Aanchal Dec 15

ہمارا آنچل

ملیحہ احمد

ڈئیر قارئین اور تمام رائٹرز کو میرا محبت بھرا سلام قبول ہو‘ جی تو ہمارا نام شازیہ اختر ہے لیکن سب پیار سے شاذی کہتے ہیں 6 جون کو اس دنیا میں انٹری دی‘ میرا تعلق ضلع چکوال کے گائوں نور پور سے ہے۔ ہم چھ بہن بھائی ہیں‘ میرا نمبر آخری ہے۔ میرے دونوں بڑے بھائی احمد اور مزمل بھائی شادی شدہ ہیں۔ احمد بھائی کی ایک بیٹی حنا اور مزمل بھائی کا ایک بیٹا معاویہ ہے۔ میری آپی نازیہ بھی شادی شدہ ہیں‘ ان سے چھوٹے ساجد بھائی اور عابد بھائی اس کے بعد میں ہوں۔ میری تعلیم کچھ خاص نہیں بس گزارے لائق ہے‘ خوبیاں یہ ہیں کہ کسی کو دکھی نہیں دیکھ سکتی۔ دل کی بہت صاف ہوں جو دل میں ہو وہ منہ پر ہوتا ہے‘ ہر کسی سے مخلص ہوکر ملتی ہوں جو ایک بار ملے دوسری بار ملنے کی خواہش ضرور کرتا ہے۔ ہنس مکھ ہوں‘ نماز کی بہت پابند ہوں اور دوسروں کو بھی تاکید کرتی ہوں۔ خامیاں یہ کہ غصہ بہت آتا ہے لیکن اس پر جو غلط کررہا ہو‘ تھوڑی جذباتی ہوں‘ حساس ہوں۔ کلر میں وائٹ اور گلابی بہت پسند ہے جبکہ چھوٹی بھابی کو بلیک کلر پسند نہیں جس پر ہم دونوں کی لڑائی ہوجاتی ہے (مذاق میں)۔ کھانے میں مجھے سب پسند ہے لیکن چنے کی دال بالکل اچھی نہیں لگتی۔ آئیڈیل شخصیت حضور صلی اللہ علیہ وسلم ہیں ‘ اللہ تعالیٰ بس ان کی سنت پر عمل کرنے والا بنادے۔ آنچل سے وابستگی کافی عرصے سے ہے‘ پہلے تو مانگ کر گزارا کرلیتے تھے لیکن اب ہر ماہ اپنا لیتی ہوں۔ ہر قسم کی کتاب پڑھنے کا بہت شوق ہے‘ اگر کسی کے پاس کوئی کتاب دیکھ لوں تو تب تک اسے نہیں چھورتی جب تک اس سے کتاب لے نہ لوں۔ اشفاق احمد کی زاویہ اور بانو قدسیہ کی امربیل بہت پیاری ہیں۔ شاعروں میں پروین شاکر‘ عبد اللہ راہی اور وصی شاہ بہت پسند ہیں۔ شاعری مجھے بہت پسند ہے جو شعر اچھا لگے وہ میری ڈائری کی زینت بن جاتا ہے (بقول نرگس کے) تمہارا انتخاب بہت اچھا ہے‘ دوستیں بنانا بہت اچھا لگتا ہے۔ جہاں بھی جاتی ہوں کوئی نہ کوئی دوست بناتی ہوں لیکن سب سے پیاری دوست نرگس شاہین ہے جو ہم راز ہے۔ نرگس میری طرف سے تمہیں بہت پیار۔ رائٹرز میں نازیہ آپی اور سمیرا آپی بہت پسند ہیں‘ مجھے نازیہ اور سمیرا آپی سے ملنے کا بہت شوق ہے۔ کاش کہ زندگی میں ان سے کبھی ملاقات ہوجائے۔ اپنے والدین سے بہت پیار کرتی ہوں‘ قارئین سے گزارش ہے کہ میری امی کی لیے دعا کریں وہ جلد صحت یاب ہوجائیں۔ بچوں سے بہت پیار کرتی ہوں‘ خصوصاً اپنے کیوٹ سے بھتیجے معاویہ اور بھتیجی حمنی میں تو میری جان ہے۔ میں نے آج تک جو بھی اپنے ربّ سے مانگا وہ مجھے ملا حتیٰ کہ زندگی کی سب سے بڑی خوشی بھی نصیر احمد کی صورت میں (میرا نکاح ہوچکا ہے لیکن ابھی رخصتی نہیں ہوئی) جس کا ملنا مشکل لگتا تھا وہ مجھے اتنی آسانی سے مل جائے گا شاید میرے ربّ کا کرم ہے۔ اب اجازت اللہ حافظ۔

ڈئیر آنچل قارئین! السلام علیکم‘ امید ہے اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے سب بخیرو عافیت ہوں گے‘ میری اللہ پاک سے دعا ہے کہ آپ سب اس بابرکت ذات کے حفظ و امان میں رہیں‘ آمین۔ اب اپنا تعارف ہوجائے‘ مابدولت کو سعدیہ خواجہ کہتے ہیں‘ نک نیم سعدی ہے جو گھر والوں کے ساتھ ساتھ فرینڈز میں بھی کامن ہے۔ تاریخ پیدائش 3 نومبر ہے‘ اسٹار عقرب ہے جس کی تمام خوبیاں اور خامیاں مجھ میں پائی جاتی ہیں۔ ہم چار بہن بھائی ہیں سب سے بڑی شگفتہ آپی جو ہیں اور ایک بہت ہی پیارے سے بیٹے کی ماما ہیں۔ دوسرے نمبر پر انوار بھائی ہیں‘ انہوں نے ایم بی اے کیا ہے‘ اس کے بعد تیسرے نمبر پر مابدولت خود ہیں۔ بی ایس سی کیا ہے اور اب ایم اے اسلامیات کرہی ہوں۔ اس کے ساتھ ساتھ گورنمنٹ ٹیچر کی حیثیت سے جاب بھی کررہی ہوں‘ چوتھے نمبر پر صدام علی ہے جو کہ چھوٹا ہونے کے ساتھ ساتھ سب گھر والوں کا لاڈلہ ہے۔ صدام بی ایس جیولوجی کے 6th سمسٹر میں ہے۔ آزاد کشمیر کے ایک خوب صورت شہر ہجیرہ میں رہتی ہوں۔ اب آتی ہوں اپنی پسندو ناپسند کی طرف تو کھانے پینے میں سب کچھ پسند ہے کیوں کہ اللہ تعالیٰ کے دیئے رزق میں نکتہ چینی کرنا اس کی ناراضگی کا سبب بن سکتا ہے۔ لانگ شرٹ‘ چوڑی دار پاجامہ اور لمبا دوپٹہ پسندیدہ لباس ہے۔ حد میں رہ کر ہر فیشن کرتی ہوں‘ رنگوں میں بے بی پنک‘ انگوری کلر پسند ہیں۔ میری فیورٹ پرسنالٹی میری ماں ہیں جو کہ اس دنیا میں نہیں رہیں‘ اللہ تعالیٰ ان کو مغفرت عظیم عطا کرے‘ آمین۔ فیورٹ بُک قرآن مجید اور آنچل ہے‘ آنچل سے میرا تعلق 2008ء سے ہے۔ دوسروں پر تنقید کرنے والے لوگوں سے نفرت ہے‘ جھوٹ بولنے والے اور دوسروں کے معاملات میں بے جا دخل اندازی کرنے والوں کو سخت ناپسند کرتی ہوں۔ خوبی یہ ہے کہ صلح جو اور امن پسند ہوں‘ لڑائی جھگڑے‘ فالتو بولنا ناپسند ہے۔ بہت کم گو ہوں‘ اکثر اپنی ذات میں گم رہتی ہوں۔ شوخ و چنچل‘ والدین کی لاڈلی اور بگڑی بیٹی تھی لیکن وقت اور حالات نے اتنا بدل ڈالا کہ اب ہر دیکھنے والا دنگ رہ جاتا ہے کہ یہ وہی سعدیہ ہے جسے ہم جانتے تھے۔ دوستی کے معاملے میں بہت حساس ہوں‘ زیادہ دوستیں تو نہیں ہیں لیکن جو ہیں وہ جگری ہیں۔ عذرا آفتاب‘ نورین فاطمہ‘ عدیلہ بشیر‘ عدیلہ رفیق‘ عظمیٰ جبین‘ صائمہ مشتاق اور فرح سرور‘ سب ایک سے بڑھ کر ایک ہیں‘ میرے آنسوئوں میں برابر شریک ہونے والی ہیں۔ تنہا رہنا اچھا لگتا ہے‘ کبھی دل کرتا ہے خوب روئوں ار کبھی ہنسنے کو دل چاہتا ہے۔ سردیاں بہت پسند تھیں خاص کر لمبی‘ کالی سیاہ خوفزدہ کردینے والی راتیں لیکن جب سے ان سیاہ لمبی راتوں میں ماما کی ڈیتھ ہوئی تھی تب سے ان سے وحشت ہوتی ہے۔ میں اندر سے بالکل خالی اور کھوکھلی لڑکی ہوں‘ بہرحال اللہ تعالیٰ سے میرے حق میں دعا کیجیے گا۔ شاعری پسند ہے‘ پسندیدہ شاعر محسن نقوی اور احمد فراز ہیں۔ آپ سب کو میرا تعارف کیسا لگا بتایئے گا ضرور۔ اللہ حافظ۔

السلام علیکم! اس ناچیز کا سلام تمام قارئین بہنوں کے نام‘ آنچل اسٹاف‘ گول مٹول‘ قارئین ننھی منی لڑکیوں کیسی ہو؟ میں نے کسی بھی ماہنامے میں کبھی شرکت نہیں گوکہ دل تو بہت چاہا پر کیا کروں ہم ذرا سست الوجود ہیں‘ دماغ کی بھی گرم ہوں۔ اب آتی ہوں اپنے تعارف کی طرف جو ذرا دل تھام کر اور آنکھیں کھول کر پڑھیے گا‘ میرا نام نادیہ جہاں تبسم میرے ابو جان نے رکھا تھا‘ اپنا نام بہت اچھا لگتا ہے۔ ہم چار بہن بھائی ہیں‘ میرا سب سے بڑا ایک بھائی نوید ہے‘ ہم تین بہنیں بھائی سے چھوٹی ہیں۔ بہنوں میں میرا نمبر دوسرا ہے ایک بہن چھوٹی تانیہ ہے ( اس سے میری بالکل نہیں بنتی) ویسے ہم میں سے کوئی ایک کہیں چلی جائے تو دل نہیں لگتا۔ 25 مئی کو سال کے گرم مہینے میں اس دنیا میں نازل ہوئی تھی‘ ضلع سیالکوٹ کے خوب صورت گائوں میں پیدا ہوئی۔ آنچل پڑھنا بہت اچھا لگتا ہے اور ان شاء اللہ پڑھتی رہوں گی اس سے میرا واسطہ دو تین سال سے ہے۔ کتابیں پڑھنا بہت اچھا لگتا ہے ۔ میں نے ماشاء اللہ مدرسہ کا چار سال کا کورس اور ترجمہ تفسیر کیا ہوا ہے‘ اسکول کی تعلیم بھی میٹرک تک ہے۔ اب آتے ہیں پسند نا پسند کی طرف‘ رنگوں میں ریڈ‘ پنک اور وائٹ کلر بہت پسند ہے اور زیاہ تر ریڈ کلر ہی پہنتی ہوں۔ کھانے میں آلو مٹر اور گرمیوں میں بھنڈی کریلے بہت پسند ہیں۔ چاولوں کی تو دیوانی ہوں اور میٹھے کی بہت ہی شوقین ہوں‘ مجھے غصہ بہت زیادہ اور جلد آتا ہے جب غصہ آتا ہے تو میری دوست نورین مجھے مناتی ہے‘ میری فرینڈ بہت اچھی ہیں۔ زنیرہ مغل‘ بشریٰ‘ شمع‘ نورین مسکان اور عفیفہ ہیں اور میں ہر ایک پر بہت جلد بھروسہ کرلیتی ہوں۔ اپنی سویٹ سے ابو جان سے بہت محبت ہے‘ مجھے اپنے بھتیجے عبید اللہ اور بھانجی زینب (زینی) سے بہت پیار ہے اور میری پسندیدہ ہستی حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ‘ حضرت علیؓ و فاطمہؓ حسنؓ و حسینؓ، قائد اعظم‘ علامہ اقبال ہیں۔ رائٹرز میں نازیہ کنول نازی‘ عمیرہ احمد ان کے ناولز بھی پسند ہیں۔ اپنے اساتذہ سے بھی محبت ہے مجھے جتنے بھی استاد ملے بہت ہی اچھے ملے ہیں‘ جن میں باجی منیبہ‘ مس مہوش جبیں اور سر خالد یہ سب سے زیادہ اچھے ہیں۔ اللہ تعالیٰ ان کو قدم قدم پر کامیابیوں سے نوازے‘ آمین۔ اللہ تعالیٰ میرے پیارے بھیا نوید کو لمبی زندگی دے‘ اب میں اجازت چاہتی ہوں‘ اللہ حافظ۔

پیارے آنچل کے پیارے اسٹاف اینڈ سویٹ سے ریڈرز اینڈ رائٹرز اینڈ آل پاکستان کو میری طرف سے السلام علیکم! کیا حال چال ہیں آپ سب کے؟ امید ہے سب فٹ اینڈ فائن ہوں گے اور میرے بارے میں جاننے کے لیے میرے بالکل سنگ سنگ ہوں گے۔ میرا نام ثناء ریاض ہے اور میں 28 جنوری کے ایک کول سے دن ضلع منڈی بہائو الدین کے ایک خوب صورت سے گائوں بوسال سکھا میں پیدا ہوئی۔ ہماری کاسٹ راجپوت (رانا) ہے‘ ہم چار بہنیں ہیں‘ میرا نمبر تیسرا ہے اور میں ایف ایس سی کی اسٹوڈنٹ ہوں‘ پاپا ڈاکٹر ہیں اور ان کی خواہش ہے میں بھی ڈاکٹر بنوں۔ اللہ تعالیٰ میرے والدین کو صحت اور عزت والی لمبی زندگی عطا فرمائے‘ آمین۔ ڈریس میں مجھے لانگ شرٹ کے ساتھ چوڑی دار پاجامہ اور بڑا سا دوپٹہ پسند ہے۔ جیولری میں مالا ‘ بین‘ ٹین رسٹ واچ اور کانچ کی چوڑیاں بے حد پسند ہیں۔ ڈشز میں چکن بریانی‘ شامی کباب اور سویٹ ڈش میں کھیر پسند ہے (صرف امی کے ہاتھ کی)۔ کلرز میں بلیک‘ بے بی پنک اور بلیو فیور ٹ ہیں۔ بیسٹ ٹیچرز مس نسرین‘ مس مقدس‘ مس ساجدہ‘ سر خالد‘ سر ممتاز‘ سر مظہر اور سر ظفر ہیں۔ اللہ تعالیٰ میرے ان تمام ٹیچرز کو ہمیشہ خوش و خرم رکھے‘ آمین۔ فیورٹ ڈائجسٹ آنچل ہے اور اس کی وجہ ’’ٹوٹا ہوا تارا‘‘ ہے اس لیے میرا آنچل پڑھنے کا سارا کریڈٹ سمیرا شریف طور کو جاتا ہے لیکن آنچل کی باقی سب ہی رائٹرز بھی ماشاء اللہ بہت اچھا لکھتی ہیں جن میں ام مریم‘ نازیہ کنول نازی‘ عشنا کوثر سردار اور اقراء صغیر ہیں۔ دعا ہے آنچل دن دگنی‘ رات چوگنی ترقی کرے‘ سنگرز میں عاطف اسلم‘ شفقت امانت علی‘ ندیم عباس اور ایکٹرز میں عامر خان‘ سیف علی خان اور ایکٹریس میں کترینہ کیف اور کاجل فیورٹ ہیں۔ اب آتے ہیں ناپسند کی طرف‘ مجھے ایسے لوگ سخت ناپسند ہیں جو دوسروں سے بلاوجہ جیلس ہوتے ہیں۔ دوسروں کا مذاق اڑانے والے اور طنز کرنے والے لوگ بے حد بُرے لگتے ہیں۔ جی جناب عالی اب خوبیوں اور خامیوں سے بھی پردہ اٹھا دینا چاہیے۔ خوبی یہ ہے کہ حقیقت پسند ہوں‘ کبھی کسی کا بُرا نہیں سوچا کبھی کسی کو بُرا نہیں کہا ہر بندہ اپنی ذات میں ٹھیک ہے بس جھوٹ نہیں بولتی۔ ارے اب اتنی بھی خوبیاں نہیں ہیں مجھ میں‘ ہاں البتہ خامیاں بہت ہیں۔ سب سے بڑی خامی یہ ہے کہ میں نماز کی پابند نہیں ہوں‘ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ مجھے پانچ وقت کا نمازی بنادے۔ غصہ بہت آتا ہے‘ ڈھیٹ ہوں اور اپنی مرضی کرتی ہوں (بقول امی کے)۔برداشت بہت کم ہے‘ میری بہت زیادہ فرینڈز ہیں جن کے نام سدرہ (بیسٹ فرینڈ) فروا‘ سعدیہ‘ ثمرہ‘ اقراء‘ نورین‘ رقیہ اور ندا ہیں۔ ویل قارئین! آپ نے اپنے قیمتی وقت میں سے کچھ وقت نکال کر میرا ساتھ دیا‘ اس کے لیے بنڈل آف تھینکس ‘ اوکے ٹیک کیئر اللہ نگہبان۔

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close