Aanchal Sep-18

ہمارا انچل

ملیحہ احمد

عاصمہ بی
ہزاروں منزلیں ہوں گی ہزاروں کارواں ہوں گے
نگاہیں ہم کو ڈھونڈیں گی نہ جانے ہم کہاں ہوں گے
السلام علیکم! تمام آنچل اسٹاف کو اور سب پڑھنے والوں کو۔ کیا حال چال ہے۔ مابدولت کو عاصمہ بی کہتے ہیں۔ 24 مارچ 2001ء کو دُنیا میں آئی ۔کلرز میں سارے شوخ رنگ پسند ہیں۔ پسندیدہ شخصیت حضرت محمدﷺ ہیں اور پسندیدہ مصنفین میں نمرہ احمد اور سمیرا شریف طور، ریحانہ آفتاب، ام مریم، نازیہ کنول، نادیہ فاطمہ، ندا حسنین ہیں۔ کھانے میں بریانی، برگر اور گول گپے پسند ہیں۔ ڈرنک میں ملک شیک پسند ہے۔ پسندیدہ ناول ’’یہ چاہتیں یہ شدتیں‘‘، ’’جنت کے پتے‘‘، ’’عشق دی بازی‘‘اور ’’پیر کامل‘‘ ہیں۔ میری بہت سی فرینڈز ہیں، جن کو تنگ کرنا میرا مشغلہ ہے۔ ایک گہری فرینڈ بھی ہے، جس کو عریشہ عرف عام میں کہتے ہیں۔ پہننے میں مجھے گھیرے دار فراک اور ساڑھی پسند ہے۔ بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹی ہوں۔ میری سب سے قریبی دوست میری ماں ہے اور میری فیورٹ ٹیچر نویدہ اور ٹیچر شاہدہ ہیں۔ مجھے مطالعہ کرنا اور شاعری کرنا بہت پسند ہے۔ مجھے جیولری میں رِنگ اور لونگ پسند ہے۔ میری سب سے بڑی تمنا حج و عمرہ ہیں۔ اللہ سب کو اپنے گھر کا دیدار کروادے۔ اب آتے ہیں خوبیوں اور خامیوں کی طرف۔ میری خوبی یہ ہے کہ کسی کو اُداس نہیں دیکھ سکتی۔ خامی، جب کسی کی بات بری لگے تو رونا شروع کردیتی ہوں۔ پسندیدہ موسم دسمبر ہے۔ آرمی میں جانا ’’جنون‘‘ کی حد تک خواہش ہے۔ میوزک ہر قسم کا سن لیتی ہوں لیکن عاطف اسلم فیورٹ سنگر ہے۔ کوکنگ ہر طرح کی کرلیتی ہوں۔ آخر میں ایک اچھی بات کے ساتھ
’’زندگی میں اپنا پن تو ہر کوئی دِکھاتا ہے
پر اپنا ہے کون؟
یہ صرف وقت ہی بتاتا ہے۔‘‘
جب بھی دعا کے لئے ہاتھ اٹھائیں، تو مجھے بھی دعاؤں میں شامل رکھئے گا۔ ساتھ ہی اجازت دیں، اللہ حافظ۔
ادیبہ شامین
میرا پورا نام ادیبہ شامین ہے۔ ہم چھ بہن بھائی ہیں۔ میرا نمبر چوتھا ہے۔ گھر بھر کی لاڈلی ہوں۔ گھر والے کسی کام کو ہاتھ نہیں لگانے دیتے۔ میں 2 فروری 2002ء کو دُنیا میں آن وارد ہوئی۔ کھانے میں بینگن، شملہ مرچ، کریلے گوشت پسند ہیں۔ پہننے میں جینز و شرٹ پسند ہیں۔ پسندیدہ شخصیت حضرت محمدﷺ اور فیورٹ کتاب قرآن مجید اور ’’جو چلے تو جان سے گزر گئے‘‘ بھی پسند ہے۔ مجھے اپنی فرینڈز بہت پسند ہیں کیونکہ وہ معصوم اور بھولی بھالی سی ہیں۔ اریبہ اور عاصمہ میری بہت اچھی دوست ہیں۔ پہننے میں ریڈ کلر پسند ہے۔ مجھے بلیو آنکھیں اٹریکٹ کرتی ہیں۔ کسی بھی شخص کی ہوں۔ پسندیدہ نعت خواں جنید جمشید ہیں۔ فیورٹ رائٹرز ماہا ملک اور عمیرا احمد ہیں۔ پسندیدہ شعبہ ’’لائر‘‘ ہے۔ مووی مجھے ’’دوستی‘‘ پسند ہے۔ جب ہم سنجیدہ ہوتے ہیں تو اس حد تک سنجیدگی اختیار کرلیتے ہیں کہ سنجیدگی بھی بول اٹھتی ہے ’’او باجی کدی ہنس وی لیا کرو۔‘‘ ہاہاہاہا آخر میں آنچل کے لئے ایک شعر:
کوئی دوست ہو تو تم جیسا
کوئی چاہنے والا ہو تو تم جیسا
کوئی دل سے پیارا ہو تو تم جیسا
پر ہر کوئی تم سا کیوں ہو (تم ہو نا)
ساتھ ہی اجازت دیں۔ فی امان اللہ۔
ڈاکٹر زارا تعبیر
السلام علیکم ! تمام آنچل اسٹاف، رائٹرز، ریڈرز اور آنچل کی ٹیم کو میرا سلام قبول ہو۔ جی تو اب آتی ہوں اپنے تعارف کی طرف۔ ارے ارے! پھپو میزاب اور آنٹی عصمت، آپ دونوں منہ بند کرلیں۔ مکھی چلی جائے گی۔ میرا نام ڈاکٹر زارا تعبیر ہے۔ میرے پاپا کا نام حاجی ممتاز ہے۔ ہم قصور میں رہتے ہیں۔ میں نویں کلاس کی طلبہ ہوں۔ ارے آپ حیران نہ ہوں، میں ابھی ڈاکٹر بنی نہیں ہوں لیکن بن جاؤں گی ان شاء اللہ۔ میں اپنی مما پاپا کی اکلوتی بیٹی ہوں۔ گھر میں سب مجھے ڈاکٹر کہتے ہیں۔ میں 29 جنوری 2004ء کو اس دُنیا میں تشریف لائی۔ (آہم) پسند ناپسند کی بات کی جائے تو مجھے کھانے میں فاسٹ فوڈ، یعنی برگر، سموسے، سینڈوچ، گول گپے، دہی بھلے، کباب اور بریانی پسند ہے۔ پھلوں میں اسٹرابری، آم اور مالٹا پسند ہیں۔ سبزیوں میں شملہ مرچ، بندگوبھی اور پیاز پسند ہیں۔ ڈارک گرین، ڈارک بلیو اور گولڈن کلر پسند ہیں۔ میٹھے میں آئس کریم، چاکلیٹ اور کیک پسند ہیں۔ گیلی مٹی کی خوشبو بے حد پسند ہے۔ انگلش، عربی اور پشتو میری فیورٹ زبانیں ہیں۔ سردیوں کا موسم بے حد پسند ہے۔ چھوٹے بچے بہت ہی اچھے لگتے ہیں۔ مغرور لوگ اور جھوٹے لوگ بہت برے لگتے ہیں۔ گلاب اور موتیا کے پھول پسند ہیں۔ مجھے ڈراؤنی کہانیاں بہت ہی پسند ہیں۔ میں سارا دن بکس میں مگن رہتی ہوں، تب ہی تو عینک لگی ہوئی ہے۔ بارش بہت اچھی لگتی ہے۔ فیورٹ رائٹرز میں عائشہ نور محمد، نازیہ کنول نازی، سمیرا شریف طور، سیدہ غزل زیدی، رفاقت جاوید، فاخرہ گل، نسیم حجازی، نادیہ فاطمہ رضوی، عمارہ خان، نادیہ احمد، نبیلہ اور صدف آصف ہیں۔ خوبیوں اور خامیوں کی بات کی جائے تو بہت ہی حساس ہوں، غصہ بہت آتا ہے۔ غصے میں ہر چیز تہس نہس کردیتی ہوں۔ میں نماز کی پابند ہوں۔ جھوٹ سن کر لال پیلی ہوجاتی ہوں۔ ہمیشہ سچ بولتی ہوں، چاہے کسی کو آگ ہی کیوں نہ لگ جائے۔ ہر کسی کو تنگ کرتی ہوں، تنہائی پسند ہوں۔ شکی بھی ہوں تھوڑی سی۔ ہر بات اللہ سے شیئر کرتی ہوں۔ فرینڈ میں منزہ، ثمینہ، سارہ، صبغہ، کرن، ایمن، تسنیم، افشا، حمنیٰ، عائشہ، ماریہ ، حمنہ کوثر، شاہ زندگی اور سونیا ہیں۔ میری پھپو میزاب بھی میری بہت اچھی فرینڈ ہیں۔ میں نے دو عمرے کئے ہیں۔ اللہ سے دعا ہے کہ وہ بار بار مجھے اپنا گھر دکھائے، آمین۔ فیورٹ ناول میں ’’حریمِ عشق‘‘، ’’تیرے نام کردی زندگی‘‘، ’’شب ہجر کی پہلی بارش‘‘، ’’تم میری ہو‘‘،’’میرے خواب زندہ ہیں‘‘، ’’بے مشروط محبت‘‘، ’’جنون سے عشق تک‘‘، ’’نظر کے سامنے‘‘، ’’آخری چٹان‘‘ ، ’’عشق دی بازی‘‘ اور ’’تلوار ٹوٹ گئی‘‘ ہیں۔ شاعر وصی شاہ اور علامہ اقبال پسند ہیں۔ آئیڈیل حضرت محمدﷺ، حضرت یوسف ؑ، حضرت سعدؓ، حضرت حمزہؓ اور میرے پاپا ہیں۔ مجھے پشاور جانے کا بہت شوق ہے۔ اگر کوئی وہاں سے ہے تو پلیز مجھ سے دوستی کرلے۔ ہر وقت میری کلائی میں گھڑی ضرور ہوتی ہے۔ آنچل میں سب سے پہلے میں نے ناول ’’تیرے عشق نچایا‘‘ پڑھا تھا۔ اچھا جی، اپنا خیال رکھیں۔ بولنے سے پہلے سوچیں اور نماز پنجگانہ ادا کریں۔ میرا تعارف کیسا لگا، ضرور بتائیے گا۔ اللہ حافظ!
نجمہ نساء
تمام آنچل اسٹاف اور قارئین کو السلام علیکم! مجھ سے ملئے، میں ہوں نجم النساء۔ میرے نام کا مطلب ہے تارہ اور میرے پاپا نے میرا یہ نام رکھا ہے۔ میں نے خوب ساری گرمی، یعنی 21 جون کو اس جہانِ فانی میں قدم رکھا اور میں اکلوتی اور لاڈلی ہوں کیونکہ میرا کوئی بھائی، بہن نہیں ہے۔ میری ایک ہی فرینڈ ہے عروج تبسم، جس کے لئے عرض ہے:
صبح کا حسین ستارا ہے تُو
ہماری اُمیدوں کا سہارا ہے تُو
خوشیوںکا گہوارہ ہے تُو
ہمت و حوصلہ ہمارا ہے تُو
اے دوست بہت پیارا ہے تُو
اس کے علاوہ نبیلہ میری خالہ زاد بہن، اس کے ساتھ بھی اچھا وقت گزرتا ہے۔ پڑھائی میں آئی سی اے مکمل کرنا ہے اور فارغ وقت میں ٹی وی دیکھنا اچھا لگتا ہے (خاص کر انڈین سوپ)۔ پسندیدہ ایکٹر کارن پٹیل (’’یہ ہیں محبتیں‘‘ میں رمن کا کردار)۔ پسندیدہ فی میل ایکٹر سونم کپور اور راحت فتح علی خان کے گانے اس کے علاوہ آنچل بہت پسند ہے۔ ارے جھوٹ نہیں بول رہی میں۔ 2011ء سے آنچل سے وابستہ ہوں، تب سے ہی دل میں خواہش تھی آنچل میں افسانہ لکھنے کی۔ اس کے علاوہ سبز رنگ بہت پسند ہے۔ میٹھا بالکل نہیں پسند۔ مرچ مصالہ جتنا ہو، شوق سے کھاتی ہوں۔ جھوٹ سے سخت نفرت ہے۔ غصہ بہت آتا ہے (عروج سے پوچھو)۔ میں پوری دُنیا تو نہیں، پیرس دیکھنا چاہتی ہوں۔ ساون کی بارش اور ساون بہت پسند ہے اور محبت، پیار، بھروسہ، خوداعتمادی اور محنت پر دُنیا قائم ہے۔ مانتی ہوں، کوکنگ کا بالکل شوق نہیں ہے۔ عروج کے بعد تنہائی کا فرینڈ آنچل ہے۔ اللہ پاک آنچل کو دن دوگنی اور رات چوگنی ترقی دے، آمین۔ آنچل گرلز مجھ سے مل کر کیسا لگا، ضرور بتانا۔ آخر میں یہ کہوں گی کہ دُنیا کی اہم دولت بھروسہ ہے، اسے مت کھونا۔ اللہ حافظ!

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close