Aanchal Sep-16

ہم سے پوچھئے

شمائلہ کاشف

آصفہ قیصرانی… شادن لنڈ
س: آپی کیا آئنسٹائن اور ویلنٹائن ڈے بھائی بھائی تھے؟
ج: نہیں‘ دونوں میں بہنوئی اور سالے کا رشتہ تھا۔
س: اجی مرغی پہلے پیدا ہوئی تھی یا انڈا؟
ج: تمہیں اس سے کیا‘ پہلے مرغی کھالو پھر انڈا فرائی کرکے وہ بھی کھالو‘ پیٹو۔
س: آپ ہر وقت ’’زعفران کا کھیت‘‘ کیوں بنی رہتی ہیں؟
ج: تم جو کریلے کے کھیت سے کریلے چراچرا کر کھاتی رہتی ہو‘ کڑوی کریلی۔
بختاور افتخار… عارف والا
س: آپی کنجوس خوش آمدید تو کہہ دو؟
ج: کوئی زور زبردستی ہے کیا ‘نہیں کہتے کرلو جو کرنا ہے ہنہہہ۔
س: آپی کہا جاتا ہے کہ عقل بڑی کے بھینس‘ مجھے تو بھینس ہی بڑی لگتی ہے‘ کیا خیال ہے؟
ج: تم جیسی عقل کی اندھی کو بھینس ہی بڑی لگے گی اب اس کی قربانی مت کردینا۔
س: بھینس بھاں بھاں کیوں کرتی ہے؟ انسانوں سے انسان کی زبان میں بات کیوں نہیں کرتیں؟
ج: ویسے جو بات تم کررہی ہو مجھے تو وہ بھی انسانوں والی نہیں لگ رہی‘ بھاں بھاں ہی………
س: اچھی سی دعا دیں‘ خصوصاً رزلٹ کے بارے میں کہ اچھے نمبر آئیں‘ اللہ حافظ۔
ج: اللہ کرے اس مرتبہ تم اگلی کلاس میں دھکے سے پہنچ ہی جائو ورنہ… اللہ کامیاب کرے‘ آمین۔
ارم کمال… فیصل آباد
س: اکثر جو ہم سوچتے ہیں وہ ہوتا کیوں نہیں اور جو نہیں سوچتے وہ ہوجاتا ہے کیا وجہ ہے؟
ج: تم اپنے دماغ پر اتنا زیادہ زور مت ڈالو یہ سوچ سوچ کر کہیں وہ اس عمر میں تمہارا ساتھ چھوڑ گئے تو سٹھیا جائو گی۔
س: یہ شوہر حضرات کو دوسروں کی بیوی ایشوریہ اور اپنی بیوی ماسی کیوں لگتی ہے؟
ج: تم ماسی والے حلیے میں رہوگی تو تمہیں سب ماسی ہی سمجھیں گے ناں پھر کب آرہی ہو یہاں کام کرنے۔
س: چاند تاروں سے بھی حسین‘ پھولوں سے زیادہ معطر بھلا کون‘ جلدی سے بتایئے؟
ج: میں اور کون بس اب برے برے منہ مت بنائو۔
س: شمائلہ جی‘ اردو میں بتایئے یہ عشق کا وائرس حملہ کرے تو دفاع میں کیا کرنا چاہیے؟
ج: اسی لیے کہتے ہیں صفائی کا خیال رکھا کرو اب لگ گئے ناں اس بیماری کے وائرس۔
س: پانچوں انگلیاں گھی میں اور سر کڑاہی میں کب ہوتا ہے؟
ج: جب میاں جی کی ساری تنخواہ مٹھی میں آجائے۔
طیبہ نذیر… شادیوال گجرات
س: آپی آپ نے مجھے مبارک باد نہیں دی بھلا کس چیز کی اگر پتا ہے تو بتادیں اگر آپ مجھے جانتی ہیں تو؟
ج: مبارک باد دے دی تو پھر سب مٹھائی کے ساتھ دعوت بھی مانگیں گے اور تم ٹھہری سدا کی کنجوس۔
س: زندگی آسان کب لگتی ہے؟
ج: جب میاں آفس سے تھکا ہارا آئے اور دن بھر کے جمع شدہ برتن دھوئے تب۔
جی کنول خان… موسیٰ خیل
س: آداب شمائلہ آپی! پرستان کی شہزادی آپ کی محفل میں تشریف لائی ہے‘ کیا لگا آپ کو؟
ج: ہمیں تو چڑیل لگی‘ جھوٹ کی عادت نہیں مجھے۔
س: آپی جی جھوٹ کے پائوں کیوں نہیں ہوتے؟
ج: مگر تمہارے تو ہیں‘ ہاتھ بھی پائوں بھی۔
نورین انجم اعوان… کراچی
س: پھول کھلے نہ کھلے بہار تو ہے
تم آئو نہ آئو انتظار تو ہے
ج: کس کا انتظار ہے ابھی تو اپنے رزلٹ کا انتظار کرو‘ باقی سب چھوڑو۔
س: مخلص کون ہوتا ہے اپنے یا پرائے؟
ج: ان چکروں میں نہیں پڑو اسکول کا ہوم ورک کرو۔
س: میرا دل کرتا ہے کہ آپ کی کرسی غائب کردوں پھر آپ بیٹھیں گی‘ کہاں ہی ہی ہی۔
ج: آپ کی امی کے سر پر ہی ہی ہی۔
شائستہ جٹ… چیچہ وطنی
س: شمائلہ جی! کیسے مزاج ہیں؟ عید کیسی گزری؟
ج: نہیں بتائوں گی ورنہ تم میری عیدی میں سے ادھار مانگو گی۔
س: سنا ہے کہ اکیسویں برس میں ہم آنٹی ہوگئے تو پھر آپ جناب کا تو اللہ حافظ…؟
ج: دو سے پہلے آپ ایک عدد کھا گئیں‘ سچ میرا اللہ حافظ۔
س: یہ مانو بھی نہ ہر وقت میٹھی ٹافیاں کیوں پسند کرتی ہے؟
ج: تم جیسی بندریا کو دے کر اپنی جان بخشی کروا سکے۔
س: مانو آج کل میرے خلاف ہورہی ہے بتائو کیا کروں؟
ج: تم اس کے خلاف ہوجائو اور پھر ایک جنگ شروع کرو‘ جیت کی خبر ہمیں ضرور دینا۔
مہناز یوسف… اورنگی ٹائون‘کراچی
س: شمائلہ سب میرے حسن سے جلتے ہیں کیوں؟
ج: اس سال کا سب سے بڑا جھوٹ۔
س: دل دیتا ہے رو رو دُھائی… بتائو کیا؟
ج: کسی سے تم پیار نہ کرو۔
س: اللہ شمائلہ میرے سر میں دو سفید بال‘ ہائے اللہ ابھی میری عمر ہی کیا ہے؟
ج: تم نے تو بتائی نہیں‘ سفید بالوں نے ظاہر کردی۔
س: انہیں بھوک بہت لگتی ہے‘ میں پکا پکا کر تھک جاتی ہوں… کھانے… آپ کیا سمجھیں؟
ج: کیا کیا پکا کر‘ ان کا دماغ… جو سچ ہے وہی سمجھی۔
وثیقہ زمرہ… سمندری
س: آپی میری شادی کیا ہوئی آپ نے پوچھنا ہی چھوڑ دیا ہے؟
ج: پوچھا تھا تمہارے ان سے… کہنے لگے اللہ بچائے اس چڑیل سے۔
س: میری آمد آپ کو کیسی لگی سچی بتائو؟
ج: سچ کہوں گی تو تمہارے سسرال والے میرے حامی ہوجائیں گے‘ اس لیے رہنے دو۔
س: کوئی اچھی سی دعا دیں؟
ج: اللہ تمہیں ساس کو خوش رکھنے کے گُر سکھائے‘ آمین۔
شبنم کنول… پاپا نگری
س: مجھے کچھ نہیں سننا آپ نے کہا تھا کہ اگلی عید پر عیدی دوں گی لیکن اس بار…
ج: چنا چاٹ پر ٹرخا دیا‘ اب منہ بنائو ہم ایسے ہی ہیں۔
س: آپی بقر عید پر بکرے کی قربانی ہوتی ہے اور چھوٹی عید کس چیز کی قربانی کرتی ہیں۔
ج: عیدی کی قربانی… بے وقوف۔
س: کبھی کبھی میں سوچتی ہوں آپ کتنی خوب صورت ہوں گی؟
ج: بے انتہا اور اس میں سوچنے والی کوئی بات نہیں۔
س: آپی آپ نے یہ بتایا نہیں کہ آپ کی شادی ہوئی ہے یا نہیں لیکن جیجا جی کا نام ہی بتادیں؟
ج: کیوں تم نے ان سے ٹیوشن پڑھنی ہے کیا۔
س: جارہی ہوں عید پر بھی کھا جانے والی نظروں سے دیکھ رہی ہیں‘ اجازت دیں؟
ج: تم جو پیسٹری جیسا میک اپ کرکے آئی ہو‘ میں کیا سب ہی کھاجانے والی نظروں سے دیکھ رہے ہیں۔
ام معاویہ… خوشاب
س: آپی سڑک پر عیدی آپ ہی اکٹھی کررہی تھی ناں؟ کتنی بنی‘ کہاں خرچ کی؟
ج: لو جی میرا ہاتھ پکڑ کر سدا لگاتی ہوئی تم چل رہی تھیں یہ تو تم بتائو۔
عائشہ اے بی… جھڈو
س: مجھے سسرالی ناموں سے تنگ مت کرنا کیونکہ میں سنگل ہوں؟
ج: صحت سے تو ڈبل روٹی لگتی ہو۔
س: کیا مجھ سے دوستی کریں گی؟
ج: تحفہ کی شرط پر۔
س: چلتی ہوں آئی نو آپ جانے نہیں دینا چاہتیں مگر دوسروں کا بھی تو نمبر آئے گا نا؟
ج: چلتی ہو تو چلتی جائو مگر میرا پرس تو چھوڑ کر جائو۔
نجم انجم اعوان… کراچی
س: شمو رانی یہ ارم کمال صاحبہ کے لفظ ’’وہ‘‘ کا مطلب آسان لفظوں میں سمجھایئے‘ پلیز…
ج: جو حور کے ساتھ ہوتا ہے لنگور… اب اس سے زیادہ آسان الفاظ نہیں اب میرے پاس۔
س: دھم… دھڑام… ہائے مر گئی‘ شمو رانی یہ ٹوٹی ہوئی کرسی کیا میرے لیے ہی خاص کر رکھی تھی۔ اب باہر نکالو گی یا یونہی پھنسی رہوں گی‘ پلیز… ہائے…؟
ج: یہ آپ کے ’’وہ‘‘ نے بھیجی تھی اور کہا تھا جب میری ’’وہ‘‘ آئے تو اسے اسی پر بٹھایئے گا۔
ریما نور ضوان… کراچی
س: شمائلہ آپی… کیسی ہیں؟
ج: بہت ہی حسین و خوب صورت‘ ویسے آپی کہہ کر عمر چھپا رہی ہو تم چلاکو خانم۔
س: ہمارے سوالات سے کبھی کوفت یا الجھن ہوئی؟
ج: اُف… پوچھا بھی تو صرف سوالات۔
س: آپی کبھی دل چاہا کہ اب جواب نہیں دینا؟
ج: ایمان سے تمہارے لیے دل چاہا لیکن تم شکایت کردیتی ہو اس ڈر سے دے رہی ہوں۔
س: آپی سب سے زیادہ کس طرح کے سوالات سے لطف اندوز ہوتی ہیں؟
ج: ڈھنگ کے سوالوں سے۔
ایم فاطمہ سیال… محمود پور
س: آپی جان کیسی ہیں آپ؟
ج: اب بار بار اپنے منہ سے تعریف کرتی کیا اچھی لگوں گی۔
س: غم دل کو ان آنکھوں سے…؟
ج: پھسل جانا بھی آتا ہے‘ ہم اب ڈھیٹ ہوگئے ہیں لُڑک جانا بھی آتا ہے۔
س: یہ آپ ہمارے سوالوں کے جواب میں ہمیں ساس‘ نند اور ہونے والے کا حوالہ دے کر چڑانا چاہتی ہیں؟
ج: ایمان سے نہیں بلکہ لوگوں سے اجتماعی دعا کروانا چاہتی ہوں تاکہ تم بے چاری کی بھی کسی بے چارے سے دھوم دھام سے شادی ہوجائے۔
س: آپی! یہ شب غم‘ تنہائی اور مچھروں کی لڑائی‘ آخر کیا کریں؟
ج: کھٹملوں سے بھی دوستی کرلو‘ پھر تم سب مل کر آپس میں خوب باتیں کرنا تنہائی غمِ تنہائی سر پر پیر رکھ کر بھاگ جائے گی۔
س: آپی آپ کی ساس بتارہی تھیں کہ آپ ان کی بڑی حکم عدولی کرتی ہیں؟
ج: جب ہی تو تمہیں بہو بنانے کا سوچتی ہیں۔
انیلہ طالب… گوجرانوالہ
س: السلام علیکم سویٹ اینڈ کیوٹ سی اپیا جانی پہلی بار آپ کی بزم میں شامل ہوئی ہوں‘ جلدی سے آٹو گراف دے دیں؟
ج: آٹو تمہارے لیے باہر منتظر کھڑا ہے‘ لیکن اس میں پوری نہیں آئو گی تم۔
س: اچھا یہ بتائیں آپ کو کبھی جب ناکامی ملتی تھی تو کیسے ڈپریشن سے باہر نکلتی تھیں؟
ج: کیوں تم امتحان میں فیل ہوئی ہوگی ہو کیا؟
س: مجھے آپ سے ملنے کا بہت شوق ہے‘ کیسے ملوں؟
ج: خواب خرگوش کے مزے اٹھائو۔
س: آخری اور بہت اہم سوال‘ اپیا کامیاب زندگی کے لیے کیا کرنا چاہیے؟
ج: کامیاب مرد سے شادی۔
عائشہ رحمن ہنی… ریالی‘ مری
س: مابدولت شہزادی جہان تشریف لارہی ہیں‘ ویلکم کیجیے؟
ج: شہزادی صاحبہ گدھے کی سواری بہت خوب لگ رہی ہے آپ پر۔
س: ارے ہماری خوب صورتی دیکھ کر حیران رہ گئی نا؟
ج: خوب صورتی نہیں اسے خوف صورتی کہتے ہیں جسے دیکھ کر سب خوف زدہ ہوجائیں۔
س: اُف اتنا کھرا جواب… کہیں میں نے آپ سے ادھار تو نہیں مانگ لیا آپی؟
ج: تم مانگ بھی نہیں سکتیں کیونکہ پہلے ہی بہت مقروض ہو ہماری۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
Close