Aanchal Aug-16

سرگوشیاں

مدیرہ

السلام علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ!
امید ہے آپ کی عید ڈھیر ساری خوشیوں شادمانی کے ساتھ گزری ہوگی، بہنوں نے رمضان کی خیر و برکت سے خوب خوب اجر الٰہی سمیٹا ہوگا اللہ تعالیٰ آپ کو ہمیشہ ہمیشہ خوش و خرم رکھے قدم قدم کامیابی و کامرانی نصیب فرمائے۔ آمین
وطن عزیز کا موسم آج کل بڑا سہانا ہے کراچی میں تو بارش کی پیش گوئی ہوتی ضرور ہے اور بادل آتے بھی ہیں چھاتے بھی ہیں لیکن بغیر برسے گزر بھی جاتے ہیں جبکہ دیگر تمام شہروں، علاقوں میں خوب گرج چمک کے ساتھ برس رہے ہیں۔ بارش اللہ تعالیٰ کی رحمت ہے پیاسی زمین پیاسے لوگوں کی پیاس مٹانے کا قدرتی ذریعہ ہے اور رحمت الٰہی کا نزول بھی لیکن ہم اور ہمارے حکمران اور انتظامیہ اپنی نا اہلی اور غفلت کے باعث اس رحمت کو زحمت میں بدل دیتے ہیں انتظامی اداروں کی آپس کی چپقلش اور اختیارات کی رسہ کشی کام کرنے دیتی ہے نہ کوئی کام ہوتا ہے۔ جب بارش ہوتی ہے تو نکاسی آب کے نالوں اور سیوریج لائنوں کے بجائے سڑکوں، گلی، کوچوں میں بہتا ہوا لوگوں کے گھروں میں داخل ہو کر زحمت بن جاتا ہے۔ یہ حکمرانوں اور ان کے ما تحت اداروں کی نا اہلی ہے بد عنوانی کرپشن میں ملوث لوگ ملنے والے فنڈز کو درست استعمال کرنے کی جگہ غلط طریقے سے ہضم کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ کراچی شہر کا کوئی پرسان حال نہیں، بلدیاتی انتخابات ہونے کے باوجود بلدیاتی ادارے غیر فعال ہیں کیونکہ انتظامی اختیارات کا جھگڑا چل رہا ہے صوبائی حکومت اختیارات منتقل کرنے کے لیے تیار نہیں اور ہی خود وہ کوئی بلدیاتی کام کر رہی ہے اور نہ ہی نو منتخب بلدیاتی ارکان کو کام کرنے دے رہی ہے مسئلہ کروڑوں کی رقم کو ٹھکانے لگانے کا ہے اگر کراچی میں واقعی پیش گوئی کے مطابق بارش ہوگئی تو وہ کسی قیامت صغریٰ سے کم نہیں ہوگی حکمرانوں سے گزارش ہے کہ وہ کسی بڑے حادثے کے رونما ہونے سے پہلے اس کا تدارک کرلیں تو بہتر ہے۔
ارے بھئی میں کہاں کی باتیں لے کر بیٹھ گئی ہوں ان تمام بہنوں کا شکریہ جنہوں نے عید کے موقع پر ہمیں یاد رکھا اور مبارک باد سے نوازا آپ سب کا تہہ دل سے شکریہ آئیں اب چلیں آپ کے عید نمبر ۲ کی جانب۔
}}…اس ماہ کے ستارے…{{
تیرے نام کردی زندگی
عائشہ نور محمد اپنے منفرد اسلوب اور دلکش پیرائے میں مکمل ناول کے سنگ حاضر ہیں۔
ذرا مسکرا اے گمشدہ
فاخرہ گل اپنے ناولٹ کے ہمراہ شریک محفل ہیں۔
دل بدل دے
’’بات جو دل سے نکلتی ہے اثر رکھتی ہے‘‘ کی عملی تفسیر پیش کرتا عروسہ عالم کا مؤثر افسانہ۔
عید ہوگئی زندگی
عید کی خوشیوں کو دوبالا کرتی نظیر فاطمہ کی خوب صورت تحریر۔
تیرے سوا نہیں دیکھا
نزہت جبین اپنے افسانے کے ساتھ جلوہ گر ہیں۔
چاند، چندا اور چاندنی
سباس گل کی عید کے حوالے سے خصوصی تحریر۔
چاند رات
’’وجود زن سے ہے تصویر کائنات میں رنگ‘‘ طلعت نظامی کی بہترین کاوش۔
نہلے پہ دہلا
نہلے پہ دہلا راشدہ رفعت پہلی بار اپنے افسانے کے ساتھ جلوہ گر ہیں۔
عید کے رنگ اناڑی پیا کے سنگ
اناڑی پیا ایک منفرد و دلکش پیرائے میں صائمہ قریشی کے طربیہ انداز میں۔
خیانت
خیانت کے مختلف پہلو اجاگر کرتا رضوانہ پرنس کا مؤثر افسانہ۔
ایسا کہاں سے لائیں
بابائے قوم، قائد اعظم کو خراج عقیدت پیش کرتا حرا قریشی کا آرٹیکل۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close