Aanchal Dec-16

بیوٹی گائیڈ

روبین احمد

پکی اور جمی ہوئی جلد
قدرت نے جلد کو اندرونی ذرائع سے توانائی کے حصول کا ذریعہ بنایا ہے مگر ہوتا یہ ہے کہ پچیس سال کے بعد اس توانائی میں کمی ہونے لگتی ہے اس کی وجہ جلد کی عمر میں اضافہ، وزن میں کمی اور کچھ بیرونی عنصر ہے مثلاً دبائو اور تنائو اور دھوپ وغیرہ یہ سب جلد کی فائبر میں کمی کردیتے ہیں جس کے بعد جلد کا پکا پن ڈھیلا پڑنے لگتا ہے۔
خوش قسمتی سے اس کمی کو ہم دنیاوی ذرائع سے پورا کرسکتے ہیں مگر کوشش یہ کرنی چاہیے کہ وقت گزرنے سے پہلے پہلے بچائو کا راستہ اپنا لینا چاہیے ورنہ جلد کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے ایسے میں ایک عام اور روایتی موئسچرائزر کار آمد ثابت نہیں ہوسکتا ہے۔
اگر آپ کو اپنی جلد کو پکا کرنے کی زیادہ ضرورت ہے تو پھر آپ کو اورنج اسکن کا مسئلہ ہے جلد کو پکا کرنے کے لیے کریم کو دائرے کی شکل میں لگائیں اور اس جلد پر زیادہ لگائیں جہاں جلدی جلدی لوز ہوجاتی ہے مثلاً پیٹ ران اور سرین پر۔
پائوں پر بھی اسی انداز میں لگائیں مگر تھوڑے زیادہ دبائو کے ساتھ یہ عمل آپ کے جلد کے تنائو کو ختم کردے گا خون کی گردش میں اجافہ کرے گا اور خلیوں کو قدرتی انداز میں فعال کردیتا ہے، اس سے ران کو شیپ ملتی ہے پیٹ فلیٹ ہوجاتا ہے اور سرین گولائی میں آجاتی ہے۔
جلد کو سردیوں میں کیسے محفوظ رکھیں
سردیوں میں جسم اور چہرے پر نمی میں کمی آجاتی ہے آئیے جانتے ہیں جلد کو سردیوں میں کیسے محفوظ رکھیں۔
غلط فہمی: جتنی موٹی کریم کی تہہ ہوگی اتنی ہی جلد شاداب رہے گی۔
حقیقت: ضروری نہیں کہ اس طرح آپ کی جلد شاداب ہوجائے کولڈ کریم کے حد سے زیادہ استعمال سے مردہ خلیے جلد کو زیادہ ڈل کرتے ہیں، کریم کی ہلکی تہہ لگائیں سیرم ہلکے ہوتے ہیں اور ان میں شاندار اجزا شامل ہیں جو جذب کرنے کے لیے بہترین ہیں۔
سردیوں میں سن اسکرین کا استعمال نہ کریں
حقیقت: اوزون کی تہہ کو چیرتی ہوئی سورج کی UVB جلانے والی شعاعیں نیچے آتی ہیں اور اس کا علاج SPF ہے سورج کچھ UVA شعاعوں کو روک لیتا ہے سردی میں نمی کم ہونے سے روزانہ موائسچرائزر کی ضرورت پڑتی ہے تاکہ جلد محفوظ رہے اس لیے سورج کی شعاعوں سے محفوظ رہنے کے لیے اینٹی اوکسیڈنٹ سیرم سے بھرپور موسچرائزر استعمال کریں۔
چکنی جلد کو نمی کی ضرورت نہیں ہے
سردیوں میں ہر قسم کی جلد خشک ہوجاتی ہے اور اس کی حفاظت کے بغیر کچھ نہیں کیا جاسکتا ہے اگر جلد بہت زیادہ چکنی ہے تو جیل یا لوشن استعمال کریں ملی جلی جلد کے مختلف حصوں کو مختلف موسچرائزر کی ضرورت پڑتی ہے ٹی زون پر ہلکا جبکہ گالوں کے لیے تیز طرح کاموسچرائزر استعمال کریں۔
ہونٹوں پر بام لگانے سے وہ نہیں پھٹتے ہیں
اگر بام صحیح ہے بعض اوقات بام کے اجزا ہونٹوں کے لیے نقصان دہ ثابت ہوتے ہیں منرل تیل ہونٹوں پر عارضی نمی پیدا کرتا ہے ہونٹوں پر ایسی بام لگائیں جس میں قدرتی تیل اور کوکواسٹر ہو ہونٹوں کی پپٹریوں کے لیے اس پرفیشل ایکسفوینٹ اسکرب سے رگڑیں بعد ازبام لگائیں۔
نیم گرم پانی سے نہانے سے جلد نم رہتی ہے
گرم پانی سے نہانے سے جلد اور خشک ہوتی ہے 96.6 درجہ کا گرم پانی خون کی شریانوں کو خون پہنچاتا ہے پانی گرم کرنے کے پانچ منٹ بعد صابن فری باڈی واش سے نہائیں جسم کو نہ رگڑیں اس طرح جلد اور زیادہ خشک ہوجائے گی۔
سردیوں میں گرم کپڑوں کا بھاری استعمال ضروری ہے
سردی میں گرم رہنے کے لیے یقیناً چند گرم کپڑوں کی ضرورت تو پڑتی ہے مگر نائلون اور پولی ایسٹر کپڑے کا استعمال خون کے دبائو میں رکاوٹ ڈالتا ہے اور اس کی بدولت مردہ خلیوں میں اضافہ ہوجاتا ہے اس لیے قدرتی فائبر سے بنے کپڑے استعمال کریں خصوصاً وہ کپڑے جو جلدے سے ٹچ ہوتے ہیں اس کے لیے Shea بہترین ہے۔
سردیوں میں اپنی جلد کی حفاظت کیجیے
سردیاں اپنے ساتھ سرد خشک ہوا اور سرد درجہ حرارت لاتی ہیں جو جلد کو خشک، کھردرا، باریک اور نمی سے دور کردیتا ہے مگر آپ ذرا سی احتیاط کر کے سردیوں میں جلد کی حفاظت کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرسکتے ہیں، یہ موسمی علاج نا صرف جلد کو دوبارہ متوازن کرتا ہے بلکہ وقت سے پہلے عمر کے بڑھنے کے اثرات سے بھی محفوظ رکھتا ہے۔
خشک سرد ہَوا کی وجہ سے نمی اور موسچرائزر میں کمی آجاتی ہے اگر جلد پہلے ہی خشک ہو تو سب سے ضروری ہے کہ جلد کے تیل کو نارمل اور پانی کے لیول کو بڑھایا جائے ملے جلے جلد والے لوگ بھی خشک جلد کا شکار ہوسکتے ہیں۔
خشک جلد میں نمی کم ہونے کی وجہ سے باریک لکیریں اور جھریاں پڑ جاتی ہیں چہرے پر یہ لکیریں منہ اور آنکھوں کے گرد باریک لکیریں نمایاں نظر آتی ہیں چہرے کے علاوہ جسم اور ہاتھ بھی خشک ٹائٹ ہو جاتے ہیں تھوڑی سی حفاظت اس خشکی کو ختم کر کے جلد کو خشک رکھتی ہے۔
ان نکات پر عمل کر کے جلد کو سردیوں میں عمر کے اثرات نمودار ہونے سے بچایا جاسکتا ہے۔
چہرے کے لیے علاج: ان لوگوں کے لیے جن کی جلد پہلے ہی خشک ہو تو جلد کی نمی کو پورا کرنے کے لیے ایسے فیشل کریں جو ان چیزوں سے محفوظ رکھ سکیں ایسے ہلکے، لوشن ہیڈ کلرز استعمال کریں جن میں فومنگ یا لیدرنگ ایجنٹ نہ ہو فورم اور لیدر خشکی میں اضافہ کرتا ہے اور نمی جلد کی کم ہوجاتی ہے۔
جلد کے لیے متوازن ٹونر لیں جس میں الکوحل کی کم مقدار ہو الکوحل جلد کی نمی کو کم کرتا ہے اور خشکی پیدا کرتا ہے۔
فیشل ایسا کریں جس میں ضرورت تیل اور ہر بس کا استعمال ہو جو خشک جلد کے لیے ضروری ہوتے ہیں جیسے چیمومائل روزوڈ لیونڈر گلاب اور صندل اچھی چیزیں ہیں۔
ایسے ایکسفولیٹ استعمال کریں جو زیادہ رف اور خشک نہ ہوں خشک جلد کھردری اور نمی سے خالی نظر آتی ہے جلد سے پرانے مردہ خلیوں کا خاتمہ کریں تاکہ نئے خلیے پیدا ہوں اجزا جیسے دلیہ اور چاول کا پائوڈر قدرتی ایکسفولیٹر کی اچھی مثالیں ہیں۔
ایک ہائیڈریٹنگ ماسک جلد کو گہرائی سے صاف اور نمی میں اضافہ کرتا ہے ماسک کو گرین، ملتانی مٹی، فلورل واٹرز اور خالص تیل بہترین چوائس ہوسکتی ہے۔
موسچرائزر مساج کے لیے فیشل آئل ایسا لیں جو مساموں کو بند نہ کرے ایک اچھے فیشل میں بادام، تیل خوبانی، جوجوبا اور وٹامن ای کے تیل کے ساتھ کچھ دیگر ضروری تیل بھی ہوتے ہیں یقین دہانی کر لیں کہ اس تیل میں منرل تیل شامل نہ ہو۔
تازہ، قدرتی اجزا کا استعمال کریں تاکہ یہ جلد میں نمی اور غذائیت پیدا کرے دہی ایک قدرتی جلد کو نرم کرنے اور صاف کرنے کا ٹونر ہے۔ دلیہ ایک ایکسفولیٹ ہوتا ہے، کیلا اور ایوا کیڈوخشک جلد کوموسچرائزر کرتا ہے اور شہد قدرتی طریقے سے جلد میں خوب صورتی شامل کرتا ہے ایسا آنکھوں کا جیل لیں جو زیادہ بھاری اور گریسی نہ ہو کیونکہ یہ فیشل کا اہم جز ہوتا ہے۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close