Hijaab Jan 19

حمد و نعت

تنویر پھول/ احمد ندیم قاسمی

حمد باری تعالیٰ
اس کا ہر ایک بندے پر لطف عمیم ہے
بندہ گناہگار ہے خالق کریم ہے
پردہ ہے اپنی آنکھ پہ دیکھا نہیں اسے
شہہ رگ سے وہ قریب ہے دل میں مقیم ہے
اللہ کے حبیب محمدؐ ہیں بے گماں
دل نے کہا یہ سر الف لام میم ہے
وہ خود بھی ہے رئوف نبیؐ نے کہا رئوف
انؐ کو کہا رحیم وہ خود بھی رحیم ہے
مخلوق کیا بھلا کرے خالق کی ہمسری
اس کا کوئی شریک نہ کوئی سہیم ہے
تنہائی میں بھی کوئی گناہ کرنے سے ڈرو
دیکھو! وہ ہے گواہ جو حاکم علیم ہے
بے شک اس کی ذات پہ اپنا ہے انحصار
خالق جہاں کا مالک عرش عظیم ہے
شاداب اس کے فضل سے گلزار شاعری
اے پھول تیری حمد میں اس کی شمیم ہے

تنویر پھول

نعت رسول مقبولﷺ
مجھ کو تو اپنی جان سے پیارا ہے ان کا نام
شب ہے اگر حیات ستارہ ہے ان کا نام
ہر شخص کے دکھوں کا مداوا ہے ان کی ذات
سب پاشکستہ گاں کا سہارا ہے ان کا نام
بے یارو بے کسوں کا اثاثہ ہے ان کی یاد
بے چارگان دید کا چارہ ہے ان کا نام
تنہائی کس طرح مجھے محصور کر سکے
جب میرے دل میں انجمن آرا ہے ان کا نام
لفظ محمدﷺ اصل میں ہے نور کا جمال
حسن خدا نے خود ہی سنوارا ہے ان کا نام
قرآن پاک ان پر اتارا گیا ندیم
اور میں نے اپنے دل میں اتارا ہے ان کا نام

احمد ندیم قاسمی

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close