Hijaab Apr 19

حمد و نعت

عنایت علی خان/علیم الدین علیم

حمد باری تعالیٰ

مجھے تُو نے جو بھی ہنر دیا، بہ کمال حسن عطا کیا
میرے دل کو حُبِ رسولؐ دی مرے لب کو ذوقِ نوا دیا
تری جلوہ گاہِ جمال میں، مرا ذوقِ دید نکھر گیا
تری ضوفشانئی حسن نے مری حیرتوں کو سجا دیا
میں مدار جاں سے گزر سکا تو تری کشش کے طفیل سے
یہ ترے کرم کا کمال تھا کہ حصارِ ذات کو ڈھا دیا
میں ہمیشہ اپنے سوال شوق کی کمتری پہ خجل رہا
کہ تری نوازش بے کراں نے مری طلب سے سوا دیا
جو مجھے دیا ہے مجھے اسی کا حساب دینے کی فکر ہو
مجھے اس سے کوئی غرض ہو کیا، اسے کیا دیا اسے کیا دیا

عنایت علی خان

نعت رسول مقبولﷺ

کبھی خواب اتنا اچھا دیکھتا ہوں
میں بند آنکھوں سے روضہ دیکھتا ہوں
گئی تھی جو کبھی سانسوں کو چھو کر
اُسی خوش بو کا رستہ دیکھتا ہوں
مدینے کو کبھی دل ڈھونڈتا ہے
کبھی دل کو مدینہ دیکھتا ہوں
نبی ﷺ کا وصف بے حد پوچھنا کیا
میں خود قرآں میں لکھا دیکھتا ہوں
جو دیکھ آتی ہیں جلوہ جالیوں کا
میں ان آنکھوں کا جلوہ دیکھتا ہوں

علیم الدین علیم

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close