Aanchal Jan 19

حمد و نعت

عبید اللہ علیم/ بہزاد لکھنوی

حمد باری تعالیٰ
میرے خدا مجھے وہ تاب نے نوائی دے
میں چپ رہوں بھی تو نغمہ مرا سنائی دے
گدائے کوئے سخن اور تجھ سے کیا مانگے
یہی کہ مملکت شعر کو خدائی دے
نگاہ دہر میں اہل کمال ہم بھی ہوں
جو لکھ رہے ہیں وہ دنیا اگر دکھائی دے
چھلک نہ جائوں کہیں میں وجود سے اپنے
ہنر دیا ہے تو پھر ظرف کبریائی دے
مجھے کمال سخن سے نوازنے والے
سماعتوں کو بھی اب ذوق آشنائی دے

 

عبیداللہ علیم

نعت رسول مقبولﷺ
شاہ دیں کی محبت بڑی چیز ہے
یہ مدینے کی حسرت بڑی چیز ہے
یہ مقدر سے ملتی ہے اے دیدہ ور
عشق احمد کی دولت بڑی چیز ہے
مضطرب ہو کے بھی پا رہا ہوں سکوں
اللہ اللہ یہ فرقت بڑی چیز ہے
میں یہ کہتا ہوں ان کا کرم ہے بڑا
لوگ کہتے ہیں قسمت بڑی چیز ہے
ان نگاہوں نے دیکھا دیار نبیؐ
یہ شرف یہ سعادت بڑی چیز ہے
اب تمہارا وہ اگلا سا عالم نہیں
ان کی بہزاد مدحت بڑی چیز ہے

بہزاد لکھنوی

Show More
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close