Hijaab Mar-17

حمد و نعت

ریاض حسین قمر/قمرالدین انجم

حمد باری تعالیٰ

اے خالق حقیقی ارض و سماں کے مالک
شمس و قمر کے مالک باد صبا کے مالک
تونے شجر اگائے تو نے حجر بنائے
گلشن میں تیرے دم سے ہیں پھول مسکرائے
ادراک سے ہے باہر جو کچھ بنا دیا ہے
تونے زمیں کے اندر لاوا پکا دیا ہے
حکمت سے تو نے اپنی آتش فشاں بنائے
ہر چیز تیرے آگے رہتی ہے سر جھکائے
انسان کو عطا کی عقل سلیم تو نے
یوں کردیا ہے اس کو سب سے عظیم تو نے
مولا بنائے تو نے کیا خوش نما پرندے
اور جنگلوں میں تو نے پیدا کیے درندے
ہے قہر میں بھی یکتا، رحمن بھی ہے مولا
ہر مرض لادوا کا درماں بھی ہے مولا

ریاض حسین قمر

نعت رسول مقبول  صلی اللہ علیہ وسلم

مجھے آپ نے بلایا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
میرا مرتبہ بڑھایا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
مجھے جب بھی غم نے گھیرا میرا ساتھ سب نے چھوڑا
تو مری مدد کو آیا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
میں غموں کی دھوپ میں جب ترا نام لے کے نکلا
ملا رحمتوں کا سایہ یہ کرم نہیں تو کیا ہے
یہ شرف بڑا شرف ہے میرا رخ تری طرف ہے
مجھے نعت گو بنایا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
میری زندگی کے دامن پہ برس پڑیں بہاریں
تیرے درد نے رلایا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
کبھی موج کے بھنور سے کبھی موج پر خطر سے
میری نائو کو بچایا یہ کرم نہیں تو کیا ہے
در مصطفیٰ سے انجم میں خود آگیا مگر دل
کبھی لوٹ کر نہ آیا یہ کرم نہیں تو کیا ہے

قمر الدین انجم

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close