Aanchal Mar-17

بیوٹی گائید

روبین احمد

فائونڈیشن

پورے سال ہمارا میک اپ ہمارے لباس کی مناسبت سے تبدیل ہوتا رہتا ہے۔ سردیوں کا موسم چہرے کے لیے بہت سخت موسم ہوتا ہے کیونکہ اس موسم میں ہمارا چہرہ ہی کھلا ہوتا ہے ورنہ تو پورا جسم گرم کپڑوں سے ڈھکا ہوتا ہے۔ فائونڈیشن کو آپ اپنی جلد ثانی تصور کریں اور جب آپ ایسا سمجھنے لگیں گی تو پھر آپ پر لازم ہے کہ آپ معیاری فائونڈیشن اپنی رنگت کے مطابق استعمال کریں تاکہ آپ کا چہرہ فطری حسن اور رنگت کا عکس ہو۔

سردیوں میں جلد کی حالت گرمیوں کے مقابلے میں بالکل الگ ہوتی ہے۔ اپنی جلد کو محفوظ رکھنے کے لیے ہمیشہ درست اور معیاری فائونڈیشن کا استعمال کریں اور اس کا شیڈ آپ کی جلد کی رنگت سے مطابقت رکھتا ہو۔ سردیوں میں ہماری جلد زردی مائل ہوجاتی ہے تو ایسے میں فائونڈیشن خریدتے وقت اس کی جانچ ضرور کرلیں۔ اس کی تھوڑی سی مقدار اپنی جلد پر لگائیں اور چند منٹ کے لیے چھوڑ دیں تاکہ یہ سیٹ ہوجائے۔ اس کے بعد قدرتی روشنی میں اس کا نتیجہ دیکھیں۔

اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ نے پرفیکٹ فائونڈیشن کا انتخاب کرلیا ہے تب بھی آپ کو اس کا ٹیسٹ ضرور کرنا چاہیے کیونکہ ہماری جلد میں جوقدرتی ایسڈ ہوتا ہے۔ وہ فائونڈیشن کے استعمال کے بعد تبدیلی کا شکار ہوسکتا ہے اور فائونڈیشن کی رنگت کو بھی متاثر کرسکتا ہے اگر سردیوں میں آپ کی جلد خشک ہوجاتی ہے تو ایسا فائونڈیشن استعمال کریں جس میں موئسچرائزر کا زیادہ استعمال کیا گیا ہو تاکہ آپ کی جلد نرم رہے۔

سرد موسم میں موئسچرائزر آپ کے میک اپ کا نہایت اہم حصہ ہے۔ جلد میں اس کی موجودگی جلد کو خشک ہوکر پھٹنے سے محفوظ رکھتی ہے۔ اچھا تو یہ ہوگا کہ آپ کے فائونڈیشن اور موئسچرائزر میں سن اسکرین بھی موجود ہو تاکہ دھوپ سے جلد کو پہنچنے والے نقصانات کا ازالہ ہوسکے۔ جب موئسچرائزر سیٹ ہوجائے تو ضرورت کے مطابق کنسیلر لگائیں۔ کنسیلر کا بھی آپ کی جلد سے میچ ہونا ضروری ہے اس کی وجہ سے آنکھوں کے نیچے موجود سیاہ حلقوں اور دانوں کے نشانات کو چھپانے میں بہت مدد ملتی ہے۔

اور اب آخر میں انگلیوں کی نوک کی مدد سے فائونڈیشن لگائیں۔ تھوڑی سی مقدار لے کر پورے چہرے کوکور کرنا ہے اس طرح آپ کا چہرہ ترو تازہ اور صحت مند لگے گا‘ بعد میں جہاں جہاں ضرورت ہو مزید فائونڈیشن لگاسکتی ہیں۔

مسکارا

موسم کے حساب سے لباس تبدیل کیا جاتا ہے تو اسی طرح میک اپ میں بھی تبدیلی کی جاتی ہے۔ جس طرح سرد موسم میں گرم اور گہرے رنگوں کے کپڑے استعمال کیے جاتے ہیں اسی طرح میک اپ بھی گہرا کیا جاتا ہے اور اگر بات آنکھوں کی ہو تو ان کو اور زیادہ ڈارک میک اپ سے سنوارا جاتا ہے۔ اس اصول سے مسکارا بھی مستنثی نہیں ہے۔ یاد رہے کہ اسے ہر تین ماہ کے بعد تبدیل کردیا جاتا ہے۔ زیادہ بہتر یہی ہوگا کہ آپ اسے موسم کی تبدیلی کے ساتھ ہی تبدیل کرلیں۔ سرد موسم کے حوالے سے کچھ ٹپس مسکارا کے سلسلے میں ملاحظہ فرمائیں۔

اس سے قطع نظر کہ میک اپ کا کون سا فیشن چل رہا ہے۔ لمبی اور بھرپور پلکیں کبھی بھی آئوٹ آف فیشن نہیں رہتی ہیں اور سرد موسم میں زیادہ درست معلوم ہوتی ہے جو خواتین اس موسم میں اچھے مسکارا کی تلاش میں ہیں اس بات کو ذہن میں رکھیں یہ مسکارا کا ٹائپ نہیں ہوتا ہے جو پلکوں کو بھرپور بناتا ہے بلکہ جادو اس کی چھڑی (اسٹک) میں ہے۔

اسٹک شیپ اور برش کے لحاظ سے کئی طرح کی ہوتی ہے اور اگر آپ پلکوں کو بھرپور بنانا چاہتی ہے تو فل برش والی اسٹک کا انتخاب کریں۔ چھوٹے برش والی اسٹک آنکھوں کے کناروں کو ٹچ دینے کے لیے بہترین ہوتی ہے جبکہ کنگھے والی اسٹک آپ کی پلکوں کو ایک دوسرے سے گڈ مڈ ہونے سے محفوظ رکھتی ہے۔

سرد موسم آنکھوں کے میک اپ کے حوالے سے تجربات کرنے کے لیے بہترین ہے۔ آپ اسموکی‘ گرے یا برائون شیڈ استعمال کرسکتی ہیں تاہم سیاہ مسکارا اسموکی آئیز کے لیے بہترین ہے اور فوراً سب کی توجہ حاصل کرلیتی ہیں۔ سردیوں میں مسکارا کے دو کوٹ لگائیں مگر دوسرا پہلے کوٹ کے خشک ہونے کے بعد ہی لگائیں اس طرح پلکیں ایک دوسرے کے ساتھ گڈمڈ نہیں ہوں گی چونکہ اسموکی آئیز بھی اچھی لگتی ہیں کہ جب دونوں پپوٹوں پر آئی لائنز لگایا گیا ہو لہٰذا نچلے حصے پر بھی مسکارا لگانا نہ بھولیں۔ 

شان دار موسم

تیز اور شوخ اور روشن رنگ‘ سفید اور سیاہ… ہر رنگ کا اپنا جادو ہوتا ہے مگر کچھ رنگ سرد موسم میں کچھ زیادہ ہی اپنی بہار دکھاتے ہیں۔ سرد موسم میں خواتین کی پسند میں تضاد ہوسکتا ہے لہٰذا اس بات کو بھی مدنظر رکھنا چاہیے۔ سرد موسم میں بہرحال رنگوں کا انتخاب مشکل ہوتا ہے‘ غلطی سے کوئی عورت موسم خزاں والا رنگ انتخاب کرسکتی ہے اور ایسا تب ہوتا ہے جب خواتین رنگوں کے انتخاب کے حوالے سے گومگو کی کیفیت سے دوچار ہوتی ہے۔

سرد موسم میں خواتین شوخ اور تیز رنگوں کا انتخاب کریں تاکہ ان کی نسوانیت پر زیادہ سے زیادہ زور پڑے۔ ان کو چاہیے کہ وہ پھیکے اور بجھے بجھے رنگوں سے دور رہیں‘ ان سے ان کی شخصیت پر منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ گرے اور سلور یا بلیک اور نیوی بلیو کا استعمال کریں۔ اسی طرح سفید شیڈ کے سارے رنگ استعمال کیے جاسکتے ہیں۔ برائون‘ اورنج‘ گولڈ اور تیز سبز رنگوں سے دور رہا جائے۔ خواتین کو اپنے اسٹائل پر زور دینا چاہیے۔ چیک (خانے دار) یا پھولوں والے لباس مناسب رہیں گے‘ اگر سفید اور سیاہ دھاری دار لباس ہو تو پھر بات ہی کیا ہے۔ زرد زمین پر اگر سیاہ پرنٹ ہو تو یہ بھی باعث کشش ہے۔

اپنی جلد کو موسم کے حساب سے قدرتی انداز میں نکھاریئے

سردیوں کے موسم میں اکثر خواتین اپنی جلد کو نرم و ملائم اور ہونٹوں کو ترو تازہ رکھنے کے لیے طرح طرح کے موئسچرائزر ‘ باڈی آئل اور وٹامنز استعمال کرتی ہیں جبکہ سردی کا زور ٹوتے ہی ان چیزوں کا استعمال قدرے کم ہوجاتا ہے اور موسم کی دوسری پروڈیک کے لیے بازار کے چکر لگانا شروع کر دیتی ہیں مگر وہ اس بات سے بے خبر ہیں کہ کئی قدرتی موئسچرائزر ان کے اپنے گھر میں موجود ہیں جن کا استعمال ان کی جلد کے قدرتی تیل کو خشک ہونے سے بچاتا ہے اور یوں جلد موسم سرما میں خشک ہونے سے محفوظ رہتی ہے۔سرد موسم میں ایک اور کار آمد عمل یہ ہے کہ اپنے جسم کو تھوڑی دیر کے لیے دھوپ میں رکھیں تاکہ یہ دھوپ میں موجود وٹامن ڈی سے مستفید ہوسکے۔ اس کے علاوہ کچھ قدرتی موئسچرائزر کا بھی استعمال کریں جو کہ آسانی سے دستیاب ہیں اور موثر بھی ہیں۔

شہد

قدرتی موئسچرائزر میں اس سے اچھی اور کوئی چیز نہیں۔ دو ٹی اسپون شہد لے کر کسی بھی ٹائپ کی جلد پر مساج کیا جائے تو سردیوں کے دوران جلد صحت مند اور نرم رہتی ہے۔ شہد میں اشیا کو نرم کرنے‘ ان کو شگفتگی بخشنے اور موئسچرائزر کے ساتھ ساتھ اگر جلد میں کوئی ٹوٹ پھوٹ ہوئی ہے تو اس کی یہ مرمت بھی کردیتا ہے۔

اووکیڈو

اس بدیسی پھل میں غذائیت بخش اجزا بہت زیادہ ہیں۔ یہ وٹامن ‘ معدنیات اور تیل سے لبریز پھل ہے‘ یہ خشک اور نمی سے پاک جلد کے لیے بہترین ماسک کا کام کرتا ہے۔

ہالہ سلیم…کراچی

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Check Also

Close
error: Content is protected !!
Close