ذرا مسکرا میرے گمشدہ

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۲

  یہ چبھن اکیلے پن کی، یہ لگن اداس شب سے میں ہَوا سے لڑ رہا ہوں تجھے کیا بتائوں…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۱

شام کی اداسی میں نیا چاند طلوع ہوچکا تھا۔ چڑیاں فاختائیں اور تمام پرندے ملگجے آسمان پر قطاریں بنائے کافی…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۳

مجھے محسوس ہوتا ہے وہ بالکل میرے جیسا ہے کہ جیسے عکس پانی میں یا سایہ روبرو میرے وہی لمحہ…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۴

حنین صبح اجیہ کے اسکول جانے تک جان بوجھ کر لیٹی رہی تھی‘ وہ اس کا سامنا نہیں کرنا چاہتی…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۵

تمام رشتے دار غزنیٰ کے گھر پر موجود تھے تو گھر کی رونق ہی کچھ الگ محسوس ہو رہی تھی…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۶

سامنے حسن موجود تھا اور سڑک کے کنارے پر گاڑی روکے بیکری سے کچھ لے رہا تھا اربش کے کہنے…

Read More »

زرا مسکرا میرے گمشدہ حصہ ۷

اربش باقی مسافروں اور غزنی کے ساتھ اپنی فلائٹ کے انتظار میں اس وقت ائیر پورٹ پر بیٹھا تھا اور…

Read More »
error: Content is protected !!
Close