Hijaab Feb 2019

بات چیت

مدیرہ

السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ۔

فروری 2019ء کا شمارہ آپ کے ذوق مطالعہ کی نذر ہے۔
انسان بڑی عجیب مخلوق ہے، خود کو کئی طرح کی زنجیروں میں جکڑا ہوا پاتا ہے پھر بھی اپنے آپ کو آزاد سمجھتا ہے۔ ہم سب کسی نہ کسی غلامی کی نادیدہ ڈور سے بندھے ہوئے ہیں۔ بڑی کرسیوں پر براجمان چھوٹے لوگ عموماً اپنی خواہشوں کے غلام ہوتے ہیں جو سچ برداشت کرتے ہیں نہ اختلاف رائے۔ اپنی جھوٹی عظمت کے خبط میں مبتلا یہ لوگ اپنے توہین آمیز رویے سے دوسروں کی دنیا برباد کرتے ہیں اور اپنی آخرت۔
دوسرے وہ لوگ ہیں جو نظام کے غلام ہیں۔ ان خود ساختہ بادشاہوں کے دربار میں کاسہ لیسی کرتے کرتے وہ ایک کٹھ پتلی کی صورت اختیار کر جاتے ہیں پھر وہی کچھ کہتے ہیں جو بادشاہ سلامت سننا چاہتے ہیں وہی کچھ کرتے ہیں جو بادشاہ سلامت دیکھنا چاہتے ہیں اپنی عزت نفس کو گروی رکھ کر یہ درباری، خوشامد کرتے کرتے اس مقام پر پہنچ جاتے ہیں جہاں غلامی کا احساس بھی باقی نہیں رہتا اور یہ غلامی کی بد ترین قسم ہے۔
انسان اشرف المخلوقات ہے اور اس شرف کا تقاضا ہے کہ وہ ہر طرح کی غلامی چھوڑ کر بندگی اختیار کرے۔ بندگی جو اسے ذہنی و فکری آزادی کی طرف لے جاتی ہے، جو اسے سر اٹھا کر جینا سکھاتی ہے۔ غلامی جبر کا سودا ہے اور بندگی تسلیم و رضا کا نام ہے۔ بندگی انسان کو تمام جھوٹے خدائوں کی غلامی سے نجات دلاتی ہے اور جھوٹے خدائوں کی غلامی سے آزادی ہی اصل آزادی ہے۔
’’شب ہائے ویرانی دل‘‘ ڈاکٹر ہما جہانگیر کا نام آنچل کے قارئین کے لیے نیا نہیں۔ گزشتہ دو دہائیوں میں ان کی متعدد کہانیاں ’’آنچل‘‘ کی زینت بن کر قارئین سے پسندیدگی کی سند حاصل کرچکے ہیں۔ اس ماہ سے ان کی ایک نئی دلچسپ سلسلہ وار تحریر حجاب میں شروع کی جا رہی ہے۔ امید ہے حجاب کے قارئین کو ان کی یہ تحریر بھی پسند آئے گی۔
…اس ماہ کے ستارے…
بشریٰ ماہا، ڈاکٹر ہما جہانگیر، شفق افتخار، مہتاب خان، نزہت جبین ضیاء، حنا بشریٰ، قرۃ العین سکندر، ثمینہ مشتاق، ماہ نور زہرا، عرشیہ ہاشمی، سمیرا ایاز، مہرین کنول۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close