Aanchal Dec-18

درجوابِ آں

مدیرہ

سباس گل… رحیم یار خان
پیاری سباس! سدا شاد و آباد رہو۔ پہلے تو ہماری جانب سے کتاب کی اشاعت پر مبارک باد قبول کریں۔ یقینا ’’خواب و خیال اور آنسو‘‘ قارئین کی توجہ کا مرکز ضرور بنے گی۔ بھئی کیوں نہ بنے آپ لکھتی ہی کمال کا ہیں۔ حجاب اور آنچل میں جب بھی آپ کی تحریر شامل ہوئی قارئین نے پسند کیا اور خطوط کے ذریعے اظہار بھی کیا۔ ہماری بھی کوشش ہوتی ہے کہ آپ کو جلد از جلد جگہ دیں لیکن صفحات کی کمی کے باعث تحریر‘ تاخیر کا شکار ہوجاتی ہے۔ خیر آپ تو سمجھتی ہیں اس لیے کبھی شکایت بھی نہیں کی۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو مزید کامیابیوں سے نوازے اور آپ کا قلمی سفر یونہی ترقی کی منازل طے کرتا رہے آمین۔
الصیٰ محبوب… کراچی
ڈیئر الصیٰ! خوش رہو۔ آپ کی تحریر ’’گڑیا‘‘ کے عنوان سے موصول ہوئی، پڑھ کر اندازہ ہوا کہ آپ میں لکھنے کی صلاحیت ہے لیکن تھوڑی محنت اور توجہ کی ضرورت ہے۔ موضوع آپ نے بالکل ٹھیک منتخب کیا‘ معاشرے میں بچیوں کے ساتھ غلط رویہ دیکھ کر ماں اپنی بیٹی پر روک ٹوک کرتی ہے، لیکن اس روک ٹوک سے بچی کی شخصیت متاثر ہو یہ تو ٹھیک ہے، لیکن وہ خود اس حادثے کا شکار ہو جائے، یہ بات تحریر کو کمزور کر گئی، اس لیے مطالعہ پر زور دیں اور نامور مصنفین کی تحریروں کو مطالعہ کا حصہ بنائیں۔
قرۃ العین سکندر…لاہور
پیاری قرۃ العین! سدا سہاگن رہو، آپ کی کتاب ’’تم سنگ نیناں لاگے‘‘ کی اشاعت پر بے حد مبارک باد۔ بے شک اپنی خواہش کی تکمیل انسان کو خوشی سے دو چار کرتی ہے اور آپ کا صاحب کتاب ہونے کا یہ خواب پایۂ تکمیل کو پہنچ گیا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کے قلم کو مزید وسعت عطا فرمائے اور بہت سی کامیابیاں آئندہ بھی آپ کا مقدر بنیں‘ آمین۔ اس خوشی کے موقع پر ہماری نیک تمنائیں آپ کے ہمراہ ہیں۔ آپ کی تحریر ’’دل مضطرب‘‘ منتخب ہوگئی ہے۔
حیاء بخاری… ڈیرہ اسمائیل خان
ڈیئر حیا! سدا سلامت رہو، یہ جان کر بے حد افسوس ہوا کہ آپ کی طبیعت ناساز ہے اور آپ ہسپتال میں زیر علاج رہیں۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو جلد صحت کاملہ عطا فرمائے‘ آمین۔ بے شک یہ مشکل وقت آپ کے لیے بے حد تکلف دہ اور کٹھن ہوگا۔ ایسے میں ہماری دعائیں آپ کے ساتھ ہیں۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو گرم ہوا کے جھونکوں سے بھی محفوظ رکھے اور بہاریں ہمیشہ آپ کے سنگ رہیں‘ آمین۔ قارئین سے بھی دعائے صحت کے لیے ملتمس ہیں۔
ساریہ چودھری… گجرات
پیاری ساریہ! سدا آباد رہو، ہمارا پرچا سبق آموز تو ضرور ہے لیکن آپ کی تحریر خالص تبلیغی ہے۔ اگر وہ اچھے انداز سے لکھی گئی ہوتی تو شاید جگہ بنا لیتی۔ مخلصانہ مشورہ ہے کہ ہلکی پھلکی تحریر لکھیں، جس موضوع پر آپ نے قلم اٹھایا ہے انداز بیاں اس کے شایان شان نہیں۔ انداز بالکل بھی متاثر نہیں کر پایا اس لیے معذرت چاہتے ہیں۔ کہانی میں اس بات کا خیال رکھیں کہ نصیحت بھی اس انداز میں ہو کہ طبیعت پر گراں نہ گزرے اور کہانی کا حسن برقرار رہے۔
صائمہ قریشی… لندن
پیاری صائمہ! سدا سہاگن رہو، آپ کی تحریروں کی کتابی اشاعت پر بے حد مبارک باد۔ ’’تم چاند بن کر رہنا‘‘ اور ’’محبت میری آخری شرارت تھی‘‘ یقینا پڑھنے والوں کے لیے ایک خوشگوار اضافہ ثابت ہوگی ویسے بھی یہ تحریر جب حجاب کی زینت بنی تھی تو سب قارئین نے بے حد سراہا تھا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو مزید ترقی عطا فرمائے اور آپ کا قلمی سفر یونہی کامیابی سے جاری رہے‘ آمین۔
رقیہ ناز… میلسی وہاڑی
پیاری رقیہ! شاد رہو، آپ کے تمام گلے شکوے پڑھے، میمونہ رومان اور ایمان وقار کا کہنا ہے کہ جب تک شاعری معیاری نہیں ہوگی وہ پرچے کی زینت نہیں بنے گی۔ اگر تھوڑی بہت اصلاح کی ضرورت ہوتی ہے تو وہ خود بھی کردیتی ہیں۔ آپ کی شاعری اگر معیاری ہوئی تو اپنی جگہ خود بنا لے گی۔ آپ دیگر سلسلوں میں شرکت کرسکتی ہیں۔ دلکش مریم تک آپ کی شادی کی مبارک باد ان سطور کے ذریعے پہنچ جائے گی۔ اپنی نگارشات کو ارسال کرنے میں جو دشواریوں پیش آتی ہیں‘ ان تکالیف سے انکار ممکن نہیں‘ ہم آپ کی کوشش کو سراہتے بھی ہیں اور اپنی ایسی بہنوں کا خیال رکھنے کی بھی کوشش بھی کرتے ہیں۔
طیبہ خاور سلطان… وزیر آباد
ڈیئر طیبہ! سدا سہاگن رہو، یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی کہ آنچل نے آپ کی ذات میں بہت سی مثبت تبدیلیاں پیدا کیں۔ بے شک وہی لوگ کامیاب بھی ہوتے ہیں جو نہ صرف اچھی باتوں کو پڑھتے ہیں‘ اپنا مطالعہ وسیع کرتے ہیں بلکہ اس پر عمل بھی کرتے ہیں کیونکہ علم اسی وقت مفید ہوتا ہے۔ جب اس پر عمل بھی ہو۔ ہمارے شہر میں کچھ دن قیام پذیر رہیں اور یہاں گھوم پھر کر آپ کو اچھا لگا، خوشی کی بات ہے۔ ویسے بھی اس شہر کو عروس البلاد کہا جاتا ہے اور رونقوں کا یہ شہر ہر کسی کو خوش آمدید کہتا ہے۔ نیا سلسلہ آپ کو پسند آیا، جان کر اچھا لگا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو نیک و صالح اولاد سے نوازے‘ آمین۔
ایس این شہزادی کھرل… جڑانوالہ
پیاری شہزادی! جگ جگ جیو، آپ کا شکوہ پڑھا اب جواب شکوہ حاضر ہے۔ آپ کی نگارشات موصول ہوتی ہیں تو ان میں سے بہترین چیزیں منتخب کرلی جاتی ہیں۔ شاید اسی وجہ سے باقی نگارشات نظر انداز ہوجاتی ہیں اور دیگر بہنوں کے ساتھ بھی یہی معاملہ ہوتا ہے کہ سب سے اچھی چیز کو شامل کیا جاتا ہے۔ بہرحال آئندہ آپ کا پیغام شامل کرلیں گے۔ مصباح علی سید اور اُم ایمان قاضی تک آپ کے ناول کی فرمائش ان سطور کے ذریعے پہنچ جائے گی۔ آپ کے ساتھ ساتھ ہم بھی منتظر ہیں کہ کب یہ مصنفین آنچل کی زینت بنتی ہیں اور جہاں تک تبدیلی کی بات ہے وہ تو ضرور آئی ہے۔ بس یہ تبدیلی عوام کے حق میں نہیں۔ انہیں پہلے سے زیادہ مشکل حالات میں ڈال دیا گیا ہے۔
حنا شبیر… سیالکوٹ
عزیزی حنا! سدا شاد رہو، آپ کے علمی شوق اور لگن کے متعلق جان کر اچھا لگا۔ بے شک جب مطالعہ کا شوق پیدا ہو جائے تو ایسی ہی کیفیت ہوتی ہے کہ پڑھے بغیر سکون میسر نہیں آتا، چاہے کتاب کا ایک صفحہ ہی کیوں نہ پڑھا جائے۔ آپ تمام سلسلوں میں شرکت کرسکتی ہیں۔ آئندہ آپ کے تبصرے کا انتظار رہے گا۔ امید ہے شریک محفل رہیں گی۔
نور چودھری… کمالیہ
ڈیئر نور! آباد رہو، آپ کا مفصل خط پڑھ کر بے حد اچھا لگا۔ لکھائی کی بات جانے دیں، ہم اصل مطلب و مفہوم تک پہنچ ہی جاتے ہیں۔ چاہے آپ کیسے بھی لکھیں، ویسے آپ کی لکھائی تو اچھی ہے۔ اس دنیا بعض لوگ ایسے ہیں جو نہ خود مطمئن اور سکون سے رہتے ہیں اور نہ ہی دوسروں کو خوش حال اور آسودہ دیکھ سکتے ہیں۔ شاید آپ کے ارد گرد بھی ایسے ہی لوگ موجود ہیں۔ پھر ایسے مشکل حالات میں ہی اپنے اور پرائے کی پہچان ہوتی ہے۔ یہ مشکلات جہاں آزمائش ہیں وہیں زندگی کے بہت سے رموز سے واقفیت بخش دیتی ہیں اور آپ کو کھرے کھوٹے کی پہچان بھی کرا دیتی ہے۔ ان معاملات پر آپ رنجیدہ مت ہوں، اگر آپ کے والدین آپ کے مستقبل کے لیے کوئی فیصلہ کریں گے تو یقینا سوچ سمجھ کر ہی کریں گے۔ آج اللہ سبحان و تعالیٰ نے آپ کے گھر کو خوشیوں کا گہوارہ بنادیا ہے تو وہ سب آپ سے ناتا جوڑنے کے خواہاں ہیں۔ بہرحال دعا گو ہیں کہ آپ کے معاملات بہتر ہوجائیں اور جو آپ کے حق میں بہتر ہو وہی معاملہ اللہ سبحان و تعالیٰ عطا فرما دے‘ آمین۔
سلمیٰ غزل… کراچی
پیاری سلمیٰ! سدا سہاگن رہو، چلیں اس بات کا تو آپ نے اقرار کرلیا کہ ہمیشہ آپ کے افسانوں کو جگہ دی گئی اور کبھی رد نہیں کیا۔ ہاں البتہ دیر سویر ضرور آپ کے حصے میں آئی اور وجہ بھی یہی ہے کہ کثیر تعداد میں کہانیاں موصول ہوتی ہیں سب کو بیک وقت خوش رکھنا اور ناراض ہونے کا موقع نہ دینا کافی مشکل ہوتا ہے۔ اسی لیے اس طرح کے معاملات درپیش آتے ہیں۔ اگر یہ تحریر بھی ہمیں موصول ہوتی تو ضرور شامل ہوجاتی، بہرحال جانے دیں، آپ کی یہ تحریر پرچے کی زینت بن گئی ہے۔ امید ہے آئندہ بھی قلمی تعاون حاصل رہے گا۔ دعائوں کے لیے جزاک اللہ۔
لیلیٰ رب نواز… ودھیوالی بھکر
پیاری لیلیٰ! سدا مسکرائو، شکوہ و شکایات سے بھرپور آپ کا خط موصول ہوا۔ بے شک آپ کا کہنا بجا ہے کہ جب آپ اپنی نگارشات بھیجتی ہیں تو انتظار بھی خودبخود آپ کے حصے میں آجاتا ہے اور پھر نام نہ دیکھ کر کوفت بھی ہوتی ہے۔ بہرحال جہاں تک شاعری کی بات ہے تو شاعری کے لیے اس کا معیاری ہونا ضروری ہے اور قافیہ ردیف کے علاوہ اشعار کا ہم وزن ہونا بھی ضروری ہے۔ اگر شاعری میں اس طرح کی خامیاں ہوں گی تو لگانا ناممکن ہوجاتا ہے۔ اس لیے معذرت۔ آپ شاعری کے علاوہ دیگر سلسلوں میں شرکت کریں۔ امید ہے جلد شامل کرلیں گے۔
انعم زہرہ… ملتان
عزیزی انعم! جگ جگ جیو، ہر ماہ آپ سے نصف ملاقات بے حد خوشی کا باعث بنتی ہے اور یہ قلمی رابطہ اب تو بے حد خلوص اور اپنائیت کا رشتہ بن گیا ہے۔ آپ کی خوشی ہماری خوشی کا باعث بنتی ہے اور آپ کا دکھ از خود ہی رنجیدہ کردیتا ہے۔ یہ جان کر بے حد مسرت کا احساس ہوا کہ آپ کی ذاتی کاوش اور شاعری کو سب نے سراہا۔ منقبت پڑھ کر آپ ہر ایک کی داد و تحسین کی مستحق ٹھہریں۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو بہت سی خوشیاں عطا فرمائے اور آپ کو بہت سی رحمتوں اور برکتوں سے نوازے‘ آمین۔
زونا خرم… دینہ
ڈیئر زونا! شاد رہو، آپ کی تحریر ’’ہماری انوکھی جٹھانی‘‘ حجاب میں ’’ہیں کواکب کچھ‘‘ کے عنوان سے لگ چکی ہے۔ البتہ آپ سے رابطہ کرنا مشکل نظر آرہا ہے کیونکہ تحریر پر درج آپ کا پتا غیر واضح ہے۔ اپنے مکمل پتا سے آگاہ کرنے کے لیے آپ دفتر کے نمبر پر رابطہ کریں یا پھر تحریری طور پر اپنا مکمل پتا ارسال کردیں تاکہ قلمی رابطہ بحال رہے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو مزید کامیابیوں سے نوازے۔
شگفتہ خان… بھلوال
پیاری شگفتہ! سلامت رہو، خط کے ذریعے آپ کی علالت کے متعلق علم ہوا۔ بے شک صحت و تندرستی اللہ سبحان و تعالیٰ کی عطا کردہ وہ عظیم نعمت ہے جس کا ہم شکر ادا کر ہی نہیں سکتے اور اس نعمت کی قدر و اہمیت کا اصل اندازہ بھی اسی وقت ہوتا ہے جب بیماری ہمیں گھیر لیتی ہے۔ بہرحال خوشی غم، دکھ و تکلیف سب اللہ سبحان و تعالیٰ ہی کی طرف سے آتی ہیں۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ جلد روبصحت ہوجائیں‘ آمین۔ ہم آپ کو ہرگز نہیں بھولے۔ بس ہر وقت نام لے کر ذکر نہیں ہوتا، لیکن آپ جیسے قارئین کی یاد ہمیشہ ہمارے دل میں تروتازہ رہتی ہے۔ قارئین سے بھی دعائے صحت کے ملتمس ہیں۔
نجم انجم اعوان… کورنگی کراچی
ڈیئر نجم! مانند نجوم جگمگاتی رہو، آپ کی مشکلات کا انداز ہوگیا۔ بے شک آپ کا کہنا درست ہے کہ کراچی جیسے شہر میں بغیر کسی روزگار کے گزارہ مشکل ہے۔ یوں اچانک سے شوہر کی نوکری ختم ہوجانا بہت سے مسائل آپ کے لیے لایا ہوگا۔ لیکن ان حالات میں مایوس ہونے کے بجائے اسے اللہ سبحان و تعالیٰ کی طرف سے اپنے لیے آزمائش سمجھیں اور ایسی آزمائش میں وہ اپنے نیک بندوں کو ہی ڈالتا ہے۔ ہمارے پاس تو آپ کی تسلی و تشفی کے لیے صرف چند الفاظ ہی موجود ہیں اور دعائوں کا ذخیرہ۔ اپنے رب کی رحمت سے مایوس نہ ہوں، ضرور وہ کوئی نہ کوئی سبب بنادے گا اور آپ کی مشکل کو دور کردے گا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کی تمام مشکلات اور مصائب کو دور کرکے جلد راحت کا معاملہ فرما دے‘ آمین۔
ریما نور رضوان… کراچی
ڈیئر ریما! سدا سہاگن رہو، آپ کی ناساز طبیعت کے متعلق علم ہوا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو صحت و تندرستی عطا فرمائے اور ہر بیماری و غم سے محفوظ رکھے‘ آمین۔ قارئین سے بھی دعائے صحت کے ملتمس ہیں۔
تبسم بشیر حسین…ڈنگہ
ڈیئر تبسم! سدا مسکرائو، آپ کا شکوہ کچھ سمجھ میں نہیں آیا۔ آنچل بھی آپ کو اپنا ہی سمجھتا ہے اور آپ کی نگارشات بھی شائع کرتا ہے۔ جہاں تک کہانیوں کی بات ہے تو ابھی آپ کو بہت محنت کی ضرورت ہے۔ سادہ اور آسان الفاظ میں کہیں تو آپ فی الحال اپنا مطالعہ وسیع کریں۔ دیگر نامور مصنفین کے انداز تحریر کو سامنے رکھیں اور اس محنت کے بعد لکھنے کی طرف آئیں۔ اگر تحریر میں اتنی گنجائش ہوتی ہے کہ تھوڑی بہت اصلاح کے بعد لگ جائے تو ہم ضرور اصلاح کرتے ہیں، لیکن ابھی آپ کو اصلاح سے زیادہ مطالعہ کی ضرورت ہے۔ ناقابل اشاعت تحریریں واپس نہیں بھیج سکتے۔ آپ آئندہ فوٹو اسٹیٹ اپنے پاس رکھا کریں۔
مہرین کنول… کراچی
ڈیئر مہرین! جگ جگ جیو، آپ کی تحریر ’’جو لا وارث نہیں‘‘ اور ’’سوچتا ہوں وہ کتنے معصوم تھے‘‘ موصول ہوئی۔ پڑھ کر اندازہ ہوا کہ ابھی آپ کو مزید محنت کی ضرورت ہے۔ جن موضوعات پر آپ نے قلم اٹھایا ہے ان پر پہلے بھی مصنفین لکھ چکی ہیں اور یقینا ایسی تحریریں آپ کی نظروں سے بھی گزری ہوں گی۔ اس کے باوجود آپ کے انداز تحریر میں پختگی نہیں۔ اس لیے پوی توجہ سے حالات و واقعات ذہن میں ترتیب دیں، پھر قلم بند کیا کریں۔ امید ہے مایوس ہونے کے بجائے ان باتوں پر عمل کریں گی اور لکھائی پر بھی خاص توجہ دیں گی۔

ناقابل اشاعت:۔
بچکانہ تحریر، کامل یقین، تیری چاہ میں، وائلن، رواجوں کے اسیر، آن اور انا، میری عائشہ، چڑیا چگ گئیں کھیت، خوشیوں کے عوض، میری پہلی محبت، یمنیٰ اختر، کلیاں اور خوش بو، تھا یقین کے آئے گی راتاں کبھی، ذرا پھر سے کہنا، سرخ محبت، وہ پیدا ہوا تو عجیب تھا، سہج کر قدم دھر مٹیارہ، محبت ہم سفر میری، بنت آدم، صلیپ، سوچتا ہوں وہ کتنے معصوم تھے، جو لاوارث نہیں، چکنا چور، ڈبل 2 چورن مصالحہ، فنا ہو کر، ایک پھول کھلا اور ٹوٹ گیا، کب ملیں گے صنم، ایک نئی صبح، لمحہ فکریہ، بیٹے کی بارات، نصیب، دل لگی، بے نام، افسانہ ایک رشتے کا، بدلتی رت بدلتے لوگ، معیار محبت، بن مانگی محبت، نیو جنریشن، دھنک کے رنگ، تجھے چاہا تھا، سوچ، احساس، گڑیا، ایک خواب کی بات، ہماری آرزو، دل مضطرب، صبح نو کی نوید، محبت جان کی بازی، محبتوں کے نصیب، مہر وفا اور تم، یہ چراغ بے نظیر ہے، میرے ہاتھ ہیں لہو لہو، یہ ستارہ بے زیاں ہے، پھر میری آنکھ سحر تک روئی‘ سرخ محبت۔

قابل اشاعت:۔
دل دعا اور دسمبر، حوصلے کی جیت، میرے بخت کا ستارہ، دل کی آواز سن، ہارے بھی تو بازی مات نہیں، تم یوں ملے، دل مضطرب، کافر‘ رواجوں کے اسیر۔

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
Close