Aanchal Dec 15

بیوٹی گائیڈ

روبین احمد

آج کل شام ڈھلتے ہی ہوا میں ہلکی ہلکی خنکی اپنے ساتھ یہ پیام لارہی ہے۔ موسم ایک بار پھر لوٹ رہا ہے‘ دیگر موسموں کی طرح اس کی بھی اپنی ایک انفرادیت ہے گویا کہ سردیوں میں کھانے پینے کے لوازمات کے ساتھ پہننے اوڑھنے کے انداز یکسر تبدیل ہوجاتے ہیں بھلا وہ کیسے؟ تو وہ ایسے کہ سوپ‘ کافی‘ ڈرائی فروٹ کے ساتھ سوئٹر اور گرم ملبوسات کے بغیر سردیاں نامکمل رہتی ہیں۔
موسم سرما میں بالوں کی حفاظت
موسم سرما کی آمد کا آپ کو اس طرح بھی پتا چل سکتا ہے کہ جب آپ اپنے بالوں کو ہاتھ لگائیں گی تو آپ کو ایسا محسوس ہوگا جیسے آپ کے بال دھول اور گردو غبار سے اَٹے ہوئے ہیں۔ اس موسم میں بال ناریل کے ریشے کی طرح اکڑنے لگتے ہیں اور آپ کی کھوپڑی کسی پیاسی اور خشک زمین کی طرح نظر آنے لگتی ہے اس کی وجہ سے کھوپڑی میں کھجلی ہونے لگتی ہے اور بالوں کے دیگرمسائل بھی جنم لینے لگتے ہیں۔
یہ سب تب ہوگا جب آپ سرد موسم میں بالوں کی مناسب دیکھ بھال نہیں کریں گی۔ اس موسم میں بالوں پر اسپیشل توجہ دینے کی ضرورت ہوتی ہے اور وجہ یہ ہے کہ سرد موسم میں ہوا میں نمی کا تناسب کم ہوتا ہے اور بال اور کھوپڑی بری طرح متاثر ہوتی ہے‘ نتیجہ میں بال کھردرے اور ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوجاتے ہیں اور اسی تناسب سے کھوپڑی کی جلد بھی متاثر ہوتی ہے۔
یہ آپ پر ہے کہ آپ بالوں میں نمی کی کمی نہ ہونے دیں اور اگر آپ موسم سرما سے لطف اندوز ہونا چاہتی ہیں تو پھر اپنے بالوں پر خصوصی توجہ دیں۔ اس حوالے سے سب سے اچھی بات یہ ہوگی کہ گھریلو نسخہ جات کو اپنایا جائے تاکہ زیادہ سے زیادہ فائدہ ہو۔ ان میں چونکہ ساری قدرتی اشیا شامل ہوتی ہیں‘ اس لیے ان کا کوئی سائیڈ ایفیکٹس نہیں ہوتا اور بازاری پروڈکٹس کے مقابلے میں زیادہ فائدہ مند ثابت ہوتے ہیں۔ ان پر اخراجات بھی بہت کم آتے ہیں مختصر یہ کہ ہر لحاظ سے قابل عمل ہیں۔
ایووکیڈ‘ مایوکنڈیشنز
اجزاء:۔
انڈے(سفیدی کے بغیر)
دو عدد
مایونیس
ایک چھوٹا جار
ایووکیڈو
آدھا
طریقہ
ایک بڑے پیالے میں ایووکیڈو کو کچل دیں اور اس میں انڈے کی زردی شامل کرلیں۔ اس کے بعد اس میں مایونیس بھی ملادیں اور سب کو اچھی طرح مکس کرلیں۔ اس کنڈیشنز کو بالوں میں جڑوں سے شروع کرکے بالوں کی نوک تک لگائیں۔ لگانے کے بعد پلاسٹک ریپ کی مدد سے سر کو ڈھانپ لیں اس کے اوپر گرم اسٹیم کیا ہوا تولیہ رکھیں‘ پچیس منٹ کے بعد سادہ پانی سے سر کو دھولیں۔
بے رونق بالوں میں چمک لائیں
بالوں میں چمک پیدا کرنے کے لیے ایک ایسا جادوئی نسخہ موجود ہے جو بالوں کو دیرپا رنگت عطا کرتا ہے۔
ایک کھانے کا چمچہ مہندی‘ ایک لیموں کا رس‘ ایک عدد انڈا ‘ تھوڑی سی کافی شامل کرکے پھینٹ لیں ایک گھنٹے تک یہ آمیزہ بالوں میں لگا رہنے دیں۔ پانی میں ایک چمچہ گلیسرین ملا کر ابال لیں‘ ٹھنڈا ہونے پر اس سے بالوں کی جڑوں پر مساج کیجیے آخر میں ہلکا گرم تولیہ بالوں میں لپیٹ کر آدھے گھنٹے بعد دھولیں۔ یہ نسخہ خشک بالوں کے لیے غیر معمولی حد تک مفید ہے۔ بالوں کی ملائمت‘ چمک اور خوب صورتی لوٹ آئے گی‘ بالوں کی سکری سے بھی نجات حاصل ہوگی۔
چقندر کے پتوں میں بھی فولاد کثرت سے پایا جاتا ہے‘ چقندر کھائیں اور اس کے پتوں کو ابال کر ٹھنڈا ہونے پر اس پانی سے سر دھولیں‘ سر کی جلد پر جمی خشکی سکری ختم ہوجائے گی۔
سکری کا خاتمہ… شیمپو ا انتخاب
سکری کے خاتمے کے لیے کون سا شیمپو بہتر ہے؟
اس حوالے سے کچھ کہنا یوں مشکل ہے کہ اشتہارات کی صنعت اتنی فروغ پاچکی ہے کہ شیمپو کی ظاہری پیکنگ ہی صارفین کو متاثر کرنے کے لیے کافی ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ بعض شیمپو سکری سے نجات کے لیے موثر بھی ہیں لیکن بیشتر شیمپو میں زائد کیمیکلز کی بہتات بالوں کی حالت میں ابتری پیدا کرنے کا سبب بنتی ہے۔ اگر آپ کے بال بھی سکری کے شکار ہیں اور اس تکلیف سے مستقل نجات بھی چاہتے ہیں تو کچھ گھریلو نسخے مرض کی شدت کم کرسکتے ہیں۔ یہ نسخے انہی اجزا پر مشتمل ہیں جنہیں اشتہاری کمپنیاں اپنی مصنوعات میں شامل کرنے کے دعوے دار ہوتی ہیں۔
٭ گندھک کا سفوف‘ ریٹھا اور سیکا کائی کا پائوڈر ملا کر سر کی جلد میں لگائیں‘ سیکا کائی ملے پانی سے سر دھولیں‘ بالوں کی جڑوں سے سکری کا خاتمہ ہوجائے گا۔
٭ کیلے کے گودے میں ناریل کا تیل ملا کر آمیزہ بنائیں‘ ہفتہ میں ایک مرتبہ ہیئر ماسک کے طور پر جڑوں میں لگائیں‘ بال نا صرف خشکی سکری سے محفوظ رہیں گے بلکہ ملائم چمکدار ہوجائیں گے۔
٭ انڈوں کو پھینٹ کر ان میں نیم گرم پانی شامل کریں‘ اسے بالوں کی جڑوں سے سروں تک لگائیں‘ دس منٹ بعد دھولیں‘ بہتر نتائج کے لیے پانی کے برعکس دودھ بھی شامل کیا جاسکتا ہے۔
سردیوں کی مناسبت سے میک اپ کریں
سردیوں میں میک اپ کرتے وقت اس بات کو ذہن میں رکھیں کہ اس موسم میں ہوائیں بہت ٹھنڈی اور سخت ہوتی ہیں اور ہم اسی مناسبت سے گہرے رنگ کے لباس اور سادہ لباس زیب تن کرتے ہیں۔ گرمیوں میں ہم ہلکے پھلکے اور سادہ لباس زیب تن کرتے ہیں مگر سردیوں میں سب کچھ اس کے برعکس ہوتا ہے‘ سردیوں کا میک اپ موسم کی مناسبت سے ہونا چاہیے اور بھاری ملبوسات اور گہرے رنگ سے بھی اس کی ہم آہنگی ہو۔ اس کا مطلب ہوا کہ آپ ہلکا فائونڈیشن ایک طرف رکھ دیں گی اور ایسا موئسچرائزر اور فائونڈیشن لگائیں گی جن کی بنیاد تیل پر ہو یعنی آئل بیسڈ‘ اسی طرح آئی میک اپ بھی مٹیالا ہوجائے گا اور بھنوئوں کی رنگت اور شیڈ میں بھی تبدیلی آجائے گی۔
سرد موسم میں میک اپ کا آغاز آئل بیسڈ موئسچرائزر سے ہونا چاہیے جو موسم کی سرد ہوائوں سے جلد کو محفوظ رکھتا ہے اور خشک ہونے نہیں دیتا۔
رات کو قدرے بھاری موئسچرائزر استعمال کرنا چاہیے جس میں و ٹامن اور جلد کو تروتازہ رکھنے کے اجزا بھی شامل ہوں۔ اسے غسل کرنے کے فوراً بعد لگانا چاہیے تاکہ جلد کی نمی جلد کے اندر ہی رہ جائے۔ میٹ (مٹیالا) فائونڈیشن سرد موسم کے لیے بہترین ہے‘ آنکھوں کا میک اپ آپ کے لباس کی مناسبت سے ہو۔ سردیوں میں عموماً آنکھوں کے نیچے حلقے سے بن جاتے ہیں ان کو ہلکے زرد رنگ کی آئی کریم کے ذریعے ماہرانہ انداز میں چھپایا جاسکتا ہے۔
گرمیوں میں جلد زرد ہوتی ہے مگر سردیوں میں ایسا نہیں ہوتا ہے‘ سرد موسم میںمیک اپ ایسا ہو کہ اس سے جلد کی ٹون اور فنشنگ میں اور اضافہ ہو۔ گرمیوں میں چہرہ کھلا ہوتا ہے اور اس کی وجہ دھوپ ہوتی ہے جس میں وٹامن ڈی ہوتا ہے جو جلد کے لیے مفید ہے مگر سردیوں میں دھوپ کی کمی ہوتی ہے۔ مطلب جلد کو ذرا زیادہ توجہ اور ٹوئننگ کی ضرورت ہوتی ہے اور میک اپ کو لائٹ رکھنا ہوگا۔ بنیادی اصول یہ ہے کہ میک اپ فائونڈیشن کا شیڈ آپ کی جلد کے ٹون سے ایک درجہ لائٹ ہو تبھی آپ کی جلد روشن نظر آئے گی۔
فاریہ بتول… خانیوال

Show More

Check Also

Close
Back to top button
error: Content is protected !!
×
Close