Aanchal Feb 15

سرگوشیاں

مدیرہ

السلام علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ!
فروری 2015ء کا آنچل حاضر مطالعہ ہے۔
آپ کے محبت نامہ کا ایک انبار میرے سامنے سجا ہوا ہے۔ بیشتر خطوط میں بہنوں نے عیسوی سال کی مبارک باد کے پیغامات بھیجے ہیں۔ تمام بہنوں کا شکریہ اللہ تعالیٰ آپ سب کو بہت ساری خوشیاں نصیب فرمائے۔ بہت سی بہنوں نے پرچے کے بارے میں سوال کیا ہے کہ نئے آنے والے پرچے کا کیا ہوا۔ ان کے لیے اطلاع ہے کہ نئے پرچے کے اجرا کے لیے سرکار کو درخواست دے رکھی ہے دیکھیں کب منظور ہوتی ہے۔
تمام لکھنے اور پڑھنے والی بہنوں کا شکریہ کہ ان کے تعاون اور حوصلہ افزائی کا نتیجہ ہے کہ آپ کا یہ جریدہ آنچل قدم قدم کامیابی کی منازل طے کرتا جا رہا ہے یقیناً یہ اللہ تبارک و تعالیٰ کا کرم خاص اور انعام ہے اور آپ تمام بہنوں کی سرپرستی کہ آپ کا آنچل ایک منفرد اور نمایاں مقام حاصل کرگیا ہے۔ میں امید کرتی ہوں کہ آپ ہمیشہ کی طرح ہماری رہنمائی کرتی رہیں گی اور اپنے آنچل کو سجانے سنوارنے میں میرا ہاتھ بٹاتی رہیں گی۔ جیسا کہ آپ بہنوں کو علم ہے کہ ہر سال اپریل کا شمارہ بطور سالگرہ نمبر شائع ہوتا ہے تو اس کی تیاری شروع کی جا چکی ہے تمام قلم کار بہنوں سے گزارش ہے کہ سالگرہ نمبر کے لیے اپنی خصوصی تحریریں جلد از جلد ارسال فرما دیں اور تمام قارئین بہنوں سے بھی درخواست ہے کہ وہ اپنے قیمتی مشورے، تجاویز اور آرا سے بھی ہماری رہنمائی کریں میں امید کرتی ہوں آپ سب کا تعاون ہمیں یوں ہی حاصل رہے گا۔ اللہ تعالیٰ آپ کی ہماری اور پیارے وطن پاکستان کی ہر بلا ہر مصیبت و آفات سے حفاظت فرمائے، آمین اب چلیں اس ماہ کے ستاروں کی جانب۔
اس ماہ کے ستارے
کروں سجدہ ایک خدا کو
قلوب کو نور ایمان سے فروزاں کرتی سیدہ غزل کی شاہکار تحریر جو رب تعالیٰ پر آپ کا ایمان مضبوط کردے گی۔
ذرا سی بات
دوڑتے بھاگتے لمحوں میں سانس لیتی محبت کی خوب صورت کہانی۔
امید نو
اشکوں سے لبریز ممتا کی کہانی جہاں سب کا دکھ سانجا ہے نظیر فاطمہ ایک نئے انداز میں جلوہ گر ہیں۔
یہ سب تمہارا کرم ہے آقا
خاتم النبینؐ کی شان رسالت اور ختم نبوت پر لکھی طلعت نظامی کی پر اثر تحریر جو قلب و روح کو منور کردے گی۔
عہد نئے سال کا
سال نو پر نئے عہد وپیمان لیے شازیہ فاروق نئے وعدوں کے سنگ حاضر ہیں۔
سرپرائز
شب ہجراں میں بھیگی ایسی تحریر جہاں خوشیوں کا سورج بہت سے سرپرائز لے کر طلوع ہوا کیسے اور کیونکر آپ بھی جانیے۔
پڑھی لکھی
علم و ہنر کے نئے رموز سے آشنا کراتی ام اقصیٰ قارئین کے لیے خوب صورت پیغام لیے منفرد انداز میں رونق افروز ہیں۔
وطن کی ہوائیں سلام کہتی ہیں
اربابِ جہاں کہتے ہیں کشمیر ہے جنت کے تناظر میں لکھی ایسی تحریر جہاں شہادت ہی مقصد حیات ہے۔
ستارہ سحر
ستاروں کی گردش کا احوال بتاتی سمیرا غزل اپنے منفرد انداز میں۔
عشق بے درد
’’اک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے‘‘ محبتوں کی شدتیں لیے انعم خان کی تحریر۔
دوسری ماں
ساس بہو کے رشتے کو ماں، بیٹی کے قالب میں ڈھالتی عنیقہ محمد بیگ اپنی کاوش کے ہمراہ رونق افروز ہیں۔
دل میں کچھ واہمے سے تھے
دل میں شکوک و شبہات جنم لیں تو پھر ان کا علاج ناگریز ہوجاتا ہے نزہت جبیں ضیا کس حد تک اس میں کامیاب رہیں آپ بھی ملاحظہ فرمائیں۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close