Aanchal Sep-16

بیوٹی گائید

روبین احمد

بھاپ سے چہرہ نکھاریں
بھاپ سے سارا میل کچیل صاف ہوجاتا ہے‘ مسام کے اندر سے گرد اور میل کے ذرات نکل جاتے ہیں۔ خون کا دوران بھی تیز ہوجاتا ہے پسینہ آتا ہے اور اس طرح اندر تک فاسد مادے خارج ہوتے ہیں جن خواتین کی جلد چکنی ہو وہ ہر روز بھاپ لے سکتی ہیں۔ نارمل جلد والی خواتین ہر ہفتے بھاپ لے کر جلد کو ٹھیک رکھ سکتی ہیں جن کی جلد خشک ہو ان کو چاہیے پندرہ دن بعد بھاپ لیں جن کی جلد حساس ہو وہ بھاپ نہ لیں۔ کسی صاف برتن میں پانی ابالیں سر پر تولیہ ڈالیں آنکھوں کو بھاپ سے بچائیں۔ تین منٹ سے لے کر دس منٹ تک بھاپ لیتی رہیں یہ آپ کی جلد پر منحصر ہے بھاپ لینے کے بعد چہرے کو روئی سے صاف کریں۔ چہرے اور ناک پر سیاہ تل ہوں تو روئی سے دبا کر ان کو نکال لیں‘ پھر ٹھنڈے پانی میں روئی بھگو کر چہرے پر پھریں تاکہ مسام بند ہو جائیں۔ بھاپ لینے سے پہلے کوئی بھی کولڈ کریم لے کر چہرے پر مساج کریں پھر اسے روئی سے خوب صاف کرلیں‘ صاف روئی جب آپ چہرے پر لگائیں تو وہ سارا میل جذب کرلے گی جب کریم صاف ہوجائے تو پھر آپ بھاپ لیں۔ بھاپ کے بعد گلاب کا ٹھنڈا عرق یا پانی چہرے پر روئی کے ساتھ لگائیں۔ ابلتے پانی میں نیم کے پتے اور سونف کے دانے ڈال دیں یہ عرق جلد کے لیے مفید ہوتا ہے۔
بھرپور نیند حسن و دلکشی کی ضامن
کہتے ہیں کہ حسن دیکھنے والے کی آنکھ میں پوشیدہ ہوتا ہے یعنی جو چہرہ ہمیں اچھا لگتا ہے مگر ضروری نہیں کہ وہی چہرہ دوسروں کو بھی اتنا ہی اچھا لگے جتنا ہمیں پسند ہے۔ ایسا ممکن ہے کہ اس میں کچھ نہ کچھ کشش ضرور ہو اور یہ کشش اسی وقت پیدا ہوتی ہے جب چہرہ صاف ستھرا ہو اور قاعدے سے میک اپ کیا گیا ہو۔ اکثر خواتین کام کی زیادتی کی وجہ سے اپنی نیند پوری نہیں کرپاتیں اور ان کا چہرہ تھکا تھکا اور مرجھایا ہوا رہتا ہے اس لیے ضروری ہے کہ خواتین اپنے چہرے کی موئسچرائزنگ اور کلینزنگ باقاعدگی سے کریں اس کے ساتھ ان کی صحت بھی ٹھیک ٹھاک ہو۔ متوازن غذا اور بھرپور نیند میسر ہو ان تمام باتوں کے ساتھ ساتھ ذہنی آسودگی اور خوشی بھی میسر ہو کیونکہ نیند تھکے ہوئے اعصاب کو سکون پہنچاتی ہے۔
چہرے سے شکنوں کا خاتمہ
خواتین اپنے چہرے کے حوالے سے بہت حساس ہوتی ہیں کیونکہ چہرے کی جلد بہت نرم و نازک اور حساس ہوتی ہے اور اگر اس کی مناسب دیکھ بھال نہ کی جائے تو اس پر جھریاں اور شکنیں نمودار ہونا شروع ہوجاتی ہیں اگر آپ اپنی جلد کو جھریوں اور شکنوں سے محفوظ رکھنا چاہتی ہیں تو باقاعدگی کے ساتھ جلد کی حفاظت کریں تاکہ جلد کی شگفتگی اور تازگی بھی برقرار رہے اور چہرے پر جھریاں بھی نمودار نہ ہوں اس لیے ضروری ہے کہ آپ اپنے چہرے کو سورج کی تماز ت سے بچائیں کیونکہ اس سے جلد میں کھنچائو پیدا ہوتا ہے جو چہرے کی خوب صورتی کو خراب کرتا ہے۔ چہرے پر شکنوں کی ایک اور بڑی وجہ جلد کی خشکی بھی ہے اس سے بچنے کے لیے آپ اپنی جلد کو نم آلود رکھیں کیونکہ جلد پر نمودار ہونے والی لائنوں اور جھریوں کے ان مقامات پر نمی جذب ہوجاتی ہے اور سکڑی ہوئی جلد آہستہ آہستہ اپنی اصلی حالت پر آنے لگتی ہے۔
سانولے رنگ کو گورا کرنا
بعض خواتین اپنے سانولے رنگ کی وجہ سے کمپلیکس میں مبتلا ہوجاتی ہیں حالانکہ سانولے رنگ کی اہمیت اپنی جگہ اور سانولا رنگ بھی کشش کا باعث ہوتا ہے لیکن خواتین یہ چاہتی ہیں کہ ان کی رنگت بھی گوری ہو اور باقی خواتین کی طرح وہ بھی خوب صورت و حسین لگیں اور وہ گھر پر ہی اپنے رنگ کو گورا کرسکتی ہیں اس کے لیے انہیں تھوڑی سی محنت کرنا ہوگی اوروہ ہوجائیں گی گوری گوری۔ مکئی اور جو کا آٹا ہم وزن لے کر اس میں آدھے لیموں کا رس ملا کر لئی سی بنالیں اور اس لئی کو گردن اور چہرے پر ملیں‘ آدھے گھنٹے کے بعد نیم گرم پانی سے اسے صاف کرلیں یہ عمل ہفتے میں دو مرتبہ کریں جب دھوپ میں نکلنے سے رنگت سیاہ ہوجائے اور دھبے پڑجائیں تو انگور کو توڑ کر چہرے پر ملیں تھوڑی دیر بعد جلد خسک ہوجانے پر پانی سے دھولیں۔ موسم سرما میں ادرک چھیل کاٹ کر چہرے پر ملنے سے رنگت نکھر آتی ہے اور سیاہ داغوں اور کیل مہاسوں سے چھٹکارا مل جاتا ہے۔
ہلدی اور لیموں سے جلد کی حفاظت
آج کل خواتین ہلدی اور لیموں کے مساج سے اپنی جلد کو بہترین غذائیت مہیا کرتی ہیں جس سے ان کی جلد چمک دار اور نرم و ملائم ہوجاتی ہے۔ ایسی جلد ہر قسم کے دانوں سے محفوظ رہتی ہے ہلدی سے چہرے پر مساج کرنے سے چہرے کا رواں ختم ہوجاتا ہے اور تھریڈنگ کی ضرورت نہیں پڑتی اس کے علاوہ رنگت الگ نکھر آتی ہے جلد سے بالوں کا خاتمہ کرنے کے لیے ویکس بھی چینی اور لیموں کو ایک خاص مقدار میں مکس کرکے تیار کی جاتی ہے۔ بیسن کا بھوسا اور آٹا بھی جلد کی کلینزنگ میں بے حد کارآمد ثابت ہورہے ہیں ان قدرتی اشیا کو استعمال کرنے سے جلد کی کم عمری اور صحت و کشش میں اضافہ ہوتا ہے جب کہ صابن اور دیگر مصنوعی اشیا کی پروڈکٹس مارکیٹ میں ملتی ہیں اور انہیں گھر پر بھی مختلف طریقوں سے تیار کیا جاسکتا ہے۔ شہد کے مساج سے چہرے کی رنگت ایسی نکھرتی ہے کہ آپ کو بیوٹی پارلر جانے کی بھی ضرورت نہیں رہتی۔
خشک جلد کی حفاظت
موسم کے بدلنے سے جہاں رخسار گلابی ہوتے ہیں لیکن اس کے ساتھ ہی تمام رطوبت جذب کرکے جلد کی رنگت کو خراب کرنے کے ساتھ ساتھ جلد اکڑ کر خشک ہوجاتی ہے‘ جلد سخت ہوجاتی ہے اور مسام سکڑ جاتے ہیں آنکھوں کے نیچے چھوٹی چھوٹی لکیریں نمودار ہونے لگتی ہیں۔ اسی طرح گردن اور رخساروں کی جلد بھی چٹخی ہوئی دکھائی دیتی ہے۔ انسانی جلد آکسیجن جذب کرتی ہے جلد کے خلیوں میں مرطوب اجزاء کا وافر ذخیرہ ہوتا ہے رطوبت کا یہ ذخیرہ عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ ہارمونز یا وٹامنز کی کمی کی وجہ سے کم ہوتا رہتا ہے اور اس کے نتیجے میں جلد خشک ہوجاتی ہے جس سے وقت سے پہلے چہرے پر جھریاں پڑجاتی ہیں۔ اس لیے ضروری ہے کہ پانی زیادہ مقدار میں پیا جائے تاکہ جلد خشک ہونے سے محفوظ رہے۔ خواتین کو چاہیے کہ اپنے روزمرہ کے معمولات میں اچھی اور صحت بخش غذا کے علاوہ آٹھ گھنٹے کی نیند بھی ضرور لینی چاہیے۔ تازہ پھلوں اور سبزیوں کو کھانے کی روٹین بنائیں‘ ورز ش اور روزانہ بیوٹی روٹین کو اپنائیں اور بیوٹی روٹین میں سب سے پہلے کلینزنگ ہونی چاہئے کیونکہ خواتین زیادہ تر اپنی جلد پر مختلف قسم کا میک اپ استعمال کرتی ہیں اس لیے کلینزنگ بہت ضروری ہے ایسے کلینزز کا استعمال کریں جو مساموں کو بند کرنے والی آلودگی اور ذرات کو اچھی طرح صاف کردے لیکن ایسا کرتے ہوئے وہ جلد پر خشکی اور اکڑن کے اثرات نہ چھوڑے اور نہ ہی قدرتی اور حفاظتی تہہ کو اتارے۔
جلد کی حفاظت
بدلتے ہوئے موسم میں خواتین کی جلد بھی متاثر ہوتی ہے اور جلد مانند پڑنا شروع ہوجاتا ہے پھر خواتین پارلر کا رخ کرتی ہیں جلد کی حفاظت گھر پر بھی کی جاسکتی ہے۔ جلد کی حفاظت کے لیے ضروری ہے کہ آپ اپنے چہرے کو موئسچرائزنگ اور کلینزنگ کے ساتھ ساتھ اپنی جلد کو سورج کی روشنی کے مضمر اثرات اور موسم کی تمازت سے محفوظ رکھیں صرف چہرے کی جلد ہی اس موسم میں توجہ نہیں مانگتی بلکہ جسم‘ گردن ہاتھ‘ بازو اور پائوں بھی توجہ چاہتے ہیں اس لیے چہرے کے ساتھ ساتھ جلد کے باقی حصوں کی حفاظت روٹین ورک میں شامل کریں۔ گلیسرین‘ عرق گلاب اور لیموں کو ہم وزن ملا کر یہ آمیزہ کسی صاف بوتل میں کرکے فریج میں رکھ دیں۔ ٹونر کے طور چہرے پر اور گردن پر لگائیں‘ ٹماٹر کے دو سلائس کاٹ کر فریزر میں رکھ دیں جب بھی کہیں باہر سے آئیں تو یہ سلائس چہرے پر مل لیں چہرے کی رونق بحال ہوجائے گی۔ خشک دودھ ایک چائے کا چمچ اور جو کا آٹا عرق گلاب میں ملا کر گاڑھا لیپ بنالیں‘ ہفتے میں دو بار یہ ماسک لگانے سے رنگت نکھر آئے گی۔ انڈے کی سفیدی میں بادام کا پائوڈر پیس کر ماسک کی طرح لگائیں اور پھر ٹھنڈے پانی سے دھودیں‘ جلد اور چہرے کی شگفتگی بہت دنوں تک قائم رہے گی۔
گل افشاں فاطمہ…لاہور

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close