Aanchal Oct-18

در جواب آں

مدیرہ

ڈاکٹر تنویز انور خان… کراچی
بہن تنویر! سدا سہاگن رہو۔ بھئی ناراضی اپنی جگہ مگر ایسی بھی کیا کہ تحریر ہی ارسال نہ کریں۔ ہم نہ سہی پر قارئین تو آپ کے اپنے ہیں‘ مانا کہ غلطی ہماری ہے کہ کتاب کی رونمائی میں حاضر نہ ہوسکے۔ لیکن مجبوری بھی تو کوئی چیز ہے۔ کام کا بوجھ ہی کچھ ایسا ہے کہ سب کو شکایت ہے‘ آئے نہیں‘ فون نہیں کیا‘ میسج نہیں پڑھا‘ اب کیا کہیں اور کس کی شکایت دور کریں۔ ’کوئی بتلائے کہ ہم بتلائیں کیا‘ آپ سے رشتہ پرانا ہے اور امید ہے اتنا مضبوط بھی ہوگا اس لیے ان باتوں کو درگزر کرتے تقریب کا احوال اور ایک عدد تحریر بھی ارسال کردیں حجاب کے لیے کیونکہ یہ بھی آپ کا ہی پرچا ہے اور پھر اب حجاب کی سالگرہ بھی آنے والی ہے‘ اس میں آپ کی شرکت ہماری اور قارئین کی خوشی کا باعث ہوگی۔ پانچ کتابیں اب آپ کی منظر عام پر آگئی ہیں۔ یہ ہمارے لیے خوشی کی بات ہے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کے قلم میں مزید نکھار پیدا کرے‘ آمین۔ ہماری جانب سے کتاب کی اشاعت پر مبارک باد قبول فرمائیں۔
نزہت جبیں ضیاء… کراچی
پیاری نزہت سدا سہاگن رہو۔ گو کہ خوشیاں انسان کی زندگی کا اہم حصہ ہیں اور ایک ساتھ اتنی بڑی خوش مل جانا بھی اللہ سبحان و تعالیٰ کا انعام ہوتا ہے جو کہ آپ کے آنگن میں معصوم پھولوں کی مانند اتر کر آپ کو مسرت بخش رہی ہے۔ ادارے کی جانب سے بھی آپ کو توام پوتے مبارک ہوں۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کی خوشی اور بچوں کی عمر دراز کرے اور انہیں نیک و صالح بنائے آمین۔
شمیم ناز صدیقی… کراچی
پیاری شمیم! آپ کے شوہر کے ساتھ رونما ہونے والے حادثے کے متعلق جان کر بے حد افسوس ہوا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ ایسی ناگہانی آفات و حادثات سے سب کو محفوظ رکھے‘ آمین۔ ایک معمولی سے حادثے نے آپ کی ساری زندگی کا مفہوم ہی بدل کر رکھ دیا۔ بے شک یہ لمحات اور مشکلات آپ کے لیے بے حد تکلیف دہ ہیں‘ لیکن اللہ کی رضا کے آگے انسان بے بس ہے اور ہمارے رب کے ہر کام میں کوئی نہ کوئی مصلحت پوشیدہ ہے‘ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کے شوہر عثمان صاحب کو غریق رحمت کرے اور آپ سمیت دیگر اہل خانہ کو صبر و استقامت عطا فرمائے۔ مشکل اور غم کے یہ لمحات جلد گزر جائیں‘ آمین۔ قارئین سے بھی دعائے مغفرت کے لیے ملتمس ہیں۔
ماورا طلحہ… گجرات
ڈیئر ماورا سدا سہاگن رہو۔ آپ کی ممانی کی رحلت کی خبر جان کر بے حد افسوس ہوا۔ بعض قریبی رشتوں کا یوں اچانک بچھڑ جانا ایک بے یقنیی کی کیفیت میں مبتلا کردیتا ہے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ مرحومہ کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا کرے اور آپ سمیت دیگر اہل خانہ کو صبر و ہمت عطا کرے‘ آمین۔
حمیرا نوشین… منڈی بہائو الدین
عزیزی حمیرا! سدا سہاگن رہو‘ طویل عرصے کی غیر حاضری کے بعد بالآخر آپ کو آنچل کی یاد آہی گئی۔ ورنہ آپ ہر ماہ باقاعدگی سے شریک ہونے والے قارئین میں سے تھیں۔ ’’کبھی ہم بھی تم بھی تھے آشنا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو‘‘ بہرحال اب بھولے سے یاد کر ہی لیا ہے تو قلمی رابطے کو بحال رکھیے گا‘ کتاب کی اشاعت پر ڈھیروں مبارک باد قبول فرمائیے۔ بے شک آپ کی محنت اور کوشش رنگ لائی۔ آپ حجاب و آنچل کے لیے اپنا قلمی رابطہ استوار رکھیے گا۔ آنچل کی پسندیدگی کے کے لیے شکریہ۔
ایس این شہزادی کھرل… جڑنوالہ
پیاری شہزادی! شاد رہو‘ آپ کی خوب صورت مصروفیت کے متعلق جان کر اچھا لگا۔ بے شک یہ دینی تعلیم ایسی تعلیم ہے کہ جس قدر بھی سیراب ہو تشنگی بڑھتی جاتی ہے۔ علم کی پیاس اور لگن برقرار رہتی ہے اور ہر بار ایک نئے معنی و مفہوم سامنے آتے ہیں۔ اللہ سبحانہ و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو دین و دنیا کے تمام امتحانات میں کامیابی عطا فرمائے‘ آمین۔ فاخرہ گل تک آپ کے ناول کی فرمائش ان سطور کے ذریعے پہنچ جائے گی۔ پرچے کے صفحات زیادہ تو فی الحال نہیں ہوسکتے۔ کاغذ کی قیمت میں جب کمی آجائے گی تو از خود آپ کی یہ خواہش پایہ تکمیل تک پہنچ جائے گی۔ امید کا دامن تھامے رکھیے۔
انیلا طالب… گجرانوالہ
عزیزی انیلہ! سدا مسکرائو‘ ’’صراط مستقیم‘‘ کے عنوان سے آپ کی طویل نظم موصول ہوئی لیکن متعلقہ شعبے کے معیار پر پوری نہ اترسکی اس لیے معذرت۔ اپنی اس نظم کو از سر نو پڑھیں اور محنت اور کوشش جاری رکھیں۔
حفضہ کنول…ٹوبہ ٹیک سنگھ
ڈیئر حفصہ! سلامت رہو‘ شکوہ و شکایت سے بھرپور آپ کا نامہ موصول ہوا۔ بیٹا نہ جانے آپ کو ایسا کیونکر محسوس ہوا کہ پرچے پر صرف چند ناموں کا راج ہے جبکہ ایسا تو ہرگز نہیں ہے۔ ہاں بعض قارئین مستقل لکھنے والوں میں شمار ہوتے ہیں۔ جن کی نگارشات ہر ماہ باقاعدگی سے موصول ہوتی ہیں اور پرچے کی زینت بھی بن جاتی ہیں۔ بہرحال پھر بھی آپ کا گلہ دور کرنے کی کوشش کریں گے کہ آپ کا پیغام جلد شامل ہوجائے۔ اس بار خط کا جواب حاضر ہے امید ہے خفگی دور ہوجائے گی۔
علشبہ نور… بھیر کنڈ
ڈیئر علشبہ! سدا آباد رہو‘ آپ کی تحریر سچی محبت موصول ہوئی۔ پڑھ کر اندازہ ہوا کہ ابھی آپ کو مزید محنت کی ضرورت ہے‘ موضوع بھی کچھ خاص نہیں تھا‘ اس موضوع پر کہ لڑکی کی منگنی ہوجاتی ہے اور پھر دوسرا لڑکا اس کے منگیتر سے غلط بیانی کرتا ہے‘ مگر منگیتر اس کی باتوں میں نہیں آتا۔ بہت سی نامور مصنفین لکھ چکی ہیں بہتر ہے کہ کچھ وقت کے لیے آپ قلم سے ناطہ توڑ کر صرف مطالعہ کریں۔ ذہن میں الفاظ کا ذخیرہ ہوگا اور موضوعات بھی نئے نئے آئیں گے۔ پھر جب کچھ عرصہ بعد قلم اٹھائیں گی تو لکھنے میں مدد ملے گی۔ امید ہے تشفی ہوئی ہوگی۔
اسماء صدیقہ… عبد الحکیم
پیاری اسماء! جگ جگ جیو‘ آپ کا نامہ موصول ہوا‘ جس تحریر کا آپ نے ذکر کیا ہے وہ ہم تک نہیں پہنچی تو شکایت کیسی۔ وطن کی محبت کے حوالے سے پہلے بھی تحریریں موصول ہوتی رہی ہیں اور آرٹیکل بھی اب قاری بہنیں کچھ مختلف پڑھنا چاہتی ہیں۔ اس لیے کسی اور موضوع کا انتخاب کرکے اپنی تحریر ارسال کریں۔
گلشن چوہدری… گجرات
عزیزی گلشن! شاد رہو‘ آپ کی تحریر ’’یہ عشق نہیں آساں‘‘ پڑھ ڈالی‘ لیکن متاثر کرنے میں ناکام رہی۔ انداز تحریر کی کمزوریاں کافی نمایاں رہیں۔ بے شک آپ نے محنت سے اور سوچ بچار کرکے لکھا ہوگا اور اس مقصد کی خاطر لاہور بھی گئی ہوں گی‘ لیکن فی الحال کہانی اس معیار کی نہیں کہ پرچے کی زینت بن سکے۔ مزید محنت اور لگن کے ساتھ کوشش جاری رکھیں۔ اپنا مطالعہ وسیع کرکے دیگر مصنفین کو بغور پڑھیں۔ ان کے انداز تحریر اور موضوعات کی انفرادیت کو پیش نظر رکھ کر قلم اٹھائیں۔
حفصہ نور… گجرات
پیاری حفصہ! سدا آباد رہو‘ بزم آنچل میں پہلی بار شرکت پر خوش آمدید۔ گلشن آپ کی کزن ہیں جان کر خوشی ہوئی اور اسی لیے دونوں کے خطوط کے جوابات بھی ساتھ ساتھ ہیں۔ ضروری نہیں کہ آپ کہانی لکھ کر ہی پرچے میں اپنی شمولیت کا اظہار کریں۔ آپ دیگر سلسلوں میں شرکت کے ذریعے بھی ہر ماہ پرچے میں اپنا نام دیکھ سکتی ہیں کیونکہ کہانی لکھنے کے لیے مطالعہ کا وسیع ہونا ضروری ہے اور انداز بیاں اور کہانی لکھنے پر عبور ہونا بھی ضروری ہے۔ امید ہے تشفی ہوئی ہوگی۔
عالیہ اشرف… لانڈھی
ڈیئر عالیہ! جیتی رہو‘ تعارف تو ہر ماہ کثیر تعداد میں موصول ہوتے ہیں لیکن صفحات کی کمیابی کی بناء پر سب کو شامل نہیں کیا جاسکتا ہے۔ بہرحال آپ کا تعارف بھی جلد شائع کرنے کی کوشش کریں گے۔ دیگر سلسلوں میں شرکت کرتی رہیں۔ وہاں اتنا انتظار آپ کے حصے میں نہیں آئے گا۔
گڑیا راجپوت… ننکانہ صاحب
عزیزی گڑیا! جگ جگ جیو‘ آپ کی تحریریں پڑھ ڈالی۔ ایک ڈائری کی صورت میں کہانی کو پیش کیا گیا‘ مختلف حالات و واقعات کو دکھایا گیا‘ بالخصوص تایا اور چچا کے دو گھرانوں کا تذکرہ ہے لیکن کہانی کے ان دونوں حصوں میں ربط نظر نہیں آرہا‘ کہانی بے جا طوالت کا شکار بھی محسوس ہوئی۔ آپ اس کہانی میں سے ڈائری کا تذکرہ نکال دیں اور ان باتوں کو پیش نظر رکھتے قلم اٹھائیں جبکہ باقی دو تحریروں کے لیے معذرت خواہ ہیں۔
رضوانہ رامین… جلالپور روڈ تاج کالونی
ڈیئر رضوانہ! سدا مسکراتی رہو‘ بزم آنچل میں پہلی بار شرکت پر خوش آمدید۔ آپ نے دل میں اس قدر ناکامی کا خوف کیوں چھپا رکھا ہے۔ بے شک یہ انسان کے ارادے ہی ہوتے ہیں جو اسے کامیاب بناتے ہیں اور پھر آپ ایک کامیاب انسان بحیثیت استاد اپنے فرائض بھی انجام دے نہ رہی ہیں۔ آپ کی نظمیں پرچے کے معیار کے مطابق ہوئیں تو ضرور شائع کردیں گے۔ بصورت دیگر آپ کی اصلاح ہوجائے گی۔ امید ہے اس بات کو سامنے رکھتے ہوئے مایوس نہیں ہوں گی۔
عذبہ آرزو چودہری… گجرات
ڈیئر آرزو! آباد رہو‘ نیرنگ خیال کے لیے ارسال کردہ آپ کی شاعری کے لیے معذرت‘ ابھی مطالعہ وسیع کریں دیگر بڑے شعراء کے کلام کو بغور پڑھیں‘ پھر شاعری کی جانب آئیں۔ آپ کی اس کاوش میں کافی جھول ہے اور بعض اشعار بھی بے وزن ہیں۔ امید ہے محنت جاری رکھیں گی۔
گلمینا خان اینڈ حسیہ ایچ ایس… مانسہرہ
پیاری مینا اور حسینہ! جگ جگ جیو‘ آپ کی تحریر کے ساتھ نامہ موصول ہوا‘ بے شک محنت کے رشتے ایسے ہی ہوتے ہیں کہ انسان تخیل کی دنیا میں دوسرے انسان کی شبہیہ بنا لیتا ہے۔ یہ سمجھ لیجیے کہ معاملہ یہاں بھی یہی رہا۔ خط پڑھتے یوں محسوس ہوا جیسے آپ سامنے ہوں اور مسکرا کر اپنی معصوم اداؤں سے مخاطب ہوں۔ بات ہوجائے اب آپ کی تحریر ’بکرے تیری خیر ہو‘ تو موضوع اور انداز تحریر دونوں ہی متاثر نہیں کرسکے۔ بہتر ہے کسی اور موضوع کو منتخب کرکے کہانی ارسال کریں۔
وفا ملک… ضلع خوشاب
ڈیئر وفا! خوش رہو‘ آپ کی جانب سے متفرق اشعار موصول ہوئے۔ شاعری کرنا ہر ایک کے بس کی بات نہیں گو کہ سنتے اور پڑھتے ہوئے بے شک یہ احساس ہوتا ہے کہ یہ تو ہم بھی کہہ سکتے ہیں یا لکھ سکتے ہیں لیکن ایسا نہیں ہے عام سے الفاظ میں بھی وزن پیدا کرنا اور اس خوب صورتی سے بات کہہ جانا کہ مدتوں یاد رہ جائے یہ ہر ایک کے بس کی بات نہیں۔ آپ کے لیے بھی یہ ہی تجویز ہے کہ ابھی اپنا مطالعہ وسیع کریں اور نامور شعراء کا کلام پڑھیں تاکہ لکھنے میں مدد ملے۔ ان اشعار کے لیے معذرت۔
ماریہ سلیم… کورنگی
ڈیئر ماریہ! سدا شاد رہو‘ اپنا نام دیکھ کر آپ کو خوشی ہوئی بے حد اچھا لگا‘ اس بار بھی آپ کا تبصرہ پرچے کی زینت بن گیا ہے امید ہے خوشی کا باعث بنے گا اور آنچل سے آپ کا رشتہ مزید گہرا ہوجائے گا۔ آپ دیگر سلسلوں میں بھی شرکت کرتی رہیں۔ وقتاً فوقتاً شائع کرتے رہیں گے۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کو دین و دنیا کے تمام امتحانات میں کامیابی عطا فرمائے آمین۔
جمیلہ بشیر… ساہیوال
ڈیئر جمیلہ! جیتی رہو‘ آپ کے خط سے تمام حالات کا بخوبی اندازہ ہوا‘ بے شک زندگی میں انسان کو ہر طرح کے حالات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ خوشی و غم کے لمحات سے گزرنا پڑتا ہے‘ مسرت بھرے لمحات مختصر اور قلیل لگتے ہیں اور جدائی کی گھڑیاںطویل۔ وہ کہتے ہیں ناں۔
مہینے وصل کے گھڑیوں کی صورت اڑتے جاتے ہیں
مگر گھڑیاں جدائی کی گزرتی ہیں مہینوں میں
اب اپنی والدہ کی دائمی جدائی آپ کے لیے بے حد جانگسل ہے۔ بے شک ماں کے مشفق سائے سے محرومی ایک گہرا صدمہ ہے اور صبر بھی وقت کے ساتھ ہی آئے گا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ آپ کی والدہ کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے اور آپ کو صبر و ہمت عطا فرمائے‘ آمین۔ آپ کی شاعری متعلقہ شعبے میں بھیج دی ہے اگر معیاری ہوئی تو ضرور شائع ہوجائے گی۔
سیدہ برجیس رباب… عیسیٰ خیل
ڈیئر برجیس! سدا سہاگن رہو‘ طویل عرصہ کی غیر حاضری کے بعد آپ کی شرکت اچھی لگی۔ آپ کا نام ہمارے ذہن کے نہاں خانوں میں محفوظ تھا اور تحریریں بھی بالکل موجود ہیں۔ جلد لگانے کی کوشش کریں گے۔ اب یہ قلمی رابطہ بحال کیا ہے تو دیگر سلسلوں میں بھی شرکت کرتی رہیے گا۔ اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو بہت سی خوشیاں عطا فرمائے آمین۔
سمیہ رانی…ملتان
ڈیئر سمیہ! سدا سہاگن رہو‘ یہ جان کر بے حد خوشی ہوئی کہ آنچل نے زندگی کے ہر میدان میں آپ کی رہنمائی کی اور آپ نے اس سے بہت کچھ سیکھا۔ بے شک ہمارا اصل مقصد بھی یہی ہے کہ کہانی کے پیرائے میں اشارے اور کنائے میں وہ مقصد اور مفہوم اجاگر کیا جائے جو اس زندگی کی حقیقت ہے۔ خیر اور شر دونوں ساتھ ساتھ زندگی میں چلتے ہیں اور ایسے ہی کردار ہر کہانی میں اپنی جھلک دکھاتے ہیں۔ آپ لکھنا چاہتی ہیں۔ ضرور لکھیں‘ لیکن ابتدا افسانے سے کریں جو کہ مختصر اور جامع ہو۔ دعائوں کے لیے جزاک اللہ۔
کوثر خالد… جڑانوالہ
ڈیئر کوثر! سلامت رہو‘ آپ کے مفصل خط سے تمام مصروفیات کا بخوبی اندازہ ہوگیا ہے‘ بے شک اب آپ نے قرآن کی تعلیمات کو سیکھنے اور اس پر کام کرنے کا جو لائحہ عمل ترتیب دیا ہے وہ قابل تحسین ہے اور بے شک اگر انسان کسی کام کا ارادہ کرلے تو منزل پر پہنچنا آسان ہوجاتا ہے۔
ہمت کرے انسان تو کیا ہو نہیں سکتا
وہ کون سا عقدہ ہے جو وا ہو نہیں سکتا
اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کو اس کام پر بہترین اجر سے نوازے‘ حوض کوثر سے جلد انتخاب کرتے نیرنگ خیال میں اشاعت کا موقع دیں گے آپ اسی طرح اپنی رائے تعریف و تنقید سے آگاہ کرتی رہا کریں دعائوں کے لیے جزاک اللہ‘ آنچل کے حوالے سے لکھی نظم بے حد پسند آئی۔
راؤ سمیرا ایاز… کراچی
پیاری سمیرا! جگ جگ جیو‘ آپ کی تحریر تاخیر سے موصول ہونے کی بنا پر عید الاضحی نمبر میں اپنی جگہ نہ بنا سکی اب یا تو آئندہ عید نمبر میں لگ جائے گی یا پھر آپ کے کہنے پر عید کا تذکرہ نکال کر جلد شائع کردیں گے۔ یہ آپ کی مرضی اور سوچ پر منحصر ہے۔ بہرکیف آپ کی پھوپو کے ایکسیڈنٹ اور ان کے آپریشن کے متعلق جان کر بے ساختہ دعاؤں نے لبوں کا احاطہ کرلیا اللہ سبحان و تعالیٰ آپ کی پھوپو کو ہمیشہ ہنستا مسکراتا رکھے‘ آمین۔
قابل اشاعت:۔
یہ خوف ایک آئینہ ہے‘ چور مینا‘ وقت کی کوڑی‘ محاسبہ‘ محبت گزیدہ‘ جب تجھ سے ناتا جوڑا ہے‘ عشق کی سیاہیاں‘ میں عورت‘ ہاتھوں پہ لکھی تحریر ہے تو‘ فارمولا‘ ہم قاری لوگ‘ اک ذرا سی بات
ناقابل اشاعت:۔
عید کے رنگ پیا کے سنگ‘ پہلا سفر‘ سجدہ شکر‘ راہ کا پتھر‘ رب کی عطا‘ مکافات عمل‘ مکافات قرض‘ نکمی ایمی‘ وجود‘ نیت‘ فی سبیل اللہ‘ اللہ رکھی‘ نمرہ شہزادی‘ اک لمحہ معتبر ہوا‘ ایک سال کی دولت‘ رشتہ انسانیت کا‘ ذرا سی بات تھی‘ نئے پڑوسی‘ پچھتاوا‘ نئے سال کا چاند‘ نجمہ بھابی جیسی‘ تم میرے ہو‘ مائیں نی میں کنوں آکھاں‘ رحمت‘ اولاد‘ بدلا میرے ہم راز کا رنگ‘ ربا یار ملا دے‘ خوشیاں ہوئیں دوبالا‘ تمنائے دل‘ میرا کرب ہی میرا سکون‘ دنیائے امید قائم‘ کنسر‘ بساط عشق‘ بکرے تیری خیر ہو‘ کامیابی ناممکن نہیں‘ عورتوں کی عزت‘ حی یا علی الفلاح‘ بس ایک احساس‘ ڈائری‘ دسویں منزل‘ خوابوں کے جگنو‘ عائشہ‘ وصال یار‘ صنف نازک‘ وہ اک صبح دسمبر‘ اک ذرا سی بات‘ ٹوٹیں میری سانسیں‘ قیامت سے پہلے‘ سینہ ہوا کھوکھلا‘ وجہ کیا تھی‘ قدر جانے نہ‘ محبت کے نام پر‘ سچی محبت‘ تیری قید میں پناہ میری‘ مکافات عمل‘ کاش بہو بھی بیٹی ہوتی‘ کتاب وقت‘ سیراب محبت کا سفر‘ محبت نام کی نہیں ملتی‘ سزا‘ روح مضطرب‘ رب کی عطا۔

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close