Aanchal Oct 15

ہمارا آنچل

ملیحہ احمد

میری عزت دوستو اینڈ آنچل کے تمام اسٹاف کو میری طرف سے السلام علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ ! میرے نام سے تو آپ واقف ہوہی چکے ہیں سوچا اب مکمل تعارف کروایا جائے‘ باقی سلسلوں میں شرکت کے ساتھ ساتھ ہمارا آنچل میں شامل ہونے کا شوق بھی کب سے تھا‘ آخر ہمت کر ہی لی۔کاسٹ پنجابی پٹھان لیکن پشتو نہیں آتی کیونکہ پنجابی ہوں۔ اصلی نام تو صائمہ خاتون ہے لیکن میری دوست کو صائمہ کشف پسند ہے‘ اب کافی سالوں سے صائمہ کشف ہی چلا آرہا ہے۔ صائمہ خاتون نام میرے ابو جی نے رکھا‘ صائمہ کا معنی روزہ رکھنے والی۔ مجھ میں میرے نام کی تاثیر بھی ہے الحمدللہ روزہ نہیں چھوڑتی فرض بھی اور نفلی بھی رکھتی ہوں‘ میری دوست مجھے گڑیا کہتی ہے اور گڑیا کا نام مجھے میرے ماموں نے بھی دیا تھا۔ دس نومبر 1993ء رمضان المبار کے بابرکت مہینے میں مغفرت کے عشرے میں رحمت بن کر اپنے گھر والوں کے لیے اس دنیا میں آئی۔ قد پانچ فٹ ہے‘ ہم چار بہن بھائی ہیں۔ مجھ سے بڑی ایک بہن ہے جو شادی شدہ ہے اس کی ایک کیوٹ سی بیٹی ہے نور فاطمہ‘ مجھے اس سے بہت پیار ہے۔ دوسرا نمبر میرا ہے اور مجھ سے چھوٹا بھائی ہے اس کا ذہنی توازن ٹھیک نہیں ہے اور سب سے چھوٹا حفظ کررہا ہے‘ چاچو لوگوں کے پاس لاہور میں حفظ مکمل ہوگیا ہے گردان کررہا ہے۔ آپ سے التجا بھی ہے دعا کرنا وہ جلدی سے حفظ مکمل کرے واپس آجائے اور اللہ تعالیٰ میرے بھائی عبد الباسط کے ذہن کو ٹھیک کردے وہ کافی حد تک ٹھیک اور سمجھ دار بھی ہے بس خدا کی مرضی۔ حافظ قرآن ہوں اپنا مدرسہ ہے‘ چار سال سے بچیوں کو حفظ کروارہی ہوں‘ ماشاء اللہ 25 لڑکیوں کی کلاس ہے ‘ 10 لڑکیاں مجھ سے قرآن پاک کی عظیم نعمت سے فیض یاب ہوکر حفظ مکمل کرچکی ہیں اور ان کو پڑھانے کے ساتھ ساتھ ایف اے کررہی ہوں اور الحمدللہ نماز پانچ وقت ادا کرتی ہوں۔ چھوٹی چھوٹی باتوں پر کافی دیر تک پریشان رہتی ہوں‘ قوت برداشت ذرا بھی نہیں ہے۔ بُری عادت یہ بھی ہے ذرا سی بات پر رونا آجاتا ہے۔ گھر میں اگر کوئی ذرا سی بات کردے غصہ میں تو برداشت نہیں ہوتا‘ رونا آجاتا ہے اور سب سے بُری عادت غصہ جلدی آتا ہے لیکن ختم جلدی ہوجاتا ہے یہ عادت مجھے اچھی لگتی ہے۔ اچھی عادت یہ بھی ہے بغیر پردہ کے باہر نہیں نکلتی‘ حتیٰ کہ ڈاکٹر کے پاس بھی کم ہی جاتی ہوں ورنہ گھر میں ہی میڈیسن لادیتے ہیں ہمارے گائوں میں لیڈی ڈاکٹر آئی ہے اب سہولت ہوگئی ہے بس اب ضرورت ہو تو اس کو گھر بلالیتے ہیں۔ لباس میں مجھے شلوار قمیص ‘ فراک اور بڑا دوپٹہ لینا اچھا لگتا ہے۔ کھانے میں بریانی‘ سموسے‘ دہی بڑے اور آئس کریم پسند ہے۔ کھانا‘ ناشتا امی جی اور آپی کے ہاتھ کا بنا ہوا پسند ہے۔ اگر کوئی نصیحت کرے تو بُرتی نہیں لگتی کبھی کبھی بُری لگ بھی جاتی ہے لیکن زبان سے نہیں بولتی چپ ہوجاتی ہوں۔ میری یہی خواہش تھی اللہ تعالیٰ مجھے‘ گھر والوں کو اپنے پیارے گھر کی زیارت کروائے‘ اللہ نے سن لی میری امی جی نے عمرہ کی سعادت حاصل کی اسی سال فروری کے اینڈ میں گئے تھے عمرہ کے لیے اور اب بس اللہ میرے ابو جی اور میری قسمت میں بھی حاضری لکھ دے ۔ میرے ابو جی مسجد کے امام ہیں‘ اللہ تعالیٰ ہمیں اور زیادہ توفیق دے دین کو پھیلانے کی‘ آمین۔ مہمانوں کی اچانک آمد اچھی لگتی ہے لیکن بتاکر آئیں تو اچھا اہتمام ہوجاتا ہے۔ طبیعت میں ضدی پن نہیں‘ غرور بھی نہیں ہے۔ ماموں کے بیٹے سے منگنی ہوئی ہے لیکن شادی کا ابھی نزدیک نزدیک کوئی ارادہ نہیں۔ دوستیں کافی ساری ہیں نام لکھنے شروع کروں تو تھک جائوں گی ایک کا نام لکھوں گی وہ ہے مدیحہ‘ وہ میری بہت اچھی دوست ہے۔ کھانا نہ کھائو تو میرا گزارہ ہوجائے گا مدیحہ کے بغیر نہیں ہوگا۔ کزنوں میں سمیہ‘ حمیرا‘ قرۃ العین‘ رابعہ‘ عالیہ‘ ملائکہ سے میری کافی اچھی دوستی ہے۔ ماشاء اللہ یہ سب بھی حافظ قرآن ہیں۔ ناول نگاروںمیں نازیہ کنول نازی‘ سمیرا شریف‘ اقراء صغیر احمد‘ عمیرہ احمد‘ عابدہ سبین‘ ام مریم‘ عائشہ نور‘ سباس گل‘ نادیہ فاطمہ رضوی‘ عشناء کوثر پسند ہیں۔ اب اجازت چاہتی ہوں اللہ تعالیٰ سب کو اپنے حفظ وا مان میں رکھے‘ آنچل کی پریوں ضرور بتانا آپ کو میرا تعارف کیسا لگا۔

تمام آنچل اسٹاف رائٹرز اینڈ ریڈرز کو میری طرف سے محبت و خلوص سے بھرا شہد سے میٹھا عاجزی سے لبریز السلام علیکم اور سنائیں جی سب ٹھیک ہیں۔ ہاں ہاں مجھے پتا ہے کہ آپ سب میرا ہی انتظار کررہے ہیں خیر زیادہ انتظار کروانا مناسب نہیں سمجھا اور محفل آنچل میں خود کو شامل کرنے کی جسارت کرلی۔ 9 نومبر کو ضلع اوکاڑہ کے ایک خوب صورت گائوں میں تشریف لائی۔ چار بھائی اور دو بہنیں ہیں‘ میں سب کی لاڈلی و پیاری ہوں۔فورتھ ائیر کی اسٹوڈنٹ ہوں‘ ذہین بہت ہوں مگر پڑھاکو نہیں۔ خواب بڑے اونچے اونچے ہیں‘ میٹرک تک ڈاکٹر بننا تھا یہ خواب ٹوٹا تو نیا خواب آنکھوں میں آبسا کہ بی اے کے بعد ایل ایل بی کروں گی اور قانون کے شعبہ سے وابستہ ہوجائوں گی ‘ اب میں چاہتی ہوں کہ ضلع اوکاڑہ کی ڈی پی او بن جائوں‘ اللہ کرے میرا یہ خواب ضرور پورا ہوجائے۔ خامیوں اور خوبیوں کی طرف چلتے ہیں‘ خامیاںیہ ہیں کہ فرینڈز بہت بناتی ہوں‘ اندھا اعتبار کرتی ہوں‘ کوئی جھوٹ بولے تو سچ سمجھ لیتی ہوں۔ پہلے غصہ نہیں آتا تھا مگر اب بہت آتا ہے‘ بردداشت ختم ہوتی جارہی ہے۔ غصہ آئے تو رونے لگ جاتی ہوں‘ حساس دل ہوں‘ معصوم بہت ہوں اور میری معصومیت کو دیکھ کر بہت سے لوگوں نے دھوکہ دینے کی کوشش کی مگر کہتے ہیں جو شکل کہ معصوم ہوتے ہیں وہ عقل کے تیز ہوتے ہیں۔ خیر خوبیاں بتاتے ہیں کہ میں سچ بولتی ہوںدوسروں کو بُرے القاب سے نہیں نوازتی۔ دوسروں کی عزت کرتی ہوں‘ غیبت سے بچنے کی کوشش کرتی ہوں‘ سنی سنائی بات پریقین نہیں کرتی اور ایک اپنی عادت جو کہ مجھے پسند ہے کہ اللہ تعالیٰ کی ذات کا مجھ پر بہت احسان کہ میں نماز پنجگانہ کی عادی ہوں۔ اللہ کے بہت قریب ہوں ایسا ایک دوست کی وجہ سے ہوا جس نے میری پوری زندگی بدل دی‘ میں میٹرک تک لا اُبالی سی بے فکری سی لائف میں مگن کبھی نماز تک نہ پڑھی تھی۔ صبح کی تو ہر کوئی پڑھتا ہے مگر میں بھاگم بھاگ اسکول جانے کی تیاری کرتی اور ہوسکتا ہے شاید مجھے نماز آتی ہی نہ تھی کیونکہ کبھی پڑھی جو نہ تھی اور کبھی پڑھی تو دھیان شاید اللہ کی طرف تھا ہی نہیں ۔ میں نے پہلی بار پوری عاجزی و انکساری اور اللہ کے سامنے نماز ظہر 13 نومبر کو ادا کی مجھے لگا آج مجھے اللہ نے اپنے دامن رحمت میں چھپالیا۔ وہ دن اور آج کا دن اس بات کو پانچواں سال ہے‘ مجھے صرف اسی ہستی کی وجہ سے اللہ سے محبت ہوگئی وہ ہستی ہی مجھے اللہ سے ملانے کا سبب بنی‘ اب میں اپنا راز اللہ سے شیئر کرتی ہوں‘ اللہ سے دعا کرتی ہوں کہ میں ہمیشہ اسوۂ حسنہ کو اپنائے رکھوں ام المومنین کی سنت پر عمل کرتی رہوں کہ ان کی بدولت ہی دین و دنیا دونوں میں کامیابی ہے۔ رنگوں میں مجھے پنک وائٹ اور گرین پسند ہے‘ لباس میں شلوار قمیص اور بڑا سا دوپٹہ پسند ہے۔ اپنی آنکھیں اور ہاتھ پسند نہیں‘ کھانے میں بڑی نخریلی ہوں۔فروٹ میں اورنج پسند ہے۔ کسی سے حسد نہیں کرتی‘ میری بہت زیادہ فرینڈز ہیں ۔ پوائزن ‘ علیشہ‘ پاکورے پن کی خوشبو پسند ہے‘ پھولوں میں گلاب پسند ہے۔ مشروبات میں مینگو جوس پسند ہے‘ شخصیت میں آپی‘ اپنا بڑا بھائی پسند ہے۔ اپنے والدین سے اپنی آپی اور اپنے بھائیوں سے بے پناہ محبت کرتی ہوں۔ بڑے بھائی میں تو میری جان ہے اور آپی کی مجھ میں جان ہے‘ آئی لو یو آپی۔ رائٹرز میں فوزیہ غزل‘ نمرہ احمد‘ مصباح نوشین‘ نازیہ کنول نازی‘ شاعری کی بڑی دلدادہ ہوں۔ پروین شاکر‘ نوشی گیلانی‘ احمد فراز‘ محسن نقوی کو شوق سے پڑھتی ہوں۔ آر جے اور نیوز کاسٹر بننے کا بہت شوق ہے‘ غروب آفتاب کا منظر پسند ہے‘ ٹریول پسند نہیں گھرکی چار دیواری میں قید رہنا اچھا لگتا ہے۔ شام کو گھروں کو لوٹتے پرندے دیکھنا پسند ہے‘ کبھی کبھی صبح پرندوں کو دانہ ڈالنا پسند ہے۔ موڈی بہت ہوں بہت گہری ہم راز ہوں دوستوں کے لیے۔ صورت پر کم دھیان جبکہ بائے نیچر اور بائے کریکٹر دیکھ کر دوستوں کے ساتھ چلتی ہوں اور ماشاء اللہ سے میری ساری فرینڈز بہت اچھی ہیں۔ ہر وقت کمرے میں بند رہتی ہوں‘ گھر کے کام کاج بالکل نہیں آتے‘ پانی تک کمرے میں لیتی ہوں۔ نازک مزاج ہوں‘ گھر والے سب مجھ سے پیار کرتے ہیں‘ ڈائجسٹ پڑھنا اور ان میں لکھنا اچھا لگتا ہے۔ شرارتی بہت زیادہ ہوں‘ اجازت دیں ‘ اللہ حافظ۔

السلام علیکم! آنچل کے پیارے قارئین اور آنچل اسٹاف کو محبت بھرا سلام قبول ہو۔ مجھے رباب سبطین کہتے ہیں‘ میرا تعلق سرگودھا شہر سے ہے۔ 12 اگست کو رات 8 بجے اس دنیا میں تشریف لائی۔ اسٹار لیو ہے‘ اس کی ساری خوبیاں اور خامیاں مجھ میں پائی جاتی ہیں۔ غصہ بہت آتا ہے جب آتا ہے تو کسی کو کچھ نہیں کہتی اور کاموں میں مصروف ہوجاتی ہوں۔ ہم چھ بہنیں اور ایک بھائی ہے‘ مابدولت سب سے بڑی ہیں اس لیے ذمہ داریاں بھی زیادہ ہیں۔ تمام بہنوں میں بہت دوستی اور پیار ہے‘ سب سے زیادہ میری اقصیٰ (چوتھے نمبر والی) سے بنتی ہے جوکہ چھٹی کلاس میں پڑھتی ہے اور بہت زیادہ شرارتی ہے ۔ تحفے دینے کا بہت شوق ہے‘ میں اپنی پاکٹ منی گفٹس دینے میں خرچ کردیتی ہوں۔ ڈائجسٹ وغیرہ میرے گھر والوں کو پسند نہیں‘ اس لیے میں اپنی فرینڈ سے لے کر رسالے پڑھتی ہوں۔ جیولری بہت پسند ہے خاص طور پر رِنگ اور بریسلیٹ۔ مہندی لگانے کا بہت شوق ہے‘ کانچ کی چوڑیاں بہت پسند ہیں۔ کھانے میں بریانی اور کھیر بہت پسند ہے‘ آم بہت شوق سے کھاتی ہوں اور کینڈیز بہت پسند ہیں۔ریڈ اور بلیک میرا فیورٹ کلر ہے‘ سارے کپڑے انہی رنگوں میں ہوتے ہیں‘ ہر سوٹ میں بلیک کلر لازمی ہوتا ہے۔ کوکنگ کا بہت شوق ہے‘ بریانی اور حلوہ بہت اچھا بناتی ہوں‘ سب لوگ فرمائش کرکے بنواتے ہیں۔ مجھے ڈریس ڈیزائنر بننے کا بہت شوق ہے اور میں اپنے کپڑے خود ڈیزائن کرتی ہوں‘ آج کل میں ڈریس ڈیزائننگ میں ڈپلومہ کررہی ہوں عنقریب میرے شوق کی تکمیل ہونے والی ہے۔ ووکیشنل کالج میں میری ڈھیر ساری فرینڈز ہیں‘ سب سے پہلے عقیدت الزہر (چھوٹی سسٹر)‘ عظمیٰ بتول‘ سمیرا‘ آمنہ امداد ‘ رضیہ ریاض‘ شاہین اختر‘ سحرش‘ کائنات اشرف اور سدرہ اعظم۔ فیورٹ رائٹرز میں سمیرا شریف طور‘ ام مریم‘ نبیلہ عزیز‘ فائزہ افتخار‘ اقراء صغیر احمد اور نازیہ کنول نازی شامل ہیں باقی سب بھی بہت اچھا لکھتی ہیں‘ سب کو پڑھتی ہوں۔ پسندیدہ ناول میں پیر کاملؐ ‘ ہم کیسے رکھوالے ہیں‘ مصحف تیرے نام کی شہرت‘ ہمسفر‘ برف کے آنسو اور مجھے ہے حکم اذاں شامل ہیں‘ اس کے علاوہ آج کل ٹوٹا ہوا تارا بہت اچھا جارہا ہے۔ پسندیدہ شخصیت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم ہیں‘ وصی شاہ‘ فیض احمد فیض‘ پروین شاکر اور امجد اسلام امجد فیورٹ شاعر ہیں۔ امانت علی ‘ عاطف اسلم اور راحت فتح علی کو بہت شوق سے سنتی ہوں۔ ایف ایم بہت سنتی ہوں‘ بارش پسند ہے مگر خوف بھی آتا ہے آندھی سے بہت ڈر لگتا ہے۔ کھیلوں میں کرکٹ پسند ہے‘ بہت حساس دل کی مالک ہوں‘ کسی پر ظلم ہوتا نہیں دیکھ سکتی۔ معذور لوگوں پر بہت رحم آتا ہے اور غریبوں کی بہت مدد کرتی ہوں‘ انجان لوگوں سے جلدی فرینک ہوجاتی ہوں‘ گھر میں سب بہنیں مل کر بہت شور شرابہ کرتی ہیں۔ دھوکے باز اور فریبی لوگوں سے سخت نفرت ہے‘ حسد نہیں کرتی اور قناعت پسند ہوں تھوڑے پر بھی راضی ہوجاتی ہوں۔ میڈم حفیظ‘ میڈم فرحت ناز‘ میڈم رضوانہ‘ میڈم ساجدہ اور میم ثمینہ طاہر میری فیورٹ ٹیچرز ہیں۔ میری کزنز سارہ کرن‘ فاطمہ فاروق‘ بینش بتول‘ نبیلہ سمیعہ ایمن اینڈ ام حبیبہ میری بہت اچھی فرینڈز ہیں‘ تعارف کیسا لگا ضرور بتایئے گا‘ اجازت چاہتی ہوں اللہ حافظ۔

السلام علیکم! پیاری پیاری قارئین اور آنچل سے منسلک تمام افراد کیسے ہیں آپ سب؟ میں ہوں زاہرہ فاطمہ! آج آنچل میں میری موجودگی اس بات کا ثبوت ہے کہ ہم آنچل سے کتنا پیار کرتے ہیں کہ ہمیں اس کی فیملی کا حصہ بننا ہی پڑا تو قارئین آپ کو بتاتی چلوں میری آنچل سے وابستگی کافی پرانی ہے۔ ہمیں آنچل کس طرح ملا‘ دراصل ہوا کچھ یوں کہ ہمارے محلے کی جو لڑکیاں ہمارے ساتھ اسکول جاتی تھیں وہ بھی آنچل پڑھتی تھیں‘ ایک بار میں نے ان کے ہاتھ سے لے کر سرسری سا دیکھا۔ اس وقت ’’یہ چاہتیں یہ شدتیں‘‘ اور ’’جانِ جاں تُو جو کہے‘‘ یہ اسٹوریز چل رہی تھیں‘ شارق زمان کا نام میرے دماغ میں ایسا اٹکا کہ بس آنچل پڑھ کر ہی چھوڑا اور ابھی تک آنچل کے ساتھ وابستگی ہے۔ اچھا بھئی اپنا تعارف بھی کراتی ہوں ہم پانچ بہنیں ہیں‘ مجھ سے بڑی منتہیٰ اس کی شادی ہوچکی ہے پھر میں گھر کی ملکہ عالیہ اور مجھ سے چھوٹی عائشہ وہ درس میں ہوتی ہے‘ عالمہ بن رہی ہے۔ چوتھے نمبر پر عائزہ اور سب سے چھوٹی گھر بھر کی لاڈلی میری پیاری بہن اسودہ۔ بھائی کی ہمیں بہت خواہش ہے۔ میرے ابو آرمی ریٹائرڈ ہیں‘ اب تو جاب کرتے ہیں۔ میرے امی ابو ہم سے بہت پیار کرتے ہیں۔ ہم ایک پیارے سے گائوں میں رہتے ہیں جس کا ہر منظر میرا پسندیدہ ہے۔ میری تاریخ پیدائش 13 اگست ہے جس کا مجھے بے چینی سے انتظار رہتا ہے‘ اسٹار لیو ہے‘ کبھی پڑھا نہیں۔ ہاں اسکول میں فرینڈ کے ساتھ پڑھا کرتے تھے اور پھر ایک دوسرے کے اسٹارز پر کمنٹس بھی کرتے تھے۔ میں نے بی اے کے ایگزامز دیئے ہیں اور اللہ سے امید ہے کہ وہ مجھے ضرور کامیاب کرے گا‘ آمین۔ دعا پر پختہ یقین کرتی ہوں‘ تنہائی میں اللہ سے مخاطب ہونا اچھا لگتا ہے اور میرا یہی مشغلہ ہے‘ تنہائی پسند ہوں۔ بقول گھر والوں کے بہت باتونی ہوں‘ باقی فرینڈز اور ٹیچرز کے بقول بہت کم گو اور معصوم ہوں‘ فضول ہنسنا بالکل پسند نہیں۔و ائٹ اور بلیک کسی بھی اور کلر میں کنٹراسٹ میں ہوجائے پسند ہے۔ ہاتھوں میں چوڑیاں اور مہندی اچھی لگتی ہے‘ لمبے بال بہت پسند ہیں مگر میرے نہیں ہیں‘ ہاں شہوار کے بال بہت پسند ہیں۔ بارش اور بارش کی خوشبو بہت پسند ہے‘ باقی پرفیوم وغیرہ کبھی یوز نہیں کی۔ کھانا جو بھی ملے کھالیتی ہوں‘ بشرطیکہ بنا ہوا ہو‘ کوکنگ میرا شوق ہے۔ میری امی کی خواہش ہے کہ تم کھانا اچھا بنالو‘ سلائی کا کام سیکھ جائو اور تندور میں روٹی لگانا سیکھ جائو تو پھر تم سسرال میں کامیاب ہو‘ ہاہاہا۔ اب کافی حد تک یہ سارے کام سیکھ لیے ہیں۔ گھر کا سارا کام میرے ذمہ ہے۔ ہمارا جوائنٹ فیملی سسٹم تو نہیں ہے مگر آس پاس ہی سب رہتے ہیں‘ میری امی کی شادی فیملی میں ہی ہوئی اس لیے ننھیال پاس ہی ہے۔ ہاں البتہ جب سب کزنز اکٹھے ہوتے ہیں‘ عید تہوار یا کسی فنکشن پر تو خوب انجوائے کرتے ہیں‘ ساری رات ہلا گلا ہوتا ہے۔ ہمارا بچپن سب کزنز کے ساتھ ہلا گلا کرتے بہت اچھا گزرا‘ اب بھی جب یاد کرتے ہیں تو مسکرادیتے ہیں۔ شاعری سے بہت لگائو ہے‘ بہت کم رائٹر اور شاعروں کو پڑھا پھر بھی شاعری کرنا اچھا لگتا ہے۔ عبایا پسند ہے جس کی اب عادت ہوچکی ہے۔ امی ابو سے بہت محبت ہے‘ بس یہ خواہش ہے کہ ان کے ساتھ خانہ کعبہ کی زیارت کو جائوں‘ آمین۔ پسندیدہ رائٹرز نازیہ کنول نازی‘ سمیرا شریف طور‘ عشنا کوثر سردار‘ عفت سحر طاہر‘ اقراء صغیر ‘ سعد امل کاشف (کہاں ہیں آپ؟) ام مریم‘ نمرہ احمد اور عمیرا احمد پسند ہیں۔ ’’جنت کے پتے‘‘ اور’’ پیر کاملؐ‘‘ فیورٹ ہیں۔ اجازت چاہتی ہوں‘ اللہ حافظ۔

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close