Hijaab Nov-18

حمدونعت

جاویدرسول/احمد ندیم قاسمی

وہ ذات اقدس جو رونق منزل نما ہے وہی خدا ہے
وہ پاک ہستی جو میری سوچوں سے ماورا ہے وہی خدا ہے
وجود ہے بے مثال جس کا یہ بزم کن ہے کمال جس کا
جو اس کا سارا نظام تنہا چلا رہا ہے وہی خدا ہے
چمن، دمن، پھول، پھل، شجر کیا، شفق، دھنک، چاندنی، گہرکیا
جو شان اپنی ہر ایک شے میں دکھا رہا ہے وہی خدا ہے
جو میری شہہ رگ کے بھی قریں ہے جو میری نس نس میں جا گزیں ہے
جو ہر گھڑی میرے ساتھ رہتے ہوئے جدا ہے وہی خدا ہے
جسے علیم و خبیر کہیے، جسے سمیع و بصیر کہیے
جو سب کی حالت کو دیکھتا اور جانتا ہے وہی خدا ہے

جاوید رسول جوہر

میں کہ بے وقعت و بے مایہ ہوں
تیری چوکھٹ پہ چلا آیا ہوں
آج میں ہوں ترا دہلیز نشیں
آج میں عرش کا ہم پایہ ہوں
چند لمحے تری قربت میں کٹے
جیسے اک عمر گزار آیا ہوں
تیرا پیکر ہے کہ ہے ہالۂ نور
جالیوں سے تجھے دیکھ آیا ہوں
یہ کہیںخامیٔ ایماں ہی نہ ہو
میں مدینے سے پلٹ آیا ہوں

احمد ندیم قاسمی

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close