Aanchal Jan-07

آئینہ

شہلا عامر

ذکیہ ابراہیم چیچہ وطنی۔ محبتوں اور سچے رشتوں بھری بزم میں سب رائٹرز قارئین اور آنچل اسٹاف کو السلام علیکم۔ آپ کے ہاتھوں میں یقینا سال نو کا آنچل ہوگا۔ سو سب کو سال نو + عید کی خوشیاں مبارک ہوں۔ اس ماہ ہم آنچل 2006 ء کا اوور آل تبصرہ لے کر حاضر ہوئے ہیں۔ گزشتہ بارہ ماہ کی بہت سی دلکش تحریروں اور کاوشوں کو آپ کے ذہنوں میں اجاگر کرنے کے لئے مجھے کافی محنت کرنا پڑی۔ اب دیکھتے ہیں آپ کو کیسا لگتا ہے۔ جناب آنچل کے تمام سلسلے اپنی مثال آپ ہیں۔ کبھی بھی کسی قاری بہن نے نہیں کہا کہ فلاں چیز کی کمی ہے یا پھر فلاں سلسلہ شروع کیا جائے۔ کیونکہ آنچل ایک مکمل رہنما ہے۔ آنچل کی سبھی رائٹرز بہت اچھا لکھتی ہیں۔ لیکن بعض تحریریں آنے والے کئی دنوں بلکہ مہینوں دل و دماغ سے نہیں مٹتیں۔میں ذکر کروں گی ان تحریروں‘ کاوشوں اور شاعری کا جن کو آنچل کے قاری حلقہ احباب میں بہت زیادہ سراہا گیا۔ سب سے پہلے سلسلہ وار ناولز کی جانب آتے ہیں تو جناب سب سے زیادہ توصیفی خراج میرے اور آپ سب کے موسٹ فیورٹ ’’محبت دل پہ دستک‘‘ کو حاصل ہوئی۔ سیکنڈ اقراء صغیر احمد کے ناول ’’دشت آرزو‘‘ تھرڈ عشنا کوثر سردار کے ناول’’ افسون جان‘‘ (گوکہ آخری مہینوں کی اقساط میں کافی مایوسی ہوئی ہے ) اور تھرڈ ٹو پر ہے نازیہ کنول نازی کا ’’جو ریگ دشت فراق ہے‘‘ فیورٹ کریکٹرز میں ’’میل کریکٹر فرسٹ پر رہے۔ معید حسن (محبت دل پہ دستک) سیکنڈ عضنان علی بخاری (افسون جان ) تھرڈ نوفل احمد (محبت دل پہ دستک ) فی میل فرسٹ ’’صبا میر‘‘ (محبت دل پہ دستک) ’’انجشاء شاہ‘‘ (یہ جو ریگ دشت فراق ہے) تھرڈ ساہیہ خان (افسون جان ) + ضحیٰ میر(محبت دل پہ دستک)۔ ناولٹ میں فرسٹ پوزیشن پر رہا صائمہ اقبال سنوھو کا کشف ذات کی جستجو(دسمبر) سیکنڈ ہما جہانگیر کا اک گھروندہ بنائیں آئو نا تھرڈ نمبر پر ہے سبیتا کنڈیار کا اور محبت ہوگئی (جون) مکمل ناولز میں پہلے نمبر پر رہا سمیرا طور شریف کا جس دھج سے کوئی مقتل میں گیا (اگست)‘ دوسرے نمبر پر نازیہ کنول نازی کا دربار محبت (اگست) تیسرے نمبر پر حنا ملک کا زندگی دھوپ تم گھنا سایہ (مئی)‘ ناول میں پہلے نمبر پر سباس گل کا محبت عید ہوتی ہے (نومبر) دوسرے نمبر پر سعدیہ امل کاشف کا دھوپ کا رنگ گلابی ہو۔(اکتوبر) تیسرے نمبر پر نادیہ فاطمہ رضوی کا تیری پناہ میں آئے (مارچ)۔ افسانہ نگاری میں پہلا نمبر لے گئی ہیں سباس گل ہم ایک ہیں (اگست) دوسرے نمبر پر راحت وفا کا افسانہ عتاب جرم (جون) اور تیسرے نمبر پر غزالہ عزیز کا افسانہ زود پشیمان (جنوری )۔ ٹائٹل میں سب سے بہترین اور دلکش ٹائٹل تھا سب سے فرنٹ پر اپریل‘ سیکنڈ نومبر اور تھرڈ نمبر پر دسمبر کا۔ 2006 ء میں آنچل سے منسلک ہستیوں میں سب سے زیادہ محبتوں اور دوستی کے پیغامات ملے ہیں وہ ہیں فرحت آراء پھپھو‘ شبیر احمد بابا جانی‘ نازیہ کنول نازی اور سمیرا شریف طور۔ جیون ساتھی سلسلہ میں سب سے پریٹی برائیڈل تھیں جنوری کی نادیہ گیلانی دوسرے نمبر پر اکتوبر کی صائمہ یوسف اور تیسرے نمبر پر نومبر کی نسرین فاخر۔ ڈش مقابلہ میں فرسٹ نمبر پر قبولی پلائو عطیہ شانزے کا بہت زیادہ پسند کیا گیا۔ سیکنڈ آلو کوفتہ بریانی طاہرہ لاریب کی اور تھرڈ عاصمہ گیلانی کی پوٹیٹو پرزہ ڈش۔ سویٹ ڈشز میں گڑیا کی آلمنڈ کوکیز‘ سیکنڈ نمبر پر نصرت بانو کی بھیل پوری اور تھرڈ نمبر پر شاہدہ سحر سندس کا سجریلا۔ (بھئی بہت خرچ کروایا) غزل نظم میں سرفہرست جن شعراء حضرات نے داد و تحسین حاصل کیں وہ نازیہ کنول نازی‘ فوزیہ سحر کائنات‘ شبیر احمد‘ سعدیہ امل کاشف‘ سدرہ سحر عمران‘ مسز فصیحہ آصف‘ برکت راہی‘ قدیر رانا‘ ندا چوہدری ہیں‘ آئینہ میں تیکھا‘ میٹھا اور مفصل تبصرہ کیا سعدیہ اکمل کاشف‘ گڑیا (سانگھڑ) اور مہرین شوکت نے ٹوٹکے بیوٹی ٹپس اور کام کی باتیں کے سلسلے میں بابا جانی شبیر احمد بازی لے گئے۔ باقی تمام شماروں میں ان سلسلوں کو زیادہ پسند کیا گیا اور مفید مشوروں سے ہزاروں قارئین بہنیں مستفید ہوئیں۔ سلسلہ یاد گار لمحہ میں بھی سبھی لمحات یادگار رہے۔ سوال و جواب کے سلسلہ ہم سے پوچھئے میں ہر آنچل شمارہ کے سوال و جواب برجستہ لاجواب تھے۔ بہت پسند کئے گئے۔ بیاض دل میں سعدیہ امل کاشف‘ اوشین نواز + زنیرہ مغل‘ رابعہ اسلم‘ الجبہ شانزے‘ مسز فصیحہ آصف‘ پروین افضل اور بہت سی دیگر بہنوں کی کلیکشن کو سراہا گیا۔ 2006 ء کے سبھی آنچل شمارے اپنی مثال آپ تھے۔ کئی نئے رائٹرز نے اپنے لئے جگہ بنالی۔ آنچل سے منسلک کئی افراد کے خاندان میں حادثات واقع ہوئے جن کے لئے تعزیت اور بہت سی رائٹرز اور قارئین کو خوشیاں اور مسرتیں حاصل ہوئیں۔ اُن کو بہت بہت مبارک باد۔ عفت سحر طاہر کو ماں بننے پر بہت بہت مبارکباد۔ آپ کو یہ تبصرہ بلکہ سالنامہ کیسا لگا ضرور بتائیے گا لیکن مجھے پورا یقین ہے۔ آپ کو پسند آئے گا اور آپ بھی مجھ سے متفق ہوئے ہوں گے۔ میری اس محنت سے لبریز کوشش کے بارے میں ضرور لکھئے گا۔ آپ کی دعائوں کی منتظر۔ آپ سے آخر میں یہی کہوں گی۔ Are you agree with me? والسلام۔

فرح طاہر‘ حسین آگاہی۔ دسمبر کا شمارہ دیکھ کر سب سے پہلے منہ سے نکلا۔ واہ! وہ اس لئے کہ لگا تار تین ماہ سے ٹائٹل اے ون جارہا ہے۔ ماڈل حالانکہ کوئی اضافی بنائو سنگھار نہیں کئے ہوئے تھی مگر دل میں اترتی محسوس ہوئی اور بنا مسکراہٹ کے بھی اس کی معصومیت دل کو بھاگئی۔ اس کے بعد فٹا فٹ چلے پیغام سلسلے کی طرف اس میں اپنا نام دوسرے نمبر پر دیکھ کر دل باغ باغ ہوگیا پھر جلدی سے چلے شہلا آپی کی محفل میں اور واہ بھئی ! اس میں بھی اپنا نام شامل دیکھ کر دل باغ کی بجائے پورا سرسبز گارڈن بن گیا اور پھر ہم نے جلدی سے اس پورے لہلاتے گارڈن کو ’’آنچل‘‘ کے نام کردیا کیونکہ اس پر صرف ’’آنچل‘‘ ہی کا حق ہے صحیح کہا ہے نہ ؟ اس کے بعد فہرست میں چلے لیکن وہاں اپنی پسندیدہ رائٹر ’’عفت سحر طاہر‘‘ کو نہ پاکر جو غصہ آیا کیا بتائوں لیکن جب سرگوشیاں سنیں تو سارا غصہ ٹھنڈا ہو گیا۔ میری طرف سے عفت آپی کو ڈھیروں ڈھیروں مبارک باد آپی مٹھائی کب کھلا رہی ہیں (ہم سراپا انتظار ہیں ) اس کے بعد آتے ہیں اس ماہ کے ستاروں کی طرف جس میں ’’صائمہ اقبال سندھو‘‘ کا تحفہ ہمیں بہت پسند آیا اور سلسلے وار سب ہی ناول بہت زبردست تھے۔ یہ سب ’’آنچل‘‘ کی جان ہیں جس کا ہمیں ہر ماہ انتظار رہتا ہے۔ اور عفت آپی پلیز یہ بتائیے کہ کیا یہ نہیں ہوسکتا کہ انس مرانہ ہو بلکہ زندہ رہے ؟ ’’نادیہ فاطمہ رضوی‘‘ ارادوں ہی ارادوں میں ہمیں بہت کچھ بتا گئیں۔ ’’یہ عید بھی مہکے گی‘‘ بھی بہت ہی اچھا افسانہ تھا جس میں ہمیں زندگی کے ایک اور پہلو کے بارے میں پتہ چلا۔ ’’آنچل عید نمبر 2‘ سارے کا سارا ہی بہت زبردست ہے۔ حنا احمد کی کام کی باتیں ساری کی ساری کی کام کی تھیں۔’’ٹوٹکے‘‘ ربابہ احمد نے بہت زبردست دیئے۔ یادگار لمحے میں لیلیٰ جمیل نے بہت اچھی بات بتائی۔ کسی ایک چیز کی تعریف نہ کرنا نا انصافی ہو گی۔ پورا آنچل بھی ’’چکے دے پھٹے‘‘ تھا آپی پلیز اب کی دفعہ بھی مجھے لازمی اپنی محفل میں شریک کرنا مہربانی ہو گی۔ سب سلسلوں میں نہ صحیح آپی پلیز دوست کے نام پیغام میں تو لازمی شامل کرلینا۔ امید ہے کہ آپ مجھے ناامید نہیں کریں گی اور نئے سال کی مبارکباد کے ساتھ ساتھ محفل میں شریک کرکے ڈھیر ساری خوشی بھی دیں گی اور ہم سے دعائیں بھی لیں گی۔ اگلے ماہ تک کے لئے اللہ حافظ۔ آپی پلیز ایک دفعہ پھر کہہ رہی ہوں لازمی لازمی اپنی محفلوں میں شریک کرلینا خدا حافظ۔
رخسانہ قاسم گل‘کراچی۔ پیاری شہلا آپی قارئین ! السلام علیکم سب سے پہلے قارئین آنچل اور اسٹاف کو نیا سال اور عید قرباں مبارک ہو۔ حمد و نعت کے بعد دانش کدہ سے فیض حاصل کرتے ہوئے سلسلہ وار ناول کی طرف آتے ہیں۔ اس بار سپر ہٹ ناول محبت دل پہ دستک کی تازہ قسط پڑھ سکے عفت سحر کے ماں بننے پر بہت خوشی ہوئی۔ افسون جان اپنی دلچسپی کھوتا جارہا ہے۔ ناولوں میں ’’ساجن تجھ سنگ عید میری‘‘ اور ’’اعتبار محبت‘‘ بہترین تحریریں تھیں۔ افسانہ ’’نہ چھڑا سکو گے دامن‘‘ پسند آیا۔ ڈش مقابلہ میں افغانی سیخ کباب اور غزل نظم میں فوزیہ سحر کائنات اور شبیر احمد بابا جانی نے قبضہ کیا ہوا تھا۔ بیاض دل میں سعدیہ امل کاشف کا انتخاب ہماری ڈائری کی زینت بنا۔ آئینہ میں رخشندہ جاوید کا تبصرہ آنچل کو سمیٹے ہوئے تھا۔ اب اجازت چاہتے ہیں۔ اللہ حافظ۔

حنا کنول۔ حویلی لکھا۔ ڈیئر شہلا آپی۔ السلام علیکم نئے سال اور عید کی بہت بہت مبارک باد۔ دسمبر کا آنچل 27 نومبر کو ملا۔ ٹائٹل خاص نہیں تھا۔ ہمارا آنچل میں سونیا لیاقت سے ملاقات اچھی رہی۔ غزل اس نے چھیڑی میں یاسمین سحر بٹ سے ملے ان کی وہ نظم جو آنچل کے نام تھی بہت اچھی تھی۔ اس دفعہ ناولز میں نازیہ کنول نازی کا مکمل ناول ساجن تجھ سنگ عید میری بیسٹ تھا۔ ویل ڈن نازیہ آپ بہت اچھا لکھتی ہیں۔ باقی ناولٹ + افسانے بھی اچھے تھے۔ ڈش مقابلہ میں عید کے حوالے سے ساری ڈشز اچھی تھیں۔ نظمیں + غزلیں سب کی سب بہت پسند آئیں۔ بیاض دل میں اس دفعہ انیلہ شاہین ، رملہ ایمل‘ مسز پروین اختر‘ شبیر احمد بابا جانی‘ سعدیہ امل کاشف‘ فریدہ جاوید فری‘سمیرا شریف طور‘ تسلیم تبسم‘ نادیہ انور اور زنیرہ مغل کا انتخاب پسند آیا۔ یادگار لمحے میں سب کے یادگار لمحے اچھے تھے۔ خاص طور پر شبیر احمد بابا جانی کی حقیقت اور لیلیٰ جمیل کی مقدر اور دعا بہت پسند آئے۔ باقی آنچل کے تمام سلسلے ہمیشہ کی طرح لاجواب تھے۔ آئندہ ماہ کے لئے اجازت دیں۔ اللہ حافظ۔

فریدہ جاوید فری‘ لاہور۔ السلام علیکم ! دسمبر کا آنچل جلدی مل گیا۔ یعنی 27 تاریخ کو حیرت ہے تین چار ماہ سے آنچل جلدی آجاتا ہے۔ اور ہمیں تبصرہ بھی جلد کرنا پڑتا ہے۔ اس مرتبہ اس میں اپنی تحریریں دیکھ کر دل بہت خوش ہوا در جواب آں میں فرحت جی کو بہت خطوط لکھے مگر جواب نہیں دیا۔ فون پر تو وہ ملتیں نہیں۔ افسانوں میں سیدہ گل بانو کا یہ عید بھی مہکے گی۔ اچھا افسانہ تھا مگر ہیرو کا نام بے حد عجیب لگا بزدغ۔ بزدغ کا کیا مطلب ہے۔ کیا وہ مطلب بتانا پسند کریں گی شکریہ۔ میری پیاری رائٹر عالیہ حرا کا ناول اعتبار محبت تو بے حد پسند آیا۔ عالیہ جی کے افسانے اور ناول تو میں ڈھونڈ ڈھونڈ کر پڑھتی ہوں۔ دوست کے پیغام میں ان کا نام رہ گیا تھا ان کو میری طرف سے دلی عید مبارک۔ نازیہ کنول نازی کا افسانہ بھی ساجن تجھ سنگ عید میری پڑھ کر مزا آگیا۔ نازیہ جی اتنا اچھا افسانہ لکھنے پر مبارکباد۔ نادیہ فاطمہ کی تحریر نہ چھڑاسکو گے۔ دامن بھی اچھی تحریر تھی۔ صنوبر جی ناولٹ اور ہم تو بڑے نایاب تھے۔ ایک سے ایک بڑھ کر افسانے اور ناول لگے۔ اس مرتبہ ڈش مقابلہ میں مچھلی کے کٹلس پڑھ کر منہ میں پانی آگیا۔ خوش نوشین جی۔ یہ شبیر بھائی کب سے حکمت کرنے لگے۔ بیوٹی گائیڈ میں بہت ہی اچھا لکھتے ہیں۔ سب کی نظمیں غزلیں اچھی لگیں میری نظم عید کے حوالے سے غائب تھی۔ شبیر بھائی کے بڑے بھائی کی وفات کا پڑھ کر بے حد افسوس ہوا۔ اللہ تعالیٰ انہیں جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے اور شبیر بھائی اور اہل خانہ کو صبر جمیل عطا کرے آمین۔ ہم ان کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ شبیر احمد بھائی کی چھوٹی سی نظم حقیقت بے حد اچھی لگی۔ فصیحہ آصف کی والدہ کی وفات کا سن کر دل بے حد اداس ہوا۔ اللہ تعالیٰ ان کو بھی جنت میں جگہ دے اور فصیحہ جی کو صبر عطا کرے آمین اور ان کے والد محترم کو بھی صحت عطا کرے۔

ماہم بدر‘ آداب۔ میری طرف سے آپ کو اور تمام آنچل اسٹاف کر دو دو مبارک باد ایک عید کی اور ایک نیا سال شروع ہونے کی۔ میری دعا ہے کہ اللہ آنچل کو ایسی ہزاروں لاکھوں عیدیں دکھائے اور یہ یوں ہی ترقی کرتا جائے۔ اب چلتے ہیں آنچل پر ریمارکس پاس کرنے تو جناب سب سے پہلے ہم نے سرگوشیاں پڑھیں لیکن یہ کیا ہماری آنکھ پلک جھپکنا بھول گئی اور دل رک سا گیا اور جی چاہا زورزور سے رونا شروع کردوں۔ آپ بھی حیران ہورہی ہوں گی کہ اس کو کیا ہو گیا۔ چلئے آپ کو اپنی اس حالت کی وجہ بتاتی ہوں۔ بھئی ہماری موسٹ فیورٹ بلکہ فیورٹ فیورٹ کہانی اس دفعہ موصول ہی نہیں ہوئی تھی جس کا ہمیں بہت زیادہ دکھ ہے لیکن کہانی نہ موصول ہونے کی وجہ پڑھ کر بہت خوش ہوئے۔ عفت آپی ہماری طرف سے زیادہ سے زیادہ مبارک قبول کیجئے۔ اس کے بعد حمد و نعت سے لطف اندوز ہوئے اور یاسمین سحر بٹ کا انٹرویو پڑھا جو کہ بہت دلچسپ تھا اور ان کی خصوصی نظم تو بہت پسند آئی اس کے بعد نظریں تمام افسانوں اور ناولٹ پر پھسلتی چلی گئیں۔ اس دفعہ تو سارا رسالہ ہی بہت اچھا تھا کسی بھی کہانی نے بور نہیں کیا۔ غزل نظم میں نادیہ نور کی غزل بہت پسند آئی اس کے بعد بیاض دل یادگار لمحے ہم سے پوچھئے۔ بیوٹی گائیڈ ٹوٹکے وغیرہ سب ہی سلسلے توجہ سے پڑھے جو کہ بہت اچھے تھے۔ ہم آنچل کا کوئی لفظ پڑھے بغیر نہیں چھوڑتے یہاں تک کہ ہم اس پر اسٹارٹ میں جو ایک دو کمرشلز آتی ہیں اس کو بھی غور سے پڑھتے ہیں۔ ہم بھی پاگل ہیں نا (آنچل کے عشق میں ) آپ ہمیں سچ مچ نہ پاگل سمجھ لیجئے گا ہم پاگل ہیں نہیں اچھا اب ہمیں بھی دعائوں میں یاد رکھئے گا۔ اللہ حافظ

مس زاہدہ رشید علوی‘ راولپنڈی۔ السلام علیکم میں آئینہ میں آج آخر آہی گئی مگر مت پوچھئے کتنی مشکل سے حاضر خدمت ہوئی۔ دسمبر کا شمارہ زبردست رہا بہت پسند آیا۔ بیاض دل‘ یادگار لمحے‘ نظم غزل‘ بیوٹی گائیڈ اور دوست کا پیغام آئے یہ سب سلسلے میرے فیورٹ سلسلے ہیں اور سب سے پہلے ان پر ہی میری نظر پڑتی ہے۔ اللہ تعالیٰ آپ کے آنچل کو مزید ستاروں سے جگمگائے اور اس پر بہت خوب صورت مستقبل کے تارے منظر عام پر لائے۔ آمین۔

صائمہ‘ سائرہ‘ سدرہ اینڈ صدف ناز‘ جھنگ۔ڈیئر اینڈ سوئیٹ شہلا آپی۔ السلام علیکم کے بعد عرض ہے کہ ہم خیریت سے ہیں اور آنچل اور آنچل کے تمام اسٹاف کی خیریت نیک مطلوب ہے۔ ہم ایک بار پہلے بھی آنچل میں شرکت کرچکے ہیں اور امید ہے کہ اس بار بھی آپ ہمیں مایوس نہیں کریں گی۔ کہتے ہیں کہ امید پر دنیا قائم ہے اور ہم بہت پر امید ہیں کہ آپ ہمارا خط آنچل میں ضرور شامل کریں گی۔ اس کے بعد ہمارے موسٹ فیورٹ ناول کی رائٹر بے بی مدر عفت آپی کو بہت بہت مبارک باد قبول ہو اور آپ نے یہ تو بتایا ہی نہیں کہ ان کے بیٹا ہوا ہے یا بیٹی۔ ہمیں تو دوہری خوشی حاصل ہے کہ ہمارے ماموں کے ہاں بھی چاند سا بیٹا پیدا ہوا ہے۔ اور تھوڑی سی مایوسی بھی ہوئی ہے کہ ’’محبت دل پہ دستک‘‘ اس بار ہمارے دل پہ دستک نہ دے سکا۔ لیکن اس سے کہیں زیادہ خوشی بھی ہوئی ہے کہ ہماری رائٹر کی گود بھر گئی ہے۔ عفت آپی سے درخواست ہے کہ نگین اور عماد کی شادی کرادیجئے اور پلیز‘ پلیز‘ پلیز نوفل کے دل سے صباء کے لئے غلط فہمی دور کردیجئے۔ اور معید کے دل کا حال بھی پبلک پر ظاہر کردیں اور پلیز عمر کاظمی کو ضحیٰ کی زندگی میں واپس مت لائیے گا۔ اور ژالے کو تھوڑی سی عقل فراہم کریں کہ وہ شموئیل کی مجبوری کو سمجھ سکے۔ عشنا جی ’’افسون جان‘‘ میں تھوڑی ہلچل پیدا کریں۔ اگر سبکتگین میرب کے دل کا حال نہیں جان پاتا تو میرب خود اسے کہہ دے کیونکہ محبت میں انا نہیں ہو تی۔ اور سبکتگین کے دل کا حال بھی بتائیں۔ اور پلیز انابیہ کا عضنان کے ساتھ برتائو اچھا کریں۔ ان کی زندگی میں کچھ تو خوشی آئے۔ رابعہ اور اوزان کی منگنی کروادیں۔ اور مہربانی فرما کر گین کو ’’گی‘‘ کی طرف مائل مت کریں اور پلیز اقراء آپی ’’دشت آرزو‘‘ کا دی اینڈ کردیں۔ نادیہ آپی اشعر اور تمکین کی اگر طلاق ہی کروانا ہے تو اچانک کروائیے گا۔ اور یہ ازمیر کو کیا سوجھی کہ اس نے سائلہ سے منگنی کرلی ؟ اور عضنان خود ہی اریشہ سے منگنی توڑ دے۔ اور اس کے بعد عرض ہے کہ ہمیں شعرو شاعری بہت پسند ہے۔ ذرا جاندار شعر لکھا کریں جو دل کو چھو جائے۔ اس بار آنچل نے بہت انتظار کروایا۔ پورا آنچل دھماکوں سے بھرا تھا۔ اب آنچل کے لئے پیار بھرا شعر۔

       یہیں پر بیٹھے رہیں گے لگا کے ہم ڈیرے                                                        
کہ تیرے ملنے کی جب تک کوئی نوید نہیں                                                       

نادیہ جہانگیر اینڈ ثوبیہ جہانگیرؔ‘ مومبر آزاد کشمیر۔ السلام علیکم ! شہلا آپی اینڈ تمام بہن بھائیوں اور دوستوں کو ہمارا سلام و آداب پہنچے‘ کہیئے کیسی گزر رہی ہے زندگی ؟ سب سے پہلے تو تمام بہن بھائیوں کو بقر عید کے ساتھ ساتھ نئے سال کی بھی ڈھیروں ڈھیر مبارکباد قبول ہو۔ اور ہماری عفت سحر کو تو اکٹھی تین خوشیوں کی مبارکیں ہی مبارکیں۔ عفت جی جہاں رہیں خوش رہیں۔ خدا ہمیشہ آپ کو ایسی ڈھیروں خوشیاں نصیب کرے (آمین )۔ خیر ٹائٹل تو ہر لحاظ سے دل کش تھا۔ دل لبھا کے لے گیا اب اسی طرح کانئے سال کا بھی ہونا چاہئے۔ سب سے پہلے تو حمد باری تعالیٰ اور نعت مقبول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے دل کو منور کیا اور پھر ’’در جواب آں‘‘ میں خالہ جانی کو آداب کہا اور ان کے ہنستے مسکراتے‘ کھٹے میٹھے جوابات سن کر انہیں ڈھیروں ڈھیر دعائوں سے نوازا اور ہمارا آنچل میں آن ٹپکے۔ اپنے ہی پیارے وطن کی پیاری سی لڑکی سے ملاقات کی تو بہت اچھا لگا۔ ویسے سونیا شاعری سے تمہیں دلچسپی نہیں لیکن باتیں پھر بھی شاعرانہ کرگئی ہو (ویسے چھا گئی ہو تم۔ ٹھاہ کرکے ) ’’غزل اس نے چھیڑی‘‘ میں اپنے پڑوس شہر کی باسی شاعرہ ’’یاسمین سحر بٹ‘‘ سے ملاقات کی تو ان کی خوشبوئوں سے لبریز میٹھی میٹھی باتیں دل میں گھر کرگئیں۔ بے شک ان کا لب و لہجہ تاثیر سے پُر ہے اور ان کی خوب صورت شاعری میں سچائی کا عنصر بہت نمایاں ہے۔ باقی سلسلوں میں سب سے پہلے قسط وار ناولز پہ نگاہ کی جو نازیہ کنول نازی کے خوب صورت سے ناول ’’ریگ دشت‘‘ پہ جاکر ٹھہر گئی۔ بلاشبہ ان کی یہ تحریر بہت دلچسپ اور بہت زبردست ہے۔ وقت کے ساتھ ساتھ یہ خوب صورت تحریریں ہمارے ذہنوں اور ہمارے دلوں پر نقش کرتی جارہی ہے۔ نازیہ نے ہر کردار اور اس کے متعلق موضوع کو بہت اچھی طرح نبھایا ہے بلکہ ابھی تک نبھا رہی ہیں۔ ہمارے خیال میں ہر کریکٹر جیسی ڈیمانڈ کررہا ہے نازی بہت ہمت سے اپنا قلم اس پر ثبت کرتی جارہی ہے اور ہر کردار کو یادگار بنانے کی بہت کوشش اور بہت محنت کررہی ہے۔ ویل ڈن نازی‘ تمہاری ہمت کی ہم داد دیتے ہیں۔ یو آر گریٹ ڈیئر۔ نازی کے بعد عشنا آپی کو پڑھا اور اس دفعہ ناول میں ذرا سی تیزی دیکھ کر بہت اچھا لگا۔ ویسے قارئین ناول اتنا بھی بور نہیں جتنا آپ لوگ سمجھ رہے ہیں۔ ذرا غور کرکے دل سے پڑھا کریں۔ آپ کو ناول میں تمام تر خوب صورتی نظر آئے گی۔ کیا ہوا جو ناول زیادہ لفظوں سے مزین ہوتا ہے لیکن یہ تو دیکھیں یہی تو عشنا کا خاصا ہے اور وہ اسی سے پہچانی جاتی ہے۔ بس ذرا دل بڑا کرلیں۔ اقراء صغیر نے بھی ہمیشہ کی طرح ’’دشت آرزو‘‘ کو خوب چلایا۔ ان کا لکھنے کا انداز سب سے ہٹ کر اور سب سے منفرد ہے جو انہیں آنچل کی تمام رائٹرز سے ممتاز کرتا ہے۔ اسی طرح عالیہ حرا مکمل ناول لے کر آئیں تو وہ تو ہماری سینئر رائٹرز میں سے ہیں۔ عید کے حوالے سے نازی کا ناول بھی سب سے ہٹ کر رہا۔ سبی کا برگماں برگماں سا روپ بہت اپنا اپنا سا لگا۔ ناولٹ دونوں ہی ایک سے بڑھ کر ایک تھے۔ صائمہ اقبال کی دلکش تحریریں بلاشبہ ایک زبردست تحریر تھی اور تحریر کا نام بھی بہت امپریسو تھا۔ سعدیہ امل کاشف کی نظم سب پر نمبر لے گئی اور ہاں ’’دوست کا پیغام‘‘ میں اس دفعہ بھی اپنا سندیسہ نہ دیکھا تو بہت افسوس ہوا۔ فی امان اللہ!

عتیقہ‘ ملتان۔ السلام علیکم شہلا آپی بہت ڈر ڈر کر لکھ رہی ہوں۔ آنچل کو دس سال سے پڑھ رہی ہوں مگر آنچل میں شرکت پہلی دفعہ کررہی ہوں۔ امید ہے شہلا آپی آپ مجھے مایوس نہیں کریں گی اور مجھے بھی آپ آنچل میں جگہ دے دیں گی۔ اس مہینے کا آنچل جلد ہی مل گیا تھا جب تک پورا نہیں کیا میں نے آنچل کی جان نہیں چھوڑی۔ میری بہن کہتی ہے کہ آنچل آگیا ہے اس نے بھاگنا نہیں ہے تسلی سے پڑھ لینا۔ آنچل مجھے بہت بہت پسند ہے آپی جان پلیز (افسون جان ) میں میرب اور سردار جی کی صلح ضرور ہونی چاہئے۔ (محبت دل پہ دستک ) ناول نہیں نظر آیا تو بہت دکھ ہوا مگر سرگوشیاں پڑھ کر تسلی ہوئی۔ اللہ تعالیٰ عفت باجی کو صحت دے اور بچے کی عمر لمبی کرے۔ (یہ جو ریگ دشت فراق ہے ) نازیہ کنول نازی کا ناول بھی بہت پسند ہے۔ اوکے باجی بہت تنگ کرلیا اب اللہ حافظ۔ زندگی نے زندگی کے ساتھ وفا کی تو پھر ملیں گے۔

رضوان بشیر بھٹی‘ گوجرانوالہ۔ ڈیئر آنچل۔ السلام علیکم۔ مجھے آنچل پڑھتے ہوئے کوئی تین سال ہوگئے ہیں لیکن کبھی رابطہ نہیں کیا آپ سے۔ اب میں نے سوچا کیوں نہ خط کے ذریعے ہی آپ سے رابطہ کیا جائے۔ اور اس کی سب سے بڑی وجہ ہے محبت دل پہ دستک۔ یہ ہم سب گھر والوں کا پسندیدہ ناول ہے۔ اور جب یہ نہیں آتا تو ایسا لگتا ہے پتہ نہیں پورا مہینہ کیسے گزرے گا۔ ویسے ہماری طرف سے مبارک ہو عفت جی کو اور عفت باجی پلیز اگلی بار ہمارے صبر کو مت آزمائیے گا کیونکہ محبت دل پہ دستک کے بغیر ہمارا وقت اچھا نہیں گزرتا۔ جناب یہ تو تھی ایک ناول کی بات اب باقی رسالے کی بات ہوجائے۔ اب باری ہے عشنا جی کی۔ آپ کا ناول بھی بہت اچھا جا رہا ہے۔ بس اب میرب پر تھوڑا سا رحم کردیں۔ باقی اس بار کا آنچل بہت اچھا تھا۔ ساری رائٹرز نے اچھا لکھا تھا خاص طور پر صائمہ اقبال‘ عالیہ حرا اور نازیہ کنول نازی۔ باقی افسانے بھی سارے ہی بہت اچھے تھے۔ اور مستقل سلسلے بھی کافی اچھے تھے۔ اب اجازت مجھے امید ہے کہ آپ میرے خط کو ضرور شامل کریں گی کیونکہ میں نے پہلی بار کسی رسالے کو خط بھیجا ہے۔

عشرت‘ فیصل آباد۔ مجھے آپ کا ماہنامہ آنچل بہت اچھا لگتا ہے۔ میں پچھلے 3 سال سے آنچل کی قاری ہوں۔ مجھے اس کے سارے سلسلے اچھے لگتے ہیں‘ لیکن اس دفعہ میں نے سوچا کہ آنچل میں اپنے لئے جگہ بنائوں تو پلیز مجھے تھوڑی سی جگہ دینا۔ سب سے پہلے میری سوئیٹ ’عفت‘ آپ کو بہت سا سلام اور اتنا اچھا لکھنے پر مبارکباد‘ اور بچہ کی مبارکباد۔ پلیز آپی آپ سے درخواست ہے کہ نوفل اور صباء کی غلط فہمی دور کردیں اور ژالے کو کچھ عقل دیں۔ میرے دل پہ دستک دیتی ہے آپ کی کہانی۔ میری آنچل اسٹاف سے درخواست ہے کہ میرا خط ضرور شامل کریں۔ پھر ملیں گے۔ اللہ حافظ !

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
Close