Hijaab Jul-16

آرئش حسن

حدیقہ احمد

عید کا میک اپ
میک اپ کے لیے ہمیں جن چیزوں کی ضرورت ہے۔
TV اسٹک
45.35.36
فیس پائوڈر
نیچرل شیڈز
Pank Cake
یلیو فیئر ‘ نیچرل
آئی شیڈز
کٹ
آئی لائنر
کیک لائنز
مسکارا
بلیک‘ برائون
بلش آن
کٹ
ہائی لائٹر
گولڈن سلور
لب پنسلز
مختلف کلرز میں
فیس شائنر
گولڈن پنک
لپ اسٹک
مختلف شیڈز
نیل پالش
مختلف شیڈز
فائونڈیشن
نیچرل‘ ہلکا اور ڈارک
گلیٹر
ملٹی شیڈ
بلش آن:
گالوں پر نیچرل سرخی دینے کے لیے اور فیس کو چوڑا یا پتلا کرنے کے لیے بلش آن لگایا جاتا ہے۔ یہ ہر رنگ میں دستیاب ہے۔ گالوں پر جبڑوں کی ہڈی سے شروع ہوکر نیچے یا گولائی میں لگایا جاتا ہے‘ صرف چہرے کی ساخت کے مطابق بلش آن لگائیں۔
لپ پنسلز
لپ پنسلز سے لپ کو شیپ دیں‘ جو کلر سوٹ ہو اس کے مطابق لپ پنسل لگائیں۔ ہونٹوں کو شیپ دینے کے لیے اندر کی طرف لپ پنسل یا باہر کی طرف لگائیں۔ موٹے ہونٹ ہوں تو لائن اندر کی طرف دیں اور اگر باریک ہونٹ ہوں تو آئوٹ لائن باہر کی طرف کرکے لگائیں تاکہ ہونٹ خوب صورت نظر آئیں پھر اس کے بعد لپ اسٹک لگائیں۔
فیس شائنر
چہرے کی چمک اور خوب صورتی کے لیے فیس شائنر لگایا جاتا ہے‘ میک اپ کے بعد آخر میں فیس شائنر کاٹچ دیں۔
نیل پالش
سوٹ کے ساتھ میچنگ نیل پالش لگائیں‘ نیل پالش لگانے کا طریقہ یہ ہے کہ پہلے ناخن کے درمیان میں ایک برش لگائیں پھر دونوں سائیڈز پر اس طرح یہ خوب صورتی سے لگے گی اور اسکن پر ٹچ نہیں ہوگی۔ ناخن کے درمیان میں ایک برش پھر ایک برش دائیں طرف اور دوسرا بائیں طرف لگائیں۔
گلیٹر
گلیٹر ہر رنگ میں دستیاب ہے‘ ہیئر اسٹائل بنانے کے بعد میں جیل کے ساتھ گلیٹر لگائیں یہ ویسے بھی چھڑکا جاسکتا ہے۔
اسٹک
میک اپ کے لیے اسٹک اپنے کلرکو دیکھتے ہوئے استعمال کریں یا دو یا تین ملا کر لگائیں تاکہ اچھا شیڈ آئے اور بیس اچھی بنے‘ بالکل گوری نہ بنے۔
فیس پائوڈر یا پین کیک
گرمیوں میں ہم پین کیک استعمال کریں گے کیونکہ یہ واٹر بیس ہے اور اسپنچ کو گیلا کرکے استعمال ہوتا ہے۔ پسینے کے ساتھ بیس نہیںاترنی چاہیے‘ کتنا ہی ٹائم گزر جائے۔
آئی لائنر
آئی لائنر آنکھ کے اوپر پلکوں کے قریب لگایا جاتا ہے۔ ایک طریقہ بالکل سیدھا ہے‘ دوسرا لمبا پھر موٹا پتلا آنکھ کی شیپ کے مطابق لگایا جائے۔ آج کل کیک لائنر دستیاب ہے اور اس کا رزلٹ بھی اچھا ہے۔ لائنر آنکھ کے نیچے لگائیں ‘ اس سے بھی آنکھ خوب صورت نظر آتی ہے۔
مسکارا
پلکوں کو گھنا اور خوب صورت کرنے کے لیے مسکارا لگایا جاتا ہے۔ یہ آج کل مارکیٹ میں ہر کلر میں دستیاب ہے۔ مسکارا ٹو ان ون لے لیں تو بہت اچھا ہے جس کے ایک سائیڈ پر ٹرانسپیرنٹ مسکارا لگائیں جب یہ خشک ہوجائے تو پھر بلیک لگالیں۔ اس طرح پلکیں گھنی‘ خوب صورت لگیں گی اور مصنوعی پلکیں لگانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔
ہائی لائٹر
گولڈن یا سلور ہائی لائٹر آنکھ کے پپوٹے پر لگایا جاتا ہے اور آئی بروز کے نیچے آنکھ بڑی اور خوب صورت لگے۔
جلد کی ساخت اور چہرے کی رنگ کے مطابق میک اپ کیجیے
سجنے سنورنے کے لیے جہاں میک اپ کا سامان اور اس کے صحیح استعمال کا جاننا ضروری ہے‘ وہاں یہ بھی ضروری ہے کہ میک اپ کرنے سے پیشتر آپ کو یہ علم بھی ہو کہ آپ کے چہرے کے خدوخال کیسے ہیں‘ آپ کی رنگت کیسی ہے‘ جلد کی ساخت کیسی ہے اور آپ کے چہرے پر کس قسم کا میک اپ مناسب رہے گا۔ اس کے ساتھ ہی سب سے اہم بات یہ ہے کہ آپ کو علم ہونا چاہیے کہ کس قسم کی جلد پر کیسا میک اپ ہونا چاہیے۔
چکنی جلد پر میک اپ
چکنی جلد پر ہمیشہ خشک میک اپ کرنا چاہیے‘ چہرے پر اسکن ٹانک کی بجائے اسٹریجنٹ استعمال کریں اور میک اپ واٹر بیس میں ہو جس سے اسکن پر چکنائی نہیں نکلے گی‘ میک اپ سے پہلے چہرے پر برف کی ٹکور ضرور کرلیں۔
خشک جلد پر میک اپ
موسچرائز لوشن خشک جلد کے لیے استعمال ہوتاہے‘ یہ جلد کو نمی اور روغن فراہم کرتا ہے۔ چکنی جلد کو اس کی ضرورت نہیں ہوتی۔ خشک جلد پر آپ میک اپ اسٹک استعمال کرسکتی ہیں۔ جس سے خشکی ظاہر نہیں ہوگی۔آئلی بیس اس کے لیے بہتر ہے۔
نارمل جلد یا ملی جلی جلد پر میک اپ
یہ جلد سب سے بہتر ہوتی ہے‘ اس جلد کی حامل خواتین چکنی اور پانی کی آمیزش والی دونوں میک اپ بیس استعمال کرسکتی ہیں۔
زرد رنگت پر میک اپ
پیلاہٹ مائل یا زرد رنگت رکھنے والی خواتین کو گلابی اور ہلکے اورنج شیڈ کے امتزاج والی فائونڈیشن یا اسٹک خریدنی چاہیے کیونکہ اس شیڈ کی فائونڈیشن لگانے کے بعد ان کے جسم کی جلد کا رنگ چہرے کے رنگ سے زیادہ متضاد نہ لگے گا۔
اس کے علاوہ دوسرا شیڈپیلاہٹ مائل برائون اور گلابی کا بھی لیا جاسکتا ہے۔ان دونوں رنگوں کی فائونڈیشن لگانے سے پہلے انہیں یک جان کرلیا جائے‘ اس سے چہرے پر قدرتی تازگی اور گلابی پن کا احساس پیدا ہوگا۔
سیاہ رنگت پر میک اپ
سیاہ رنگت والی خواتین کو ہلکے نارنجی یا گلابی شیڈ کی فائونڈیشن لینا چاہیے۔ اس سے ان کے چہرے پر صحت مند تازگی کا تاثر ابھرے گا اور گورا کرنے کی بالکل کوشش نہیں کرنی چاہیے۔ اس سے ان کی رنگت اور بری لگنے لگے گی‘ اس لیے ایسی رنگت پر ایسی بیس استعمال کریں جو دیکھنے میں اچھی لگے۔
حساس جلد پر میک اپ
حساس جلد بہت نازک ہوتی ہے‘ ایسی جلد رکھنے والی خواتین ہمیشہ جلد کے مسائل کا شکار رہتی ہیں کبھی دانے نکل آتے ہیں تو کبھی الرجی ہوجاتی ہے ایسی خواتین کو چاہیے کہ وہ جو فائونڈیشن استعمال کریں اس میں چکنائی شامل نہ ہو کیونکہ ان کی جلد کے مسامات ویسے ہی زیادہ چکنائی خارج کرتے رہتے ہیں اس لیے انہیں چاہیے کہ وہ ادویات پر مشتمل فائونڈیشن استعمال کریں۔
کیل اور مہاسوں پر میک اپ
ایسی جلد پر میک اپ کرنا بہت مشکل ہوتا ہے‘ کیوں کہ کیل مہاسے چکنائی کی وجہ سے نکلتے ہیں۔ اس لیے ایسا میک اپ بالکل استعمال نہ کریں جس میں چکنائی ہو‘ واٹر بیس ہی بہتر رہے گی۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close