Naeyufaq Jun-16

اقرا

طاہر قریشی

اللّٰہ
(۱۲)۔المومن۔امان دینے والا‘ امن بخشنے والا‘ہر خوف سے بچانے والا۔ ہر مصیبت سے نجات دینے والا‘ حفاظت کرنے والا‘ اپنی ذات کی گواہی دینے والا‘ فساد کو مٹانے والا۔
(۱۳)۔الشکور۔اپنے بندوں کے نیک عمل قبول کرنے والا‘ اور پسند کرنے والا‘ قدردان‘ زیادہ اجردینے والا‘ شکرقبول کرنے والا‘ توفیقِ شکر دینے والا‘بڑا قدردان۔
(۱۴)۔الغفور والغفار۔ معاف کرنے والا‘ گناہ بخشنے والا‘ درگزر کرنے والا‘ مغفرت کرنے والا‘ چشم پوشی کرنے والا‘ مطلق بخشنے والا‘ بے انتہا بخشش کرنے والا‘ قصور معاف کرنے و الا۔
(۱۵)۔الحفیظ والحافظ۔حفاظت کرنے والا‘ نگہبان‘بچانے والا‘ زندگی کے لوازم دینے والا‘قسمتوں کے فیصلے کرنے والا‘ ہربات جاننے والا‘ قوت دینے والا‘ تقویت د ینے والا۔
(۱۶)۔الوھاب۔ دینے والا‘ عطا کرنے والا‘ بخشنے والا‘ بلامعاوضہ بہت کچھ اور مسلسل دینے والا۔
(۱۷)۔الرازق و الرزاق۔ روزی دینے والا‘ نشوونما کاسامان بہم پہنچانے والا‘ ہر ایک کو اپنی مشیت کے مطابق دینے والا۔
(۱۸)۔الولی۔دوست‘ حمایتی‘طرف دار‘ دوستوں کا مددگار‘ ساتھی‘ مالک ومحافظ‘ قریبی‘ محبت کرنے والا‘ بلند درجے کامالک۔
(۱۹)۔الرؤف۔مہربان‘ نرمی اور شفقت کرنے والا‘ رحم دل‘ بوجھ ہلکا کرنے والا‘ نہایت ہی مہربان‘مہربان ہونا‘برتنا‘ بے تحاشا مہربانی کرنے والا۔
(۲۰)۔المقسط۔انصاف کرنے والا۔ عادل‘ میزان کرنے والا‘ مساوی کرنے والا‘ حقوق کاپورا پورا ادا کرنے والا‘ عدل وانصاف سے کام لینے والا۔
(۲۱)۔الھادی۔راہ دکھانے والا۔رہنما‘ ہدایت دینے والا‘ ہر قسم کی مخلوق کی اس کے انجام کی طرف رہنمائی کرنے والا۔
(۲۲)۔المتعالی۔کارساز۔بلند غلبے والا‘ ہرعالی مرتبہ سے بلند‘ بلندی والا‘ بہت ہی بزرگ وبرتر‘ بلندی اختیار کرنے والا۔
(۲۳)۔الکافی۔اپنے بندوں کی ہرضرورت کے لئے کافی‘پورا کرنے والا‘ کفایت کرنے والا‘جس کے سوا کوئی اور ذات احتیاج نہ کرسکے۔
(۲۴)۔الولی۔کارساز‘ مالک‘دوست رکھنے والا‘تسلط رکھنے والا‘تصرف رکھنے والا‘ سب سے بڑھ کر رفیق۔
(۲۵)۔المجیب۔قبول کرنے والا۔دعائوں کا سننے والا‘ پکارنے والوں کی مدد کوپہنچنے والا‘ دعا سننے والا‘دوست‘ محافظ‘ سرپرست۔
(۲۶)۔ذوالجلال والاکرام۔ تمام عالموں کامالک‘ تمام مخلوقات کا مالک‘ تمام عالم پر خودمختار‘اقتدار کامالک‘جلالت والا‘بزرگی وعزت والا‘ بے پناہ شان والا‘ عظمت وغضب والا‘ جلال والا۔
(۲۷)۔الحلیم۔بردبار۔بندوں کی برائیوں سے چشم پوشی‘ درگزرکرنیوالا‘ حلم والا‘ گناہوں کومعاف کردینے والا‘جلد عذاب نہ دینے والا۔
(۲۸)۔التواب‘ وقابل التوب۔توبہ قبول کرنے والا‘ گنہگار کے گناہوں سے درگزر کرنے والا‘ توبہ کرنے والوں کی طرف دوبارہ رجوع ہونے والا۔
(۲۹)۔الحنان۔ماں کی طرح بچوں پرشفقت کرنے والا‘ شفیق‘رحمت کرنے والا۔
(۳۰)۔المنان۔احسان کرنے والا‘جس کے کثیر انعامات کابارمخلوق پرہے۔
(۳۱)۔النصیر۔مدد کرنے والا‘نصرت دینے والا‘ فتح عطا کرنے والا۔
(۳۲)۔ذوالطول۔کرم کرنے والا‘ جودوسخا والا‘ مہربان‘ رحیم۔
(۳۳)۔ذوالفضل۔ فضل کرنے والا‘ بزرگی والا‘ افضل‘متفضل۔
(۳۴)۔الکفیل۔بندوں کی کفالت کرنے والا‘ ذمہ داری لینے والا‘ حاجتیں پوری کرنے والا۔
(۳۵)۔الوکیل۔بندوں کی ضرورتوں کا ذمہ لینے والا‘ سامان کرنے والا‘ بندوں کا کارساز‘ مرادیں پوری کرنے والا‘ نعمتیں دینے والا۔
(۳۶)۔المقیت۔روزی پہنچانے والا‘ قسمتوں کے فیصلے کرنے والا‘ہربات کا جاننے والا‘ قوت دینے والا‘ تقویت عطا کرنے والا۔
(۳۷)۔المغیث۔فریاد کوپہنچنے والا‘ فریاد سننے والا۔
(۳۸)۔المجیر۔پناہ دینے والا۔
(۳۹)۔المغنی۔بندوں کو اپنے سوا ہرچیز سے بے نیاز کرنے والا‘غنا کرنے والا‘ مخلوق کو اس کی ضروریات دینے والا‘ مخلوق کو اس کے کمال تک پہنچانے والا۔
(۴۰)۔النور۔روشن‘ظاہر‘ اپنی گواہی خود دینے والا‘ ہرشے کووجود بخشنے والا‘انسانی فکروبصیرت کو روشنی د ینے والا‘منبع نور‘ بصیرت کی غیرفانی روشنی والا۔
(2)۔اللہ تعالیٰ کی صفاتِ جلالی۔
ایسی صفات ِباری تعالیٰ جن سے اللہ تعالیٰ کی بڑائی‘ کبریائی‘ شہنشاہی کا اظہار ہوتا ہے۔
(۱)۔الملک والملیک۔فرماںروا‘ شہنشاہ‘ عالموں کامالک‘ تمام مخلوقات کاکامل مقتدر‘جسے سارے عالموں پرخودمختارانہ اقتدار حاصل ہے‘ قادرِمطلق۔
(۲)۔العزیز۔ غالب جس پرکوئی دسترس نہ چاہئے‘ عزت والا‘ بے نظیر‘ صاحب قوت‘یکتا‘ امام غزالی کے نزدیک ایسا نادر مشکل الحصول جسے چاہے جو سزادے۔
(۳)۔القاھروالقھار۔جس کے حکم سے کوئی باہر نہیں جاسکتا‘ سب کواپنی طاقت سے دبا کر اپنے قابو میں رکھنے والا‘ مغلوب کرنے والا‘ جس کی قدرت کے سامنے تمام عاجز ومغلوب ہیں۔بلند مرتبہ رکھنے والا قہار۔
(۴)۔المنتقم۔سزادینے والا‘برائیوں کی جزادینے والا‘ انتقام لینے والا‘ خوب بدلہ لینے والا‘ سرکشوں اور کافروں سے خوب بدلہ لینے والا۔
(۵)۔الجبار۔جبروت والا جس کے سامنے کوئی دوسرا دم نہ مارسکے‘ جس سے کوئی سرتابی نہ کرسکے‘سب سے بڑا حاکم‘ بڑی قوت والا‘ بگڑے کام بنانے والا‘ جس کی حکومت کوسمجھنابڑا مشکل ہے‘شکستہ دلوں کوسنبھالنے والا۔
(۶)۔المھیمن۔سب پرشاہد اور گواہ اور دلیل‘چھپالینے والا‘ نگہبان‘ مخلوق کے رزق اور موت سے واقف اور خیال رکھنے والا‘ اپنی رحمت میں مخلوق کوچھپالینے والا‘ نگہداشت کرنے والا۔
(۷)۔المتکبر۔اپنی بڑائی دکھانے والا‘ کبریائی والا‘ سخت سزا دینے والا۔
(۸)۔شدید العقاب۔سخت سزادینے والا‘ قوی تر‘غالب‘شدت رکھنے والا۔
(۹)۔شدید البطش۔بڑی گرفت والا‘ جس سے کوئی نہ چھوٹ سکے نہ بچ سکے۔
قرآن حکیم میں جہاں جہاں اللہ تعالیٰ کی صفاتِ جلالی کا ذکر آیا ہے اس کے ساتھ ہی ہمیشہ اللہ تعالیٰ کے عادل‘حکیم وعلیم ہونے کا ذکر آتا ہے۔ جیسے عزیز (غالب) کے ساتھ ’حکیم‘(حکمت والا) ہمیشہ قرآن حکیم میں آیا ہے اور اللہ کے عذاب کے ذکر کے ساتھ اس کی رحمت کاتذکرہ آیا ہے۔دوزخ کے بیان کے ساتھ جنت کا ذکر بھی لازماً آیاہے۔ جہاں دردناک عذاب دینے والا بیان کیا گیا ہے وہیں مغفرت وبخشش والا بھی کہا گیا ہے۔ غرض اللہ تعالیٰ کی صفاتِ جلالی کے ساتھ ہی آگے پیچھے اللہ کی صفات جمال کاذکربھی آیا ہے۔ خوف وخشیتّ کے ساتھ اس کے لطف وکرم اور محبت کے جذبات کااظہار ہوا ہے۔ تاکہ صفاتِ جلالی سے جو نعوذ باللہ بے رحمی اور ظالمانہ سخت گیری کا شبہہ پیدا ہوسکتا ہے وہ دور ہوجائے۔

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close