Hijaab Apr-18

رخ سخن

سباس گل

نئی رتوں میں گئی رتوں کو تلاش کرنا
شب اماوس میں جگنوئوں کو تلاش کرنا
موسم کوئی بھی ہو رت کوئی بھی ہو جب ایشئن سائونڈ ریڈیو پر کہکشاں سمیٹتی ہے فضا میں سونا اگلتی ہے گیت ہو یا غزل ہر ایک استعارہ ہے شعر پر‘ ایک اداس چاند جیسا ہے لفظ لفظ ستارہ ہے روشنی کا دھارا ہے تتلیاں بھی اس کی لوریوں سے سوتی ہیں جو بھی جگنو سنتا ہے منتظر ہی رہتا ہے جی ہاں اے ایس آر پر کہکشاں جب سمٹتی ہے اور یہ کہکشاں سجاتی ہیں نزہت محبوب کبھی سحر کی اجلی اجلی ساعتوں میں کبھی سہہ پہر چنچل سی پر کیف فضائوں میں اور کبھی رنگین سی شاموں میں۔
٭السلام علیکم نزہت آپی کیسی ہیں؟
وعلیکم السلام الحمدللہ ٹھیک ہوں۔
٭حجاب کے قارئین کو بتائیے اپنے بارے میں، کب اور کہاں پیدا ہوئیں تعارف تو آپ نے کریا دیا ہے۔
تاریخ پیدائش پانچ جولائی ہے۔ روشنیوں کے شہر کراچی میں پیدا ہوئی، (کم از کم اس وقت تو روشنیوں کا شہر ہی تھا) بچپن گزرا میرا پنجاب میں جہلم کے پاس ایک خوب صورت گائوں ہے جس کے چاروں طرف چنچل سی ندی بہتی ہے جہاں سر سبز و شاداب کھیت اور ٹھنڈے میٹھے پانی کے کنوئیں، بہت ہی خوب صورت نظارہ ہوتا ہے جب چنچل مٹیاریں سر پر مٹی کے گھڑے پانی سے بھرے اٹھا کر لہرا لہرا کر چلتی ہیں تو مجال ہے کہ ایک قطرہ پانی بھی چھلکے۔
بچپن میرا ماں جی اپنی نانی امی یعنی بے جی، نانا جی اور خالہ جان کے ساتھ گزرا، سب کا تعلق تعلیم کے شعبے سے تھا نانا جان لڑکوں کے ہائی اسکول میں ہیڈ ماسٹر تھے بے جی لڑکیوں کے ہائی اسکول میں ہیڈ مسٹرس تھیں اور خالہ جان جنہوں نے بی اے اردو عالم، اردو فاضل میں ڈگری حاصل کی وہ بھی ہائی اسکول میں ٹیچنگ کے شعبے سے منسلک تھیں میرا بچپن ایسی عظیم ہستیوں کے ساتھ گزرا، گھر میں علم، ادب کا ماحول تھا اور آپ کو پتا ہے ماحول کا اثر آپ کی شخصیت پر پڑتا ہے یہی وجہ ہے کہ اردو ادب سے مجھے بھی دلچسپی رہی اپنی زبان، اپنے کلچر، اپنی ثقافت سے ہمیشہ محبت رہی جب ہوش سنبھالا تو انگلینڈ آ پہنچے بالکل الگ ماحول، مختلف کلچر، انگلش زبان، ابو ہمارے پہلے پاکستان آرمی میں تھے پھر یہاں آگئے اس لیے ہمیں بھی یہاں آنا پڑا یہاں آکر بھی میں بڑے شوق سے مختلف میگزین ناول وغیرہ پڑھتی تھی شوق سے مگر ملتے بہت مشکل سے تھے۔
اے آر خان، رضیہ بٹ، سلمیٰ کنول کے ناول بہت پسند تھے اور اسی طرح شاعری بھی بہت پسند تھی میری پسندیدہ شاعرہ پروین شاکر، احمد فراز، فیض احمد فیض، امجد اسلام امجد، نوشی گیلانی، ادا جعفری کو بہت پڑھا میری ہمیشہ سے عادت تھی کہ جب کوئی شعر اچھا لگتا کوئی غزل پسند آتی کسی کتاب کا کوئی اقتباس اچھا لگتا تو فوراً میری ڈائری کی زینت بن جاتا اسے میں ہمیشہ کے لیے محفوظ کرلیتیں۔
٭پاکستان کا کون شہرسب سے زیادہ پسند ہے ؟
یوں تو سارا پاکستان ہی پسند ہے یہ ہی ہماری پہچان ہے موسم کے لحاظ سے کراچی‘ خوب صورتی کے لحاظ سے اسلام آباد اور سیر و تفریح کے کے لحاظ سے مری، ایبٹ آباد، کاغان، سوات، کالام وغیرہ جو کہ جنت کا نمونہ ہیں شہروں سے دور صاف ستھری فضا، سر سبز و شاداب وادیاں، پہاڑوں کے دامن سے گرتے جھرنے کیا خوب صورت لگتے ہیں جھیل سیف الملوک دیکھنے کی آرزو ہے دیکھیں کب پوری ہوتی ہے۔
٭پاکستان سے یو کے سیٹل ہوئے کتنا عرصہ ہوگیا؟
کافی عرصہ گزر گیا زندگی گزر گئی شادی کے بعد کچھ عرصہ کویت میں بھی گزرا پھر واپس یہاں یو کے آکر سیٹل ہوگئے ویسے تو یہاں سب اچھا ہے مگر سردیاں بہت بری لگتی ہیں ہر وقت اندھیرا، تب دل گھبراتا ہے لاسٹ ایئر قطر گئے بیٹے کے پاس وہاں بھی بہت اچھا لگا۔
٭یو کے میں رہ کر پاکستان کی یاد ستاتی ہے؟
کیوں نہیں سباس، اپنا ملک ہے اور اسی سے ہماری پہچان ہے آنا جانا لگتا رہتا ہے۔
٭ریڈیو سے آپ کا تعلق کب جڑا؟
تقریبا اٹھارہ‘انیس سال ہوگئے اس ریڈیو سے منسلک ہوں بالکل اپنائیت والا ماحول ہے جیسے اپنی ہی فیملی تمام اسٹاف، مینجمنٹ سبھی سے بہت پیار ملا عزت ملی یہاں سب کا شکریہ بھی ادا کرتی ہوں آج جو کچھ بھی ہوں میں اسی ریڈیو کی وجہ سے ہوں یہاں نارتھ ویسٹ کا سب سے بڑا ریڈیو اسٹیشن ہے www.asiansoundradio.com آن لائن، ڈیجیٹل ریڈیو اور اپنے اسمارٹ فونز پر آپ دنیا میں کہیں بھی سن سکتے ہیں۔ آغاز میں، میں نے شام غزل کے نام سے پروگرام پیش کیے جو بے حد پسند کیے گئے پھر سدا بہار گیتوں کے پروگرام، آفٹرنون شوز، کوکنگ، ایک شعر ایک نغمہ، مکس اینڈ میسج، کڑی سے کڑی ملا کر گیت اور ہر سال ماہ رمضان کے خصوصی پروگرام، وقت سحر اور وقت افطار کے خاص پروگرام پیش کرتی ہوں اور مجھے سحری کے پروگرام کرنے میں جو لطیف جو روحانی تسکین ملتی ہے وہ بیان سے باہر ہے محرم الحرام کے خصوصی پروگرام جمعۃ المبارک کے روحانی پروگرام۔
٭شعر و ادب سے آپ کی دلچسپی کا اندازہ آپ کے پروگرام سے ہوجاتا ہے کیا کبھی خود بھی کوئی شعر کہا یا کوئی کہانی لکھی؟
جی ہاں لکھنے کو جی تو بہت چاہتا ہے پر وقت اجازت نہیں دیتا فرصت کی گھڑیاں کم کم ہی نصیب ہوتی ہیں کبھی کبھی کچھ دل چاہتا ہے تو لکھتی ہوں یہ چند اشعار آپ کے اور سب کے نام۔
سامنے میرے ماہ رنج کیا
نگاہ چہرے پر جمی جمی سی ہے
سونے آنگن میں مہک ہے کلیوں کی
سیج سپنوں کی سجی سجی سی ہے
حریم دل پہ ہوا یوں دستک کا گماں
جبین شوق سجدے میں جھکی جھکی سی ہے
٭آپ کی تعلیم؟
تعلیم ڈگریوں سے نہیں حاصل ہوتی زندگی سے ہم بہت کچھ سیکھتے ہیں اپنے تجربات سے ہم بہت کچھ سیکھتے ہیں اور آخری سانس تک سیکھتے ہی رہتے ہیں میں نے ڈگریاں حاصل کرنے والوں کو جاہلوں سے بد تر دیکھا اور ان پڑھوں کے پاس بیٹھ کر بہت کچھ سیکھا بہت کچھ حاصل کیا۔
٭زندگی کیسی ہے یہاں آسان یا مشکل؟
جی ہاں بہت مشکلٓ۔ اگر سلیقے سے گزاریں تو آسان بھی ہے۔
٭زندگی ہمیں بہت کچھ سکھاتی ہے سمجھاتی ہے آپ نے زندگی سے کیا سکھا؟
وقت کے ساتھ ساتھ ہم بہت کچھ سیکھتے ہیں اپنی غلطیوں سے تلخ تجربات سے اور دوسروں کے رویوں سے۔
اس زندگی کے حسن کی تابندگی نہ پوچھو
جو حادثوں کی دھوپ میں تپ کر نکھر گئی
٭اپنی فیملی کے بارے میں بتائیے؟
میرے ماشاء اللہ تین بچے ہیں ایک بیٹی اور دو بیٹے تینوں کی شادی ہوچکی ہے میاں کا اپنا بزنس تھا میری ایک بہن اور ما شاء اللہ پانچ بھائی ہیں سبھی یہاں ہیں خوب دل لگا رہتا ہے امی ابو کی ڈیتھ ہوچکی ہے اللہ پاک ان کی مغفرت فرمائے انہیںجنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے، آمین۔
٭آپ پاکستان کے بارے میں کیا سوچتی ہیں؟
جو حالات ہیں دیکھ کر دکھ ہوتا ہے یہ ہمارا ملک جو ہم نے اتنی قربانیوں کے بعد حاصل کیا اس کا کیا حال ہوگیا ہے‘ بس یہی دعا ہے اللہ ہمارے ملک کو قائم و دائم رکھے اور اتنی ترقی کرے ہمارا ملک کہ پوری دنیا میں ہمارے ملک کا نام ہو مقام ہو۔
٭زندگی سے کوئی گلہ؟
گلزار کی اس شاعری میں جواب دوں گی جو مجھے بہت پسند ہے۔
اک روز زندگی کے روبرو آ بیٹھے
زندگی نے پوچھا درد کیا ہے
کیوں ہوتا ہے کہاں ہوتا ہے
یہ بھی تو پتا نہیں چلتا تنہائی
کیا ہے آخر کتنے لوگ تو ہیں پھر تنہا کیوں ہوں
میرا چہرہ دیکھ کر زندگی نے کہا
میں تمہاری جڑواں ہوں
مجھ سے ناراض نہ ہوا کر
تجھ سے ناراض نہیں زندگی
حیران ہوں میں
تیرے معصوم سوالوں سے پریشان ہوں میں
٭کوئی دعا جو اکثر آپ کے لبوں پر رہتی ہے؟
دعائیں تو بہت ہوتی ہیں مگر ایک خواہش بھی ہے اور دعا بھی کہ جلد از جلد حج کا فریضہ ادا ہو اور روضہ رسولﷺ پر حاضری دوں اور سلام پیش کروں۔
٭آپ یو کے میں رہ کر پاکستان کی کون سی چیز بہت مس کرتی ہیں؟
پورے چاند کی چاندنی راتیں موتیے اور رات کی رانی کی خوشبو اور سردیوں کی راتوں میں انگیٹھی کے گرد بیٹھ کر چلغوزے کھانا۔
٭ریڈیو پر آواز کے ذریعے ہزاروں لاکھوں دلوں تک اپنا پیغام پہچانا رابطے میں رہنا کیسا لگتا ہے؟
بہت اچھا لگتا ہے کوشش یہی ہوتی ہے کہ صرف گیت ہی نہ ہوں کوئی نہ کوئی اچھی بات آپ تک پہنچائوںپھر جب لوگ یاد دہانی کراتے ہیں کہ وہ بات آپ نے اب شامل کرنا چھوڑ دی کیوں؟ تو اچھا لگتا ہے جب لوگ کہتے ہیں کہ آپ دعائیں بہت اچھی مانگتی ہیں خاص طور پر ماہ رمضان میں اللہ پاک کا لاکھ لاکھ شکر ادا کرتی ہوں اتنی عزت افزائی کے لیے یہ اسی کا کرم ہے جو بات اب تک بنی ہوئی ہے۔
٭کس طرح کے لوگ پسند ہیں؟
جو منافق نہ ہوں جو مغرور نہ ہوں سادہ ہوں صاف دل ہوں مجھے پسند ہیں مطلبی لوگ ذرا بھی اچھے نہیں لگتے۔
٭کوئی پیغام دینا چاہیں گی نوجوانوں کو پاکستانیوں کو؟
اللہ تعالیٰ نے ہر کسی کوکسی نہ کسی خوبی کے ساتھ پیدا کیا ہے ان خوبیوں کو پہچانیں محنت کریں نیک نیتی سے کام کریں نیت صاف رکھیں گے تو منزلیں آسان ہوں گی والدین کا احترام کریں۔
٭کتابیں پڑھنے کا شوق؟
جی ہاں، واصف علی واصف، عمیرہ احمد، قیصر حیات کو پڑھنا اچھا لگتا ہے روحانیت سے بھی دلچسپی ہے اشفاق احمد، سرفراز اے شاہ صاحب کی بکس سے بھی بہت کچھ سیکھنے کو ملا اچھی بکس کا مطالعہ کرنا اچھا لگتا ہے۔
٭کس قسم کا میوزک پسند ہے؟
کبھی درد بھرے گیت اچھے لگتے ہیں جب اداس ہوں تو غزلیں سننے کا موڈ ہوتا ہے سدا بہار گیت اچھے لگتے ہیں دل خوش ہو تو شوخ و چنچل بہت اچھے لگتے ہیں۔
میری پسند بھی کتنی عجیب ہے اے دوست
پرانے گیت، کھنڈر، چاندنی اور گلاب کے پھول
اب اجازت چاہوں گی اس دعا کے ساتھ
ہمارا سوہنا رب ہمیں ہر اس چیز سے نوازے جس میں خیر و برکت ہو، عزت، راحت اور سکون ہو آمین خوشیاں بانٹیے آسانیاں بانٹیے۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close