Aanchal Oct-18

ہمارا آنچل

ملیحہ احمد

شائستہ یاسین
آنچل کے تمام قارئین‘ رائٹر اور اسٹاف کو میرا پر خلوص اور محبت بھرا سلام قبول ہو‘ دعا ہے کہ آنچل ہمیشہ کلیوں کی طرح خوبصورت رہے ۔ صاف شفاف تر و تازہ مہکتا ہوا۔ جیسا کہ آپ جان گئے ہوں گے کہ میرانام شائستہ یسین ہے۔ پیار سے سب ’’مانی‘‘ کہتے ہیں۔ 6 اگست کو ہڑپہ شہر میں پیدا ہوئی۔ ہم پانچ بہن بھائی ہیں۔ تین بہنیں دو بھائی ‘ میرا نمبر پہلا ہے اس کے بعد دو بہنیں اور بھائی دونوں چھوٹے ہیں۔ میں نے بی اے کیا ہے۔ اور ایم اے اردو کرنے کا ارادہ ہے۔ اب ہوجائے بات خوبیوں اور خامیوں کی۔ خامیاں جلد باز ہوں‘ غصہ جلدی آجاتا ہے‘ دوسروں پر جلد اعتبار کرلیتی ہوں۔ خوبیاں‘ نرم اور حساس دل کی ہوں‘ کسی کا دل نہیں دکھاتی‘ چھوٹی چھوٹی باتوں پر رونا شروع ہوجاتی ہوں۔
آنچل‘ کرن‘ خواتین‘ شعاع میرے پسندیدہ رسالے ہیں۔ ائٹرز میں نازیہ کنول نازی‘ صائمہ اکرم‘ عمیرہ احمد ‘ نمرہ‘ عفت‘ منشا محسن علی‘ رنگوں ٓیں گلابی مطلب پنک اور ریڈ کلر بہت پسند ہے۔ سردیوں کا موسم بہت پسند ہے۔ پرفیوم مجھے بہت زیادہ پسند ہیں۔ دوست نہیں بناتی ‘ مجھے اعتبار نہیں آتا اب کسی کا ‘ شاعروں میں پروین شاکر‘ امجد اسلام امجد‘ وصی شاہ بہت پسند ہیں۔ کھانے میں نخرے نہیں کرتی‘ جو مل جائے کھالیتی ہوں۔ ویسے مجھے آئسکریم‘ برگر‘ فروٹ چاٹ‘ دہی بھلے اور ملک شیک بہت بہت پسند ہیں۔
میں اسکول میں پڑھاتی ہوں۔ صبح نماز اور قرآن پاک کی تلاوت اور پھر گھر کا کام جلدی مکمل کرکے اسکول جاتی ہوں اور پھر بچوں کو ٹیوشن پڑھاتی ہوں۔ کچھ دیر ٹی وی دیکھتی ہوں اور پھر رات کو نیند کی وادی میں گم ہوجاتی ہوں (ہاہاہا) اگر میں اور میرا تعارف اچھا لگے تو رائے ضرور دینا دوستو! اب اجازت چاہتی ہوں‘ آپ لوگ تنگ اگئے ہوں گے۔
مہربان شاہ
السلام و علیکم! تمام ریڈرز سے التماس ہے کہ میرا چاہتوں اور خلوص بھرا سلام قبول کریں۔ مابدولت کو آپ جانتے ہیں اور اگر نہیں جانتے تو اب جان لیجیے۔ میرا نام مہرباں شاہ ہے جو میرا قلمی نام ہے۔ بہن بھائیوں میں میرا نمبر چوتھا ہے۔ ابھی فرسٹ ایئر کا ایگزام دے کر فارغ ہوئی ہوں۔ ڈیٹ آف برتھ20 دسمبر ہے۔ سالگرہ نہیں مناتی‘ لیکن فرینڈ وش ضرور کرتے ہیں۔ میری سب سے اچھی دوست سمیر چانی‘ مجھے برتھ ڈے کے دن وش کرنا نہیں بھولتی۔ لویو ثانی اینڈ مس یو اتنے مہینوں سے ملاقات جو نہیں ہوئی تو مس کر رہی ہوں‘ تم سب کو۔ میری فرینڈز لسٹ میں صباگل‘ معرفہ‘ حمیمہ‘ سمیہ چانی‘ کے ٹی‘ عائشہ اور سلویٰ شامل ہیں۔ میں افغان (مریم) کو بہت مس کرتی ہوں۔ کلرز مجھے سب اٹریکٹ کرتے ہیں۔ لیکن بلیک کلر جنون کی حد تک پسند ہے۔ گرے اور لائٹ بلیو بھی پسند ہیں۔ شلوار قمیص کے علاوہ ساڑھی اور فراک پسندیدہ لباس میں شامل ہیں۔ آئی تھنک میں سکس کلاس میں تھی جب میں نے ڈائجسٹ پڑھنا شروع کیا تھا۔ گھر والوں سے چھپ کر ڈائجسٹ پڑھنے کا اپنا ہی مزا تھا۔ اب بھی اگر ڈائجسٹ ہاتھ میں دیکھ لیں نا امی تو پھر ان کے غصے سے جان بچانا مشکل ہوجاتا ہے۔ پسندیدہ رائٹرز کو لکھنے بیٹھوں تو میرے خیال میں صفحے کم پڑ جائیں گے۔ نازیہ کنول نازی‘ اقراء صغیر‘ عشنا کوثر‘ ام مریم‘ سباس گل‘ نمرہ احمد عمیرہ احمد اور فرحت اشتیاق کے ناول بیسٹ ہوتے ہیں۔ دلوں کو چھولینے والی شاعری باعث تسکین ہے۔ کچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جن کی شاعری دل کو لگتی ہے۔ ان میں چند شعراء کے نام ساغر صدیقی‘ احمد فراز‘ غالب‘ ادا جعفری‘ پروین شاکر‘ محسن نقوی‘ علامہ اقبال کی شاعری پسندیدہ ترین ہیں۔ پشتو شاعروں میں امیر حمزہ سنواری‘ اجمل خٹک‘ غنی خان‘ رحمان بابا بیسٹ شاعر تھے‘ ان کی شاعری میں بہت تاثیر ہے۔ آتے ہیں خوبیوں اور خامیوں کی طرف تو خوبی تو شاید ہو لیکن میں انجان ہو‘ ہاں خامی غصہ ہے جو ساری خوبیوں کو دبا دیا کرتی ہے۔ دھوکے باز لوگوں سے سخت نفرت ہے اور ایک چھوٹی سی کوشش ہر وقت رہتی ہے کہ کوئی مجھ سے ناراض نہ ہو۔ تنگ نظر اور بے حس لوگوں سے ملنے کو تو کیا بات کرنے اور دیکھنے کا بھی دل نہیں کرتا۔ تعارف میرے خیال میں زیادہ طویل ہوگیا ہے۔ اس لیے میرے لیے دعا کریں کہ میرا غصہ کسی صحرا کی خاک چھاننے چلا جائے۔ جو مجھے پڑھ رہا ہے ان کے نام ایک پیغام۔ کبھی بھی اپنا دکھ کسی پر ظاہر نہ کریں۔ دوسروں کو خوش رکھیں اور خود کو مطمئن ‘ کسی بھی مشکل میں صرف اس کو پکاریں جو سب کی سنتا ہے۔ سب کو عطا کرتا ہے۔ اس پر تو کل کریں۔ ساری مشکلیں خود بخود آسان ہوجائیں گی۔ مجھ سے آدھی ملاقات کیسی لگی‘ ضرور بتائیے گا۔
کنزہ علی
اسلام علیکم! تمام آنچل اسٹاف اور قارئین کو میرا محبت بھر سلام۔ تو جناب آتے ہیں اپنے تعارف کی طرف۔ مجھے کنزہ علی کہتے ہیں۔ میرا تعلق کھاریاں کے ایک گائوں فتح بھنڈ سے ہے۔ میں نے جون کے اس آگ برساتے مہینے میں والدین کی آنکھوں کو ٹھنڈک بخشی‘ میں فرسٹ ایئر کی اسٹوڈنٹ ہوں۔ ہم لوگ پانچ بہن بھائی ہیں۔ میرا نمبر تیسرا ہے۔ مجھے اپنے بہن بھائیوں اور امی ابو سے بہت پیار ہے۔ اللہ تعالیٰ ان کا سایہ ہمارے سروں پر ہمیشہ سلامت رکھے۔ علی میرا موسٹ فیورٹ بھائی ہے۔ جو ہم سب کی جان ہے۔
میں کالج میں پڑھتی ہوں۔ اور کالج لائف کو بہت انجوائے کر رہی ہوں۔ کالج میں پڑھنا کم اور انجوائے کرنا زیادہ پسند ہے۔ اب آپ لوگ یہ نہ سمجھنا کہ پڑھائی سے بھاگتی ہوں۔ میٹرک میں ماشاء اللہ میں نے پلس کے ساتھ نمبرز حاصل کیے ہیں۔ اب بات ہوجائے پسند و ناپسند کی۔ تو کلرز میں بلیو اور بلیک کلرز میرے فیورٹ ہیں۔ فنکشنز میں جانا پسند نہیں۔ شادی کے فنکشن میں مہندی اور ولیمہ کی رسم بہت پسند ہے۔ کھانے میں بریانی‘ شوارما‘ نوڈلز اور فروٹ بہت پسند ہیں۔ سنگرز میں عاطف اسلم‘ آرجیت سنگھ‘ نیہا ککر اور ارمان ملک پسند ہیں۔ ڈریسز میں لانگ فراک اور چوڑی دار پاجامہ اچھے لگتے ہیں۔ ساڑھی تو بہت پسند ہے۔ کرکٹرز میں شاہد آفریدی‘ عماد وسیم‘ محمد عامر اور حفیظ بہت سند ہیں۔ موویز میں عاشقی ٹو اور ہاف گرل فرینڈ پسند ہیں۔ شاعری بہت پسند ہے۔ شاعروں میں علامہ اقبال اور جون ایلیا بہت پسند ہیں۔ رائٹرز میں سمیرا شریف طور‘ عمیرہ احمد‘ نمرہ احمد‘ نازیہ کنول نازی‘ اقراء صغیر اور ہاشم ندیم ہیں‘ ناولز میں متاع جاں ہے تو اور امر بیل پسند ہیں۔ چائے جنون کی حد تک پسند ہے۔ خوبیاں خامیاں سبھی میں ہوتی ہیں سو مجھ میں بھی ہیں۔ خوبیوں میں رشتوں کو بہت اہمیت دیتی ہوں‘ خاص طور پر اپنی گزنز کو۔ میرے کزنز میں زمل‘ زرثل سجل‘ عروہ اور عائزہ شامل ہیں۔ خامیوں میں بہت بڑی خامی یہ ہے کہ غصہ بہت جلد آجاتا ہے۔ لیکن غصے میں خاموش ہوجاتی ہوں۔ تنہائی پسند ہے۔ ساحل سمندر پر بیٹھ کر ڈوبتے ہوئے سورج کا منظر دیکھنے کا بہت شوق ہے۔ زندگی کے ان پل کو بہت انجوائے کرتی ہوں جو کزنز کے ساتھ گزاروں۔ سردیوں کا موسم بہت پسند ہے۔ برف باری اچھی لگتی ہے۔ کوئی اگنور کرے تو بہت دکھ ہوتا ہے۔
ایف ایم بہت شوق سے سنتی ہوں۔ آر جے کبیر خان اور آر جے دانی بہت اچھے لگتے ہیں۔ میرا تعارف کچھ زیادہ ہی لمبار ہوگیا فارغ بیٹھ کر اپنی کزن زمل اور آپی کے ساتھ مل کر تعارف لکھا۔ کیسا لگا‘ ضرور بتائیے گا۔
نورحیدر
السلام علیکم ! تمام پڑھنے والوں اور رائٹرز کو میرا پیار بھر اسلام‘ آپ کی آنچل کی ساتھی اور آنچل کی خاموش قاری حاضر ہے۔ ارے ویلکم تو کریں۔ سوچ رہے ہوں گے کیسی منہ پھٹ سی لڑکی ہے۔ ارے میں نے اپنا نام بھی نہیں بتایا؟ حیران مت ہوں بتاتی ہوں ابھی۔ میرا نام نور حیدر ہے۔ پندرہ اپریل انیس سو ننانوے کی صبح ضلع خانیوال کے ایک چھوٹے سے گائوں میں روشنی بکھیرنے آئی۔ ہم چھ بہن بھائی ہیں۔ میری چھوٹی بہن سے بہت زیادہ بنتی ہے۔ بہن کم فرینڈز زیادہ ہے۔ میری دوستوں کی لسٹ کافی زیادہ ہے‘ لیکن زیادہ قریبی میری پھوپو‘ میری کزن ماریہ اور میری سسٹر نیہا شامل ہیں اور لڑکوں میں میری دوستی اپنے کزن حیدر سے ہے۔ ارے آپ سوچتے ہوں گے کیسی لڑکی ہے جس کی لڑکوں سے دوستی ہے۔ ایسی کوئی بات نہیں کبھی کبھی فرینڈز بنانا بھی پڑتا ہے۔ میں خوش نصیب ہوں کہ مجھے اس جیسا دوست ملا جو کبھی مجھے اداس ہونے ہی نہیں دیتا۔
بور ہو رہے ہیں میری باتیں سن کر؟ رنگوں میں میرا فیورٹ کلر پنک اینڈ وائٹ‘ لیمن اینڈ پستہ کلر ہے۔ لباس میں مجھے فراک اچھی لگتی ہے‘ لیکن سادہ شلوار قمیص زیادہ اچھے لگتے ہیں اور بڑا دوپٹا بھی کیونکہ عورت ہمیشہ سات پردوں میں چھپی زیادہ اچھی لگتی ہے۔ زیادہ ہیوی جیولری پسند نہیں ہے‘ بس سمپل سی ہو۔ چوڑیاں‘ ایئر رنگ‘ ٹاپس اور گھڑی زیادہ اچھی لگتی ہے‘ کیونکہ مجھے میرے فرینڈز نے دی ہے۔ کھانے میں مجھے مٹر پلائو اور دال اچھی لگتی ہے پسندیدہ کتاب قرآن پاک ہے۔ پسندیدہ شخصیت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم ہیں۔ مطالعہ کی بے حد شوقین ہوں‘ بہت ساری کتابوں کا مطالعہ بھی کیا ہے۔
مجھے میری ماں بہت یاد آتی ہے۔ ان کو ہم سے بچھڑے چار سال ہوگئے ہیں۔ اللہ تعالیٰ انہیں جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے(آمین) ہمارے ابو بہت اچھے ہیں۔ انہوں نے ہمیں ماں کی کمی محسوس ہی نہیں ہونے دی۔ لیکن ماں تو آخر ماں ہوتی ہے۔ اس کی جگہ کوئی لے ہی نہیں سکتا۔ ہمارے ماموں بہت اچھے ہیں‘ ہماری ہر خواہش منہ سے نکلنے سے پہلے ہی پوری کردیتے ہیں۔ چھوٹے ماموں ہمارے ماموں کم دوست زیادہ ہیں۔ کبھی کبھی ہمیں لگتا ہے کہ ہم وقت سے پہلے بڑے ہوگئے ہیں۔ لوگوں کے رویوں کی وجہ سے۔ رائٹرز میں سب بہت اچھا لگتی ہیں۔ کسی ایک کا نام لوں تو نا انصافی ہوگی۔ کسی خوبی کا تو پتا نہیں لیکن خامیاں بہت زیادہ ہوں گی۔ گھر کو صاف ستھرا رکھنا بڑا اچھا لگتا ہے۔ ڈائجسٹ بہت شوق سے پڑھتی ہوں۔
میرے والد‘ بہن بھائی ماموں اور میرے فرینڈز میرا قیمتی اثاثہ ہیں۔ ان کے بغیر بہت ادھوری ہوں۔ ارے دھکے مت دیں جا رہی ہوں‘ بس اتنا بتادینا انٹرویو کیسا لگا۔ آخری بات ’’کسی کے لیے عام ہونا اہمیت نہیں رکھتا بلکہ عام ہوکر کسی کے لیے خاص بن جانا اہمیت رکھتا ہے۔‘‘

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close