Hijaab Nov-17

آرائش حسن

حدیقہ احمد

شادی کے میک اپ کے حوالے سے دس عام غلطیاں
بہت زیادہ میک اپ:۔
اس میں شک نہیں کہ شادی ایک بڑا اور اہم پروگرام ہوتا ہے مگر اس کی مناسبت اور اہمیت کے پیش نظر اپنے چہرے پر زیادہ لیپا پوتی نہ کریں جس قدر کم میک اپ ہوگا اسی قدر اچھا لگے گا۔
جو موجودہ رجحان ہے اس کو پیش نظر رکھیں، یہ ٹھیک ہے کہ پانچ سال پہلے چمک دمک والے میک اپ کا زور تھا مگر اب آپ ذرا ان تصاویر کو ایک بار پھر دیکھیں تو آپ وہ گئے دنوں کی پھیکی پھیکی تصاویر لگیں گی چہرے پر چمک دمک کم سے کم رکھیں اور جس قدر ممکن ہو چہرے کو نیوٹرل رکھیں۔
میک اپ یہ نہیں ہے کہ چہرے کو ہر رنگ سے سجا لیا جائے بلکہ میک اپ یہ ہے کہ آپ میک اپ کرنے میں اعتدال پسندی کا مظاہرہ کریں اور میک اپ کرنے کے بعد آپ کے چہرے سے تازگی کا احساس ملے۔
وہ وقت گیا جب دلہن کسی بڑے سے سجے سجائے کیک کی مانند نظر آتی تھی آپ انفرادیت کو اپنائیے اور وہی کچھ پہنیے جو آپ پر سوٹ کرتا ہے اگر لباس پرپل ہے تو ضروری نہیں کہ آنکھوں کا میک اپ بھی پرپل ہو، اس کے علاوہ بھی شیڈز ہیں تجربات کر کے دیکھیں جو سوٹ کرے اسے لگا لیں۔
کوشش کر کے آپ اپنا میک اپ خود کرنے کی کوشش کریں اور اگر ایسا ممکن نہ ہو تو بیوٹیشن سے کہیں کہ وہ آپ کی ہدایات کے مطابق عمل کریں، میک اپ کو نیوٹرل رکھیں اور بہت سارے رنگوں کے استعمال سے گریز کریں۔
اکثر دلہنیں فیشل کرانے بھاگتی ہیں ساتھ میں گوری رنگت کو تھوڑا سانولا پن بھی دیتی ہیں اور دانتوں کو بھی چمکاتی ہیں اور یہ سب وہ ایک ہفتہ قبل کرتی ہیں مگر وہ یہ بھول جاتی ہیں کہ عین شادی والے دن جلد اکھڑ سکتی ہے۔ مسوڑھے سرخ ہوسکتے ہیں اور سانولا پن کسی وال پیپر کی طرح الگ ہوسکتا ہے آپ اپنی روٹین کو محض اس وجہ سے نہ چھوڑیں کہ آپ کی شادی ہو رہی ہے اپنی روٹین پر چلتی رہیں باقاعدہ اسکن کیئر پر توجہ دیں کھانا معمول کے مطابق کھائیں ورزش کریں ڈھیر سارا پانی پئیں گہری نیند لیں اور کافی اور چائے سے دور رہیں۔
ماہرین حسن اگر یہ کہتے ہیں کہ وہ ایسا میک اپ کردیں گے کہ پھر آپ کو پارٹی کے دوران ٹچنگ کی ضرورت ہی نہیں رہے گی تو آپ سمجھ لیں کہ وہ خواب فروخت کرنے کی کوشش کر رہے ہیں آپ کو بلوٹنگ پیپر کی ضرورت رہے گی تاکہ آپ چہرے کی چمک پر قابو پاسکیں اور ایسا فوٹو بنوانے سے قبل ضرور کریں لپ اسٹک کو بھی ٹچنگ کی ضرورت رہتی ہے رونے دھونے کے دوران آئی لائنر اور آئی شیڈو اور پھر مسکارا بھی ٹچ کرنے کی ضرورت لازمی پیش آتی ہے۔
اکثر لڑکیاں میگزین سے تصاویر الگ کر کے ایسے لک کی درخواست کرتی ہیں جو ان پر قطعی سوٹ نہیں کرتا ہے آپ کو چاہیے کہ آپ اپنے لک کو موقع کی مناسبت سے ہم آہنگ کریں اور وہی کچھ کریں جو آپ کے چہرے پر سوٹ کرتا ہے۔
ہر دلہن کو ایسے گال چاہیں جن میں چمک ہو مگر ان کو یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ اس حالت میں جب فوٹوز بنتے ہیں تو چہرہ ایسا لگتا ہے جیسے اس پر گریس مل دیا گیا ہو، آنکھوں اور گالوں پر ہلکا میک اپ کریں، بے شک دوسرے حصے پر چمک لگالیں۔
ہونٹوں پر گلوسنگ نہ کریں کیونکہ شادی کے موقع پر بھاری لباس اور برقی قمقموں میں گرمی بہت لگتی ہے اور حرارت کی وجہ سے لپ اسٹک اور گلوسنگ پگھلنے لگتی ہے اس لیے مٹیالے رنگ کے گلوس ٹھیک رہیں گے۔
ہاتھوں کا میک اپ
آپ کے خوب صورت ہاتھ آپ کی دلکشی اور جاذبیت میں چار چاند لگاتے ہیں لیکن آپ کے ہاتھ کس طرح خوبصورت بنائے جائیں،اس سوال کا جواب مندرجہ ذیل سطور میں پیش کیا جاتا ہے
۱۔گھریلوکام کاج یعنی سبزی کاٹنے،برتن اور کپڑے دھوتے وقت ربڑ کے باریک دستانے پہننے نہ بھولیں۔
۲۔جتنی بار اپنے ہاتھ دھوئیں اتنی ہی بار اپنے ہاتھوں پر کریم یا لوشن لگائیں۔
۳۔اپنے پاس نیل فائل(ناخنوں کی ریتی)ضرور رکھیں،ہر روز اپنے ناخن صاف کریں۔
۴۔ہر روز چند لمحوں کے لیے اپنے ہاتھ اوپر اٹھائیں اور انگلیوں کی نوک سے ہتھیلی کی طرف ہاتھوں پر مساج کریں۔
۵۔اگر کام کاج کی وجہ سے آپ کے ہاتھ سخت ہوگئے ہیں تو رات کو سونے سے پہلے اپنے ہاتھ صابن اور نیم گرم پانی سے دھوئیں۔ہاتھوں پر کولڈ کریم ملیں اور بعد میں سوتی دستانے پہن کر سو جائیں۔صبح اٹھ کر آپ کو اس عمل کے بہترین نتائج کا علم ہوجائے گا۔
۶۔اگر آپ کے ہاتھوں کی جلد سیاہ پڑگئی ہے تو رات کو سونے سے پہلے ہاتھوں پر لیموں ملیں۔ہاتھوں کو گورا کرنے کے لیے لیموں کا رس اکسیر ہے۔ہاتھوں کی جلد کے بعد ناخنوں پر خاص توجہ دینی چاہیے،ناخنوں کا پرانا پالش اتار دیں اور ایمری بورڈ سے ناخن بنائیں،نیل فائل کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ فائل کو ناخن کی اطراف سے مرکز کی طرف حرکت دیں۔اگر فائل کو آرے کی طرح آگے پیچھے چلایا جائے تو ناخن ہموار ہوجاتے ہیں،ناخنوں کے گرد سفید جھلی سی بن جاتی ہے،ناخنوں کی صفائی اور میک اپ کے لیے اس جھلی کو دور کرنا ضروری ہے۔اسے کیوٹیکل لوشن یا کریم سے دور کیا جاتا ہے۔کیوٹیکل لوشن کو روئی کے پھاہے کے ساتھ ناخنوں کے ارد گرد لگائیں تاکہ جلد نرم ہوجائے،کسی لکڑی کے تنکے کے ارد گردروئی لپیٹیں،اسے کیوٹیکل ریموور یا لوشن میں بھگوئیں اور جھلی صاف کردیں،اب اپنے ہاتھ صابن والے نیم گرم پانی میں بھگودیں۔اس کے بعد ہاتھ تولیے یا ٹشو پیپر سے خشک کریں۔ناخنوں کے اردگرد کی جلد اچھی طرح صاف کریں،اپنے ہاتھوں پر ہینڈ لوشن لگائیں۔مساج کریں ناخنوں کی فالتو چکناہٹ کو نیل پالش ریموور سے اچھی طرح صاف کردیں۔ذرا سی چکناہٹ بھی نہ رہ جائے،مساج ہلکے ہاتھوں سے کرنا چاہیے،بہتر ہے کے نیل پالش لگانے سے پہلے آپ ناخنوں پر بیس کوٹ لگائیں،اس سے ناخنوں کی حفاظت ہوتی ہیں اور وہ مضبوط ہوتے ہیں،اب پالش لگانا شروع کریں۔پالش لگاتے وقت برش کو تین چار جنبشیں دیں،یعنی ایک بار درمیان میں نیل پالش لگائیں اور بعدمیں دونوں طرف لگائیں۔نیل پالش کو سوکھنے دیں،اب دوسرا کوٹ کریں۔نیل پالش لگانے کا بہترین وقت رات کا ہے۔سونے سے پہلے نیل پالش لگائیں تو وہ صبح تک اچھی طرح سیٹ ہوجاتی ہے۔
ہالہ سلیم… اورنگی ٹاؤن کراچی

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close