Aanchal Nov-16

درجواب آں

مدیرہ

عنیقہ محمد بیگ… کراچی
عزیزی انیقہ! سدا سہاگن رہو‘ یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی کہ آپ بھی اپنی زندگی کے نئے سفر پر گامزن ہیں اور پیادیس رخصت ہوکر بزگوں کی دعائوں کے سنگ عروس البلاد پہنچ چکی ہیں۔ بے شک اب ذمہ داریاں اور مصروفیات بھی بڑھ گئی ہوں گی لیکن قوی امید ہے کہ پہلے کی طرح اب بھی اپنی مصروف گھڑیوں میں سے چند پل ہمارے نام کرتی رہیں گی۔ اپنی شادی کا احوال اور نئے سفر کی حسین شروعات کے خوب صورت لمحات کو شیئر کرنا چاہیں تو ضرور ارسال کردیں ماہنامہ آنچل و حجاب ان خوشیوں کے لمحات میں آپ کی خوشیوں کے احساسات کو دوچند کردے گا۔
ندا حسنین… کراچی
ڈئیر ندا! شاد و آباد رہو‘ آپ کی والدہ کی علالت کے متعلق جان کر دل افسردہ ہوگیا‘ بے شک مائوں کے وجود سے ہی گھر کی رونق اور خوشیاں قائم ہوتی ہیں اور اگر یہ مہربان وجود بیمار ہوجائے تو لگتا ہے گھر کی ہر شے میں اداسی و افسردگی کا غلبہ نمایاں ہے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعاگو ہیں کہ آپ کی والدہ کو صحت کاملہ عطا فرمائے اور آپ کی جنت ہمیشہ ایسے ہی آپ کے سنگ رہے اور آپ ان کی ڈھیروں خدمت کرکے اپنی عاقبت سنوارتی رہیں‘ آمین۔ قارئین سے بھی دعائے صحت کی اپیل ہے۔
فوزیہ سلطانہ… تونسہ شریف
ڈئیر فوزیہ! خوش رہو‘ پہلی کامیابی پر ہماری جانب سے آپ کو ڈھیروں مبارک باد۔ لوگوں کا کام تو باتیں بنا ہے بے شک تحریر عام ہی سہی لیکن ہر کوئی یہ عام سی تحریر بھی نہیں لکھ سکتا بہرحال آپ ہرگز افسردگی ومایوسی کو خود پر طاری مت کریں ایسی باتوں کو مثبت انداز میں لیں اور بہتر سے بہترین کے سفر کی جانب گامزن ہوجائیں۔ بے شک تخلیقی امر کوئی بھی ہو مشکل اور کٹھن ہی ہوتا ہے چاہے وہ ایک سطر ایک جملہ ہی کیوں نہ ہو۔ بہرحال آپ کی والدہ نے تو آپ کو سراہا اور پسند کیا اس سے بڑھ کر کسی کی تعریف و تحسین اہمیت نہیں رکھتی۔ امید ہے قلمی کاوش جاری رکھیں گی‘ آپ اپنا مکمل پتا آفس کے نمبر پر رابطہ کرکے نوٹ کروا دیں تاکہ آپ سے قلمی رابطہ بحال ہوسکے۔
آسمارہ انصاری… لاہور
ڈئیر آسمارہ! جیتی رہو‘ آپ آج سے دس سال پہلے کی بات کررہی ہیں اور ان گزرے ماہ وسال میں گردش زمانہ کی بدولت بہت سے تغیرات رونما ہوئے جن میں لوگوں کی پسند و ناپسند کے معیار بھی بدلتے رہتے ہیں۔ آج زیادہ تر لوگ تخیل اور فینٹسی سے نکل کر معاشرے کی حقیقت اور سچائیوں کا سامنا کرنا چاہتے ہیں۔ حقیقی زندگی کے حقیقی مسائل کی ترجمانی دیکھنا پسند کرتے ہیں بہرحال آپ کی اپنی الگ سوچ ہے اور بہت سے لوگ اس کے حامل بھی ہیں کہ حقیقت کے تلخ حقائق کو فراموش کرنے کے لیے کچھ نہ کچھ تفریح بھی ہونی چاہیے۔ آپ کی تجویز نوٹ کرلی ہے جلد عمل کرنے کی کوشش کریں گے‘ امید ہے آئندہ بھی رہنمائی و رہبری کا فریضہ سر انجام دیتی رہیں گی۔
جیا عباس کاظمی… تلہ گنگ
پیاری جیا! سدا سہاگن رہو‘ بے شک آپ سے دیرینہ تعلقات اس بات کے گواہ ہیں کہ آپ ہماری پرانی قارئین میں سے ایک ہیں۔ خط و کتابت کے سلسلے یہ نصف ملاقاتیں اگرچہ تعطل کا شکار رہیں مگر ہمارے اور آپ کے رشتے کو ان قلمی سہاروں کی ضرورت نہیں ہے آپ کے حالات کے متعلق جان کر تمام حقیقت کا ادراک بخوبی ہوگیا۔ اللہ سے دعاگو ہیں کہ آپ کو اپنے ہمسفر کے سنگ زندگی کی ڈھیروں خوشیاں نصیب فرمائے تاکہ کوئی تشنگی و محرومی باقی نہ رہے۔ آپ کے مرحوم بھائی کے لیے قارئین سے دعائے مغفرت کے ملتمس ہیں۔
سدرہ احسان… سمبڑیال
عزیزی سدرہ! سدا شاد رہو‘ آپ کا تبصرہ تاخیر سے موصول ہونے کی بناء پر شائع نہیں ہوسکا البتہ پیغام کے لیے ضرور کوشش کریں گے کہ جلد لگاسکیں۔ اس سلسلے کے لیے بہت سی ڈاک ہر ماہ موصول ہوتی ہے جبکہ صفحات کی کمیابی کی باعث بعض پیغامات شامل محفل ہونے سے محروم رہ جاتے ہیں بہرحال مایوسی ترک کردیں متعلقہ شعبے والوں کے پاس محفوظ ہوا تو ضرور شامل ہوجائے گا۔ آپ کی دیگر تحاریر نوٹ کرلی ہیںالبتہ صحت کے مسائل کے لیے ’’آپ کی صحت‘‘ سلسلے میں الگ سے خط ارسال کردیں ڈاکٹر صاحب ازخود رہنمائی کردیں گے اور جواب آنچل کے صفحات پر آپ کو مل جائے گا۔
عائشہ رحمن ہنی… ریالی مری
ڈئیر عائش! سدا آباد رہو‘ آپ سے یہ نصف ملاقات بے حد اچھی لگی ابتدائی سطور پر لکھا شعر جس میں گلے اور شکوے کے تمام رنگوں کو آپ نے بخوبی سمیٹ دیا ہے بہرحال آپ کے خطوط اضافی تو نہ تھے البتہ تاخیر کا شکار ضرور تھا۔ اس بار جواب حاضر ہے امید ہے خفگی اور ناراضگی کے سائے چھٹ جائیں گے۔ آپ کی تحریر کے لیے معذرت خواہ ہیں‘ ابھی مزید محنت اور وسیع مطالعہ کی ضرورت ہے۔
شازیہ الطاف ہاشمی… شجاع آباد
ڈئیر شازیہ! خوش و خرم رہو‘ بزم آنچل میں آپ کی پہلی بار شرکت بے حد اچھی لگی۔ اس کے ساتھ ہی دو افسانے ’’داغ‘‘ اور ’’دوست‘‘ بھی موصول ہوئے‘ انداز تحریر میں پختگی تو ہے لیکن موضوع کا چنائو کمزور ہے۔ البتہ دوست کے عنوان سے آپ کی تحریر قدرے بہتر ہے اس لیے منتخب ہوگئی ہے جبکہ دوسری تحریر کے لیے معذرت خواہ ہیں۔ آپ آئندہ بھی بزم آنچل میں شرکت کرسکتی ہیں۔
مشا علی مسکان… کمر مشانی
ڈئیر مشا! سدا خوش رہو‘ محبت اور چاہت کی خوشبو لیے آپ کا نامہ موصول ہوا۔ پہلی کامیابی کے ساتھ ہی ایک دوسری کامیابی بھی آپ کی منتظر ہے یعنی آپ کی تحریر سعادت قبولیت کا درجہ حاصل کرنے میں کامیاب ٹھہری‘ آنچل یا حجاب جہاں بھی گنجائش ہوئی جلد لگانے کی کوشش کریں گے‘ اس کامیابی پر ڈھیروں مبارک باد۔
ام ایمان قاضی… کوٹ چھٹہ
ڈئیر ایمان! سدا آباد رہو‘ آپ کا شکوہ بجا ہے کہ کہانیوں کی اشاعت میں تسلسل نہیں رہا‘ مگر ہر ماہ ایک کثیر تعداد میں بہنوں کی کہانیاں موصول ہوتی ہیں اور ہر کسی کی یہی خواہش ہوتی ہے کہ اس کی تحریر جلد از جلد شائع کردی جائے‘ ایسے میں دیر سویر تو ہوہی جاتی ہے۔ اسی شکوے کو دور کرنے کی خاطر ماہنامہ حجاب کا اجرأ کیا گیا‘ بہرحال ناامید ہونے کے بجائے آنچل کے شجر سے پیوستہ رہیے‘ ضرور ایک دن آپ کے دامن میں بھی بہار آجائے گی یعنی آپ کی تحریر آنچل میں بھی لگ جائے حجاب کی طرح۔
امبرینہ‘ رابعہ… کراچی
عزیزی سسٹرز! جیتی رہو‘ پچھلے سات سال سے آپ آنچل کے ہمقدم ہیں‘ یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی۔ آپ لکھنا چاہتی ہیں ضرور لکھیں آنچل و حجاب دونوں کے لیے لکھیں‘ مستقل سلسلوں میں آپ ہر ماہ شامل ہوسکتی ہیں‘ اس کے لیے اجازت کی قطعاً ضرورت نہیں ہے۔
ثانیہ مغل… سرگودھا
ڈئیر ثانیہ! سدا ہنستی رہو‘ طویل عرصے کی غیر حاضری کے بعد ایک افسانے کے سنگ آپ کی شرکت اچھی لگی۔ ہم نے کب کہا ہے کہ آپ نہیں لکھ سکتیں‘ آپ اچھا اور بہت بہتر لکھ سکتی ہیں‘ اسی لیے آپ کی یہ تحریر قبولیت کا درجہ حاصل کرنے میں کامیاب ٹھہری۔ ’’سزا اور آزمائش‘‘ کے عنوان سے یہ تحریر جلد حجاب کی زینت بن جائے گی‘ حجاب و آنچل کی پسندیدگی کے لیے مشکور ہیں‘ آئندہ بھی اسی طرح کے موضوعات پر قلم اٹھائیں۔
ارباب ہاشمی شام
گائوں نوتھیہ قریشیاں
پیاری ارباب! سدا شاد رہو‘ آپ کا شکایت نامہ موصول ہوا‘ اتنی بدگمانی ٹھیک نہیں۔ ڈاک اگر وقت پر مل جائے تو درجواب آں میں ضرور شامل کی جاتی ہے پھر آپ ناامید کیونکر ہوئیں۔ آپ سے ذاتی دشمنی تو نہیں‘ ہمارا دل تو وفائوں کے معاملے میں خود کفیل ہے۔ آپ محروم اس لیے رہیں کہ ڈاک ہم تک پہنچی ہی نہیں‘ حجاب کے لیے بھی آپ کی نگارشات موصول نہیں ہوئیں۔ کوشش جاری رکھیں‘ تحریر پڑھ کر جلد ہی اپنی رائے سے آگاہ کریں گے۔
اقراء لیاقت… حافظ آباد
پیاری اقراء! جگ جگ جیو‘ آپ کی دوست عاصمہ نسیم کی والدہ کی رحلت کا افسوس ہوا‘ اس میں کوئی شک نہیں کہ والدین کی محبت کا نعم البدل نہیں‘ اس لیے ہر شخص والدین کی سلامتی کی دعائیں مانگتا ہے لیکن دنیاوی زندگی فانی ہے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کی دوست کے گھر والوںکو صبر جمیل عطا فرمائے اور ان کی والدہ کو اپنی جوار رحمت میں جگہ عطا کرے‘ آمین۔
بلیو فیری… کوٹلہ جام بھکر
پیاری گڑیا! شاد و آباد رہو‘ آپ کی شاعری موصول ہوئی‘ متعلقہ شعبہ کو بھیج دی گئی‘ رد و قبول کا فیصلہ وہیں طے پاتا ہے۔ آپ نامور شعراء کی شاعری پڑھیں‘ لکھنے میں بھی مدد ملے گی ساتھ ہی شاعری میں بھی نکھار آئے گا۔ امید ہے اس بات پر عمل کرتے ہوئے کوشش جاری رکھیں گی۔
ایماب علی… گجرات
ڈئیر ایماب! جیتی رہو‘ آپ کا نامہ موصول ہوا‘ جواب بھی حاضر ہے آپ کی تحریر باری آنے کے انتظار میں ابھی قطار میں ہے‘ ان شاء اللہ جلد ہی پڑھ کر اپنی رائے سے آگاہ کریں گے‘ امید اچھی رکھیں۔ ’’مٹی نہ بھرول ہن‘‘ اس نام سے آپ کی کوئی تحریر موصول نہیں ہوئی البتہ ’’دل دریا سمندر ڈونگے‘‘ پر آپ کی گرفت کمزور ہی‘ اس کی بناء پر ناقابل اشاعت ٹھہری۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو اپنے مقصد میں کامیاب کرے‘ آمین۔ امید ہے آپ کی شکایت دور ہوگئی ہوگی۔
رومی غفور… شاہ کوٹ
ڈئیر رومی! سدا مسکراتی رہو‘ آپ کا شکایت نامہ موصول ہوا‘ دیر سے موصول ہونے والی ڈاک ہم اسی شمارے میں شامل نہیں کرسکتے کیونکہ تکمیلی مراحل کی جانب بڑھ چکا ہوتا ہے اس لیے تاخیر سے ملنے والی تمام ڈاک ہم آئندہ کے لیے رکھ لیتے ہیں۔ ماہنامہ آنچل کی پسندیدگی کے لیے جزاک اللہ‘ تحریر بھیجنے کے لیے اجازت کی کیا ضرورت‘ شرائط مدنظر رکھتے ہوئے ایک سطور چھوڑ کر اور مختصر موضوع پر قلم بند کریں۔ باقی آپ کی تحریر پڑھ کر ہی اپنی رائے سے آگاہ کر پائیں گے۔
یاسمین کنول… پسرور
ڈئیر یاسمین! سہاگن رہو‘ آپ کے ماموں کی رحلت کے متعلق جان کر بے حدا فسوس ہوا۔ بے شک والدین اللہ سبحان و تعالیٰ کی عظیم نعمت ہیں اور ان کا سایہ سر سے اٹھ جانا ایک بڑا سانحہ ہے۔ ان آزمائش کی گھڑیوں میں اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعاگو ہیں کہ آپ کو اور دیگر اہل خانہ کو صبر و استقامت عطا فرمائے‘ قارئین سے بھی دعائے مغفرت کے ملتمس ہیں‘ آنچل کی پسندیدگی کے لیے شکریہ۔
پرنسز اقو… تلہ گنگ
ڈئیر پرنسز! سدا آباد رہو‘ سلطنت آنچل میں آپ کی تشریف آوری بے حد اچھی لگی۔ یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی کہ آپ نے آئی کام میں ٹاپ کیا ہے‘ اللہ سبحان و تعالیٰ مزید کامیابیاں آپ کے دامن میں بھردے اور آپ یونہی اپنے والدین کے لیے باعث فخر بنی رہیں۔ آپ کی چاہت و پُرخلوص جذبوں پر ہمیں کوئی شک نہیں‘ امید ہے آپ کو بھی یقین ہوجائے گا۔
عائشہ اختر بٹ… سرگودھا
ڈئیر عائش! سدا مسکرائو‘ آپ کا مفصل خط پڑھ کر بے حد اچھا لگا‘ بے شک آپ نے اپنے تمام احساسات وجذبات کا اظہار جس چاہت سے کیا ہے وہ قابل تحسین ہے۔ محبتوں کے قرض کو الفت چاہت سے چکا کر دستبردار ہوجائیے ویسے پیاری سی بھتیجی کی آمد پر ڈھیروں مبارک باد۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو زندگی کی بہت سی خوشیاں نصیب فرمائے‘ آمین۔ آپ کا میگزین موصول ہوگیا ہے پڑھ کر بہت پسند آیا۔ جزاک اﷲ۔
ثمینہ سحر… جام شورو
عزیزی ثمینہ! شاد و آباد رہو‘ امید ہے اس نصف ملاقات کے بعد بے حد خوش ہوں گی‘ ہمیں بھی آپ سے مل کر اچھا لگا اس سے پہلے کے خطوط ہم تک پہنچ ہی نہیں پائے لہٰذا جواب کیسے اور کیونکر ارسال کرتے ضرور محکمہ ڈاک کی غفلت کے نذر ہوگئے۔ آپ لکھنا چاہتی ہیں ضرور لکھیں اپنا مختصر افسانہ لکھ کر ارسال کردیں جہاں بھی رہنمائی کی ضرورت ہے وہ آپ کو مل جائے گی اگر تحریر معیاری ہوئی تو ضرور حوصلہ افزائی کی جائے گی۔
سید نیلم شاہ… رحیم یار خان
ڈئیر نیلم! خوش رہو‘ حجاب کے لیے ارسال کی گئی تحریر ’’انقلاب لانا منع ہے‘‘ موصول ہوئی‘ پڑھ کر اندازہ ہوا کہ آپ کی یہ تحریر پہلے کے مقابلے میں کمزور ہے اس لیے حجاب کے صفحات پر جگہ بنانے میں ناکام ٹھہری۔ اشاعت شدہ تحریر کو سامنے رکھ کر پھر قلم اٹھائیں‘ ہر بات کا مثبت پہلو بھی سامنے رکھیں۔ حجاب بھی آپ لوگوں کا ہے اسے بھی آپ لوگوں نے سجانا و سنوارنا ہے۔ بہن کو اجازت کی قطعی ضرورت نہیں وہ لکھ سکتی ہیں۔
کوثر خالد… جڑانوالہ
عزیزی کوثر! سدا سہاگن رہو‘ آپ کے پُرخلوص جذبوں کو پذیرائی اور ستائش سے کیونکر نوازا نہ جائے کیونکہ بے شک آپ کے قلم میں موجود روانی بے ساختگی اور دلکشی ہر کسی کا دل موہ لیتی ہے۔ خط پڑھ کر بالمشافہ ملاقات کا گمان ہوتا ہے تو تبصرہ کے ذریعے تمام مناظر صفحۂ قرطاس پر ابھرتے دکھائی دیتے ہیں اگر ہمارے چند تعریفی کلمات سے کسی کے شوق قلم کو مہمیز عطا ہوتی ہے تو یہ تو اچھی اور قابل ستائش بات ہے بہرحال آپ کے چاہنے والے ہر ماہ آپ کو پڑھنا چاہتے ہیں اور آپ سے نصف ملاقات کے متمنی ہوتے ہیں‘ امید ہے اپنے پیاروں کی خواہش کا احترام کرتے قلم سے تعلق برقرار رکھیں گی اور آنچل و حجاب کے زیر سایہ رہیں گی۔
انعم وہاب… ای میل
ڈئیر انعم! سدا مسکرائو‘ وطن سے محبت کے عنوان پر آپ نے اپنی تحریر ارسال کی۔ قیام پاکستان کے پس منظر کو آپ نے بخوبی اس تحریر میں سمونے کی کوشش کی ہے اسی بناء پر یہ تحریر قابل قبول ٹھہری‘ جلد اس تحریر کو لگانے کی کوشش کریں گے اس پہلی کامیابی پر مبارک باد قبول کیجیے۔
مدیحہ عارف… ای میل
ڈئیر مدیحہ! سدا آباد رہو‘ کمائی کی عنوان سے آپ کی تحریر موصول ہوئی‘ آپ نے استاد کی عظمت اور محبت کو بہترین طریقے سے پیش کرنے کی سعی کی‘ بے شک ایک استاد کا بہت بڑا درجہ ہے اور باادب ہی بانصیب ہوا کرتے ہیں البتہ یہ آپ کی پہلی کاوش ہے لہٰذا بعض جگہ آپ کی گرفت کمزور ہے‘ کانٹ چھانٹ اور کچھ ردو بدل کے بعد آپ کی تحریر شامل اشاعت ہوجائے گی‘ اس کامیابی پر ڈھیروں مبارک باد۔
عنزہ یونس انا… حافظ آباد
ڈئیر عنزہ! جیتی رہو‘ مفصل خط پڑھ کر اس بات کا ادراک بخوبی ہوگیا کہ آپ حساس جذبات و احساسات کی مالک اور اپنے وطن سے محبت کرنے والی ہیں۔ بے شک آج ہر محب الوطن ایسے ہی جذبات و احساسات کا حامل ہے‘ آج سرحدوں پر لڑی جانے والی جنگ جیتنے کے لیے ضروری ہے کہ ہم ذہنی طور پر بھی اس غلامی و محکومی کے شکنجے سے خود کو آزاد کریں جو باطل و استعمار کی قوتوں نے ہمارے گرد تنگ کر رکھا ہے‘ ہماری نسل نو واقعی آج اپنی ثقافت روایات اور اقدار کو بھلا کر اپنے حریف کی تقلید میں مصروف ہے۔ انڈین چینلز اور انڈین فیشن کی تقلید کرنے والوں کے لیے واقعی سوچنے کا مقام اور خود کو بدلنے کا مرحلہ ہے۔ اﷲ سبحان و تعالیٰ سے دعاگو ہیں کہ آپ کی دعائوں کو ارض وطن کے حق میں قبولیت کا درجہ بخش دے اور ہمارے وطن پاکستان کی حفاظت فرمائے اور دشمنان اسلام کو نیست و نابود فرمائے‘ آمین۔ آپ کا پیغام اس بار تاخیر سے موصول ہونے کی باعث شامل نہ ہوسکا‘ بہرحال آئندہ ضرور شامل کرنے کی کوشش کریں گے۔
کنزہ مریم… سرگودھا
ڈئیر کنزہ! سدا خوش رہو‘ اصلاحی موضوع پر لکھی آپ کی تحریر ’’انداز‘‘ موصول ہوئی‘ جسے پڑھ کر اندازہ ہوا کہ آپ نے بہت سے پڑھنے والوں کے لیے اچھا اور مثبت پیغام دیا ہے واقعی اگر کوئی کرنا چاہے تو بہت سے کام ہیں جنہیں احسن طریق پر سر انجام دے کر انفرادیت بھی پیدا کی جاسکتی ہے اور اپنی صلاحیتوں کا بھی بھرپور اظہار کیا جاسکتا ہے۔ آپ کا یہ انداز ہمیں بھی بہت بھایا ان شاء اللہ جلد آپ کے اس انداز سے قارئین بھی مستفید ہوں گے۔
ثریا فاطمہ… نوشہرہ
عزیزی فاطمہ! آباد رہو۔ ’’وہ مستقیم رات‘‘ ایک اچھے اور مثبت پیغام کی حامل تحریر بہت سے لوگوں کے لیے رہنمائی کا سبب بن سکتی ہے۔ اسی طرح راہنمائی و رہبری کا فریضہ سر انجام دیتی رہیں‘ اس تحریر کی قبولیت پر ڈھیروں مبارک باد‘ امید ہے آئندہ بھی قلمی تعاون برقرار رہے گی۔
عذرا کنول…اوکاڑہ
ڈیئر عذرا! آباد رہو۔ تحریر کی اشاعت پر ڈھیروں مبارک باد اب جلدی سے اپنا مکمل ایڈرس آفس کے نمبر پر رابطہ کرکے نوٹ کروا دیں تاکہ آپ سے قلمی رابطہ بحال کیا جاسکے۔
ناقابل اشاعت:۔
میری عید کا چاند ہو تم‘ وفا کی دیوی‘ کانچ کی سلطنت‘ حاصل محبت‘ انصاف کی دہلیز پہ‘ دل سمندر‘ شیشوں کا مسیحا کوئی نہیں‘ محبت نہ دیکھے رشتے‘ پچھتاوا‘ آزمائش کے بعد‘ ہجراں یاراں‘ رشتے بھی ایسے ہوتے ہیں‘ رنگ دوستی کا‘ آسماں سے آگے‘ سجدہ‘ اس دل میں تم ہی تم ہو‘ لمحہ آگہی کا‘ دل کی امید‘ میری وفائیں تم سے ہیں‘ میرے خوابوں کا شجر‘ انا کی جنگ‘ میں تو پیامن بھاگئی‘ بیٹی‘ کڈنیپ بیس اسٹوری‘ کہ یہ عید زندگی ہے‘ جان لیا ہم نے‘ عید بکرا اور آغا جان‘ دہرا معیار‘ جنت کا مکین‘ پاکیزہ محبت‘ ایک گھروندا ریت کا‘ اعتبار نہ کریو‘ قربان دل آوارہ گرد‘ ایک تھی روشانہ جنت‘ پاکستان‘ انڈیا اینڈلو اسٹوری‘ ایسا بھی ہونا ہے‘ وہ آنکھیں خفا ہیں مجھ سے‘ میرا درد بے انتہا‘ ایسا بھی ہوتا ہے‘ دربدر عشق میں‘ خاک اور خون کا دوسرا منظر‘ خواب نگر‘ آزادی‘ ابن آدم‘ بنت حوا اور شیطان‘ سوچ کے رنگ‘ کچھ خواب اپنے سے‘ نہ جانے کب پیار ہوگیا‘ گھر اور گھرانہ‘ محبت ہوگئی‘ تھپڑ‘ آدابِ قربانی‘ ناراض‘ اے زندگی‘ دھنک‘ خوشیاں‘ غم اور یہ بندھن‘ ہماری عید چند دے رنگ‘ محبت کی زنجیریں‘ خواب‘ منت اور جنت‘ چمن امید کا‘ اخلاق‘ داغ‘ پیار کی جانب‘ میری دعائوں کا حاصل‘ اک بس تیری چاہت‘ لمحہ آگہی‘ خوابوں کا شہزادہ‘ بلاعنوان‘ جنون‘ نیا انداز مسکراتی زندگی‘ خیالوں کی دنیا‘ محبتوں کی آغوش۔
قابل اشاعت:۔
چائے‘ انا کا بُت‘ تیرا ہجر میرا نصیب‘ ادھوری محبت‘ سعادت‘ روزن‘ دسمبر آئے تم آئے‘ قلب من ورق‘ کمائی‘ خانہ دل‘ دوست‘ تیرے اسیر ہونے تک‘ وہ مستقیم رات‘ یہ عشق ہیں آساں‘ سزا اور آزمائش‘ میرے خوابوں کا شجر‘ہمارا معیار تعلیم‘ حقیقت کے رنگ‘ سگ لیلیٰ‘ بڑی عید بڑی خوشی‘ الٹا چکر‘ محبت رنگ بدلتی ہے‘ مٹی سے محبت‘ عزت‘ زندگی تمام ہوئی‘ جرم محبت‘ ریشم کی زنجیر‘ صدیوں کا سفر‘ انداز‘ دل آشنا‘ دشتِ محبت کا سفر‘ من مسیحا‘ میرا گھر پیارا گھر‘ زلمونی‘ دل تو بچہ ہے جی۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close