Hijaab Oct-18

حمد و نعت

خادم اجمیری/ وقار صدیقی

نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم
تابندہ مقدر کا ستارہ نظر آئے
جب آنکھ اٹھے گنبد خضرا نظر آئے
ان آنکھوں کا ورنہ کوئی مصرف ہی نہیں ہے
سرکارﷺ تمہارا رخ زیبا نظر آئے
یہ عز و شرف اور کسی کو نہیں حاصل
بالا نہیں بالا سے بھی بالا نظر آئے
اللہ کے ہر وصف کو پایا ہے مجسم
سرکار صلی اللہ علیہ وسلم دو عالم ہمیں کیا کیا نظر آئے
ایسی بھی سحر مجھ کو وقار آئے میسر
اک اک سے کہوں میں شہ بطحا نظر آئے

وقار صدیقی اجمیری

.

حمد باری تعالیٰ

تو نشانِ نشاں ہے تو بہار سرمدی ہے
ترا دیکھنا عبادت تری یاد بندگی ہے
مرا دامن گدائی ترے آگے کیوں نہ پھیلے
تو متاعِ دو جہاں ہے ترے گھر میں کیا کمی ہے
تری یاد میں بسر ہو ترے در پہ موت آئے
یہی مقصد ولی ہے یہی جانِ زندگی ہے
مجھے اس کا دیکھنا کیا یہ خوشی ہے یا ہے کلفت
مرے واسطے ہے نعمت ترے در سے جو ملی ہے
در یار پر لٹا دے تو متاع زیست خادم
یہی رسم عاشقاں ہے یہی فرض عاشقی ہے

حضرت خادم اجمیری

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close