Aanchal Apr 15

سرگوشیاں

مدیرہ

السلام علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ۔
اپریل 2015ء کا آنچل سالگرہ نمبر حاضرِ مطالعہ ہے۔
اللہ تعالیٰ کا شکر ہے اس نے یہ دن دیکھنا نصیب فرمایا۔ آج آپ کے لیے ایک خوش خبری بھی منتظر ہے۔ اللہ کا شکر ہے کہ آپ کی دعائیں اور ہماری کوشش رنگ لائی آپ کے آنچل کی سہیلی و ہم جولی کے بطور پر ایک نیا ماہنامہ جس کی ایک عرصے سے فرمائش کی جا رہی ہے ماہنامہ ’’حجاب‘‘ کی منظوری مل گئی ہے۔ ماہنامہ حجاب جلدی آپ کی آرا اور تجاویز کی روشنی میں ان شاء اللہ آپ کے ہاتھوں میں ہوگا۔ یقیناً اس نئے ماہنامہ کو سجانے سنوارنے میں آپ سب بہنوں کا تعاون اور بھرپور معاونت درکار ہوگی۔
میں سمجھتی ہوں کہ ہم سب ایک فیملی کی مانند ہیں جس طرح تنکا تنکا جوڑ کر گھونسلہ بنتا ہے ایسے ہی قطرہ قطرہ جمع ہو کر بالٹی بھر جاتی ہے۔ حجاب کو سنوارنے سجانے کی ذمہ داری ہم سب کی ہے بطور ایک فیملی ممبر کے آپ سب کو ہی حجاب کے لیے اپنا حصہ ڈالنا ہوگا۔ آپ کے تعاون و مدد کے بغیر ہم بھی ادھورے ہیں اور آنچل اور حجاب بھی ادھورا ہی رہے گا۔ آپ کے بھرپور تعاون نے ہی آپ کے آنچل کو اشاعت کی بلندی پر پہنچایا ہے میں سمجھتی ہوں اگر آنچل کے ساتھ ساتھ آپ کا تعاون حجاب کو بھی مل جائے تو یقیناً وہ دن دور نہیں ہوگا جب حجاب بھی آپ کا مان بن جائے گا۔ ان شاء اللہ تعالیٰ۔
بہنوں سے گزارش ہے کہ وہ اپنی تجاویز اور اپنی تحریریں حجاب کے لیے ارسال کرنا شروع کردیں بہت جلد آپ کے ہاتھوں میں ہوگا۔ یقیناً آپ کو تھوڑا سا انتظار کرنا پڑے گا کیونکہ نئے ماہنامہ حجاب کے لیے اس کے شایان شان انتظامات بھی تو کرنا ہیں۔ آئیں ہم سب مل کر دعا کریں کہ اللہ حجاب کو بھی آنچل کی طرح مقبول عام کرے، آمین۔
مئی کا شمارہ سالگرہ نمبر 2 اور اگست کا شمارہ عید نمبر ہوگا بہنیں نوٹ فرمالیں۔
اس ماہ کے ستارے
چاہت دھوپ چھائوں سی
چاہت و محبت کے حسین رنگوں کو سموئے صدف آصف کی خوب صورت تحریر۔
آئوٹ
زندگی کی خوشیوں سے کھیل جانے والے کھلاڑی کی کہانی عنیقہ کی زبانی۔
میرے بخت میں درج ہے
محبت کی شدت نے محبت کے نئے روپ کیسے دکھلائے طلعت نظامی کے موثر انداز میں۔
لال جوڑا
ہر اس لڑکی کی کہانی جو انتظار کے جاں گسل لمحات سے گزری۔فاخرہ گل کی خوب صورت تحریر۔
تہی دست
زندگی کی بساط پر سب کچھ پانے کے باوجود بھی کوئی تہی دست کیونکر رہا نازیہ کے خوبصورت انداز میں۔
اڑان
سیما بنت عاصم کی تحریر جہاں خواہشوں اور خوابوں کی اڑان بہت اونچی نظر آتی ہے۔
محبت سے مجبوری تک
مجبوری کے بندھن سے لپٹی محبت جہاں قدم قدم پر امتحان تھا۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close