Hijaab Aug-17

ذکر اس پری وش کا

زینب احمد

مریم عنایت
السلام علیکم! آنچل اسٹاف قارئین اور رائٹرز کو میرا پیار بھرا ‘ پھولوں سے بھرا سلام قبول ہو۔ میرا نام مریم عنایت ہے‘ دہم (اے) کی اسٹوڈنٹ ہوں۔ 14 مارچ 2002ء کو اس دنیا کو رونق بخشی۔ اپنے والدین کی اکلوتی بیٹی ہوں‘ اپنی امی سے بہت پیار کرتی ہوں‘ اللہ تعالیٰ میرے امی ابو کا سایہ تاقیامت میرے سر پر قائم رکھے‘ آمین۔ سادگی پسند کرتی ہوں اور خود بھی سادہ رہتی ہوں۔ میرا فیورٹ کلر بلیک اور بے بی پنک ہے‘ پھولوں میں گلاب اور موتیا بہت پسند ہے۔ فیورٹ ہابی پڑھنا اور لکھنا ہے‘ بارش سے عشق ہے‘ اب ذرا بات ہوجائے خوبیوں اور خامیوں کی تو سب سے بڑی خامی یہ ہے کہ غصہ بہت آتا ہے اور خوبیاں تو بہت سی ہیں مثلاً ہر کسی کو معاف کردینا‘ خوش اخلاقی سے پیش آنا اور بہت ساری ہیں۔ فیورٹ شخصیت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم اور مولانا طارق جمیل ہیں۔ آنچل اور حجاب مجھے بہت اچھے لگتے ہیں‘ میرا ایک چھوٹا سا کزن ہے ہنزلہ‘ وہ مجھے بہت اچھا لگتا ہے۔ دھنک کے رنگ بہت اچھے لگتے ہیں‘ کھانے پینے والی ہر چیز اچھی لگتی ہے مثلاًبرگر‘ پزا‘ چاکلیٹ کیک‘ کورنیٹو آئس کریم اور بہت کچھ۔ میری فرینڈز میں ردا رحمان‘ مریم فدا‘ مومنہ کائنات اور عیشا کائنات شامل ہیں۔ حساس بہت ہوں چھوٹی چھوٹی بات پر رونا شروع کردیتی ہوں‘ فروٹ میں انار اور اورنج بہت پسند ہیں۔ ڈاکٹر بننا چاہتی ہوں آپ میرے لیے دعا کیجیے کہ میں ڈاکٹر بن جائوں‘ اگر آپ سکون چاہتے ہیں تو پانچ وقت کی نماز پڑھیں‘ ہر وقت اللہ تعالیٰ کے ذکر میں مشغول رہیں تو دیکھئے گا آپ کی ہر پریشانی دور ہوجائے گی۔ ایک اور بات یہ کہ تعلیم ضرور حاصل کریں‘ یہ مشکل وقت میں آپ کا سہارا ہے اگر تعلیم نہیں حاصل کرو گے تو دربدر کی ٹھوکریں کھانی پڑیں گی۔ بارش جب بھی ہوتی ہے تو میرا دل اداس ہوجاتا ہے‘ اپنی فرینڈز کی بہت یاد آتی ہے۔ اب اجازت چاہوں گی‘ جہاں رہیں خوش رہیں‘ دوسروں کو خوش رکھیں کیونکہ دوسروں کے لیے جینا ہی اصل جینا ہے۔شاہ زندگی کا انتقال ہوگیا بہت افسوس ہوا‘ اچھا اب اجازت دیں‘ اپنا خیال رکھیے گا اور مجھے بھی دعائوں میں یاد رکھیں‘ اللہ حافظ۔
الوینہ
السلام علیکم! آنچل اسٹاف اور قارئین کو میرا محبتوں بھرا سلام۔ میرا نام الوینہ ہے میں گجرات کے ایک چھوٹے سے گائوں مہسم شریف سے تعلق رکھتی ہوں‘ ہم چھ بہن بھائی ہیں میں سب سے بڑی ہوں۔ گھر میں مختلف ناموں سے بلاتے ہیں جو زیادہ تر مجھے چڑانے کے لیے رکھے گئے ہیں‘ ایل ایل بی فائنل ائیر کی اسٹوڈنٹ ہوں‘ پڑھنا میرا شوق ہی نہیں بلکہ جنون ہے۔ 23 ستمبر کو اس دنیا میں جلوہ افروز ہوئی بقول امی کہ بہت بڑا احسان کیا اس دھرتی پر (ہاہاہا)۔ عروج‘ رامش (پاشی) نایاب (گلابو) اور اسوہ نور (رانی) میری پیاری بہنیں ہیں۔ شز راجہ‘ سائرہ‘ ربیعہ‘ آمنہ‘ سدرہ‘ مہوش‘ زینی‘ فضا اور شگفتہ (شگو) میری سویٹ فرینڈز ہیں۔ کزنز میں مجھے سب سے اچھی شیبا آپی لگتی ہیں‘ آفتاب ماموں میرے فیورٹ ماموں ہیں۔ میں بہت موڈی ہوں‘ موڈ ہو تو جی بھر کے باتیں کرتی قہقہے لگاتی ہوں۔ موڈ نہ ہو تو سنجیدہ بنی پھرتی رہتی ہیں‘ مجھے کانچ کی سادہ چوڑیاں بہت اچھی لگتی ہیں۔ سردیوں کی بارش بہت پسند ہے چائے میری فیورٹ ہے ‘ فیشن کچھ خاص پسند نہیں لیکن تھوڑا بہت کرہی لیتی ہوں‘ حساس بہت ہوں‘ رونا بہت جلدی آتا ہے۔دوستیں بنانا اچھا لگتا ہے‘ محسن نقوی میرے پسندیدہ شاعر ہیں‘ کتابیں پڑھنا میرا پسندیدہ مشغلہ ہے۔ سفید اور کالا رنگ پسند ہے‘ فیورٹ پرفیوم چیچی ہے جو ہمیشہ میرا بھائی اسرار ہی مجھے لاکر دیتا ہے۔ مجھے اپنے اردگردبکھرے ہر رشتے سے محبت ہے میں سوچتی بہت زیادہ ہوں‘ چھپکلی اور کاکروچ سے بہت ڈر لگتا ہے۔ دنیا میں سب سے زیادہ عزیز مجھے میرے پاپا ہیں‘ میں ان سے بہت محبت کرتی ہوں‘ اللہ تعالیٰ انہیں سلامت رکھے‘ آمین۔ باتیں تو بہت ہیں لکھنے بیٹھوں تو ختم ہی نہ ہوں لیکن اس سے پہلے کہ اماں جی اپنی جوتی سے میرے سر کا نشانہ باندھیں‘ مجھے اجازت دیں‘ دعائوں میں یاد رکھیے گا میرا تعارف کیسا لگا پڑھ کر ضرور بتایئے گا اس شعر کے ساتھ اجازت چاہوں گی۔
تیرا عکس روشن ہے ان ویران آنکھوں میں
وگرنہ کیا رکھا ہے ان بے جان آنکھوں میں
اللہ نگہبان۔
بی بی اسماء سحر
گرمی کی آمد آمد ہے‘ بہاروں کی نوید سناتی پرندوں کی چہچہاہٹ زندگی کی امید دلاتی ہے۔ تعارف کیا یہ الجھے ریشم سے دھاگے ہیں شاید اگر سمجھ نہ بھی آئے تو حلقہ نظر میں مت لایئے گا کہ کتھارسس کی ایک کوشش سی ہے‘ میں یکم ستمبر کو پیدا ہوئی نام دادی جان نے ایک معتبر بزرگ کی کامل بیٹی اور سیدہ کے نام پر اسماء بی بی رکھا اور سحر ہم بس یونہی لکھ دیتے ہیں۔ ابو جان اور امی محبت کے مینار ہیں‘ جنہوں نے اپنی بہت ساری ذمہ داریاں احسن طریقے سے پوری کیں اور کررہے ہیں۔ اللہ کریم میری والدہ اور بابا کو صحت سلامتی اور خوشیوں بھری زندگی عطا کرے‘ اپنی رحمت خاص میں سے کہ میرا کوئی عمل اس کی نعمتوں کے قابل نہیں۔ بہن بھائی زندگی کی راہوں کے ناتجربہ کار کم عمر مسافر ہیں‘ ان کے لیے ہمہ وقت دعاگو ہوں کہ ان کا یہ سفر صراط مستقیم قرب الٰہی اور نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت اور اطاعت سے مالا مال ہو۔ دنیا میں شاید کوئی بھی اپنی ذات سے اتنا لاعلم نہ ہو جتنی کہ میں۔ رنگ سب ہی اچھے ہوتے ہیں اور جو موقع پر میسر ہو اپنالیا۔ زیورات کا کوئی خاص شوق نہیں‘ خوب صورت بنانا دوسروں کو میری کمزوری ہے‘ رنگوں‘ کھانوں‘ لباس اور زیورات میں قناعت پسند ہوں یا شاید یہ میری اولیت نہیں ہیں۔ ادب موسیقی‘ شاعری‘ تمثیل‘ فلم‘ مصوری غرض فنون لطیفہ کی ہر ہر شاخ کا جنون میری رگوں میں دوڑتا ہے۔ مطالعہ میرا شوق ہے یا شاید شوق کہنا بجا نہ ہوگا کہ کوڑے کے ڈھیر سے بھی اخبارات اٹھا کر پڑھ لیتی ہوں۔ تحریر اور اچھی تحریر میری اولین پسند ہے۔ رومی جامی ‘ بابا فرید‘ بلے شاہ‘ میاں محمد بخش‘ شاہ حسین‘ امیر خسرو‘ غالب‘ میر‘ اقبال‘ حالی‘ شبلی‘ فیض‘ فراز‘پروین‘ نصیر الدین انصیر‘ محسن‘ وصی‘ مہر شاہ انیس غرض لاتعداد شعراء ہیں جن کی شاعری میری کمزوری ہے۔ فطرت رویے نفسیاتی لسانیات قومیت‘ سیاست تصوف یہ سب میرے پسندیدہ موضوعات ہیں۔ تنقید اور تبصرہ بقول میری اماں کے تمہیں تو بولنے کا خبط ہے مگر صرف صوفی کے موضوعات پر علم میرا جنون ہے۔ دنیا کے ہر موضوع پر جاننے کا کریز ہے ‘متلون مزاجی حساسیت اور مروت اپنی ان عادات نے مجھے بے حد خوار کیا ہے‘ خبر نہیں یہ خوبیاں ہیں یا خامیاں بہرحال کبھی کبھی میرا دل چاہتا ہے کہ یہ دل پتھر ہوجائے ‘ ہزاروں لاکھوں ٹھوکریں سرد رویے بے اثر ہوجائیں گے (اللہ معاف فرمائے)۔ اپنے آنسوئوں سے میں سخت عاجز ہوں‘ ہدایت کی طالب ہونے کے بجائے پُریقین ہوں کہ ہمہ وقت یہی میری ماں کی دعا ہے۔ مجھے اپنے کوتاہ بین ہونے کا سخت افسوس ہے‘ نامعلوم مالک کی کن کن نعمتوں کا استعمال کرتے ہوئے ہم محرومی کا رونا روتے ہیں‘ الفاظ اور زبانوں کا انجذاب میرے اندر بہت جلدی ہوتا ہے۔ مختلف زبانوں کو سیکھنا‘ ثقافتوں کو جاننا اور تاریخ کے اوراق کھولنا‘ دنیا کے مذاہب کے بارے میں جاننا خاص کر یہودیت اور بدھ ازم ‘ ارض پاک کی محبت میری رگ رگ میں بھری ہے۔ میری نظریں پاکستان کا مستقبل بے انتہا شاندار دیکھتی ہیں۔ پاکستانیوںکا مستقبل روشن بلکہ بے حد روشن ہے۔ محبت میں جنون کی حد تک واحدانیت ہوتی ہے‘ یکسانیت سے بہت جلد اکتا جاتی ہوں۔ گمنام خاموش موت سے خوف سا آتا ہے مگر ہجوم سے بھی الجھن ہوتی ہے‘ وہ کیا شعر کا مصرعہ ہے ’’آپ ہی جانتے ہو ہم کو کیا چاہیے‘‘ رسمی تعلیمی سلسلہ کچھ تعطل کا شکار ہے ورنہ دیکھا جائے تو زندگی کا ہر لمحہ سکھاتا ہے‘ فطرت سادگی خوب صورتی اپنے وقارکے ساتھ ہمیشہ کشش کا باعث ہوتی ہے۔ میرے اندر کہیں بہت دور سے ایک مدہم ہے ‘ نجانے وہ کون بلند بخت ہوتے ہیں جو اس کے قریب ترین ہوجاتے ہیں جن کا ہر مسام انا الحق پکارتا ہے۔ میرا مالک میرے محسنوں اور میری ماں کی دعا کے صدقے ان میں نہیں تو ان کے غلاموں میں شامل کردے‘ آمین۔ اجازت اس دعا کے ساتھ کہ اللہ پاک ہمیں اپنی رحمت خاص سے عطا کرے کہ مانگتے ہوئے ہم نہیں جانتے کہ خالق کبھی اپنی تخلیق کو آگ میں نہیں ڈالتا اور بسا اوقات انسان کی طلب ہی آگ ہوتی ہے تو کیونکر وہ آگ میں ڈالے گا‘ فی امان اللہ۔
شازمہ رفیق
السلام علیکم! ڈئیر قارئین اور رائٹرز سب کیسے ہیں؟ امید ہے کہ فٹ فاٹ ہوں گے اللہ تعالیٰ ہمیشہ آپ کو ایسا ہی رکھے‘ آمین۔ میں پہلی بار شرکت کررہی ہوں اس لیے مابدولت کو خوشی خوشی تھوڑی سی جگہ دیں‘ امید ہے کہ مجھ سے مل کر اچھا لگے گا۔ اب تھوڑا سا تعارف ہوجائے‘ میرا نام شازمہ ہے گھر والے مختلف ناموں سے پکارتے ہیں ۔ کزنز شازی یا شامہ کہہ کر بلاتے ہیں‘ قصور کے قریب گائوں بھہیڑ سو ہڈیاں سے میرا تعلق ہے اور میں ایف اے کی اسٹوڈنٹ ہوں جہاں تک آنچل سے میرا تعلق ہے وہ بہت گہرا اور پرانا ہے اور میں آنچل کو بہت پسند کرتی ہوں۔اس لیے مابدولت لکھنے کی جسارت کررہی ہیں‘ یہ سوچ کر کہ آنچل یا حجاب میں جگہ ضرور ملے گی ناں۔ چلیں اب فیملی انٹروڈکشن ہوجائے۔ ہم دو بہنیں اور ایک بھائی ہے‘ فہد بھائی ہم سب سے بڑے ہیں اور ایسوسی انجینئر ہے اور بی ایس سی ماس کمیونیکیشن کررہے ہیں‘ دوسرے نمبر پر مابدولت‘ میرا سب سے بڑا خواب رائٹر اور ڈیزائنر بننا ہے۔ دعا کیجیے گا کہ اللہ تعالیٰ مجھے کامیاب کرے‘ آمین۔ سب سے چھوٹی ہما یعنی میری سسٹر ہے‘ وہ بی ایس سی سائیکلوجی کررہی ہے‘ اللہ تعالیٰ نے ہم تینوں کو بہت ذہانت سے نوازا ہے‘ الحمدللہ۔ اب بات کچھ اپنے بارے میں ہوجائے‘ کھانے میں بریانی‘ شامی کباب‘ فش پکوڑے‘ گول گپے اور بہت سی اسپائسی چیزیں پسند ہیں۔ میں خود بھی بہت اچھی کوکنگ کرلیتی ہوں لیکن امی جی کے ہاتھ کا پکا کھانا میری کمزوری ہے ‘ اللہ تعالیٰ انہیں تند دوستی و صحت عطا فرمائے‘ آمین اور ہمارے سر پر ان کا سایہ قائم رکھے‘ آمین اور میرے بابا جانی بہت اچھے اور نیک انسان ہیں۔ منافقت اور جھوٹ سے نفرت ہے۔ بہت صاف گو ہوں‘ جو بات بری لگے اس کے منہ پر کہہ دیتی ہوں۔ اب آتے ہیں خوبیوں اور خامیوں کی طرف‘ سب سے بڑی بات یہ ہے کہ ہر کسی کا جلد اعتبار کرلیتی ہوں جس کا خمیازہ ہر حال میں مجھے ہی بھگتنا پڑتا ہے‘ خوبیوں کے بارے میں دوسرے ہی بتاسکتے ہیں اب اپنے منہ میاں مٹھو کیا بننا(ہاہاہا)۔ میری سب سے اچھی دوست اور کزن سدرہ تھی لیکن وہ اب اس دنیا میں نہیں رہی لیکن ہمارے دلوں میں زندہ ہے‘ اللہ تعالیٰ اسے غریق رحمت فرمائیں اور کروٹ کروٹ جنت نصیب فرمائے‘ آمین۔ میری اور بھی بہت سی فرینڈز ہیں میمونہ‘ حبیبہ‘ صوفیہ‘ کنول‘ بشریٰ اور نمرہ ہیں۔ میری کزنز ماریہ‘ آمنہ‘ صباء‘ آنسہ‘ کاشفہ‘ ادیبہ‘ توشیبہ‘ آمنہ‘ ثمرہ‘ اقصیٰ‘ عنیزہ‘ ہمیرا‘ عطیہ‘ زینب‘ نمرہ سب بہت اچھی ہیں ‘ ہم سب کزنز کا آپس میں بہت پیار ہے اللہ تعالیٰ ہمیں ہمیشہ خوش ہی رکھے۔ میری اور بھی بہت سی کزنز ہیں اگر میں ان کے بھی نام لکھنا شروع کروں تو میرا تعارف ختم ہوجائے گا۔ میری فیورٹ رائٹرز نبیلہ عزیز‘ عفت سحر طاہر‘ اقرأ آپی‘ سمیرا شریف طور‘ سباس گل اور نازیہ کنول نازی ۔ میری فیورٹ شخصیت حضور پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات پاک ہے‘ اللہ تعالیٰ ہمیں ان کے نقش قدم پر چلنے کی توفیق عطاء فرمائے‘ آمین۔ فیورٹ شاعر پروین شاکر‘ قتیل شفائی‘ وصی شاہ احمد فراز اور محسن نقوی ہیں۔ فیورٹ سنگرز اے ار رحمان‘ راحت فتح علی خان‘ محمد رفیع‘ عاطف اسلم‘ ابرار الحق ہے۔ فیورٹ کلر وائٹ‘ ریڈ اور بلیک ہے ویسے تو میں ہر لباس میں خوب صورت لگتی ہوں (آہم) لیکن مجھے لانگ شرٹ‘ ٹرائوزر اور فراک‘ چوڑی دار پاجامہ پسند ہے۔ موسم سردیوں کا پسند ہے‘ چائے بہت شوق سے پیتی ہوں‘ میں جو چائے پکاتی ہوں وہ میرے اور آنسہ کے علاوہ کوئی نہیں پی سکتا۔ بڑی اعلیٰ قسم کی چائے پکاتی ہوں (سمجھا کریںنا) میرا خیال ہے کہ تعارف بہت لمبا ہوگیا ہے اس سے پہلے کہ آپ بور ہوجائیں‘ اللہ حافظ۔ تعارف کیسا لگا بتایئے گا اپنا خیال رکھیے گا اور ان کا بھی جو آپ کا خیال رکھتے ہیں اور ان کا بھی جو آپ کا خیال رکھتے ہیں۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close