Hijaab Apr-16

شوخئی تحریر

ہما ذالفقار

عورت کا لباس کیسا ہو؟
حضرت ام سلمیٰ ؓ نے رسول اللہ ﷺ سے دریافت فرمایا کہ عورت کا لباس کیسا ہونا چاہیے عورت اپنا دامن کتنا نیچے چھوڑے؟
آپ ﷺ نے فرمایا نصف پنڈلی سے لے کر نیچے تک بالشت بھر۔
عرض کیا ’’اس طرح تو پائوں کھل جائیں گے۔‘‘
آپ ﷺ نے فرمایا ’’تو ہاتھ بھر نیچے چھوڑے اور اس سے زیادہ نہ چھوڑے۔ عورت جو کپڑا ٹانگوں پر پہنے اسے اتنا لمبا ہونا چاہیے کہ وہ پائوں کے ٹخنوں کو ڈھانپ لے جو کپڑا گلے میں پہنے اس کے بازو اتنے لمبے ہونے چاہیے کہ کہنیوں کے بعد کا حصہ کلائی تک پورا ڈھک جائے گلے کی طرف سے پہننے والے کپڑے کا گلا اتنا کھلا نہیں ہونا چاہیے کہ گردن کے علاوہ کوئی حصہ جیسے کندھے اور سینہ یا نیچے اور گردن کے درمیان والا حصہ نظر آئے۔ کیونکہ یہ بھی ان اعضا میں سے ہے جن پر کپڑا پہننا چاہیے قمیص کے چاک ایسے نہ ہوں کہ ان سے پہلو کاحصہ نظر آئے۔ شلوار کے پائنچے یا قمیص کے بازو کو چیرنا ہوس عریانی کو تسکین پہنچانے کے مترادف ہے۔
رسول ﷺ نے فرمایا ’’جو عورتیں کپڑا پہننے کے باوجود ننگی نظر آتی ہیں اللہ انہیں نظر رحمت سے نہیں دیکھے گا۔‘‘
کس حالات میں جی رہے ہیں آج ہم
یہاں آدم کا بیٹا خوش ہوتا ہے حوا کی بیٹی کو بے پردہ دیکھ کر۔
نگینہ حنین شاہ… ساہیوال، ضلع سرگودھا
ڈولفن ذہین ہوتی ہے
سمندری دنیا کی سب سے ذہین مخلوق ڈولفن ہی ہے یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ وہ ایک وقت میں 60 سے زائد الفاظ سمجھ سکتی ہے اور ان الفاظ میں سے دو ہزار کے قریب جملے بنا سکتی ہے یہ اپنی ذہانت کے بل بوتے پر سمندر کے سخت موسموں اور بد ترین حالات کا مقابلہ کرتی ہے ڈولفن کے دماغ کا وزن 2 کلو گرام سے زیادہ ہوتا ہے تحقیق تو یہ بتاتی ہے کہ کئی پہلوئوں سے یہ دماغ انسانی دماغ سے بھی زیادہ تیز ہے ان کی بصارت اور سماعت کی خوبی بھی غیر معمولی ہوتی ہے ڈولفن مختلف آوازوں اور حرکات وسکنات کی مدد سے اپنی ساتھی ڈولفن سے ابلاغ کرتی ہیں۔
ثنا اعجاز حسین قریشی… ساہیوال
درود شریف کی فضیلت
رسول محتشم ﷺ کا فرمان ہے قیامت کے روز اللہ عزوجل کے عرش کے سوا کوئی سایہ نہ ہوگا اور تین شخص اللہ عزوجل کے عرش کے سائے میں ہوں گے عرض کی گئی وہ کون لوگ ہیں؟ فرمایا۔
وہ لوگ جو میرے امتی کی پریشانی کو دور کرے۔
میری سنت کو زندہ کرنے والا۔
مجھ پر کثرت سے درود شریف پڑھنے والا، سبحان اللہ
حمیرہ عمیر احمد… کراچی
اللہ کا کرم
روٹی کا نوالہ منہ میں ڈالنے کے بعد بھی ہم اللہ کے محتاج ہیں وہ چاہے تو اس نوالے کو حلق میں پھنسا دے سانس بند ہوجائے اور ہم مر جائیں اتنے محتاج ہونے کے بعد بھی ہم اتنے نافرمان مگر اس کی رحمت تو دیکھو سب نافرمانیوں کو دیکھ کر بھی نوازتا چلا جاتا ہے اور نوازتا چلا جاتا ہے، سبحان اللہ۔
ریما نور رضوان… کراچی
انمول موتی
mابر کے سائے اور غرض مند کی دوستی کا کوئی فائدہ نہیں‘ اعتماد روح کی مانند ہے ایک بار چلا جائے تو واپس نہیں آتا۔
mاپنی غلطی چاہے ذلت کی ہو‘ نصیحت کی بات چاہے کڑوی ہو قبول کرلو۔
mجب نیکی تمہیں مسرور کرے اور برائی افسردہ کرے تو تم مومن ہو۔
mپیغمبروں کی میراث علم ہے اور فرعون و قارون کی میراث مال ہے۔
mلوگوں سے ملو تو اخلاق کی بنیاد پر اور کٹو تو اعمال کی بنیاد پر۔
mوہ بنیاد جو کبھی ویران نہ ہو عدل ہے اور وہ تلخی جس کا آخر شرینی ہو صبر ہے۔
mوہ شرینی جس کا آخر تلخ ہے شہوت ہے وہ بلا جس سے دلوں کو بھاگنا چاہیے عیش ہے۔
mبولنا عظیم ہے خاموشی اس سے عظیم تر۔
mکوشش ہی بند دروازے کھول دیتی ہے اور ہر مشکل آسان کردیتی ہے۔
mحملہ آور دشمن سے نہ گھبرائو لیکن خوشامدی دوستوں سے بچو۔
mجو دوسروں پر ہنستا ہے، دنیا اس پر ہنستی ہے۔
mمحبت انسانیت کا دوسرا نام ہے۔
mاسلام صرف ایک شہنشاہی کو پسند کرتا ہے وہ اللہ کریم کی شہنشاہی ہے۔
mترقی کا راز لگاتار عمل اور تکرار عمل میں پوشیدہ ہے۔
mجتنے تم اللہ پر راضی ہوا اتنا ہی اللہ تم پر راضی ہے۔
مسز نگہت غفار…کراچی
مٹی کا قرض
اس ملک کی جڑوں میں دوڑتا ہوا لہو آج ہم سے اپنے حساب کا طلبگار ہے کہ ہم نے اس مٹی کا قرض کس طرح ادا کیا۔ کہیں ہمارے اپنوں کا خون ہماری گردنوں پر تو نہیں کہیں ہم کسی کے بہتے ہوئے آنسوئوں کا سبب تو نہیں بنے کہیں ہم ماں، باپ کی نافرمانی اور حرام خوری جیسے گناہ کبیرہ کے مرتکب تو نہیں ہوئے۔
آج یہ دل رو رہا ہے اور رو رو کر اللہ کے حضور سجدہ ریز ہو کر یہ کہہ رہا ہے کہ یا اللہ ہم کب تک اس آزادی کی قیمت بوریوں میں بند لاشوں کی صورت میں ادا کرتے رہیں گے۔ مسجدوں سے اپنے پیاروں کے لاشے اٹھانے کی صورت میں ادا کرتے رہیں گے روڈوں پر سے بکھرے ہوئے وجود کو سمیٹنے کی صورت میں ادا کرتے رہیں گے۔ حکمرانوں کی بے پروائیوں اور کوتاہیوں کے سبب ہونے والے حادثات کی صورت میں ادا کرتے رہیں گے یا اللہ تو بڑا غفور الرحیم ہے ہم پر رحم فرما ہمارے اندر کے اچھے انسان کو حسد، کینہ اور برائی جیسی بیماریوں سے بچا، شیطان کے شر سے بچا، گناہ اور فریب سے بچا، یا اللہ ہمارے دلوں کی سیاہی کو اپنے پر نور اجالے سے منور فرما‘ ہمارے ہاتھوں کو ہمیشہ دینے والا بنا‘ یااللہ ہمیں ایسا بنا کہ ہم وطن سے محبت و خدمت کو عبادت سمجھ کر ادا کرتے رہیں‘ یااللہ پاک تو ہمیں ایسا بنا جیسا تو چاہتا ہے بے شک تو خوب خوب نوازنے والا ہے، آمین۔
ثمینہ ناز… اورنگی، کراچی
اچھی باتیں
٭پاک رکھو
جسم، لباس، خیالات۔
٭قابو میں رکھو
زبان، نفس، غصہ۔
٭یاد رکھو۔
موت، احسان، نصیحت۔
٭برداشت نہ کرو۔
نا حق جھوٹ، فحاشی۔
٭حاصل کرو۔
علم، دعا، اعتماد۔
٭ضائع مت کرو۔
صلاحیت، موقع، دوست۔
٭کبھی نہ توڑو
دل، عہد، قانون۔
٭چھوٹا نہ سمجھو
قرض، فرض، مرض۔
٭ایک بار ملتے ہیں۔
والدین، وقت، وجاہت۔
٭ذلیل کرتی ہے۔
چوری، چغلی، چاپلوسی۔
٭دھیان سے اٹھائو۔
قدم، قلم، قسم۔
٭پابندی سے پڑھو۔
نماز، قرآن، درود پاکﷺ
تانیہ فاروق… پیر محل
نکھرے موتی
شیخ سعدی فرماتے ہیں کہ انسان بھی کیا چیز ہے دولت کمانے کے لیے اپنی صحت کھو دیتا ہے اور پھر صحت کو پانے کے لیے اپنی دولت کھو دیتا ہے۔
مستقبل کو سوچ کر اپنا حال ضائع کرتا ہے پھر مستقبل میں اپنا ماضی یاد کر کے روتا ہے۔ جیتا ایسے ہے جیسے کبھی مرنا ہی نہیں ہے اور مر ایسے جاتا ہے جیسے کبھی جیا ہی نہیں۔
سائرہ حبیب اوڈ… عبدالحکیم
ترکیب
ایک شخص نے اپنے دوست سے پوچھا میں اپنا رنگ صاف اور گورا کرنا چاہتا ہوں کوئی ترکیب بتائو۔
دوست نے کہا۔ سخت سردی میں رات کے تین بجے پانی میں برف ڈال کر نہایا جائے تو رنگ صاف اور گورا ہوجائے گا یہاں تک کہ لوگ دیکھ کر بے ساختہ کہیں گے کہ کس قدر صاف اور گورا رنگ نکل آیا ہے ’’مرحوم کے چہرے کا‘‘
لائبہ میر… حضرو
تین چیزیں
٭تین چیزوں کا احترام کرو۔
قرآن پاک
قانون
والدین
٭تین چیزوں کو قابو میں رکھو۔
زبان
تلوار
دل
٭تین چیزوں کے لیے تیارر ہو۔
غم
زوال
موت
تین چیزیں ہمیشہ یاد رکھو۔
سچائی
فرائض
موت
ملالہ اسلم… خانیوال
ممکن
یقین اور دعا نظر نہیں آتے‘ مگر نا ممکن کو ممکن بنا دیتے ہیں۔
سونیا نورین گل…دندہ شاہ بلاول
زندگی کیا ہے؟
انسان کی پیدائش کے وقت اذان دی جاتی ہے مگر نماز نہیں ہوتی اور موت کے وقت نماز پڑھی جاتی ہے مگر اذان نہیں ہوتی۔
زندگی اذان سے نماز تک وقفہ ہے اسی طرح ہمیں اپنی زندگی اس سوچ کے ساتھ گزارنی چاہیے کہ اذان ہوگئی ہے اور جماعت کسی بھی وقت ہوسکتی ہے۔
سعدیہ رمضان سعدی…186پی
رشتہ
رشتہ ایک کلر پنسل کی طرح ہوتا ہے ہوسکتا ہے کوئی رشتہ آپ کا پسندیدہ رنگ نہ ہو مگر یقیناً آپ کو ضرورت پڑ سکتی ہے اس کلر کی کسی جگہ اپنی زندگی کی ڈرائنگ بک مکمل کرنے کے لیے ۔
مدیحہ نورین مہک… برنالی
اچھی بات
ایک بزرگ نے دیوار پر بڑا سا سفید کاغذ لگایا اور اس پر ایک کالے کلر کا نقطہ لگا دیا پھر سامنے بیٹھے ہوئے لوگوں سے پوچھا کہ یہ تمہیں کیا نظر آرہا ہے لوگوں نے کہا کالا نقطہ بزرگ نے کہا کہ کمال ہے اتنا بڑا کاغذ نظر نہیں آتا اور ایک چھوٹا سا نقطہ نظر آگیا یہی حال ہے سب لوگوں کا کسی کی ساری زندگی کی اچھائیاں نظر نہیں آتیں اور کسی کی ایک برائی بھی ہو تو نظر آجاتی ہے ذرا غور کریں یہ ایک چھوٹی سی مگر بہت کام کی بات ہے۔
سونیا نورین گل… دندہ شاہ بلاول
بہترین اقوال
vضروری نہیں کہ کوئی بد دعا یا آہ آپ کا پیچھا کرے بعض اوقات کسی کا صبر بھی آپ کی خوشیوں کی راہ میں رکاوٹ بن سکتا ہے۔
vقابل رشک ہے وہ محبت جس میں تم کسی ایسے شخص کو پالو جو تمہارے ایمان کو مضبوطی بخشے اور تمہیں نیک بنا دے۔
v اگر کسی اچھے انسان سے غلطی ہوجائے تو درگزر کرنا چاہیے کیونکہ موتی اگر مٹی میں بھی گر جائے تو قیمتی رہتا ہے۔
صائمہ سکندر سومرو… حیدر آباد، سندھ
افسانچہ
میں نے اچانک اسے ایک دکان میں دیکھا میری حالت قابل دید تھی میرا بس نہیں چل رہا تھا کہ کس طرح پیچھے سے جا کر اسے پکڑ لوں بہرحال میں دکان میں گئی آدھے گھنٹے کی ملاقات کے بعد تمہیں اپنے ساتھ گھر لے آئی خوشی میرے انگ انگ سے پھوٹ رہی تھی پھر اچانک ایک دن میں نے تمہیں اپنی چھوٹی بہن کے ہمراہ دیکھا مارے غصے کے میرے جسم کے تمام خلیات و عضلات مائیکل جیکسن کی طرح ٹیڑھے میڑھے ہونے لگے اور بے قابو ہو کر اپنی بہن کی طرف جھپٹی اسی کھینچا تانی میں تم ایک طرف سے پھٹ گئے۔ ہائے میرا فیروزی کلر کا سوٹ اب زخمی حالت میں پڑا میری توجہ کا منتظر ہے؟
بشریٰ افضل… بہاولپور
محبت سانس لیتی ہے
شریر میں لہو کی روانی
چلتی سانسیں
دھڑکتی دھڑکن
اس بات کی عکاس ہیں
کہ…
تمہاری محبت آج بھی
مجھ میں سانس لیتی ہے
شمع مسکان… جام پور
دکھ
دکھ انسان کو کھوکھلا کر دیتے ہیں دکھ انسان کو دیمک زدہ کر دیتے ہیں جو دکھوں کی تکلیف وہی جانتے ہیں دکھوں کے اژدھام سے نکلے ہوں جن کے گرد دکھوں نے گرداب باندھا دکھوں سے انسانی شخصیت دب کر رہ جاتی ہے دکھ تو سفیدے کے درخت کے مانند ہوتے ہیں جو انسان کے اندر پورے قد سے کھڑے ہوتے ہیں جو کاٹنے سے بھی نہیں کٹتے بلکہ دکھوں کے سائے گہرے سے گہرے ہوتے چلے جاتے ہیں انسان ساری دنیا سے لڑتا ہے پر اپنے دکھوں کے آگے ہار جاتا ہے بس دکھ ہوتے ہی ایسے ہیں۔
کے ایم نور المثال شہزادی… کھڈیاں خاص
خواتین اور مرد
٭ خواتین کی نسبت مرد حضرات زیادہ کروٹیں لیتے ہیں۔ خواتین، مرد حضرات کو اور مرد حضرات خواتین کو کم عقل سمجھتے ہیں۔
٭ ہاتھی اور چوہے کے دانت ساری عمر بڑھتے رہتے ہیں۔
٭ کوے کی آواز کو پاکستان میں مہمان کی آمد اور آسٹریلیا میں موت کی خبر اور نیوزی لینڈ میں شادی کا پیغام سمجھا جاتا ہے۔
٭الو کو مغرب میں دانشمند اور مشرق میں بے وقوف سمجھا جاتا ہے۔
٭ غیبت کرنے کی بیماری اب مردوں میں بھی عورتوں کے برابر ہوگئی ہے۔
مشی خان… بھیر کنڈ
آنکھ کے راز
}ہر جھپکنے والی آنکھ حیادار نہیں ہوتی کیونکہ وہ بھید چھپانے کے لیے بھی جھکتی ہے اور شرمندگی کی وجہ سے بھی۔
}ہر بھیگنے والی آنکھ غمزدہ نہیں ہوتی کیونکہ وہ پچھتاوے کی وجہ سے بھی بھیگتی ہے اور خوشی کے عالم میں بھی۔
}ہر بند ہونے والی آنکھ پر سکون نہیں ہوتی کیونکہ وہ نیند کی وجہ سے بھی بند ہوسکتی ہے اور درد چھپانے کے لیے بھی۔
حمیرا نوشین… منڈی بہائو الدین
انمول موتی
زندگی کی شاہراہ پر اکثر زخم اگر چہ بھر جاتے ہیں لیکن لہو نہیں تھمتا آہیں دھواں بن کر آسمان کی وسعتوں کو چھو لیتی ہیں اور کبھی کچھ لمحے زندگی میں دبے پائوں آتے ہیں اور ساری زندگی کو جلتا ساگر بنا دیتے ہیں۔
خوشی اور اطمینان چہرے پر لگا ئے جانے والے لیبل یا سائن بورڈ نہیں ہوتے یہ جذبے دل کے نہاں خانوں سے پھوٹتے ہیں خودرو پودوں کی طرح اور عجیب عجیب پھولوں کی بہار دکھاتے ہیں محض چہرے پر سجی مسکراہٹ سے کسی کی خوشی یا اطمینان کا اندازہ لگانا اتنا ہی مشکل ہے۔ جتنا ساحل سمندر پر کھڑے ہو کر سمندر میں تیرنے والی مچھلیوں کی قسموں اور تعداد کا اندازہ لگانا۔
عابد محمود… ملکہ ہانس
مسکراہٹ
مصوری کے شوقین ایک صاحب نے جنگل میں ایک لڑکے کو دیکھا اور فوراً اس کی تصویر بنانے کا ارادہ کیا جنگلی لڑکے کو گڑ اور چنے دے کر ماڈل بننے پر راضی کیا اور درخت کی ایک اونچی شاخ پر بٹھا دیا اور تصویر بنانے لگا ایک گھنٹے بعد لڑکے نے بے چینی سے پہلو بدلا اور صاحب نے ذرا سا منہ بنا کر کہا۔
میں نے تو سنا تھا کہ جنگلی لڑکے بڑے صبر اور برداشت والے ہوتے ہیں تم تو ایک گھنٹے میں گھبرا گئے۔
لڑکے نے مصور کی بات سن کر شاخ سے چھلانگ لگا دی اور کہا۔
تم اس شہد کے چھتے پر پانچ منٹ بیٹھ کر دکھا دو تو مانوں۔
اقصیٰ کشش… محمد پور دیوان
علم کی فراوانی
حضرت ابن عمرؓ سے روایت ہے انہوں نے کہا کہ میں نے رسول اللہ ﷺ سے سنا آپ فرما رہے تھے کہ میں ایک مرتبہ سو رہا تھا میرے سامنے دودھ کا پیالہ لایا گیا میں نے اسے پی لیا یہاں تک کہ سیرابی میرے ناخنوں سے ظاہر ہونے لگی پھر میں نے اپنا بچا ہوا دودھ عمر بن الخطاب ؓ کو دے دیا صحابہ کرام ؓ نے عرض کیا یا رسول اللہ ﷺ آپ نے اس کی کیا تعبیر لی، آپ نے فرمایا کہ اس کی تعبیر علم ہے (صحیح بخاری)
مہوش فاطمہ بٹ… جہلم
رزق
مولانا جلال الدین رومی فرماتے ہیں ہر وقت اللہ کے کرم کا شکر ادا کرتے رہو صرف پیسہ ہی رزق نہیں ہے علم، عقل اولاد اور اخلاق بھی رزق میں شامل ہے اور مخلص اور ہمدرد دوست بھی بہترین رزق میں شامل ہے۔
زہرہ فاطمہ…

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close