Aanchal Apr 16

بہنوں کی عدالت

ادارہ

پیاری بہنو السلام علیکم
ایک طویل مدت بعد آپ کے سامنے حاضر ہوں میرا خیال تھا میں قصہ پارینہ ہوچکی لیکن آپ سب کی محبتوں نے ایک بار پھر مجھے میرے ہونے کا احساس دلا کر دلی خوشی سے ہمکنار کیا بہت شکریہ میں آپ سب کی ممنون ہوں اور دعا گو کہ آپ جہاں بھی ہوں اللہ تعالیٰ کا فضل و کرم آپ کے ساتھ ہو، آمین۔
اب آتے ہیں سوال کی طرف۔
میرے پاس پہلا خط ہے ثانیہ مسکان کا تحصیل گوجر خان سے
/ بطور لکھاری فیملی کا رویہ کیا حوصلہ افزا ہوتا ہے؟
٭ نہیں بی بی، تنقید تو ہوتی ہے خصوصاً بہن بھائی مذاق اڑاتے ہیں، سہیلیاں مشکوک نظروں سے دیکھتی ہیں افسانہ لکھنا افسانہ بن جاتا ہے لیکن یہ سب شروع کی باتیں ہیں اگر آپ اپنے محاذ پر ڈٹے رہیں تو پھر یہی مذاق رشک میں بدل جاتا ہے۔
/ ترے عشق نچایا میں آپ کا پسندیدہ کردار کون سا ہے؟
٭ اس ناول میں میرا پسندیدہ کردار محسن ہے کیونکہ صرف اس کردار کو لے کر میں نے پوری کہانی کی نیت کی پھر آپ نے پوچھا ہے کیوں پسند ہے تو اس کی وجہ شاید یہ ہے کہ اسے لکھتے ہوئے میں اس کردار کو پوری شدت کے ساتھ محسوس کرتی ہوں اور کہیں کہیں میں اس کے لیے رو پڑتی ہوں اور آنسو تو اس کے لیے چھلکتے ہیں ناں جو دل کے قریب ہو۔
/ آج کے دور کی لڑکی کو نشا جیسا ہونا چاہیے یا صبا جیسا؟
٭ دیکھیں ثانیہ دور خواہ کوئی بھی ہو، نظام قدرت روز اول جیسا ہی ہے، پھر لڑکیوں کے لیے جو حدود وقیود مقرر کی گئی ہیں ان میں کمی یا زیادتی کیسی نشا اور صبا سے ہٹ کر میں کہوں گی لڑکیوں کو پانی جیسا ہونا چاہیے پانی کی خاصیت یہ ہے کہ اسے جس رنگ کے برتن میں ڈالو اسی رنگ میں نظر آئے گا امید ہے آپ میری بات سمجھ گئی ہوں گی مزید وضاحت کردوں لڑکیوں کو ایک گھر سے دوسرے گھر جانا ہوتا ہے اور وہی ان کا اصل گھر ہوتا ہے تو بجائے اس پر تنقید اور جلنے کڑھنے کے اس گھر کا حصہ بننا چاہیے۔
/ آنچل کے لیے سلسلے وار ناول کب لا رہی ہیں؟
٭ جب آنچل مجھ سے ناول کی فرمائش کرے گا۔
/ شہرت، رحمت ہے یا زحمت کیا مداح پریشان بھی کرتی ہیں؟
٭ شہرت رحمت ہے اور میرا خیال ہے زحمت جب بنتی ہوگی جب کوئی زبردستی خود کو منوانے کی کوشش کرتا ہوگا اور مجھے مداحوں کی طرف سے کبھی پریشانی نہیں ہوئی سب بہت محبت کرتے ہیں اور محبت سے ملتے ہیں۔
/ آج کی لڑکی کے لیے کوئی پیغام؟
٭ میں بہت خلوص سے لڑکیوں کے لیے پیغام لکھ رہی ہوں کہ اگر آپ غیر شادی شدہ ہیں تو ماں باپ کی خدمت کریں اور اگر شادی شدہ ہیں تو شوہر کی تابعدار وفادار رہیں کیونکہ دین و دنیا کی بھلائی اسی میں ہے۔ باقی آپ کی تعریفوں اور دعائوں کا بہت شکریہ ثانیہ بی بی۔
/ یہ سوالات وانیہ مصطفی نے بہت محبت کے ساتھ میل کیے ہیں۔ پہلے تو وانیہ آپ کی محبت، تعریف اور دعائوں کا بہت شکریہ۔
/ مجھے لگتا ہے آپ بہت دوستانہ شخصیت کی مالک ہیں اپنے ارد گرد ہونے والے واقعات آپ کے لیے بہت معنیٰ رکھتے ہیں کیا یہ درست اندازہ ہے؟
٭ جی وانیہ آپ کا اندازہ بالکل درست ہے اس معاملے میں میرے شعور کے ساتھ لاشعور کا بھی بڑا دخل ہے اگر میں قصداً کسی کو اگنور کردوں تو میرا لاشعور اسے محفوظ کرلیتا ہے اور کسی موقع پر میرے سامنے لا کھڑا کرتا ہے۔
/ کہا جاتا ہے کہ ہر کامیاب مرد کے پیچھے ایک عورت کا ہاتھ ہوتا ہے تو کامیاب عورت کے پیچھے کس کا ہاتھ ہوگا آپ کے خیال میں؟
٭ اس کا مختصر جواب یہ کہ باپ اور شوہر کا یعنی غیر شادی شدہ کے لیے باپ اور شادی شدہ کے لیے شوہر۔
/ کوئی ایسا سین یا ڈائیلاگ جو لکھنے کے بعد سوچا ہو کہ یہ نہیں لکھنا چاہیے تھا؟
٭ جی ہاں وانیہ سین، ڈائیلاگ نہیں دو ناولٹ ہیں جو کسی کی فرمائش پر لکھے تھے کہانی بھی ان کی تھی جس پر اب تک ملال ہوتا ہے کہ مجھے نہیں لکھنے چاہیے تھے۔
/ کسی انسان میں اس کی سیرت کے علاوہ کیا چیز آپ کو متاثر کرتی ہے ذہانت، تعلیم، دولت یا خوب صورتی؟
٭ ذہانت متاثر کرتی ہے اور تعلیم اگر مثبت انداز سے اثر انداز ہوئی ہو تب۔
/ یہ خط ہے مدیحہ نورین مہک کا انہوں نے برنالی سے سوال نامہ بھیجا ہے۔
/ آپ نے لکھنا کب شروع کیا سب سے پہلے کیا لکھا شاعری یا کوئی تحریر؟
٭ جی میں جب میٹرک میں تھی تب دو افسانے حور میگزین کے لیے لکھے تھے اس کے بعد کافی گیپ آیا پھر 1988ء سے باقاعدہ لکھنے لگی، شاعری پر طبع آزمائی نہیں کی۔
/ آپ نے سب سے پہلے کس میگزین میں لکھنا شروع کیا اور آپ کی تحاریر کتابی شکل میں کب اور کون سی آئیں؟
٭ جیسا میں نے بتایا ابتدا حور میگزین سے کی اس کے بعد جب باقاعدہ اس میدان میں آئی تو حنا، آنچل، پاکیزہ، کرن، شعاع اور خواتین ڈائجسٹ میں لکھا میرے ناول کتابی شکل میں 2000ء سے شائع ہونا شروع ہوئے جن میں دل پھولوں کی بستی، مجھے روٹھنے نہ دینا، انتظار فصل گل، کوئی لمحہ گلاب ہو، میرے خواب لوٹا دو، وغیرہ وغیرہ۔
/ آپ کو کس مشکل سے دوچار ہونا پڑ اور سپورٹ کس نے کیا؟
٭ شروع میں مشکل تو ہر کام میں ہوتی ہے مجھے بھی ہوئی لیکن اللہ تعالیٰ کے فضل سے بہت جلد میرا ایک نام اور مقام بن گیا پھر مشکل تو نہیں ذمہ داری بڑھ گئی اور مجھے میرے شوہر نے سپورٹ کیا۔
/ آپ کی آج تک مارکیٹ میں کتنی بکس آچکی ہیں؟
٭ شاید آپ کو یقین نہ آئے مجھے اپنی بکس کی تعداد نہیں معلوم، عالم یہ ہے گھر میں کوئی بھی چیز تلاش کرنے لگوں تو ہاتھوں میں اپنی کتاب آجاتی ہے۔
/ ایک رائٹر کے طور پر آپ کو اپنی لائف کیسی لگی اور اگر آپ رائٹر نہ ہوتیں تو کیا مشاغل ہوتے۔
٭ میں اللہ تعالیٰ کی شکر گزار ہوں کہ اس نے مجھے رائٹر بنایا میں اپنے لکھنے سے بہت خوش اور مطمئن ہوں کیونکہ لکھنے ہی کی بدولت میں بہت ساری فضول ٹینشنوں سے محفوظ ہوں، مجھے صرف لکھنے کی ٹینشن ہوتی ہے باقی میرے اور بھی بہت سے شوق ہیں جو کبھی زیادہ سر ابھارتے ہیں تو بس لکھنا ایک طرف رکھ کر وہ پورے کرتی ہوں یعنی کوکنگ، سلائی، سوئٹر بنائی، سردیوں میں جب تک سوئٹر نہ بنائوں مزہ نہیں آتا، یہ الگ بات ہے کہ اپنے لیے کبھی نہیں بناتی، اگر بہت بوریت ہو تو اچھی ڈشز پکا کر یا ایک سوٹ سی کر فریش ہوجاتی ہوں۔
/ کوئی نصیحت جو آپ کرنا چاہیں؟
٭ میں نے اپنی ماں سے کہا ماں مجھے کوئی نصیحت کریں انہوں نے کہا غیبت سے بچو اور میں یہی بات آگے پہنچاتی ہوں آپ جہاں رہیں خوش رہیں۔
/ یہ سوالنامہ ہے پروین افضل شاہین کا بہاولنگر سے۔
/ آپ نے لکھنے کا آغاز کب کیا؟
٭ باقاعدہ آغاز 1988ء سے کیا۔
/ آپ کو اپنی کہانیوں میں سب سے اچھی تحریر کون سی لگتی ہے؟
٭ میں یہ تو نہیں کہوں گی کہ سب ہی اچھی لگتی ہیں لیکن کوئی ایک بتانا بھی مشکل ہے بہت ساری ہیں جنہیں میں خود بار بار پڑھتی ہوں اور آپ کے لیے بہت ساری دعائیں۔
/ یہ اگلا خط لائبہ میر حضرو سے لکھتی ہیں۔
/ کس بات پر غصہ آتا ہے اور غصے میں آپ کا ردعمل؟
٭ مجھے سب سے زیادہ غصہ اس بات پر آتا ہے جب کوئی اپنی بات سے پھر جائے گو کہ اب یہ عام بات ہے لیکن مجھے ہضم نہیں ہوتی اور میرا ردعمل یہ ہوتا ہے کہ دل تو یہ چاہ رہا ہوتا ہے کہ سامنے والے کا سر توڑ دوں لیکن زبان بالکل خاموش ہوتی ہے پھر اگلے کئی دن تک اس شخص کی ڈھٹائی پر کھولتی رہتی ہوں یہاں تک کہ مجھے اپنے رب کے آگے گڑگڑانا پڑتا ہے کہ میرے دل سے اس شخص کا خیال نکال دے۔
/ اگر آپ کو موقع ملے ایک قیدی کو رہا کرنے کا تو آپ کسے رہا کرنا چاہیں گی؟
٭ خود کو۔
/ اکثر میں نے انٹرویوز میں یہ سوال دیکھا اور پڑھا ہے کہ اگر ساری دنیا سو جائے سوائے آپ کے تو آپ کیا کریں گے یہی آپ سے پوچھنا چاہتی ہوں؟
٭ میں ایسی حیرت میں گھروں گی جو کبھی نہیں ٹوٹے گی اور بس یہی سوچتی رہوں گی کہ ایسا کیا ہوا تھا کہ سب سو گئے ہیں اور میں جاگتی رہ گئی اور جب تک مجھے اپنے جاگنے کا جواز نہیں مل جائے گا، میں سوچتی رہوں گی۔
/ باقی سوالوں کے جواب آپ اس کالم میں دیکھ لیں، آپ کی تعریفوں اور دعائوں کے لیے جزاک اللہ، اللہ آپ کو خوش رکھے، آمین۔
/ یہ خط ہے مہوش فاطمہ بٹ رینہ سے۔
٭ ایک جیسے سوال ہونے کی وجہ سے بار بار ایک ہی جواب لکھنا کچھ ٹھیک نہیں لگ رہا آپ اپنے سوالوں کے جواب اسی کالم میں دیکھ لیں باقی میرے خواب لوٹا دو کے بارے میں‘ میں کیا کہوں اگر آپ تبصرہ کرتیں تو زیادہ بہتر تھا۔ بہت ساری دعائوں کے ساتھ شکریہ۔
/ یہ سوال بھیجا ہے میری آپ کی پسندیدہ رائٹر سباس گل نے رحیم یار خان سے۔
/ زندگی سے کیا سیکھا قلم کا لکھا بہت کمال ہے آپ کا۔ زندگی نے کیسے برتا آپ کو؟
٭ جی سباس آپ کا سوال بہت گہرائی لیے ہوئے ہے میں آسان الفاظ میں بیان کرتی ہوں کہ مجھے زندگی نے نہیں بلکہ اللہ کا شکر ہے میں نے زندگی کو برتا، بس میں نے یہ سمجھ لیا تھا کہ مجھ پر کیا ذمہ داریاں ہیں جن کے لیے میں اپنے اللہ کے سامنے جواب دہ ہوں گی اور پھر میں پوری ایمان داری اور محنت سے اپنی ذمہ داریاں نبھانے میں لگ گئی، ہاں کہیں کہیں حقوق العباد کا معاملہ آیا تو کچھ وقت میں نے اپنی ذمہ داریوں سے نظریں چرالیں۔ جس سے نقصان بھی ہوا لیکن میرا ضمیر مطمئن رہا اور اللہ کا شکر ہے کسی رشتے کی طرف سے میرے ضمیر پر کوئی بوجھ نہیں ہے اور میں بھی پیاری سباس آپ کی خوشیوں اور دلی سکون کے لیے دعا گو ہوں۔
/ یہ اگلا سوالنامہ ہے محمد ناصر ریاض سعودی عرب سے۔
/ آپ کو ناول لکھنے کا خیال کیسے آیا تھا؟
٭ جی بھائی مجھے ناول لکھنے کا خیال بالکل نہیں آیا تھا ایڈیٹر نے نہ صرف احساس دلایا بلکہ اصرار بھی کیا تب بہت گھبراہٹ میں پہلا ناول لکھا تھا۔
/ آپ نے اپنا پہلا ناول مکمل کرکے سب سے پہلے کسے خوش خبری سنائی؟
٭ میں اپنے لکھنے کے سارے کارنامے اپنے شوہر کے ساتھ شیئر کرتی تھی ان کی بھرپور حوصلہ افزائی کی بدولت ہی میں اس مقام پر پہنچی۔
/ کوئی زندگی کی ادھوری خواہش۔
٭ جی جناب میرے نزدیک خواہشوں سے زیادہ ذمہ داریاں اہم رہیں خواہشیں رکھتی تو ہوں لیکن ان کے پوری ہونے کی شرط نہیں رکھتی میرے ساتھ یہ معاملہ نہیں ہے کہ ہر خواہش پہ دم نکلے ہے تو شکر ہے نہ ہے تو مصلحت۔
/ آپ کی زندگی میں ایسا کیا کام ہے جو کرنا چاہتی ہیں لیکن نہیں ہورہا۔
٭ آپ کو میرا جواب مذاق لگے گا لیکن یہ سچ ہے کہ چھوٹے موٹے بہت سے کام ہیں جو نہیں ہوپاتے اور بڑے کام اللہ کرادیتا ہے اللہ اکبر۔
/ آٹو گراف میں کیا لکھتی ہیں۔
٭ دعائیں اور لڑکیوں کی فرمائش پر اشعار۔
اور آپ کا بہت شکریہ۔
(جاری ہے)

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close