Hijaab Apr-16

حسن خیال

جوہی احمد

٭ السلام و علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ! ابتدا ہے خالق کونین کے بابرکت نام سے جو وحدہ لاشریک ہے۔ اپریل کا حجاب آپ کے زیرمطالعہ ہے امید ہے کہ آپ کے ذوق عین کے مطابق ہوگا۔ زندگی کے انمول لمحات میں سے جس طرح آپ وقت نکال کر اس بزم میں شریک ہوتی ہیں آپ کی یہ شرکت ہماری ہمت بندھانے کے ساتھ ساتھ ہماری خوشی بھی دگنی کردیتی ہے۔ امید ہے کہ آپ ہمیشہ ہی اپنے خیالات سے حسن خیال کو آباد رکھیں گی۔ آنچل‘ نئے افق و حجاب گروپ میں تبصرہ مقابلہ میں انعام جتنے والوں کو مبارک باد اور ججز عشنا کوثر اور ریحانہ آفتاب کے بھی مشکور ہیں۔ آئیے اب بڑھتے ہیں آپ کے دلچسپ تبصروں کی جانب:۔
صدف آصف… کراچی۔ اسلام علیکم۔ حجاب کے نام پہلا تبصرہ بھیج رہے ہیں۔ اس بار کا ٹائٹل ہمیں بہت بہتر لگا۔ حمد و نعت دونوں ہی آنکھیں نم کر گئی۔ اس کے بعداپنی پیاری دوست فصیحہ آصف خان کی گفتگو بہت اچھی لگی۔ سباس گل جی آپ کی کیا بات ہے ’’بڑا آدمی‘‘ کمال۔ صائمہ قریشی نے بھی اچھے انداز میں دل موہ لیا۔ ہما ایوب کی تحریر بھی پسند آئی۔ ناولٹ میںنادیہ احمد کا نام دیکھ کر دل کو ہمیشہ کی طرح بہت اچھا محسوس ہوا۔ ’’اسکینڈل‘‘ مختلف طرز تحریر کے ساتھ چھا گئیں آپ تو۔ نزہت جبیں ضیاء جتنی سوفٹ اور سوئٹ ہیں۔ ان کی تحریر میںبھی یہ بات جھلکتی ہے۔ افسانے سارے ہی اچھے لگے مگراقبال بانو کا افسانہ کافی دنوںبعد نگاہ سے گزرا‘ وہ میٹھا لکھنے کا انداز‘ صوفیہ کا کردار بہت اسٹرونگ تھا۔ سیما بنت عاصم ایک بہت اچھی لکھاری ہیں۔ ان کی کہانیاں ہمیشہ پسندیدگی کی سند لے جاتی ہیں۔ صباحت رفیق چیمہ اور باقی لکھاریوں کے افسانے بھی اچھے موضوعات کے ساتھ پسند آئے۔ سلسلے وار ناول میں نادیہ فاطمہ کہانی کو اچھا لے کر چل رہی ہیں۔ ’’دل کے دریچے‘‘ کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتے (ہاہاہا)۔ شاعری کا انتخاب غضب کا ہوتا ہے‘ باقی سلسلے بھی اچھے ہیں۔ ایک بات کہنا چاہیں گے آنچل اور حجاب کا پلیٹ فارم قابل تعریف ہے جس نے پرانے لکھنے والوں کو دوبارہ یہاںجمع کیا مگر کچھ نئے لکھنے والوںکو بھی پڑھ کر مزہ آتا ہے جیسے سحرش فاطمہ‘ ندا حسنین‘ صباء خان وغیرہ۔ سحرش ایک ابھرتی ہوئی لکھاری ہیں جبکہ ندا نے آنچل میں لکھا اب ہم چاہتے ہیں کہ وہ حجاب میں بھی لکھیں۔ نئی لکھنے والوں کو واقعی ایک اچھا پلیٹ فارم دیا ہے۔ امید ہے کہ ہمارا اور نئے لکھنے والوں کا ساتھ آنچل و حجاب کے ادارے سے ہمیشہ رہے گا اورحجاب بھی مزید ترقی پائے گا‘ آمین۔
کنول خان… ہری پور ہزارہ۔ اسلام علیکم! کیسے ہیں آپ سب؟ میں تو بالکل ٹھیک ٹھاک ہوں۔ جی جناب سوری ماہ بدولت پچھلی بار تبصرہ نہیں کر پائی (کمی تو محسوس ہوئی ہو گئی) کیا ؟ نہیں۔ ایسا نہیں ہو سکتا کسی نے تو کیا ہوگا (چلو کوئی گل نہیں) سب سے پہلے جیتنے والی دوستوں کو بہت ساری مبارک باد اور جن بہنوں نے میرا تبصرہ پسند کیا اور مجھے مبارک دی ان سب پیاری بہنوں کا بہت بہت شکریہ۔ جی بھائیوں اور بہنوں مارچ کا حجاب میرے ہاتھوں میں آ چکا ہے۔ اس بار کا سروق ہمیشہ سے ذیادہ پسند آیا کھٹا میٹھا سا‘ ماشاء اللہ۔ حمدو نعت ماشاء اللہ سے ہمیشہ بہت خوب صورت رہی ہیں۔ دل کو سکون بخشتی ہیں۔ ’’ذکر اس پری وش کا‘‘ میں صبا‘ سائرہ‘ زنیرا اور انعم امانت آپ کے بارے میں جان کے اچھا لگا۔ رخ سخن واہ فصیحہ آصف سے ملے بہت مزہ آیا بھئی شکریہ سباس جی۔ کیا کہوں کیسے کہوں سحرش تم نے مجھے بہت رولیا سچی میں‘ اللہ جی تمہیں ہمیشہ خوش رکھیں۔ تمہاری امی کا جان کے دکھ ہوا۔ ثمن بہنا کے ذریعے ڈاکڑ فوزیہ تبسم صاحبہ سے ملاقات ہوئی شاندار ملاقات۔ ’’پیا کا گھر‘‘ پیارا لگے ماریہ فاطمہ جی کو شادی کی بہت ساری مبارک باد۔۔ اللہ پاک آپ کو ریحان بھائی کے ساتھ خوش رکھے‘ آمین۔ اس کے بعد ہم چلے نادیہ جی کے پاس بس پھر کیا تھا لے بیٹھے شکوے۔ نادیہ جی خاور کیا نکلا میرے سامنے آئے تو ذرا (ہاہاہا)۔ حورین کے ساتھ اچھا نہیں ہوا (رو رو کر آنسو بھی ختم ہوئے) جانے آگے آگے ہو گا کیا۔ نادیہ جی اچھا ہی کرنا ہے سب پلیز۔ پیاری سی سسٹر صدف آصف کا ناول کمال زبردست شاندار‘ کیا کیا کہوں بہت ہی عمدہ۔ صدف ایسے ہی اچھا اچھا لکھتی رہیں۔ آہ ’’بڑا آدمی‘‘ سباس آپ کے کیا کہنے۔ سہی کہا آپ نے اللہ پاک جس کو چن لیتا ہے پھر وہ کہیں بھی چلا جائے دنیا کا کوئی کونا ہو اللہ جی ہمیشہ اس کے ساتھ ہوتا ہے دعا ہے اللہ جی ہم سب کے دلوں میں ایسی ہی چاہ ڈال دے آمین۔ شنکر لال کا محمد بلال تک کا سفر بہت عمدہ اور خاص کر کے ہمارے پیارے ابراہیم بابو۔ ’’بڑا آدمی‘‘ زبردست۔ تیرے خیال سے؟ صائمہ کیا بات ہے اصبح کے ساتھ برا ہوا۔ ایک ضد ایک جلن ماں کا بدلہ بیٹی کا نصیب کھا گئی زریدہ کی نفرت اشعر کی چال بازی آخر لے ڈوبی اصبح کے ارمان۔ فیصل کیا کرتا حالات‘ مجبوری‘ قصور کس کا تھا۔ اصبح کا جو کچھ بول نہیں پائی یا یا فیصل کا جو پرانے رشتوں کی خاطر نیا رشتہ نبھا نا سکا۔ اف اصبح کی ماں فیصل کی ماں یا پھر سرمد صاحب جنوں نے بہن کو چھوڑ دیا۔ بدلے کی آگ میں اپنی ہی بیٹی کے مقدر میں دکھ لکھ گئی بٹ ناول اچھا لگا۔ ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ ہما جی بہت شاندار ناول تھا اور نام تو بہت بہت پیارا رکھا۔ عفاف روشان ارے بھئی یہ رانیہ کہاں سے آ گئی؟ عفاف کا دل اتنا بڑا ہما جی۔ روشاف کے لیے دکھ ہوا بٹ ناول زبردست رہا۔ جی جناب مکمل ناول ختم کئے تو آرام کا ٹائم ہوا چلا یہ کہہ کے سونے لگے لیکن یہ کیا نادیہ احمد ہمیں پکڑے پکڑے نیندوں سے (ہاہاہا خوابوں سے) باہر لے آئی۔ ارے بہن رک جاؤ سنتی ہوں تمہاری بھی کہانی۔ ’’اسکینڈل‘‘ پڑھنے بیٹھے تو ختم کر کے ہی چھوڑا۔ نادیہ کتنا برا کیا حوریہ کے ساتھ؟ کاش کبھی دنیا میں آغا اور فروا جیسے لوگ پیدا ہی نہ ہوں کاش لیکن نہیں جہاں کوئی اچھا ہو گا وہاں برا لازمی ہوگا۔ کیسی محبت تھی فراز کی جسے دوسروں کی باتوں پر یقین ہوتا ہے لیکن اپنی محبت پر نہیں؟ بٹ جہاں نوفل جیسے محبت کرنے والے انسان ہوتے ہیں وہاں محبت بھی ہمیشہ زندہ رہتی ہے اعتماد یقین سب کچھ ہوتا ہے ۔ تمہاری راہ دیکھتی ہوں نزہت آپ کا ناول بہت اچھا لگا۔ شاہ میر کا الجھا الجھا انداز بہت زبردست تھا۔ سبیکا آہ یہ کیسی محبت تھی۔ شاہ میر اور سبیکا کا ساتھ ہونا اینڈ عمدہ۔ سلمی جی کب ختم ہو گا ناولٹ 5 قسط ہو گئی بے چینی بڑھ رہی میری؟ جلدی کریں کچھ (ہاہاہا) ۔ پیاری سی دوستوں کو حجاب میں ’’بندگلی‘ میں ایک لڑکی ہوں‘‘اور ’’حجاب‘‘ کے ذریعے شامل ہونے پر بہت سی مبارک باد۔ افسانوں میں سب سے پہلے میں ایک لڑکی ہوں پڑھا آہ۔ عائشہ پہلا ہی افسانہ وہ بھی اتنا زبردست یار۔ کاش لڑکیوں کو کم تر نہ سجھا جائے بٹ یہی کچھ ہوتا ہے ہمیشہ‘ لڑکی ہے تو یہ ایسے نہیں کر سکتی یا پھر اسے ایسا نہیں کرنا چاہیے کیوں کے یہ تو لڑکی ہے ناں۔ حجاب صباحت تم تو ماشاء اللہ سے بہت اچھا لکھنے لگی ہو۔ حجاب کتنا ضروری ہے یہ ایک چھوٹی سی تحریر میں تم نے بہت اچھے سے بتا دیا‘ عمدہ۔ غزالہ آپ افسانہ بہت اچھا لگا اس کے علاوہ مصباح علی کا ’’پر رحمت‘‘ اقبال بانو جی کا۔ ہمیشہ کی طرح افسانہ لاجواب چاہتوں کے دکھ بھی ان کی بہترین تحریر رہی۔ سیما جی کا افسانہ ’’من کا سیپ‘‘ بھی بہترین رہا۔ ’’ذرا سوچئے‘ جیسا میں نے دیکھا‘ طب نبوی‘ بزم سخن‘ کچن کارنر‘ آرائش حسن‘ شوخی تحریر‘‘ اور ’’حسن خیال‘ شوبز کی دنیا‘‘ ہو یا پھر خدیجہ احمد کے ٹوٹکے تمام سلسلے بہت زبردست اور میرا پسندیدہ سلسلہ عالم میں انتخاب اف سب کے انتخاب خوب صورت تھے عروج فاطمہ کا انتخاب اچھا لگا۔ تیری آنکھیں کلام محسن نقوی انتخاب ثناء اعجاز بہترین۔ آخر میں ہر بار کی طرح حجاب کے لئے بہت ساری دعائیں۔
سارہ خان … بہاولپور۔ اسلام علیکم! میری بہت پیاری فیملی اللہ پاک سے دعاگو ہوں آپ خیریت سے ہو تمام پریشانیوں سے محفوظ رہیں (آمین) میری خوشی لفظوں میں بیان نہیں ہو رہی تھی جب معلوم ہوا حجاب کے تبصرہ میں پہلی پوزشن آئی ہے ساتھ ہی انعام میں حجاب ارسال کیا جائے گا طاہر بھائی کا بہت شکریہ‘ دل چاہا بھنگڑا ڈالو مگر اپنے بھنگڑے کی خواہش کو بہت مشکل سے قابو کیا اور پورے گھر میں شور ڈالتے رہے انتظار کے دیپ روشن کر لیے ہمارے انتظار کی کیفیت جدا نہ تھی ابھی بیل بجی تو حجاب آئے۔ بالاخر ہماری مراد بر آئی اور جی ہاں حجاب ہمارے ہاتھوں میں اپنا شائع تبصرہ اماں جی کو دکھایا اور گول گول گھما دیا ساتھ ڈانٹ بھی سنتے رہے بچی ہو اب‘ کیا کہتے اماں جی کو (دل تو بچہ ہے) ۔ ہم تو مقروض ہوگئے حجاب کے اس لیے پھر سے حاضر خدمت ہیں اب کی بار بھی تبصرہ کیا جائے سرورق کو دیکھا دوشیزہ کا ہلکا سا میک اپ بہت بھایا چونکہ گرمیوں کا آغاز ہو رہا ہے اسی مناسبت سے سروق بھی بہت خوب صورت لگا ۔ قیصرہ آپا کی بات چیت میں محو ہوئے اور مصنفاؤں کے نام دیکھ کر دل گارڈن گارڈن ہو گیا (یاہو) ۔ حمد باری تعالی اور نعت سے اپنے دل کو منور کیا تو امہات المومنین کو پڑھ کر اپنی معلومات میں اضافہ کیا بہت عمدہ سلسلہ ہے ۔ اپنی نٹ کھٹ سہیلیوں سے ملاقات واہ جی صبا، سائرہ، زنیرا، انعم سواد آگیا سچی مچی۔ رخِ سخن میں سباس جی کے سوالات اور فصیحہ آصف خان کے جوابات محفل کو چار چاند لگاتے رہے مزہ دوبالا ہو گیا ویلڈن سباس گل ۔ آغوشِ مادر میں اس بار سحرش فاطمہ کو پڑھنا دل کو اداسی سے ہمکنار کر گیا بہت خوب لکھا آپ نے سحرش ۔ ڈاکٹر فوزیہ تبسم سے ملاقات ہماری بھی خوشگوار رہی تو ساتھ ہی پیا کا گھر میں فاطمہ کی باتیں دل کو لبھاتی رہی اللہ پاک آپ کو بہت خوشیوں سے نوازے‘ آمین ۔ اب ہم نے اپنی دنیا میں قدم رکھ لیا جی ہاں وہ دنیا ہماری جہاں ہم روتے بھی ہیں ہنستے بھی ہیں دعا بھی کرتے ہیں غصہ بھی کرنا ہمارا حق ہے سمجھ گئے آپ سب بھی پہلی کہانی اقبال بانو ’’چاہتوں کے دکھ‘‘ بہت عمدہ تحریر صوفیہ کا فیصلہ بر وقت اور مناسب تھا۔ سباس گل ’’بڑا آدمی‘‘ آپ کی کہانی نے ہمارے رونگٹے کھڑے کردیئے ماشااللہ بہت خوب میرے جذبات لفظوں میں بیان نہیں ہو سکتے۔ اتنا کہوں گی اللہ پاک آپ کے قلم کو اور طاقت دے‘ آمین‘ بہت خوب صورت لکھتی رہیں ہمارے لیے ۔ نزہت جبیں ’’تمہاری راہ دیکھی ہے‘‘ شاہ میر کا دکھ اپنے دل پہ محسوس ہوا ہم دعا کر رہے تھے سبیکا کو سچ معلوم ہو صد شکر ایسا ہوا ہیپی اینڈ واہ مزا آگیا ۔ نادیہ فاطمہ ’’میرے خواب زندہ ہیں‘‘ کہانی بہت خوب صورتی سے آگے بڑھ رہی ہے بہت عمدہ لکھ رہی ہیں ہر کردار کے ساتھ انصاف بیسٹ وشز ۔صائمہ قریشی ’’تیرے خیال سے‘‘ آپ کو میں نے پہلی بار پڑھا ہے مگر آپ نے مایوس نہیں کیا عمدگی سے کہانی کو لیے چلی اینڈ ہونے تک ہمیں معلوم ہی نہیں ہو سکا بہت خوب صورت لکھتی ہیں۔ صدف آصف ’’دل کے دریچے‘‘ واہ کیا لکھ رہی ہیں جی خوش کر دیتی ہیں آپ تو کیا کہوں مزہ دوبالا ہوتا جا رہا ہے ہر بار بیسٹ وشیز ۔ ہما ایوب ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ عفاف کی محبت میں قربانی نے جہاں بہت متاثر کیا وہاں غصہ بھی آیا کیا تھا جو مقابلہ کرتی روشان کو کیوں چھوڑا لیکن وقت وحالات نے روشان کی محبت کو مزید مضبوط کیا بلآخر عفاف نے بھی محبت کا ساتھ شامل کر کے زندگی کی خوشیوں کو اپنے دامن میں سمیٹا بہت عمدہ لکھا ہما آپ نے ۔ نادیہ احمد ’’اسکینڈل‘‘ جتنی تعریف کروں کم ہے یقین جانیے کئی پل تو ہم اپنی جگہ سے ہی نہیں ہل سکے کتنی تلخ سچائی بیان کی ہے کہتے ہیں سچ ہمیشہ کڑوا ہوتا ہے بہت عمدگی سے ہر پہلو کو اجاگر کیا ۔ بھائی بول دینے سے واقعی کوئی حقیقی بھائی نہیں بن جاتا ایسا سبق ہم لڑکیوں کو دیا ہے اب یہ ہم پہ منحصر ہے کتنا سیکھتے اور سمجھتے ہیں بہت عمدہ ایسے ہی لکھتی رہیں بیسٹ وشز۔ سیما بنت عاصم ’’من کا سِپ‘‘ محبت ہمیشہ نفع و نقصان کیوں دیکھتی ہے معلوم نہیں محبت وصل کی تمنا ہی ٹھہری۔سلمیٰ فہم ’’تیرے لوٹ آنے تک‘‘ دلچسپ انتظار سے بھر پور ۔ شدت سے اگلی قسط کا انتظار ۔ غزالہ جلیل (بند گلی) بہت عمدہ تحریر کافی عرصہ بعد آپ کو پڑھا مزہ آیا عمدہ لکھا ۔ مصباح علی ’’پرِ رحمت‘‘ بیٹی واقعی رحمت ہے ایک عورت کے نہ ہونے سے کیا کیا زندگی نے رنگ دکھائے دکھ ،درد ، سب کچھ تو تھا اپنی اولاد کے لیے بیٹی کی دعا مانگنا ہماری آنکھیں بھی بھیگ گی ۔ صباحت رفیق ’’حجاب‘‘ سوچنے پہ مجبور کر دینے والا افسانہ کاش ہم لوگ سمجھ سکیں کاش ۔ اب باری میری ننھی سی دوست کی جی بالکل آپ ٹھیک سمجھے میری اپنی دوست عائشہ ’’میں ایک لڑکی ہوں‘‘ بہت خوب صورت افسانہ اللہ پاک زورِ قلم اور بلند کرے آمین۔ ایسے ہی لکھتی رہو‘ کامیابیاں سمیٹو بہت خوشی ہو رہی ہے تمہارا افسانہ دیکھ کر مستقبل کی مصنفہ (ہاہاہا) سچی مذاق نہیں سمجھنا ۔ ثنا ناز ’’زرا سوچیے‘‘ بہت عمدہ لکھا تمام باتیں سوچنے پہ مجبور کرتی رہی ہیں ۔ ’’جیسا میں نے دیکھا‘ طبِ نبوی، بزم سخن سے لطف اندوز ہوئے ۔ کچن کارنر اور آرائش حسن سے بھر پور استفادہ کیا ۔ عالم انتخاب میں ارم شہزادی نے محفل لوٹ لی جی۔ ہم پھر پہنچ گئے حسن خیال میں تمام خطوط پڑھے ایک سے بڑھ کر ایک خط مزہ دوبالا ہوتا رہا۔ حجاب پہ تبصرہ کرنا دریا کو کوزے میں بند کرنا ہے اب کتنا ٹھیک بند کر پائی یہ تو آپ پڑھ کر بتائیے گا‘ اب اجازت‘ ان شااللہ آپ سے ملاقات کرنے پھر آؤں گی مجھے ضرور یاد رکھنا۔
عائشہ پرویز… کراچی
تیری ہستی کو چند لفظوں میں سمیٹوں کیسے
تیرا وجود تو لگتا ہے آکاش کی طرح
جیسے زمین کی کشش اشیاء کو اپنی جانب کھینچتی ہے ویسے ہی کشش حجاب نے بالآخر ہمیں دوبارہ اپنی جانب کھینچ لیا۔ ہمیشہ کی طرح حجاب تمام ڈائجسٹ میں ٹاپ آف دی لسٹ جارہا ہے دعا ہے کہ یہ ہمیشہ دن دگنی رات چوگنی ترقی کے منازل طے کرتا رہے آمین۔ سوچتی ہوں کچھ طنزیہ تبصرہ کروں لیکن نہیں بھئی آنچل و حجاب نے ہمیشہ اپنے پرانے لکھنے والوں کے ساتھ ساتھ نئی رائٹرز کی بھی دل سے پذیرائی کی ہے، حجاب ہمارا رہنما ہے اسی طرح ہر اسٹوری میں کسی نہ کسی کردار کی صورت میں ہمیں اردگرد کا ماحول، معاشرے کے بارے میں پتا چلتا ہے تمام رائٹرز بہت اچھا لکھ رہی ہیں۔ تبصرہ:۔ سب سے پہلے ’’حمد و نعت‘‘ سے مستفید ہوتے ہوئے قیصرہ آپی کی دانش بھری باتیں اپنے دل و دماغ میں بٹھائیں ’’امہات المو منین‘‘ حضرت سودہؓ کے بارے میں معلومات میں اضافہ ہوا۔ ’’ذکر اس پری وش کا‘‘ تمام تعارف بیسٹ رہے۔ ’’رخ سخن‘‘ میں فصیحہ آصف کی باتیں اچھی لگیں۔ ابھی میں ’’آغوش مادر‘‘ سے روح کو سرشار اور معطر کر ہی رہی تھی کہ امی جی کی پکار نے تہلکہ مچادیا کہ آج ہی سارا ڈائجسٹ چاٹنا ہے کیا گھر کے کام کون کرے گا؟ حجاب رکھا سائیڈ پر پھر مابدولت نے جلدی میں گھر کی ایسی صفائی کی کہ امی بھی دیکھتی رہ گئیں۔ اب حجاب کو ہا تھوں میں لیا اور اِدھر اْدھر دیکھا کوئی کام تو نہیں سکون کا سانس لیا پھر پڑھنے میں مگن ہوگئی۔ ڈاکٹر فوزیہ سے ملاقات اچھی رہی۔ سلسلے وار ناولز نادیہ آپی، صدف آپی ٹکر پر ہیں کون بازی لے کر جائے پر ہمیشہ کی طرح دونوں چھائیں رہیں۔ مکمل ناول ’’بڑا آدمی‘‘ جسے چاہا در پہ بلا لیا جسے چاہا اپنا بنالیا سباس آپی یقین کریں یہ کہانی میں نے بہتے آنسوؤں کے ساتھ پڑھی ہے اور دل اداس نہیں بلکہ خوش ہوا اتنی عمدگی سے لکھنے پر ویل ڈن۔ ’’تیرے خیال سے‘‘ صائمہ آپی نے اپنے خوب صورت ناول کی صورت میں مجھے اپنے خیال سے آگے ہلنے ہی نہیں دیا۔ ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ ہما نے اچھا لکھا محبت کی کہانی پھر محبت میں قربانی۔ ناولٹ ’’تمہاری راہ دیکھی ہے‘‘ نزہت آپی سدا بہار باقاعدگی سے لکھنے والی کیا کہوں ان کے بارے میں کہ میری طرح سب ہی قارئین ان کے سحر میں جکڑے ہوئے ہیں۔ ’’اسکینڈل‘‘ نادیہ آپی بہت زبردست لکھتی ہیں ان کے افسانوں کے مقابلوں میں ناولز زیادہ خوب صورت ہوتے ہیں بہت اداس کردینے والا لیکن سبق آموز اپنے مخصوص انداز میں آج کل کی ایک سفاک حقیقت کو روشناس کروایا تسی چھا گئی ہو۔ ’’تیرے لوٹ آنے تک‘‘ سلمی نے پہلی قسط سے لے کر اب تک تجسس کا عنصر ہنوز برقرار رکھا ہوا ہے۔ اب بات ہوجائے افسانوں کی ’’چاہتوں کے دیپ، من کا سِپ اور بند گلی‘‘ اچھی رہی۔ ’’پرِرحمت‘‘ مصباح بھی بہت عمدہ موضوع کے ساتھ نظر آئیں بہت اچھی طرح انہوں نے کردار تخلیق کیا۔ ’’حجاب‘‘ صباحت نے بہت اچھی طرح سے پوائنٹ آؤٹ کیا۔ ’’میں اک لڑکی ہوں‘‘ عائشہ (جی مابدولت) صرف اتنا کہوں گی کہ یہ کہانی کافی حد تک حقیقت پر مبنی ہے (بقول میری نانی اماں کے) اپنی گزری باتیں لکھ ڈالی۔ ’’ذرا سوچیے‘‘ ثناء ناز نے واقعی سوچنے پر مجبور کردیا۔ ’’طبّ نبویﷺ‘‘ بہترین رہا۔ بزم سخن سب کے اشعار سیدھے دل کو لگے۔ کچن کارنر میں تمام سوئٹ ڈشز میری ڈائری کی شان کو بڑھا گئی۔ آرائش حسن میں حدیقہ احمد نے بہت اچھا گائڈ کیا ضرور عمل کروں گی۔ عالم میںانتخاب علامہ اقبال کا کلام اچھا لگا۔ حسن خیال میں مجھ سمیت میری تمام دوستیں حسن بکھیرتی رہیں۔ شوبز کی دنیا میں علی ظفر کا پڑھ کے بے ساختہ دعا نکلی کہ خدا کرے یہ ثابت قدم رہے۔ آخر میں ٹوٹکے امی کو بتاتی رہی۔ اللہ آپ سب کو خوش رکھے آپ سب کی کاوشوں سے ہی ہم سب کو یہ خوب صورت تحفے مل رہے ہیں۔ بنڈل آف مینگو، اینڈ کھٹی میٹھی کیریاں خربوزہ وی بس فی امان اللہ ۔
شمع مسکان… جام پور۔ موسم بہاراں اپنی دلکش رعنائی سمیٹے چار سو اپنی گہری دلکش چھاپ‘ ہمارے ذہن و قلب پر بھی چھوڑتے خراماں خراماں انداز میں اٹھلاتے ہوئے موسم گرما سے گلے ملنے کے لیے فکسڈ مقام کی جانب رواں دواں ہے۔ ایسے ہی مہکتے موسم کی مانند اپنی شمع کا خوشیوں بکھیرتا سلام آپ سب کی خدمت میں حاضر ہے۔ لمحہ لمحہ سولی پر لٹکنے کی مانند اپنا ہر پل ہر لمحہ محو انتظار بسر کرتے ہیں‘ آنکھیں فرشِ راہ منتظر رہیں۔ موسم بہاراں کے بُکے (حجاب) کے لیے مگر… نخریلی محبوبہ کے انداز اپنائے جلوہ بکھیرا۔ 14 مارچ کی ٹھنڈی گرم دوپہر میں۔دھوپ چھائوں کا سماں اور ہم چائے کے رسیا چائے بنانے کے شغل میں مصروف کہ بھائی کی آمد اور ہاتھوں میں حجاب کی جھلک‘ موسم بہاراںکی بارش کی انجوائمنٹ دوبالا کرگئی۔ سرورق ماڈل سر سے ہاتھ ٹکائے ترچھی قاتل نگاہیں ہم پر ٹکائے کچھ بتاتی‘ کچھ جتاتی سی لگیں اور کچھ کچھ پراسرار اور بھید بھری ہم بھی الجھے الجھے سے رب سبحانی کی تعریف اور عالم دو جہاں کی تعریف میں بکھرے عقیدت کے پھولوں کی پاکیزہ مہک سے اپنے قلب و روح کو معطر کرنے لگے۔ کوثر خالد صاحبہ اپنے لفظوں اور دعائوں کے نذرانے ایسے ہی رب تعالیٰ کی بارگاہ میں بھیجتی رہیں۔ لفظوں کے موتی پُرعقیدت تھے‘ گہری دلی وابستگی کے غمان۔ بات چیت قیصر آنی نے اپنی مصروفیت کا ذکر کیا‘ پر ہمیں اچھی لگیں ان کی مصروفیت آخر وہ ہمارے آنچل پر زرق برق ستارے ٹانکنے میں مصروف ہیں اور ہم منتظر ہیں ان کی محنت کے شاہکار کے۔ آنکھیں بند کیں اور سیدھے پہنچے ’’حسن خیال‘‘ میں ‘ ارے یہ کیا؟ شاک لگا‘ ہمارا تبصرہ انعام کا مستحق قرار پایا۔ میرے سوچوں خیالات سے دور گمان کی وادی میں بھی اس بات کی رمق نہیں ملے گی کہ میراتبصرہ انعام یافتہ قرار پایا۔ ہاتھوں نے پرواز کی ورق پلٹنے میں اور بصارت نے برقی انداز میں رفتار پکڑی ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا ہے‘‘ پڑھا۔ ہما ایوب شیخ یونیک ہیرونز کے نام کے ساتھ آئیں اور حسد و انتقام اکثر خود ہی کو کھاجاتا ہے کا گہرا سبق دے گئیں۔ عفاف بے شک گزشتہ رویے اور حالات کو دیکھتے خوف زدہ تھیں پر تنہا اکیلے اتنا بڑا فیصلہ سراسر بے وقوفی تھی۔ روشان محبت کا دیوتا‘ روشاف کا کریکٹر بہت امیرپسو تھا۔ تائی کی فیملی کا انجام ان کے بھیانک اعمال کا نتیجہ تھا۔ میرے ویو سے رانیہ بے قصور تھیں کیونکہ سارا قصور تائی کا تھا‘ بچپن سے ہی صبر کا درس دینے کی بجائے چھیننے کا سبق دیا۔ سباس آپی کا ’’بڑا آدمی‘‘ ہمارے ایمان کو نئے سرے سے تازہ کرگیا۔ لفظ لفظ عقیدت میں ڈوبا ہمارے دین اسلام کی سچائی و کشادگی کو واضح کرگیا۔ انسانیت کا درس دیتا سباس کے قلم سے تخلیق کیا منفرد شاہکار روح کو مہکا گیا۔ شنکر لال سے محمد بلال تک کے سفر میں جو کٹھنائیاں اور مشکلات برداشت کیں ہمارے پروردگار نے سب کا مداوا کردیا۔ وہ دنیاوی دولت کمانے نکلا اور اس پاک بزرگ ہستی نے اسے آخرت کی دولت سے مالا مال کردیا‘ سبحان اللہ۔ ابراہیم نے انسانیت کے رشتے پر اس کا ایمان مستحکم کیا سباس آپی! اللہ آپ کے لفظوں کے خزانے میں برکت عطا فرمائے‘ آمین۔ ’’تیرے خیال سے‘‘ صائمہ قریشی محبت کا یہ انجام قلب مضطرب کرگیا‘ انا کا جھنڈا بلند ہی رہا اور محبت ہار گئی۔ کہانی انجام کے بغیر رہ گئی‘ بے شک اصبح اور فیصل نے ہجر کا جام پینے کا فیصلہ کرلیا تھا مگر دونوں کی مائیں تو اپنے فیصلے سے خوش و مطمئن تھیں مگر برائی کا انجام تو کرنا تھا۔ فیصل نے غیرت مند بھائی کا سہرا اپنے سر پر پہن لیا‘ محبت اپنی ناقدری پر بین کرتی رہ گئی۔ ناولٹ ’’تمہاری راہ دیکھی ہے‘‘ نزہت آنٹی اپنے سادہ پُر اثر لفظوں کے موتیوں سے سوتیلے رشتوں کے زہر کو واضح کرنے حجاب میں تشریف آور ہوئیں۔مذنہ اورشامیر فیورٹ کریکٹر تھے‘ سبیکا تو عین عکس سوچ شامیر کو ہی ملی۔ ’’اسکینڈل‘‘ گہرا سبق دیتی پُر اثر تحریر تھی۔ مردوں کی دنیا مردوں کی شنوائی‘ حوریہ کو بھی دوست نے ہی ڈسا۔ اس اسٹوری کو ایک لفظ میں کروں تو وہ ’’خود غرضی‘‘ ہوگا پر ہیپی اینڈ‘ طبیعت فریش فریش کرگیا۔ افسانے ایک سے بڑھ کر ایک تھے ’’چاہتوں کے دکھ‘ من کے سِپ‘ بند گلی‘ پر رحمت‘ حجاب‘‘ اسٹوری میں حجاب کی اہمیت کو واضح کیا‘ صباحت رفیق نے ہمارے دین میں اس کی کیوں تاکید کی گئی اس اسٹوری سے ذہن کی گرہیں کھل گئیں۔ ’’میں ایک لڑکی ہوں‘‘ عائشہ نے بھی اچھا لکھا۔ ذکر اس پری وش کا میں ساری پریاں (چاروں) اپنے پروں میں اپنی زیست کے ڈھیروں رنگ بھرے ہوئے تھیں۔ رخ سخن فصیحہ آصف خان کی باتیں اچھی لگیں۔ آغوش مادر میں سحرش فاطمہ کی ماں سے محبت و عقیدت بہت بھائی‘ ابھی نا تو الفاظ کم ہوئے ہیں اور نہ ہی تبصرہ مکمل پر پھر بھی اب قلم بند کرتی ہوں‘ آج اتنا کافی۔ باقی اگلے ماہ‘ ان شاء اللہ موسم گرما کے گرم گرم تبصرے کے ساتھ پھر آپ سب کو گرمانے اپنے لفظوں بخشتے سے حرارت سے پھر حاضر ہوں گی‘ رب راکھا۔
کرن ملک… جتوئی۔ السلام علیکم! کرن ملک اپنے لفظوں کو چھما چھم بہار کے موسم کی طرح برساتے حاضرخدمت ہے اس مرتبہ حجاب 9 تاریخ کو بہار کی نوخیز کلی کی طرح میری جھولی میں آن ٹپکا جونہی حجاب میں نے ہاتھ میں اٹھایا کچھ بھاری سا محسوس ہوا کھول کر دیکھنے پر پتا چلا سات سہیلیاں انعام و صول کررہی ہیں سب کو بہت مبارک ہو۔ پھر مدیرہ سے بات چیت کرتے ہوئے انہی کی زبانی معلوم ہوا کہ وہ آج کل بہت مصروف ہیں۔ جناب مصروفیت تو ہونی ہی ہے دو دو پرچے اتنے شاندار طریقے سے نکالنا کوئی عام بات تھوڑی ہے۔ آنچل ود حجاب اسٹاف بنڈلز آف تھینکس ہم سب کے لیے اتنی محنت کرنے کا پھر میں نے دوڑ لگائی سباس آپی کے پاس۔ سباس نے زبردست سوالات کیے فصیحہ آپی سے ان کے خیالات جان کر‘ ہمارے خیالات بھی مزید روشن ہوگئے۔ آغوش مادر میں سحرش فاطمہ آپ کو تو خوش ہونا چاہیے‘ آپ کی امی کے دم آخیر وہاں نکلے جہاں دم نکلنے کی سب کی تمنا ہے پھر مکمل ناول ’’بڑا آدمی‘‘ پر نظر ٹھہری یہ چٹاچٹ چاٹ لیا۔ سباس آپی مبارک ہو اتنی ایمان افروز کہانی لکھنے پر ایمان تازہ ہوگیا آپ کی تحریر پڑھ کر رب کریم سب کو سچا پکا مسلمان بنائے‘ آمین۔تیرے خیال سے فیصل کو چاہیے تھا اصبح کو اپناتا اسے بیچ منجدھار میں چھوڑ دیا ۔ ’’کیاکھیل عشق نے کھیلا‘‘ اچھی کاوش رہی اینڈ اچھا ہوا‘ نزہت جبیں ضیاء کی بھی جاندار تحریر تھی۔ آج کل سب اپنا سوچتے ہیں نادیہ احمد نے اسکینڈل میں بالکل بجا فرمایا پھر میں ہجرت کرگئی پریوں کی جانب چاروں پریوں سے مل کر اچھا لگا ۔ ’’من کا سیپ‘‘ پڑھتے ہوئے ایسا محسوس ہوا جیسے میں محو خواب ہوں‘ کہانی کا اینڈ ہوا تو خیال آیا میں تو کہانی پڑھ رہی تھی۔ ’’بند گلی‘ پر رحمت‘ حجاب‘ میں ایک لڑکی ہوں‘‘ سب بہنوں کی اچھی کاوش تھی۔ چاہتوں کے دکھ پڑھ کر واقعی دکھ ہوا۔ ’’دل کے دریچے‘‘ میں سنبل اور ثوبیہ کی چھیڑ چھاڑ نے لطف دیا‘ دادا کی موت کی وجہ سے فائز اور سفینہ کا نکاح ملتوی ہوگیا۔ دیکھو اب کتنا انتظار کرنا پڑے گا۔ بزم سخن میں فائزہ بھٹی‘ طلعت نظامی اور صائمہ کنول کے اشعار نے سماں باندھ دیا‘ عالم میں انتخاب مدیحہ نورین اور ارم شہزادی کا بیسٹ لگا۔ شوخئی تحریر میں فریحہ شبیر‘ جازبہ عباسی‘ ماہ رخ تاج نمبر لے گئی۔ اللہ کرے حجاب اسی شان سے سجتا رہے‘ دعائوں میں یاد رکھنا فی امان اللہ۔
فریدہ فری یوسف زئی… لاہور۔ السلام علیکم! مارچ کا حجاب ملا ٹائٹل پرکشش لگا۔ سب سے پہلے حمدو نعت سے فیض یاب ہوئے۔ رخ سخن میں سباس گل نے فصیحہ آصف کو متعارف کروایا‘ انٹرویو بے حد پسند آیا وہ ہماری پیاری سی دوست بھی ہیں۔ ڈاکٹر فوزیہ تبسم سے ملاقات اچھی لگی‘ افسانوں میں ’’چاہتوں کے دکھ‘‘ اقبال بانو کی کمال کی تحریر تھی۔ ’’بند گلی‘‘ غزالہ جلیل واہ کیا افسانہ لے کر آئیں۔ ’’میں ایک لڑکی ہوں‘ پر رحمت ‘ حجاب’’ بہت اچھے افسانے تھے پڑھ کر مزا آگیا۔ نزہت جی اتنا اچھا ناولٹ لگا کیسے اتنا اچھا لکھ لیتی ہیں۔ آپ کے افسانے‘ سباس گل‘ فصیحہ آصف کی تحریریں اور نادیہ فاطمہ رضوی کے ناول بے حد پسند آتے ہیں ۔ ’’بڑا آدمی‘‘ سباس گل اتنا اچھا لکھنے پر مبارک باد تو بنتی ہے۔ ’’تیرے خیال سے‘‘ اور ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ تینوں مکمل ناول بے مثال تھے۔ ’’من کا سِپ‘‘ بھی بہترین تحریر تھی‘ حجاب بھی آنچل کی طرح مقبول اور مشہور ہورہا ہے۔ کچن کارنر میں مغز مصالحہ اور کوفتہ پلائو بے حد مزے دار لگا۔ پروین افضل شاہین کا تبصرہ بہت ہی دلچسپ اور مزے دار ہوتا ہے‘ بے حد ہنسی آتی ہے پڑھ کر‘ خوش رہو پروین جی! سب کو دعا اور سلام۔
نبیلہ اسلم… خانیوال۔السلام علیکم! طاہر انکل اور قیصر آپی کیسی ہیں آپ؟ میں آنچل آپی ملالہ کی وجہ سے پڑھ رہی ہوں ۔ میں ملالہ آپی کی تیسرے نمبر والی سسٹر ہوں‘ وہ مجھ سے بہت پیار کرتی ہیں اس لیے میں رسالہ پڑھ لیتی ہوں۔ مجھے آپ کا ڈائجسٹ بہت اچھا لگتا ہے‘ آنچل کی شروعات میں آپ کی سرگوشیاں اور حجاب میں آپ کی بات چیت اچھی لگتی ہے۔ حمدو نعت میں اپنی ڈائری میں ہمیشہ نوٹ کرلیتی ہوں‘ انکل مشتا ق کی باتیں میں ہر ماہ پڑھتی ہوں۔ ہمارا آنچل میں سب سے مل کر بہت اچھا لگتا ہے‘ اب ملالہ آپی خانیوال سے حجاب لائیں تو مجھے بہت خوشی ہوئی یہ جان کر کہ ’’ذکر اس پری وش کا‘‘ میں تعارف بھیج سکتے ہیں۔ سمیرا آپی کی اسٹوریز بہت اچھی لگتی ہیں۔ آپ حجاب میں ضرور لکھیں بالکل ولید بھائی والا کردار لائیں مجھے وہ بہت اچھے لگتے ہیں۔ شوخٰی تحریر میں سب کی باتیں اچھی لگتی ہیں۔ میری دعا ہے کہ حجاب اور آنچل ترقی کریں اور بہت سے نئے ستاروں کو سامنے لائے‘ اللہ حافظ۔
پروین افضل شاہین… بہاولنگر۔ پیاری باجی جوہی احمد السلام علیکم! اس بار مارچ کا حجاب ٹھیک خواتین ڈے والے دن 8 مارچ کو ملا سرورق واقعی جاذب نظر تھا۔ حمدو نعت اور امہات المومنین مضامین پڑھے اپنی روح کو سرشار کیا۔ رخ سخن میں فصیحہ آصف خان کے بارے میں اور ’’جیسا میں نے دیکھا‘‘ میں پروین شاکر کے بارے میں پڑھا بہت اچھا لگا۔ کہانیوں میں ’’پیا کا گھر‘ بڑا آدمی‘ کیا کھیل عشق نے کھیلا‘ اسکینڈل‘ تمہاری راہ دیکھی ہے‘ چاہتوں کے دکھ‘ بند گلی‘ حجاب‘‘ اور ’’من کا سِپ‘‘ پسند آئیں۔ میرے خط کو اس بار انعام یافتہ قرار دیا گیا ہے آپ کا بہت بہت شکریہ۔ ایسے ہی بہنوں کی آپ حوصلہ افزائی فرماتی رہا کریں۔دعا ہے حجاب اور ترقی کرے‘ آمین۔
مدیحہ نورین مہک… برنالی۔ آداب عرض ہے امید ہے سب خیریت سے ہوں اور زندگانی کو بھرپورطریقے سے جی رہے ہوں گے۔ ٹائٹل میں ماڈل کی جیولری بہت پسند آئی‘ حمدو نعت میں کوثر ناز ماشاء اللہ کیا خوب تعریف بیان کی‘ سبحان اللہ جیتی رہیں ۔ بزم سخن میں نزہت جبیں ضیاء‘ ارم کمال‘ طلعت نظامی‘ سباس‘ پرنس افضل شاہین کے اشعار پسند آئے۔ عالم میں انتخاب میں سعدیہ رمضان سعدی کا انتخاب پسند آیا۔ شوخئی تحریر میں سب کے انتخاب بہت عمدہ تھے‘ ماشاء اللہ اور پرنس افضل شاہین‘ مسز نگہت غفار میرا انتخاب پسند کرنے کا بہت شکریہ۔ فصیحہ آصف خان کی شخصیت کے بارے میں پڑھ کر بہت اچھا لگا۔ ’’عورت‘‘ موضوع پر ثناء ناز کے الفاظ دل کو بہت بھائے اور تمام افسانے اچھے تھے‘ سب کو سلام‘ رب راکھا۔
دلکش مریم… چنیوٹ۔ السلام علیکم! حجاب کی کامیابی پر مبارک باد پیش کرتی ہوں۔ اتنی جلدی اس کی اتنی مقبولیت دیکھ کر بے پناہ خوشی ہوتی ہے‘ بے شک آنچل و حجاب اسٹاف کے ساتھ ساتھ اس کی مقبولیت میں آنچل رائٹرز اور ریڈرز کا بھی ہاتھ ہے جنہوں نے اپنی تحریروں سے حجاب کو آنچل کی طرح سجادیا ہے دعا ہے آنچل و حجاب اسی طرح ترقی کی منازل طے کرتے جائیں‘ آمین۔اب بات ہوجائے سباس گل کے ناول ’’بڑا آدمی‘‘ کی‘ اللہ تعالیٰ تو ہر انسان کے دل میں ہوتا ہے چاہے وہ کسی بھی مذہب سے ہو۔ خوش قسمت ہوتے ہیں وہ انسان جواللہ کو جان جاتے ہیں پہچان جاتے ہیں۔ محمد بلال (شنکر لال) اللہ کا چنا ہوا تھا کیسے نہ بڑا آدمی بنتا۔ مال و دولت سے تو آج کل ہر دوسرا آدمی بڑا آدمی بنا ہوا ہے مگر اصل بڑا آدمی تو خدا کے آگے جھکنے والا ہی ہوتا ہے اور جس نے خدا کو پالیا اس نے سب کچھ پالیا۔ بہت عمدہ تحریر لکھی سباس گل نے جس میں انہوں نے آج کل کے معاشرے کی بھرپور عکاسی کی‘ واقعی اللہ کے سوا ہر رشتہ غرض کا ہی ہے جو کچھ لو اور دو کی بنیاد پر قائم ہوتا ہے بہت کم رشتے ایسے ہیں جو بے غرض اور مخلص ہوتے ہیں۔ محمد بلال سے دنیاوی رشتے چھوٹ گئے مگر اللہ نے اسے اپنا بنالیا اور اس تعلق نے اسے بڑا آدمی بنادیا جس پر ہر مسلمان رشک کرے۔ دل تو کرتا ہے آنچل کی طرح حجاب پر بھی مکمل تبصرہ کروں مگر حجاب مجھے لیٹ ملتا ہے اس لیے اگر مکمل رسالہ پڑھ کر تبصرہ کرتی تو بروقت نہ پہنچ پاتا اور جن بہنوں کو میرا انتخاب پسند آیا ان کی تہہ دل سے مشکور ہوں‘ خوش رہیں‘ والسلام۔
لائبہ میر… حضرو۔ السلام علیکم خیالوں کی رانی حسن خیال میں جانتی ہوں سبھی فائن شائن ہیں (یونہی رہو ہمیشہ)۔ ٹائٹل حجاب کا اچھا لگا کیوٹ سی ماڈل‘ جیولری‘ میک اپ سب ‘ پورے حجاب کا سرسری جائزہ لینے کے بعد حسن خیال میں جھانکا تو پتا چلا لہذا جیتنے والوںکو بہت مبارک اینڈ پروین افضل یار اب کیا کہوں۔ علی ظفر اینڈ مہوش حیات کا پڑھ کر اچھا لگا (دونوں فیورٹ ہیں)۔ تعارف اور آغوش مادر گڈ‘ فصیحہ آصف کی باتیں اچھی لگیں شاعری بھی اینڈ آپ کی کتابوں کے سرورق بھی پسند آئے۔ماریہ فاطمہ خوش رہو ہمیشہ اور گفٹ پائل مختلف تھا نا۔ڈاکٹر فوزیہ سے مل کر کچھ کرنے کی‘ کچھ بننے کی لگن میں اضافہ ہوا بٹ یار ایک بات سمجھ نہیں آتی کہ کشمیری فیملیز کی سب مائیں کیوں چاہتی ہیں کہ ان کی بیٹیاں بھی کشمیری گھرانوں میں ہی بیاہی جائیں اور میرے دادا ابو بھی ہمیں کشمیری لوری سے سلایا کرتے تھے بول بھی مجھے آتے ہیں مطلب بھی وہ اس لوری سے مختلف ہے لکھوں تو تعارف لمبا ہوجائے گا۔ ندا رضوان سے حضرت سودہؓ کے بارے میں مزید معلومات ملی پھر اقبال بانو کا ہاتھ تھام کر انا اور محبت کی آنکھ مچولی کا کھیل دیکھنے کے لیے کمرۂ تصور کا رخ کیا جہاں آخر کار انا محبت پر بھاری پڑگئی اور انا کی جیت ہوئی‘ دراصل جیت کے لباس میں لپٹی ہوئی ہار‘ سباس گل کے توسط سے بہت کچھ سمجھنے جاننے کا موقع ملا۔ نزہت جبیں ضیاء نے خوب صورت انداز میں اسی حقیقت سے روشناس کروایا جس کا انجام جان کر بھی ہم انجانے میں صدیوں سے جس غلطی کو دہرائے جارہے ہیں۔ ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ میں سمجھ نہیں سکی کہ زیادہ خسارے کس کے حصے میں آئے رانیہ یا تائی کہ۔ نادیہ فاطمہ نے پھر سے یاد دہانی کروادی کہ لفظ انسان کا مطلب غرض (مرے نزدیک)خواہ انسان کوئی بھی کام کرے بہت اچھا ہی سہی پر اس میں صرف اور صرف اس کی غرض شامل ہوتی ہے۔ ’’من کا سِپ‘‘ پڑھ کر بے ساختہ دل سے دعا نکلی ’’اللہ ہر مسلمان کو نفس اور شیطان کی پیروی سے اپنی پناہ دے‘‘ آمین۔ ’’بند گلی‘‘ پر یہ کہوں گی کہ یہ عبد القادر کی بے حسی تھی جس نے یہ دن دکھایا چونکہ یہ دونوں صرف اپنی اپنی ذمہ داری نبھاتے رہے اور شاید نہیں جانتے تھے کہ رشتے نبھانے کے لیے صرف ذمہ داری نہیں بلکہ احساس اور خلوص بھی ضروری ہوتا ہے اور اس طرح سے شاید زندگی گزاری تو جاسکتی ہے لیکن جی نہیں جاتی اور زندگی گزارنے کے لیے نہیں جینے کے لیے ہے۔ ’’پر رحمت‘ حجاب‘‘ اور عائشہ کا افسانہ ‘ وجہ تینوں میں میرے خیال سے جاہلیت‘ کم علمی اور حل علم‘ تقویٰ اور میرے خواب زندہ ہیں‘ ماریہ کی حالت اور جیسکا کا انداز بات کچھ خاص ہے یقینا۔ ’’دل کے دریچے‘‘ ابرار خان فوت ہوگئے‘ چلو جی مل چکے فائز اور سفینہ۔ ’’تیرے لوٹ آنے تک‘‘ اخ ‘ پاپا اور زری کے درمیان کیا چل رہا ہے۔ ’’جیسا میں نے دیکھا‘‘ سلسلہ اچھا لگا۔ بزم سخن سے ارم کمال‘ کوثر خالد اور طلعت نظامی کے شعر اچھے لگے۔شوخئی تحریر فل بیسٹ یار عالم میں انتخاب پرانے سینئر شعرا کی بات ہی کچھ اور ہے‘ سبھی بہت اچھے تھے لیکن عدیم ہاشمی کی (سعدیہ رمضان کی چوائس) حسب حال تھی اور حمدو نعت بہت خوب صورت۔ ہومیو کارنر بھی بہت سے لوگوں کے لیے سود مند اور جی لائبہ میر کواجازت دیجیے، اللہ حافظ۔
کوثر ناز… حیددآباد۔ اسلام علیکم! امید اور اللہ تعالی کے حضور دعا کرتے ہیں کہ حجاب نگر کی تمام شہزادیاں اور بھائی حضرات باخیر و عافیت ہوں گے سبھی کے لیے پرخلوص دعائیں۔ حجاب کے تبصرے کے ساتھ حاضر ہیں تو جناب مابدولت کو اس بار حجاب کا سرورق خاصا بھایا ریشمی بالوں‘ حسین آنکھوں اور نازک لبوں نے دوشیزہ کے چہرے کو خوب صورتی و معصومیت کا لبادہ بڑی خوب صورتی سے اڑھایا دھیمی سی مسکان اور لائٹ سے میک اپ میں میں اپسرا حجاب کے سرورق پر پوری آب و تاب کے ساتھ جلوہ نما آنکھوں کو بھلا سا تاثر دے گئی ۔ حجاب ہاتھوں میں سمایا سب سے پہلے فہرست کی سمت جست لگائی نگاہیں عائشہ پرویز کے نام کے گرد محو رقصاں ہوگئی بھئی میری طرح کیوٹ سی دوسری لڑ کی جو ہے (پہلی ہم خود ہیں) ۔ مدیرہ سے بات چیت اچھی لگی اپنی اپنی سی لگی ہمیشہ کی طرح دل سے ساختہ حجاب سے جڑے ہر فرد کے لیے ڈھیروں دعائیں لبوں پر آ ٹھہریں‘ رب تعالی قبولیت کا درجہ عطا کرئے آمین۔ حمد و نعت کوثر خالد کی بہترین کاوش اللہ آپ کو جزا دے‘ آمین۔ امہارت المومنینﷺ ندا رضوان کا بہترین سلسلہ‘ شاندار معلومات فراہم کرتا ہمیں اچھائی و سچائی کی سمت بلاتا۔ ذکر اس پری وش کا صبا زرگر آپ چھوٹی لگی ہمیں‘ انداز تحریر سے کیا ایسا ہی ہے؟ سارہ رضی‘ زونیرا ذولفقار‘ انعم نعمت آپ سب سے مل کر اچھا لگا۔ رخ سخن فصیحہ آصف خان انہیں تو نائنتھ کلاس سے جانتی ہوں لیکن پتا اس شمارے میں چلا کہ یہ شاعرہ ہیں ماشااللہ بہت اچھا لگا بڑی سلجھی سلجھی گفتگو رہی۔ آغوش مادر سحرش فاطمہ جان سکتے ہیں جو ہمیں بے طرح عزیز ہوں وہ ہمیں چھوڑ کر چلے جائیں وہ بھی اس دیس جہاں روح کے جسم میں ہوتے جانا ممکن ہی نہیں پھر ان کی یادیں صفحہ قرطاس پر بکھیر دینا وہ بھی ماں جیسی عظیم ہستی کی تو آہ دکھ حد سے بڑھ جاتا ہوگا۔ رب تعالی سے دعاگو ہوں کہ وہ آپ کو سچی خوشیاں دے اور والدہ کے درجات بلند کرئے‘ آمین۔ ملاقات ڈاکٹر فوزیہ تبسم سے خاصی طویل اور اچھی رہی۔ ’’پیا کا گھر‘‘ ماریہ فاطمہ ماشااللہ بہت ساری خوشیاں اور زندگی بھر کا سکون خدا آپ کی حیات میں لکھ دے‘ آمین۔ بہت خوب صورت باتیں دل کو چھو گئی۔چاہتوں کے دکھ اقبال بانو کا درد دیتا حقیقتوں سے آشنائی بخشتا مختصر افسانہ بہت خوب۔ ’’بڑا آدمی‘‘ سباس گل آپی احساس تشکر سے کئی بار آنکھوں کے گوشے بھیگ گئے کئی بار مسلمان ہونے پر الحمدللہ کہا اور کہانی پڑھتے ہوئے ان گنت بار آپ کو سلام پیش کیا اللہ کرئے زور قلم اور زیادہ آمین۔ تمہاری راہ دیکھی ہے نزہت جبین ضیاء بہترین ناولٹ مجھ ناچیز کو کہیں کہیں شک تھا کہ سوتیلے والا کوئی معاملہ ہوسکتا ہے اور جاہل بدتمیز کو عقل بڑی جلدی آگئی اچھا لگا۔ ’’میرے خواب زندہ ہیں‘‘ اور ’’دل کے دریچے‘‘ بہترین سلسلہ وار ناول خوب صورتی سے آگے بڑھتے ہوئے ۔ ’’تیرے خیال سے‘‘ صائمہ قریشی خاصا اچھا اور ہارٹ ٹچنگ لکھا۔ مرد تو کبھی مجبور نہیں ہوتااگر وہ حالات سے سمجھوتا کرلیتا ہے تو لڑکی کو محبت جیسی خوش گمانی میں رہنے کی قطعی ضرورت نہیں لیکن یہاں جو بڑوں نے کیا وہ اتنا بھی ناپید نہیں یہی ہوتا ہے ویلڈن۔ ’’کیا کھیل عشق نے کھیلا‘‘ محبت کی داستان میں دکھ واذیت کی ریت لکھ دی ہما ایوب بہت بہترین۔ ’’اسکینڈل‘‘ آپا نادیہ احمد کیا خوب لکھا‘ ماشااللہ اور سچ ہی کہتے عورت ہیں عورت کی دشمن ہوسکتی ہے اور فروا سے اسی بات کی امید تھی البتہ اختتام اچھا رہا ہیرو نے اچھا فیصلہ کیا اور مجھے سکون ملا ۔ ’’من کا سِپ‘‘ سیما بنت عاصم الگ نام بہترین سبق بہت خوب۔ ’’تیرے لوٹ آنے تک‘‘ سلمی فہیم گل کی اچھی تحریر مکمل تبصرہ کہانی مکمل ہونے پر ان شااللہ ۔ ’’بند گلی‘‘ غزالہ جلیل راؤ آپی ویری ویل۔ ’’پر رحمت‘‘ ًمصباح علی بہترین ۔ ’’میں ایک لڑکی ہوں‘‘ عائشہ پرویز صدیقی حقیقت پر مبنی بہترین اور پختہ انداز تحریر کے ساتھ لکھا گیا پہلا افسانہ مبارکباد لڑکی ۔ حجاب صباحت رفیق بہت بہترین اللہ مزید کامیابیاں دے‘ آمین۔ ذرا سوچئے‘‘ ثنا ناز بہت بہترین۔ ’’جیسا میں نے دیکھا‘ طب نبوی ﷺ‘ بزم سخن‘ کچن کارنر‘ آرائش حسن‘ عالم میں انتخاب‘ شوخی تحریر‘ حسن خیال‘ شوبز کی دنیا‘ ٹوٹکے‘‘ سبھی پر نگاہ ڈالی اچھے سلسلے کسی نہ کسی کی دلچسپی کا سامان لیے۔ مجموعی طور پر حجاب بے مثال رہا‘ ہمیں بہت پسند آیا اللہ تعالی ترقی کی ہزاروں سیڑھیوں سے آشنائی بخش کر عروج کی منزل عطا کرئے ‘آمین ثم آمین۔
منتشاء صدیقی… کراچی۔ السلام علیکم!پہلی بار حجاب پر تبصرہ کررہی ہوں‘ وجہ بہت آسان ہے‘ میں حجاب کا حصہ بننا چاہتی ہوں امید ہے آپ لوگ مجھے مایوس نہیں کریں گے۔ مارچ کا حجاب مجھے 10 تاریخ کو مل گیا تھا ماڈل اس بار سادگی کا روپ دھارے دل پہ بجلیاں گرا گئیں۔حمدو نعت ‘ امہات المومنین پڑھ کر روح کو منور کیا۔ آغوش مادر میں سحرش فاطمہ کا دکھ دل سے محسوس کیا‘ اللہ پاک سب کی مائوں کا سایہ سلامت رکھے اور جن کی مائیں نہیں‘ ان کو جنت میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔ ذکر اس پری وش کا‘ میں تمام بہنوں سے مل کر اچھا لگا۔ رخ سخن میں فصیحہ آصف اور ملاقات میں ڈاکٹر فوزیہ کو جان کر خوشی ہوئی۔ سلسلہ وار ناولز ’’میرے خواب زندہ ہیں‘‘ اور ’’دل کے دریچے‘‘ تو اچھے ہی جارہے ہیں۔ افسانے سارے ایک سے بڑھ کر ایک لگے پر مکمل ناول میں ’’بڑا آدمی‘‘ سباس گل نمبر لے گئیں۔ ناولٹ میں ’’اسکینڈل‘‘ نادیہ احمد نے خون کے آنسو رلا دینے والی تحریر لکھی ہے۔ منہ بولے بھائی آغا اور ڈاکٹر فروا کیا حقیقت میں ایسے ہوتے ہیں؟ طب نبویﷺ سے بہت سی معلومات حاصل ہوئیں۔ بزم سخن اے ون رہا۔ کچن کارنر سے مزے دار کھانوں کی خوشبو دل کو لبھاتی رہی۔ شوخئی تحریر میں بہت اچھی باتیں پڑھنے کو ملیں۔ عالم میںانتخاب واہ کیا غزل اور کلام تھے‘ لاجواب۔ شوبز کی دنیا میں ابھی گھومنا باقی ہے۔ اب اس دعا کے ساتھ اجازت چاہوں گی‘ اللہ پاک ہم سب کو ناگہانی آفات سے بچائے اور حجاب و آنچل کو ترقی دے‘ آمین۔
سنبل بٹ… بورے والا۔ السلام علیکم! حجاب ہاتھ میں کیا آیا دل ناچ اٹھا‘ اتنا پیارا من موہنا سا ٹائٹل دو منٹ تک تو نگاہ جم گئی۔ حمدونعت پڑھ کر عقیدت پیدا ہوئی‘ اس کے بعد ’’پیا کا گھر‘‘ پڑھا‘ اچھا لگا۔ ندا رضوان نے امہات المومنین کمال انداز میں لکھا۔ سب سے پہلے ناولٹ پر نگاہ دوڑائی نادیہ احمد کا ’’اسکینڈل‘‘ بہترین لگا۔ افسانوں کی فہرست میں کافی قابل ذکر نام نظر آئے۔ اقبال بانو‘ صباحت رفیق چیمہ اور سیما بنت عاصم کے افسانے سب سے بہترین تھے۔ اس کے بعد سلسلے وار ناول کی باری آئی‘ نادیہ فاطمہ کا ’’میرے خواب زندہ ہیں‘‘ اچھا جارہا ہے مگر ہمیں صدف آصف کے ’’دل کے دریچے‘‘ کا انتظار جتنی شدت سے رہتا ہے اس کا اظہار مشکل ہے۔ فصیحہ آصف خان سے ملاقات اچھی رہی۔ سحرش فاطمہ نے آغوش مادر کمال انداز میں تحریر کیا۔ مکمل ناول میں سباس گل کا ’’بڑا آد می‘‘ اور صائمہ قریشی کا ’’تیرے خیال سے‘‘ بہترین لکھے گئے ہیں‘ دوسرے سلسلے بھی مناسب ہیں اچھا اب اجازت دیں‘ اللہ حافظ۔
٭ اب اس دعا کے ساتھ اگلے ماہ تک کے لیے اجازت چاہوں گی کہ اللہ تعالیٰ ہم سب کو اپنے حفظ ا امان میںرکھے اور ملک پاکستان کو دشمن عناصر سے محفوظ فرمائے اور اسے رہتی دنیا تک قائم و دائم رکھے‘ آمین۔ تمام جیتنے والی بہنوں کو ادارے کی جانب سے ڈھیروں مبارک باد۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close