NaeyUfaq Feb-18

دستک

مشتاق احمد قریشی

پھونکوں سے یہ چراغ بجھایا نہ جائے گا

ابھی کچھ زیادہ دن نہیں گزرے جب افغانستان میں پاکستان کی شیر دل افواج نے روس جیسی سپر پاور کو شکست سے دوچار کیا۔ وہ پاک افواج ہی تھی امریکن نہیں امریکن تو آج تک طالبان کو جو خود ان کی ہی پیداوار ہیں قابو نہیں کرسکے پاک افواج دنیا کی بہترین افواج میں شمار ہوتی ہے تب میں اب میں یہ فرق ہے کہ آج پاک افواج ہر قسم کے جوہری اسلحہ سے لیس ہے امریکا جو سات سمندر پار ہے جبکہ روس کی تو سرحد سے سرحد ملی ہوئی تھی امریکا نے اگر میلی آنکھ سے دیکھا تو اسے بہت مہنگا پڑ سکتا ہے۔
اللہ تبارک و تعالیٰ نے قرآن حکیم میں واضح طور پر ارشاد فرمایا کہ یہود و نصاریٰ تمہارے دوست نہیں ہوسکتے تقریبا گیارہ بارہ مقامات پر قرآن میں مختلف انداز میں یہی بات دہرائی گئی ہے اس کا مشاہدہ تمام عالم انسانیت اور خصوصا تمام ہی اسلامی ممالک یہود و ہنود کے مظالم و شقاوت کا شکار ہیں امریکا جو یہود و ہنود کی دوغلی نسل سے تعلق رکھتا ہے امریکی حکمرانوں کی بڑی تعداد کا تعلق یہودی النسل افراد سے ہے وہاں کی تجارت و ثقافت پر یہودیوں کی بڑی مضبوط گرفت ہے یہ دونوں اقوام ایک دوسرے کی دوست صرف مسلمانوں کو مٹانے انہیں نیست و نابود کرنے کے لیے تو ہیں لیکن باہم یہ بھی ایک دوسرے کو پسند نہیں کرتے لیکن جب معاملہ مسلمانوں کا ہو تو یہ ایک مضبوط چٹان کی مانند ایک دوسرے کے دوست ہوتے ہیں آج اگر ہم کھلی آنکھوںسے دیکھ سکیں تو ہمیں نظر آجائے گا کہ کون سا اسلامی ملک ایسا ہے جہاں یہود و ہنود نے اپنے پنجے نہ گاڑھ رکھے ہوں اپنے ظلم و ستم کا شکار نہ بنا رکھا ہو افغانستان ہو عراق ہو یمن ہو شام ہو ایران ہو یا افریقی ریاستیں یہاں تک کہ مسلم دنیا کے سب سے اہم اور مقدس ملک سعودی عرب بھی ان کے چنگل سے آزاد نہیں ہے معاشی طور پر اقتصادی طور پر سیاسی طور پر اور عسکری طور پر اپنا فرمانبردار اطاعت گزار بنا رکھا ہے جس نے بھی ذرا سر اٹھانے کی کوشش کی اس کا سر کچلنے کے لیے فوری عملدرآمد شروع ہوجاتا ہے عراق کی کیا دشمنی تھی امریکا سے جو اس کی اینٹ سے اینٹ بجا دی کرنل معمر قذافی نے کیا کیا تھا جو اسے قتل کر کے وہاں اپنے پسندیدہ افراد کو متعین کردیا شام نے یمن نے افغانستان نے کونسی امریکی گدھی چرائی تھی جو اسے تہس نہس کر کے رکھ دیا اب پاکستان کو نشانے پر رکھنے کی تیاری کرلی گئی ہے حالانکہ پاکستان نے اپنے قیام سے لے کر آج تک تقریبا ستر برس امریکی اطاعت میں ہی گزاری ہے اب جبکہ پاکستان نے اپنے ہمسائے ممالک چین اور روس کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھایا ہے تو امریکی حکمرانوں کو کیوں مرچیں لگ رہی ہیں صرف اس لیے کہ خطے کا ایک اہم ملک جو مسلمان بھی ہے جوہری توانائی کا حامل بھی وہ ان کے ہاتھوں سے پھسلے جا رہا ہے اس کی وجہ وہ خود بھی خوب اچھی طرح جانتے ہیں افغانستان جو ایک خالص مسلم مملکت کے طور پر خود امریکی سرپرستی اور تعاون سے بنا تھا اسے صرف اس لیے بارود کے ڈھیر میں تبدیل کردیا گیا خاک و خون میں نہلا دیا گیا کہ کلیسا کو یہ قطعی پسند نہیں تھا کہ زمین پر ان کے علاوہ بھی کوئی مذہب کے نام پر سر بلند کرے اب جبکہ امریکا اور اس کے اتحادی فرعونوں نے افغان مسلمانوں کا خود ان کی اپنی سر زمین پر رہنا مشکل کردیا ہے خاک و خون میں نہلا دیا ہے اور یہ سب انہوں نے پاکستان کو آگے لگا کر کیا یا یوں بھی کہہ سکتے ہیں کہ مسلمانوں کی جوتی مسلمانوں کا سر اس کے باوجود امریکا بہادر پاکستان سے مطمئن نہیں وہ چاہتا ہے کہ پاکستان کا بھی وہی حشر نشر ہو جو اس نے افغانستان عراق و شام کا کردیا ہے وہاں اپنی مرضی کے سیکولر حکمران بٹھا کر بھی اسے چین نہیں ہے افغانستان جس کی طویل سرحد پاکستان سے ملحق ہے جس نے امریکی منشا و مرضی کے مطابق افغان مجاہدین طالبان اور دیگر مسلمان قوتوں کوبغاوت، دہشت گردی کے نام پر کچلا اور امریکی پالیسیوں کے بر خلاف خود اپنے وطن عزیز میں دہشت گردوں کی سرکوبی کی جس سے وطن عزیز میں انتقامی دہشت گردی نے جنم لیا اور خود کش دہشت گردی بھی افغانستان کے حوالے سے امریکی تحفہ ہے، پاکستان میں منشیات اسلحہ اور دہشت گردی صرف اور صرف افغانستان میں امریکی مداخلت اور اس مداخلت میں پاکستان کی شرکت نے پاکستان کو دہشت گردی سے آشنا کیا اس امریکی رد عمل کے طور پر اب تک تقریبا پچھتر ہزار جانوں کا نقصان پاکستان اٹھا چکا ہے صرف اور صرف امریکی خوشنودی کی خاطر آج وہی امریکا پاکستان کو آنکھیں دکھا رہا ہے دھمکی دے رہا ہے اگر اس نے کوئی خطیر رقم پاکستان کو ادا بھی کی ہے تو کون سا احسان کیا ہے اس ملنے والی رقم سے کئی گنا زیادہ کا پاکستان نے نقصان برداشت کیا ہے اس کے جواب میں آج امریکا پاکستان کی امداد روکنے یا بند کرنے کی دھمکی دے رہا ہے جبکہ ملنے والی تمام رقم نہ تو قرض تھیں نہ امداد بلکہ وہ تمام رقوم خدمات کا معاوضہ ہے جو ابھی پوری طرح ادا بھی نہیںہوا یہ تو وہی مثل ہوگی چور مچائے شور۔
تمام غیر مسلم قوتیں ہمیشہ سے مسلمانوں سے خوفزدہ رہتی ہیں یہی وجہ ان کے اتحاد کی بھی ہے اس لیے ہی وہ تمام اقوام مسلمانوں کے خلاف انہیں مٹانے اور ختم کرنے کے لیے ایک آواز بن جاتے ہیں افغانستان کو زیر کرنے اور امریکی قبضہ مضبوط کرانے میں پاکستان نے سر دھڑ کی بازی لگا لی تھی اس لیے بھی اس کا حق بنتا ہے اور اس لیے بھی کہ اس کی سرحد افغانستان سے ملتی ہے اسے افغانستان میں وہ اختیارات ملنے چاہیے تھے جو امریکا نے پاکستان کے دشمن نا پسندیدہ پڑوسی بھارت کو عطا کیے ہیں جبکہ نہ اس کی سرحد ملتی ہے نہ معاشرت نہ مذہب نہ زبان کسی قسم کی کوئی مطابقت نہیں بنتی لیکن صرف اسلام دشمنی میں بھارت کی ہندو قوم کو افغانستان میں کھیل کھیلنے کے لیے چھوڑ دیا ہے کیونکہ بھارتی ہندو بھی مسلمانوں کے اتنے ہی دشمن ہیں جتنے یہود و ہنود پاکستان میں ہونے والی تمام تر دہشت گردی کے پس پشت بھارتی ہاتھ ہمیشہ رہا ہے اب جبکہ ایک اہم اور بڑا جاسوسی نیٹ ورک پکڑ لیا گیا کلبھوشن یادو گرفتار ہوچکا ہے اس نے اقبال جرم بھی کرلیا ہے اور سارا کچا چٹھا بیان کردیا ہے اس کے باوجود بھارت اور اس کا نیا باس و سرپرست امریکا مسلسل آنکھوں میں دھول جھونکنے میں مصروف ہے امریکی شہ پر بھارت بلوچستان کو ایک الگ ریاست بنوانے کے محاذ میں گو کہ ناکام ہوچکا ہے لیکن اس کی مذموم کارروائیاں بھی ختم نہیں ہوئیں اب بھی افغانستان جہاںبھارت کو ہر طرح کی کھلی آزادی حاصل ہے وہاں سے وہ پاکستان کے خلاف سازش کر رہا ہے اس میں اس کی مدد امریکا و اسرائیل کر رہے ہیں اور اب امریکا نے براہ راست پاکستان کے خلاف اپنے قلبی بغض کا اظہار کردیا ہے امریکی صدر جو خود بھی یہودی نژاد ہے نے کھل کر اسرائیل کی حمایت کرتے ہوئے پہلے بیت المقدس کو اسرائیلی دار الحکومت بنانے کا حکم جاری کیا جس نے عالم اسلام میں ایک کرب و بے چینی ایک ہلچل نے جنم لیا اب مسلمانوں کے خلاف دوسرا بڑا قدم پاکستان کو اپنے نشانہ پر رکھ کر کیا ہے لیکن پاکستان کا معاملہ اور اس کا محل وقوع اور حدود و اربعہ خطے کے اعتبار سے بہت اہمیت کا حامل ہے اس کی سرحدیں جہاں ایران افغانستان سے ملتی ہیں وہیں چین جیسے دوست اور دوستی کے خواہش مند روس سے بھی ملتی ہیں اگر امریکی عسکری قوتوں کو یہ گمان ہے کہ پاکستان کے ایک طرف ان کا حمایت یافتہ بھارت ہے تو دوسری طرف خود امریکی افواج کے زیر تسلط افغانستان ہے لیکن ان نا سمجھوں کو یہ بھی یاد رکھنا ہوگا کہ چین جس کے مفادات اب پاکستان سے وابستہ ہوچکے ہیں وہ کبھی بھی پاکستان کو اکیلا نہیں چھوڑے گا اور روس بھی کسی نہ کسی حد تک پاکستان کے ساتھ ضرور کھڑا ہوگا چاہے وہ بغض معاویہ میں ہی کیوں نہ ہو امریکا سے وہ اپنا انتقام لینے اور اسے خاک چٹانے کے لیے جیسا کہ امریکا روس کے ساتھ افغانستان کے معاملے میں کر چکا ہے جس کے نتیجے میں روس منتشر ہوا اس کا انتقام لینے کے لیے وہ پاکستان کے ساتھ کھڑا ہوسکتا ہے پاکستان اب کسی بھی طرح تنہا نہیں اگر امریکا نے کسی بھی طرح عسکری برتری کا مظاہرہ کرنے کی کوشش کی تو منہ کی کھائے گا ان شاء اللہ۔ پاکستانی حکمرانوں کو حوصلے اور ہمت سے کام لینا ہوگا کسی طرح کے خوف یا دہشت گردی سے ڈر کر سر جھکانے کی ضرورت نہیں بلکہ سینہ تان کر کھڑے ہونے کا وقت ہے۔ پاکستان کا قیام اللہ کی مشیت اور کرم و فضل کا نتیجہ ہے اس کی حفاظت ان شاء اللہ تعالیٰ، اللہ فرما رہا ہے اور ہمیشہ فرماتا رہے گا ہمیں ایک آواز ایک قوت اور ایک قوم بن کر سینہ سپر ہونا ہوگا دشمن چاہے کوئی بھی ہو اللہ کی قوت سے بڑا نہیں ہوسکتا پھونکوں سے یہ چراغ بجھایا نہ جائے گا۔ اللہ تعالیٰ ہماری ہمارے وطن عزیز کی حفاظت فرمائے۔ آمین

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close