Aanchal May 15

ہمارا آنچل

ملیحہ احمد

سلامِ شوق مدیرہ‘ پیاری پیاری قارئین‘ آنچل سے منسلک تمام ٹیم ممبرز اور ان افراد کے لیے جو سب سے پہلے حرا قریشی کو ڈھونڈ کر پڑھتے ہیں اور پھر باقی سلسلے بس انہی محبتوں اور چاہتوں کے زیر اثر اپنا تعارف بھیجنے کی ادنیٰ سی جسارت کررہی ہوں۔ اس امید پر کہ ٹاپ پر نہ بھی ہو لاسٹ فہرست میں تو ضرور خوش آمدید کا تمغہ حاصل کرلیں۔
میں؟ میری ذات؟ میری شخصیت‘ کچھ بھی نہیں۔
میری زیست؟ محبت کے دائروں میں مقید۔
میری کامیابی؟ والدین‘ اساتذہ اور احباب جاں کی محنتوں‘ ریاضتوں کا حاصل ہے۔
میری خوش قسمتی؟ والد حیات ہیں‘ محبت کرنے والے بہن بھائی ہیں۔
میری بد قسمتی؟ ایک چراغ ہے جو شدید تیرگی میں بھی روشن نہیں ہوپاتا۔ المختصر یہ کہ ماں نہیں ہے۔
باعثِ کشش چیزیں؟ دسمبر‘ فیض کی شاعری‘ احباب من کے ستائش سے پُر جملے‘ تحفظ کا سائباں فراہم کیے بھائی‘ بابا کا سر پر رکھے دست اور دعائیں۔
میری کمزوریاں؟ ذہانت‘ محنتی لوگ‘ مسکراتے نونہال‘ میرے بابا…
میری خوبیاں؟ یہ تو آپ جناب بتائیں گے۔
میری تعلیم؟ ڈبل بیچلر پلس ایم ایڈ
میری فیورٹ کتاب؟پاک قرآن سے بڑھ کر کوئی نہیں۔
پسندیدہ مصنفہ؟ بہت سی ہیں مگر عمیرہ پہلے نمبر پر۔
پسندیدہ وقت؟ طلوع سحر‘ غروب آفتاب۔
پسندیدہ جگہ؟ خانہ کعبہ۔
پسندیدہ موسم؟جس موسم میں بھی دسمبر کا سماں آئے۔
پسندیدہ رنگ؟ شفق اور فلک کے بدلتے تیوروں کے سبھی رنگ۔
پسندیدہ منظر؟ جب بھی‘ جہاں بھی‘ معصوم نونہال ہالۂ دعا بنائیں۔
میرا اثاثہ؟ میرے بابا ‘ میری شاعری‘ میری کتابیں‘ احباب من۔
پسندیدہ مہینہ؟ اکتوبر (بھئی اسی ماہ کی پندرہ تاریخ کو دنیا میں جو تشریف لائے‘ یہی وجہ ہے بس۔
میرے شوق؟ مطالعہ سرفہرست ‘ شاعری کرنا‘ لکھنا‘ دوستوں سے گپ شپ (جس کے لیے شاذو نادر ہی اب وقت دستیاب ہوتا ہے)۔
پسندیدہ مہک؟ مہندی کی۔
پسندیدہ تعلق؟ جو بشر کا اپنا ربّ دو جہاں سے ہوتا ہے۔
میری تھکن اور آرام کا مصرف؟ نماز‘ ذکر الٰہی۔
میری دنیا پہلی چاہت؟ لیلتہ القدر۔
میری گائیڈر؟ ریگ جاں‘شمائل۔
میری نیکی؟ خود کو مصروف رکھنا ربّ کے پسندیدہ کاموں میں۔
میری غلطی/برائی؟ کوئی ایک ہو تو بتائوں‘ صفحے کم پڑجائیں گے۔
میری پیاس؟ علم (نت نئی چیزوں سے متعلق)
میری حوصلہ افزائی؟ شعاع‘ خواتین‘ کرن‘ آنچل کے تعریفی کلمات ۔
میری محبت؟ اللہ جی (سب کو چھوڑ سکتے ہیں قادرِ مطلق کو نہیں)۔
پسندیدہ جانور؟ گلہری (خصوصاً جب کچھ کھاتی ہے)۔
پسندیدہ شاعر؟ فاخرہ بتول۔
پسندیدہ لباس؟ (جو حجاب کا بہترین سامان فراہم کرے)۔
پسندیدہ ایجاد؟ موبائل۔
پسندیدہ ناول؟ لاتعداد۔
پسندیدہ شعبہ؟ ٹیچنگ (کیونکہ معلم ہونا پیشہ نہیں پیغمبری ہے)۔
پسندیدہ قلم؟ جو معیاری تخلیق کا باعث بنے۔
بس اتنا کافی ہے کہ بقول شیکسپیئر کے ’’اختصار کمالِ ذہانت ہے‘‘ مزید ٹی وی‘ میوزک‘ فلمز وغیرہ سے کوئی خاص لگائو نہیں۔ قابل افراد کو دیکھ کر اپنی اندر مزید صلاحیتیں اجاگر کرنے کو جی چاہتا ہے کجا کے رشک و حسد میں مبتلا ہوجائیں۔ معیاری تحریریں پڑھ کر اپنی تحریری رگ میں بھی ارتعاش برپا ہوجاتا ہے۔ آخر میں پھر سے ڈھیر ساری دعائیں اور نیک تمنائیں‘ آنچل سے منسلک تمام افراد کے لیے دعائیں کرتے رہیے گا کہ ہماری کامیابی آپ کی دعائوں کا حاصل ہی تو ہے۔ بطور خاص آنچل کے لیے
مہکے صدا بہار کی صورت تیرا وجود
تُو مسکرائے‘ شام کی رعنائیوں کے ساتھ

السلام علیکم! آپ سب بہنیں حیران ہورہی ہوں گی کہ یہ کون؟ تو چلیں میں آپ کو اپنے بارے میں کچھ بتاتی ہوں‘ نام تو آپ لوگ پڑھ ہی چکے ہیں۔ اداس و ویران آنکھیں جن میں ہلکی ہلکی نمی سدا موجود رہتی ہے‘ بالوں کو سمیٹ کر کیچر میں جکڑنے کے بعد بھی چہرے کے اطراف کو چھوتی لٹیں نارمل سے کپڑے بنا چوڑی بالی لونگ مہندی کاجل کہ سراپا لبوں پر چپ کبھی کھانا بناتے تو کبھی صفائی کرتے‘ کبھی کپڑے دھوتے تو کبھی انہیں پریس کرتے‘ کبھی بچوں کے پیچھے نڈھال ہوتے‘ کبھی اپنے ہی آپ میں گم ہر وقت سوچتے رہنا‘ اپنے اردگرد ڈائریاں پھیلائے میں ہوں شہانہ عابد…! بنی سنوری خوشبوئوں میں مہکی نفاست سے چوڑی مہندی لپ اسٹک سے سجی اسٹائل سے بنائے گئے بال کچھ کچھ نخریلی مگر بہت جلد سب سے فری ہوجانے والی ہر وقت ہر محفل میں قہقہے بکھیرنے والی بہن بھائیوں سے لڑ جھگڑ کر فرمائشیں پوری کروانے‘ گھنٹے بھر کی جان پہچان میں گفٹ تھمادینے والی‘ آنکھوں میں شرارتی سی چمک ہونٹوں پرہر وقت مسکراہٹ ہلکے ہلکے گنگناتے رہنا‘ حد سے زیادہ حساس ہوناہر رشتے سے محبت کرنا سب پر بھروسہ کرلینا اور بھروسہ ٹوٹنے پر خود بھی ٹوٹ جانا‘ ہفتوں روتے رہنا‘ بچوں کے ساتھ بچی بنی گھومنے پھرنے کی شوقین ایسی تھی شہانہ محمود شیخ! تعارف ہے تو عجیب سا مگر شاید میں خود کے بارے اور نہ لکھ سکوں کیونکہ شہانہ محمود سے شہانہ عابد تک کہ سفر میں‘ میں کہیں اٹک گئی ہوں کسی یاد نے دامن تھام لیا ہے ۔ اس سے اتنی جلدی پیچھا نہ چھڑا سکوں گی‘ زندگی رہی اور آپ بہنوں نے چاہا تو پھر ملیں گے اپنی پسند نا پسند خوبی خامی کہ ساتھ تب تک کے لیے اللہ نگہبان اور ہاں بتایئے گا ضرور ہمارا تعارف کیسا لگا‘ کس شہانہ سے مل کر اچھا لگا ویسے مجھے تو…!

السّلام علیم و رحمتہ اللہ و برکاتہ و مغفر اللہ! کیسے ہیں آپ سب؟ اب اپنے تعارف کا آغاز کرتے ہیں لہٰذا توجہ میری طرف‘ مجھے حفصہ کہتے ہیں لیکن میرا نک نیم چنی منی ہے۔ 31 مارچ کوآکر اس دنیا کو آٹھ چاند لگادیئے‘ بہن بھائیوں سے چھوٹی ہوں۔ زیر تعلیم ہوں اور ساتھ ساتھ آنچل لیے کر زندگی کا سفر طے کررہے ہیں۔ آنچل کو 2007ء سے پڑھا اور تازیست پڑھتے رہیں گے ان شاء اللہ۔ آنچل نہایت ہی پیارا اور دلنشین پرچہ ہے‘ اس کو پڑھ کر بہت سی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں۔خوبیوں خامیوں کا تذکرہ مکس کروں گی‘ اپنے دشمنوں کے بارے میں بھی غلط نہیں سوچ سکتی۔ غصے کی بے حد تیز اور منہ پھٹ ہوں‘ اللہ پاک میری یہ بُری عادت ختم کردے‘ آمین۔ ہر اچھی اور پیاری لڑکیوں کی طرح بہت حساس ہوں‘ نماز کی پابند ہوں لیکن فجر کی نماز آہم…! اللہ ہدایت دے مجھے ‘ آمین۔اب باتیں پسند و ناپسند کی‘ کھانے میں صرف چکن بریانی پسند ہے۔ میٹھے میں فرنی‘ لباس میں میکسی‘ جیولری میں انگوٹھی‘ بریسلیٹ اچھے لگتے ہیں۔ ارے پھلوں کا تو ذکر ہی نہیں کیا جی‘ جناب آم اور انناس نہایت شوق سے کھاتی ہوں۔ رنگوں میں سرخ اور ہیزل گرین کلر بہت پسند ہے۔ ایک تمنا ہے کہ اللہ تعالیٰ کے پیارے لاڈلے اور میٹھے محبوب نبی پاک صلی اللہ علیہ سلم کے روضۂ مبارک کا دیدار کروں۔ اللہ ہم سب کی دلی تمنا قبول کرے‘ آمین ثم آمین۔ اچھی شاعری پڑھتی ہوں جو سمجھ آجائے۔ خود بھی شاعری کرلیتی ہوں۔ ناولوں میں ’’محبت دھنک رنگ اوڑھ کر‘ جو ریگ دشت فراق ہے‘ افسوس جاں‘ محبت دل پر دستک‘ دشت آرزو‘ میرے ساحر سے کہو‘‘ بہت بہت اچھے لگے اور ان کو لکھنے والی رائٹرز بھی بہت بہت اچھی لگتی ہیں۔ اللہ ان سب کو کامیابیاں دے‘ آمین۔ آنچل کی تمام ریڈرز بھی بہت اچھی ہیں۔ دوستیں نہ ہونے کے برابر ہیں اگر آپ میں سے کوئی دوستی… خیر آپ سب کی مرضی۔ آنچل کے تمام سلسلے بہت ہی پسند ہیں‘ خاص کر ’’ہم سے پوچھئے‘‘ اچھا لگتا ہے۔ میں نے دل کی تمام باتیں کہہ دیں جو رہ گئیں وہ پھر کبھی سہی‘ آپ سب کی خدمت میں پیش کروں گی۔ میں لفظوں کی کھلاڑی ہوں‘ آپ نے مجھے کبھی جانا ہی نہیں‘ سب سے اہم کام ریڈیو سنتی ہوں ۔ اچھا بھئی جارہی ہوں‘ آخری بات کسی کو دھوکہ مت دینا‘ وہ گھوم پھر کے آپ کے پاس آجائے گا کیونکہ اسے اپنے ٹھکانے سے بہت پیار ہوتا ہے۔ اپنے والدین اور بزرگوں کا خیال رکھیے گا کیونکہ ان کی دعائوں سے آپ اس جہاں میں بھی اور آخرت میں بھی کامیاب ہوں گے‘ اللہ حافظ۔

ارے ارے ڈرنے کی کوئی بات نہیں‘ اندھیرا ہے تو کیا ہوا ہم آگئے‘ روشنی کرنے کے لیے تو جناب ہمیں کرن شہزادی کہتے ہیں۔ دیکھا ہم نے بولا تھا اس لیے بتادیتے ہیں‘ کرن تو روشنی کو بولتے ہیں تو شہزادی کا بھی بتادیتے ہیں‘ اب آپ بول رہے ہوں گے لو بھلا کہاں کی شہزادی توجناب ہم اپنی چھوٹی سی سلطنت کی خوب صورت شہزادی ہیں۔ بس جی بہت آزمالیا‘ لیں سنیں میں نے 11 ستمبر کو اپنی روشنی سے اپنے گھر کو چار چاند لگادیئے۔ (اوہو میرے چار چاند کو اتنا غور سے نہ دیکھو) اور اس لحاظ سے اس کی ساری خوبیاں (صرف خوبیاں) مجھ میں پائی جاتی ہیں۔ خوبیاں یہ ہیں کہ بہت حساس ہوں‘ ہر کسی کے ساتھ فیئر ہوں اور خامیاں تو جناب ہم میں چراغ لے کر بھی ڈھونڈنے سے بھی نہیں ملتیں (ہاہاہا)۔ بس جی اب ہنسنا بند کرو تو ہاںمیں کہہ رہی تھیں کہ میں میٹرک کی اسٹوڈنٹ ہوں‘ ادب سے بے حد لگائو ہے یوں سمجھ لیں کہ کتابی کیڑا ہوں۔میں نے چھٹی کلاس سے ڈائجسٹ پڑھنا شروع کیے اور تمام ڈائجسٹوں میں آنچل میرا فیورٹ رسالہ ہے۔ موسٹ فیورٹ نازیہ کنول نازی‘ آپی سمیرا شریف طور اینڈ ام مریم باجی ہیں۔ کلرز میں بلیک ‘ وائٹ اینڈ اسکائی بلو پسند ہیں۔ جیولری میں نیکلیس اور چوڑیاںپسند ہیں۔ ڈریس میں لانگ شرٹ اور چوڑی دار پاجامہ پسند ہے۔ پرفیوم اور ہر طرح کے گلاب بہت پسند ہیں۔ کھانے سب کھالیتی ہوں‘ بریانی اور طاہری میری فیورٹ ہیں۔ سوئٹ ڈش میں کھیر پسند ہے‘ ایف ایم بہت شوق سے سنتی ہوں۔ طاہر عباس اور فیصل عرفان میرے پسندیدہ آر جے ہیں ۔ مجھے عابی بجو اور بھانجی انابیہ پرنسس بہت یاد آتی ہیں کیونکہ وہ کراچی میں رہتی ہیں۔ مجھے پرنسس انا کی مسکراہٹ بہت پیاری لگتی ہے‘ وہ ہنستی ہے تو ایسا لگتا ہے جیسے زندگی مسکرانے لگی ہو۔ ارے دوستوں کو تو بھول ہی گئی‘ ہمارا گروپ پورے اسکول میں مشہور ہے جن میں سب سے زیادہ پیاری دوستیں کرن فاروق (کشمیری سیب) مریم عالم ‘نبیلہ شاہ‘ نگہت بٹ‘ مشی خان‘ کلثوم ‘ لمبے قد کی وجہ سے پورے گروپ میں مشہور ہے۔ میری دوستوں میں میری جان ہے ۔ اچھا جناب بہت شکریہ‘ میرا تعارف پڑھنے کا اور بتایئے گا ضرور کہ آپ کو میرا انٹرویو کیسا لگا اور اپنی دعائوںمیں یاد رکھیے گا‘ ربّ راکھا۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close