Aanchal Jul-17

ہمارا آنچل

ملیحہ احمد

مریم خان
السلام علیکم ! میرا نام مریم خان ہے‘ میں شاہ پور صدر کے ایک قصبہ کوٹلہ سیداں کی رہنے والی ہوں (اب آتی ہوں اپنے تعارف کی طرف)‘ ہم پانچ بہن بھائی ہیں‘ میں سب سے بڑی ہوں‘ عمر اٹھارا سال ہے اور میں نے میٹرک کیا ہے‘ جاب کرنے کا بہت شوق ہے لیکن تعلیم کم ہونے کی وجہ سے میں اپنا شوق پورا نہیں کرسکی۔ کہانیاں چار سال سے لکھ رہی ہوں جو بھی لکھتی ہوں کچھ عرصے کے بعد پھاڑ دیتی ہوں کیونکہ مجھے معیار پر پوری نظر نہیں آتی۔ پسندیدہ رائٹرز میں سیدہ شبانہ عظیم اور عمیرہ احمد بہت پسند ہیں۔ لباس میں مجھے فراک اور شلوار قمیص پسند ہیں مگر میں شلوار قمیص ہی پہننا پسند کرتی ہوں۔ کلرز میں بلو کلر بہت پسند ہے‘ میری امی کہتی ہیں تم پر یہ کلر بہت جچتا ہے۔ شادی بیاہ پر نمائش پسند نہیں‘ لوگ اکثر کہتے ہیں کہ تم میں کوئی بوڑھی روح ہے۔ کچھ زمانے کے ساتھ چلو مگر میں کہتی ہوں کہ زمانے کے ساتھ چلنا چاہیے‘ زمانے کو سر پر سوار نہیں کرنا چاہیے‘ زیادہ تر شریعت پر عمل کرتی ہوں‘ زیادہ سے زیادہ اسلامی کتابیں پڑھ کر معلومات اکٹھی کرتی ہوں۔ میری تین قریبی دوستیں ہیں جن میں سے دو میری کزنز ہیں‘ جن کا نام رخسانہ‘ آسیہ‘ روبینہ ہیں‘ لوگ مجھے کہتے ہیں کہ میں بہت مغرور ہوں مگر اصل بات یہ ہے کہ مجھے زیادہ بولنا پسند نہیں اور لڑکوں سے کام کے علاوہ کوئی بھی بات کرنا میں پسند نہیں کرتی۔ پھولوں میں گلاب اور موتیا پسند ہے‘ بارش بہت اچھی لگتی ہے۔ بہت سنجیدہ طبیعت کی مالک ہوں‘ تمام لوگ کہتے ہیں کہ تم کو پرانے زمانے میں پیدا ہونا چاہیے مجھے شور سے الجھن ہوتی ہے‘ تنہائی پسند ہوں دنیا میں سب سے زیادہ ماں باپ سے پیار کرتی ہوں۔ پسندیدہ شعر۔
رخصت ہوا تومیری بات مان کرگیا
جو کچھ اس کے پاس تھا دان کرگیا
بچھڑا کچھ اس ادا سے کہ رُت ہی بدل گئی
ایک شخص سارے شہر کو ویران کرگیا
حمیرا سعید احمد
السلام علیکم !تمام آنچل ٹیم کو میری طرف سے بہت بہت سلام اور دعائیں‘ سدا خوش رہیں‘ اب آتے ہیں اپنے تعارف کی طرف جی جناب میرا نام حمیرا سعید احمد ہے آنچل سے میرا تعلق بہت پرانا ہے ہر ماہ آنچل ڈائجسٹ کو ضرور پڑھتی ہوں میں ہی نہیں بلکہ میری ساری کزنز سدرہ ‘ عابدہ تہمینہ اور تو اور سب سے چھوٹی بہن آمنہ بھی پڑھتی ہے یہ ایک ایسا واحد ڈائجسٹ ہے جس کو پڑھ کے بندہ فریش ہوجاتا ہے‘ اس لیے آج کل کی نئی جنریشن بھی بہت زیادہ پسند کرتی ہے۔ جی اب بات کرتی ہوں کچھ اپنی ‘ میں 12 دسمبر 1992 اتوار والے دن صبح صبح اس دنیا میں تشریف لائی‘ اسٹار پر میرا یقین بالکل بھی نہیں۔ ہم چار بہن بھائی ہیں‘ دو بہنیں اور دو بھائی‘ پہلا نمبر میرا ہے پھر عامر بھائی‘ پھر حمزہ بھائی پھر آمنہ ہے۔ جوائنٹ فیملی سسٹم میں رہتے ہیں‘ بہت زیادہ مزہ آتا ہے سب ہنسی خوشی رہتے ہیں۔ فیورٹ کلر ریڈ اور بلیک ہے‘ کپڑوں میں شوار قمیص پہننا پسند کرتی ہوں اور پسندیدہ پرفیوم رائل میرج ہے۔ پسندیدہ فنکار جمال شاہ اور پھولوں میں گلاب اور موتیا پسند ہیں۔ شاعروں میں وصی شاہ بہت زیادہ پسند ہیں‘ سنگرز ابرار الحق اور جواد احمد ہیں۔مجھے خوب صورتی بہت اٹریکٹ کرتی ہے‘ پسندیدہ رائٹرز نازیہ کنول نازی‘ سمیرا شریف طور‘ سعدیہ امل کاشف ہیں سب سے زیادہ انڈراسٹینڈنگ سدرہ کے ساتھ ہے اس سے ہر بات شیئر کرلیتی ہوں۔ شاعری بہت پسند ہے‘ پینٹنگ کا بھی شوق ہے کپڑے بھی سلائی کرلیتی ہوں اور ایمبررائیڈی بھی کرلیتی ہوں اور ایک اور بات بھئی ہم ساری کزنز جب بھی ڈائجسٹ پڑھتی ہیں تو چوری چھپے پڑھتے ہیں‘ اپنے ابو سے جب بھی پڑھنے بیٹھیں تو ہمارے ابو جوں ہی کمرے کے چگر لگاتے ہیں ہم نے کہانی شروع کی ہوتی ہے‘ اتنا مزہ آرہا ہوتا ہے کہ کیا بتائوں مگر پھر بار بار بند کرکے چھپانا پڑتا ہے‘ اس طرح سارا مزہ خراب ہوجاتا ہے۔ ہنس مکھ لوگ زیادہ پسند ہیں‘ مغرور لوگ اچھے نہیں لگتے‘ میرے بہت سارے رشتہ دار ہیں مجھے اپنی خالہ فریدہ بہت پسند ہیں‘ ان کے شوہر رمضان انکل مجھے بہت پسند ہیں‘ وہ تھوڑے مغرور بھی ہیں‘ خوش مزاج بھی ہیں‘ ان کا ایک چاند سا بیٹا بھی ہے ریحان علی وہ سب کی آنکھوں کا تارا ہے۔ مجھے سفر بالکل بھی پسند نہیں‘ گھر آکے بھی ایسا لگتا ہے جیسے سفر میں ہی ہوں پر جب سفر کرتی ہوں تو جس گھر سے واپس آتی ہوں تو اُن لوگوں سے بچھڑنے کا بہت صدمہ ہوتا ہے خاص کر خالہ فریدہ اور سعدیہ سے بچھڑ کر۔ ڈائری کی ڈیزائننگ اور لکھنے کا بہت شوق ہے۔ میں جو بات کرتی ہوں اسے پورا کرواتی ہوں اگر کوئی پورا نہ کرے تو اسے دوبارہ بلانا پسند ہی نہیں کرتی۔ مجھ میں خامی یہ ہے کہ غصہ بہت زیادہ آتا ہے بھئی میری اچھائی کے بارے میں تو کوئی اور ہی بتائے گا وہ تو میں اپنے منہ سے نہیں بتاسکتی ہوں۔ سب پڑھنے والوں کو میری طرف سے سلام جن میں سے کزنزغزالہ رانی‘ شمائلہ رانی‘ شائستہ پروین رانی کو بہت بہت سلام ہو‘ نیک خواہشات کے ساتھ اجازت چاہتی ہوں‘ اللہ نگہبان۔
سعدیہ اجمل
ہم بہت مان سے اپنا تعارف لے کر آتے ہیں اس ناچیز کا محبت بھرا سلام‘ سب آنچل پڑھنے والوں کے نام۔ میرا نام تو آپ نے سنا ہو گا (نہیں سنا) بہت دکھ کی بات ہے کہ آپ نے اتنی بڑی شخصیت کا نام نہیںسنا (اوہیلو) اتنی بڑی شخصیت سے مراد ہم کوئی پچاس ساٹھ سال کی بوڑھی نہیں‘ چلو پریشان نہ ہو اگر نہیں سنا تو اب سن لیں۔ میرا نام سعدیہ اجمل ہے (اتنا بڑا نام)‘ سنیں سعد یہ میرا نام ہے اور اجمل میرے سویٹ سے ابو کا نام ہے۔ میری دوستیں اکثر کہتی ہیں کہ آپ کے ابو کا نام کتنا ینگ سا ہے‘ ہے نا نائس نیم۔ میں بی کام پارٹ ٹو کی اسٹوڈنٹ ہوں‘ 16 ستمبر 1992ء کو اس دنیا میں تشریف لائی‘ ہم گوجرانوالہ میں رہتے ہیں‘ میرا اسٹاف ورگو ہے‘ ہم ماشاء اللہ چار بہنیں اور پانچ بھائی ہیں۔ میرا آنچل سے تعلق بہت پرانا ہے‘ میری بھانجیاں انعم و عائشہ‘ میرب اور سحر ‘ ماہین اور رامین ہیں سب بہت کیوٹ ہیں‘ بہت پیار کرتی ہوں ان سے آفٹر آل مجھے لڑکیاں پسند جو بہت ہیں اور عبدالرحیم اور عبداللہ‘ احمد یہ بھانجے ہیں‘ سب ہی بہت شرارتی ہیں اور ایک بھتیجا ہے وہ بھی ان ہی کی کاپی ہے شرارتوں میں سب سے آگے ریان احمد۔ اب خوبیوں اور خامیوں کی طرف آتے ہیں‘ سب سے بڑی خامی دوسروں پر بہت جلد اعتبار کرلیتی ہوں جو کہ مجھے بہت نقصان دیتا ہے اور خوبی کا تو پتا نہیں مگر کسی کو پریشانی میں نہیں دیکھتی۔ بچوں سے بہت پیار کرتی ہوں‘ سردی کا موسم بہت پسند ہے‘ چاندنی رات اور بارش میں تو جان ہے‘ بہت انجوائے کرتی ہوں۔ میرا پسندیدہ مشغلہ پینٹنگ کرنا اور ڈائجسٹ پڑھنا ہے اور کوکنگ کرنا مگر میرا بس اپنی پسند کی ڈشز بنانا‘ پنک‘ بلیک اور وائٹ کلر اچھے لگتے ہیں۔ میں بہت حساس ہوں چھوٹی چھوٹی باتوں کو بہت سیریس لے لیتی ہوں مگر کوئی پروا نہیں کرتا یہ بات بہت دکھ دیتی ہے‘ میں چاہتی ہوں بہت سے اپنے ہوں بہت سے رشتہ دار مگر (چھوڑیں کیوں دکھی ہورہی ہوں)
مدت بعد اس بے پروا نے
حال پوچھ کر پھر وہی حال کردیا
بائیک چلانے کا بہت شوق ہے‘ اب میری دوستوں کی لسٹ میں آجائیں جو کہ بہت لامحدود ہے انعم و عروج‘ ماریہ‘ کومل‘ مہوش‘ سنیعہ‘ حمنہ‘ ثناء‘ نورین‘ ثناء‘ وغیرہ۔ دوستیں تو بہت ہیں اگر نام لکھنے بیٹھوں تو آنچل کے صفحات ہی ختم ہوجائیں۔ میری بہت ہی اچھی ٹیچرز میں میم عندلیب‘ میم بریرہ‘ روبینہ‘ سر امان اللہ‘ سروقاص‘ سر قدیر اللہ تعالیٰ ان سب کو ڈھیروں خوشیاں دیں۔ اوہو جی‘ میں اپنی پیاری سی چڑیل کزن کا ذکر کرنا تو بھول ہی گئی اگر اس کا نام نہ لکھا وہ تو مجھے مار دے گی اس کا نام (ماہم انور)میرے چاچو کی بیٹی ہے۔ چلو اب اجازت چاہتی ہوں اگر میرا تعارف پسند نہ آیا تو دل کھول کر اپنی رائے کا اظہار کرنا‘ ایک اور بات اللہ کے گھر جانے کا بہت شوق ہے‘ اللہ تعالیٰ سب کو ڈھیروں خوشیاں عطا کرے‘ اپنی دعائوں میں یاد رکھنا‘ اللہ حافظ۔
سمیرا سواتی
مجھے عادت ہے تمہیں یاد کرنے کی اے آنچل
تمہیں عجیب لگے تو معاف کرنا
السلام علیکم!قارئین کیسے ہیں آپ؟ ارے اتنے حیران نہ ہوں کیوں میں نہیں آسکتی‘ آنچل میں اپنا تعارف کروانے ہر ماہ سب فرینڈز کے انٹرویو پڑھ کر ہمیں بھی شوق ہوا کہ ہم بھی رونق بخشیں پیارے آنچل کو‘ تو جی دوستوں مجھے کہتے ہیں سمیرا گل! میں مانسہرہ کی خوب صورت اور ترقی پذیر شہر بھیرکنڈ میں 13 اگست 1999ء میں پیدا ہوئی۔ بہن بھائیوں اور کزنز میں سب سے بڑے ہونے کا شرف رکھتی ہوں۔ تعلیم میٹرک تک ہے‘ کالج جانے کی خواہش دل میں دفن کردی‘ بات ہوجائے پسند ناپسند کی تو سب کچھ کھالیتی ہوں‘ بھئی میری چچی صاحبان (ملکہ سمیعہ صاحبہ اینڈ ملک سعدیہ صاحبہ) جو کہتی ہیں۔ بریانی‘ برگر‘ شوق سے کھاتی ہوں‘ میٹھے میں فیرنی‘ زردہ پسند ہے۔ لباس میں فراک اینڈ پاجامہ سوٹ کرتا ہے‘ میک اپ بالکل نہیں کرتی سوائے کاجل اور مسکارے کے۔ جیولری میں ائر رنگ ‘ لاکٹ پسند ہے‘ چارلی خوشبوپسندیدہ ہے‘ فرینڈلی ہوں‘ ہنس مکھ ہوں‘ اپنے بارے میں جھوٹ برداشت نہیں کرسکتی۔ منافق لوگوں سے نفرت ہے‘ کوئی اچھائی کرے تو بدلے میں ‘ میں بھی اچھائی کرتی ہوں اور جتنی اچھی ہوں‘ اتنی ہی بُری بھی‘ کچھ لوگ مجھے چالاک اور مغرور سمجھتے ہیں لیکن میری دوست رمشہ مجھے بہت معصوم کہتی ہے‘ سچ کہتی ہے وہ (ہے نہ رمشہ)۔ مری جانے کا بہت شوق ہے لیکن گئی کبھی نہیں‘ مکہ مدینہ جانے کی دلی خواہش ہے اللہ پوری کرے۔ فیورٹ شخصیت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم ہیں۔ سیاستدانوں میں شہید محترم بے نظیر بھٹو مجھے بہت پسند ہیں‘ ناول پڑھنا اچھا لگتا ہے۔ رائٹرز میں نازی کنول‘ عائشہ نور محمد‘ ہما احمد‘ سمیرا شریف طور ‘عشنا کوثر‘نادیہ فاطمہ‘ صدف آصف‘ نادیہ احمد‘ندا حسنین‘ حرا قرشی‘نزہت جبنیں ضیاء طلعت نظامی‘ صبا عیشل اور کوثر ناز پسندہیں یہ سب بہت گہرا لکھتی ہیں۔ دوست بہت کم بناتی ہوں کیونکہ اعتبار‘ یقین اب اس دنیا میںنہیں رہا‘ ہر رشتے میں کھوٹ شامل ہے ‘ ہر کوئی اپنے مطلب کے لیے استعمال کرتا ہے‘ چند مخلص دوستیں رمشہ‘ ماریہ‘ ثوبیہ‘ لائبہ ہیں‘ یہ میری نظروں میں بہت اچھی ہیں (آئی لومائی سویٹ فرینڈز) زندگی پتانہیں کب دغا دے جائے۔ اسکول فرینڈز حسینہ بہت اچھی دوست ہے‘ حسینہ یار پتا نہیں کیا بات ہے میں جب بھی تم سے بات کرتی ہوں‘ پزل ہوجاتی ہوں آخر کیوں؟ سوچنا پڑے گا۔ کرکٹ جنون کی حد تک پسند ہے‘ محمد حفیظ اور احمد شہزاد بیسٹ کرکٹر ہیں۔ علامہ اقبال اور ساغر کو شوق سے پڑھتی ہوں ان کے علاوہ احمد فراز ‘ فیض احمد فیض اور انشاء جی کو بھی پڑھتی ہوں۔ اوکے فرینڈز ! جہاں رہیں خوش رہیں‘ کسی پر اندھا اعتماد نہ کریں کیونکہ اب سنبھل کر چلنے کا زمانہ ہے‘ اوکے گائیذ زندگی نے وفاکی تو پھر آن دھمکیں گے کیونکہ ابھی ڈھیٹوں کی کمی نہیں دنیا میں جو دوستی کرنا چاہے تو ہم حاضر ہیں‘ اللہ حافظ۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close